آج ملک بھرمیں یوم استحصال کشمیرمنایا جارہاہے

آج ملک بھرمیں یوم استحصال کشمیرمنایا جارہاہے
ویب ڈیسک : آج ملک بھرمیں یوم استحصال منایا جارہاہے جس کامقصد بھارت کےغیرقانونی زیرقبضہ جموں وکشمیر میں فوجی محاصرے کاایک سال مکمل ہونے پرمظلوم کشمیریوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کرناہے۔
گزشتہ سال پانچ اگست کونریندرمودی کی حکومت نے بھارت کےغیرقانونی زیرقبضہ جموں وکشمیر کی خصوصی آئینی حیثیت ختم کردی تھی ۔ کشمیری عوام کے خلاف بھارت کے یکطرفہ غیرقانونی اقدامات اورمقبوضہ کشمیرمیں بھارتی فوج کے مظالم کی مذمت کے لئے متعدد تقریبات کا اہتمام کیاجارہاہے۔ 
ملک بھرمیں صبح دس بجے ایک منٹ کی خاموشی اختیار کی جائے گی اورایک منٹ کے لئے ٹریفک رک جائے گی۔ وزیراعظم عمران خان آزاد جموں وکشمیر کی قانون ساز اسمبلی سے خطاب کریں گے جس میں کشمیریوں کے نصب العین کیلئے پاکستان کی حمایت کا اعادہ کیا جائے گا۔وفاقی دارالحکومت سمیت تمام بڑے شہروں میں ایک میل لمبی یکجہتی واک کا اہتمام کیا جائے گا۔ صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی اسلام آباد میں واک کی قیادت کریں گے۔ واک کے شرکا بازوں پر سیاہ پٹیاں باندھیں گے اور پاکستان اور آزاد کشمیر کے پرچم لہرائیں گے۔
کنٹرول لائن کے دونوں جانب اوردنیابھرمیں بھی مقیم کشمیری عوام یوم استحصال منائیں گے جس کامقصد گزشتہ سال آج کے روزبھارت کی طرف سے مقبوضہ کشمیرکی خصوصی آئینی حیثیت ختم کرنے کےغیرقانونی ،غیراخلاقی اورغیرآئینی اقدام کی مذمت کرناہے۔ آج کے دن پوری قوم اپنے کشمیری بھائیوں کوایک پیغام دے گی کہ وہ تنہانہیں بلکہ پاکستان کے عوام اُن کی آزادی کی جدوجہدکی ہمیشہ حمایت کریں گے۔