خالد محمود کا پاک انگلینڈ سیریز میں کشمیریوں اور فلسطینیوں کی آواز اٹھانے کا مطالبہ

خالد محمود کا پاک انگلینڈ سیریز میں کشمیریوں اور فلسطینیوں کی آواز اٹھانے کا مطالبہ
لاہور:سابق چیئرمین پاکستان کرکٹ بورڈ(پی سی بی)خالد محمود نے پاکستان اور انگلینڈ کے مابین سیریز میں کشمیریوں اور فلسطینیوں کی آواز اٹھانے کا مطالبہ کر دیا۔
اپنے ایک بیان میں سابق چیئرمین پاکستان کرکٹ بورڈ(پی سی بی)خالد محمود کا کہنا تھا کہ پاکستان کرکٹ ٹیم کو بلیک لائیوز میٹر مہم کے علاوہ انسانی ہمدردی کے دوسرے معاملات کا حصہ بھی بننا چاہیے،اگر بلیک لائیوز میٹر کی بات کی جا سکتی ہے تو کشمیر اور فلسطین کی بات کیوں نہیں کی جا سکتی؟پاکستان اور انگلینڈ کے مابین سیریز میں بلیک لائیوز میٹر (بی ایل ایم) مہم کے ساتھ کشمیریوں اور فلسطینیوں کے حق میں بھی آواز  اٹھائی جائے،ویسٹ انڈیز اور انگلینڈ سیریز میں بلیک لائیوز میٹر کے سلوگن کو شامل کیا گیا جبکہ پاکستان کرکٹ بورڈ نے اس بات پرکرنا ہی گوارا نہیں کیا۔
ان کا مزید کہنا تھا کہ پی سی بی کو کشمیر اور فلسطین کے معاملے پر اظہار یکجہتی کا مطالبہ کرنا چاہیے،اس معاملے کو ابھی تک نہیں اٹھایا گیا جو کوئی غیرت مند قوم اور کرکٹ بورڈ کرتا۔
انہوں نے کہا کہ دورہ انگلینڈ میں پاکستانی ٹیم کے ساتھ بہت سے سمجھوتے کیے گئے ہیں،اگر انگلینڈ کرکٹ بورڈ کچھ مانگ رہا تھا تو پی سی بی کو بھی کچھ شرائط رکھنی چاہیے تھیں،ابھی تک انگلینڈ کرکٹ بورڈ نے دورہ پاکستان کے لیے حامی نہیں بھری،انگلینڈ کرکٹ بورڈ نے جس طرح چاہا، پاکستان ٹیم کھیلنے کے لیے چلی گئی۔

سابق چیئرمین پاکستان کرکٹ بورڈ(پی سی بی)خالد محمود نے مزید کہا کہ انڈین کرکٹ بورڈ اپنی غرض کا دیوانہ ہے،ورلڈ کپ ملتوی ہونے کا ذمہ دار بھی انڈیا کو قرار دیا جا رہا ہے،بدقسمتی کی بات ہے کہ ایک بڑا اہم ایونٹ ورلڈ کپ ملتوی کر کے آئی پی ایل کرایا جا رہا ہے،آئی سی سی کی بھی کوتاہی ہے کہ بی سی سی آئی کو موقع دیا۔