25جماعتوں کی تنظیمات اہل سنت پاکستان کی آزادی مارچ کی مخالفت

25جماعتوں کی تنظیمات اہل سنت پاکستان کی آزادی مارچ کی مخالفت
اسلام آباد:25جماعتوں کی تنظیمات اہل سنت پاکستان نےجمعیت علمائے اسلام (ف) کے آزادی مارچ کی مخالفت کر دی۔
مسلم لیگ ن کے رکن صوبائی اسمبلی میاں جلیل شرقپوری ،صاحبزادہ حامد رضا اور پیر معصوم نقوی نے 25 اہل سنت جماعتوں کےہمراہ پریس کانفرنس کی جس میں اہل سنت علماء کا کہنا تھا کہ جمعیت علمائے اسلام (ف)  کے سربراہ مولانا فضل الرحمن کا آزادی مارچ ملکی سلامتی کے خلاف ہے،27اکتوبر کو پاکستان بنانے والے علماء مشائخ کشمیری بھائیوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کریں،پاکستان کی داخلی اور خارجی سلامتی کو خطرات لاحق ہیں،نازک مرحلے پر آزادی مارچ سے انتشار اور فرقہ واریت پھیلے گی۔ صاحبزادہ حامد رضا کا کہنا تھا کہ مدارس اہل سنت سیاسی مقاصد کےلئے استعمال نہیں ہوں گے، وزیر اعظم کا مدارس ریفارمز پر تحفظات دور کرنے کا اعلان خوش آئند ہے، 26 اکتوبر کو کنونشن سنٹر اسلام آباد میں استحکام پاکستان کا اعلان کرتےہیں۔ میاں جلیل شرقپوری کا کہنا تھا کہ مدارس اہل سنت قطعا آزادی مارچ کا حصہ نہیں ہوں گے۔

واضح رہے کہ جمعیت علمائے اسلام (ف)کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے 27 اکتوبر کو حکومت مخالف آزادی مارچ اور دھرنے کا اعلان کر رکھا ہے ۔ مسلم لیگ ن اور پاکستان پیپلز پارٹی کی جانب سے بھی مولانا فضل الرحمان کو مکمل تعاون کی یقین دہانی کرائی گئی ہے۔