جی این این سوشل

جی این این میں ویڈیو ڈیسک آپ کو روزانہ کی تازہ ترین سرخیاں ، شوز ، پروگرام ، ایونٹس اور بہت کچھ فراہم کرے گا جب آپ اسے دیکھنا چاہتے ہیں۔

علاقائی

شہر قائدمیں آج کتنی بارش ہوئی ؟ اعدادوشمار جاری 

کراچی : محکمہ موسمیات کی جانب سے صوبائی دارالحکومت   کراچی میں آج ہونے والی بارش کے تازہ اعداد و شمار جاری کردئیے گئے ۔

Published by Asma Rafi

پر شائع ہوا

کی طرف سے

تفصیلات کے مطابق محکمۂ موسمیات کے ریکارڈ کے مطابق شہر قائد میں آج  سب سے زیادہ 32 ملی میٹر بارش قائد آباد میں ریکارڈ کی گئی۔

ریکارڈ کے مطابق دوپہر 2 بجے تک پی اے ایف فیصل بیس شارع فیصل اور سرجانی ٹاؤن میں 26 ، جناح ٹرمینل پر 25 اعشاریہ 9 ، ناظم آباد میں 22، یونیورسٹی روڈ پر 19 اعشاریہ 5، ایئر پورٹ کے اولڈ ایریا میں 18 اعشاریہ 22 ملی میٹر بارش ریکارڈ ہوئی ہے۔

محکمۂ موسمیات کے اعداد و شمار کے مطابق سعدی ٹاؤن میں 18، ڈیفنس میں 17 اعشاریہ 8، پی اے ایف مسرور بیس پر 11، گلشنِ معمار میں 9 اور کیماڑی میں 6 اعشاریہ 4 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی۔

واضح رہے کہ محکمہ موسمیات  کی جانب سے اسلام آباد ، پنجاب ، خیبر پختون خوا اور بلوچستان میں بھی آج سے 13 اگست تک تیز ہواؤں اور گرج چمک کے ساتھ  بارشوں کی پیش گوئی کی ہے ۔ 

پڑھنا جاری رکھیں

کھیل

سابق نمبر ون ٹینس سٹار سرینا ولیمز کا ٹینس کو خیر باد کہنے کا عندیہ

لاہور: سابق عالمی ویمن نمبر ون ٹینس سٹار  "سرینا ولیمز "نے یو ایس اوپن کے بعدڈٹینس کی دنیا کو خیر باد کہنے کا عندیہ دے دیا ۔ 

Published by Muhammad Akram

پر شائع ہوا

کی طرف سے

 

امریکا سے تعلق رکھنے والی 23 بار کی گرینڈ سلیم چیمپیئن 40 سالہ سرینا کا کہنا ہے کہ اب وقت آگیا ہے کہ وہ اپنے خاندان کی نشوونما سمیت دیگر چیزوں پر توجہ دیں، ان کا کہنا تھا کہ مجھے اپنی 5برس کی بیٹی اولمپیا کے ساتھ بھی وقت گزارنے کی خواہش ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

ڈاکٹررتھ فاؤ کو بچھڑے 5  برس بیت گئے

پاکستان میں جذام کے مریضوں کے لیے مسیحا ڈاکٹر رتھ فاؤ کی آج   پانچویں   برسی منائی جارہی ہے۔

Published by Asma Rafi

پر شائع ہوا

کی طرف سے

 جرمنی میں پیدا ہونے والی یہ عظیم خاتون 57 سال پاکستان میں مقیم رہیں اورجذام کا مرض مملکت خداد سے ختم کرنے میں سب سے کلیدی کردار ادا کیا ۔ ڈاکٹر رتھ فاؤ 9ستمبر1929 کو جرمنی کے شہر لیپ زگ میں پیدا ہوئی تھیں ، ڈاکٹر رتھ فاؤ1960 میں پاکستان آئیں اور پھر جذام کے مریضوں کے لیے اپنی ساری زندگی وقف کردی تھی ،  وہ جذام کے مریضوں کو مفت علاج کی سہولیات فراہم کرتی تھیں۔

جرمنی کی سماجی تنظیم ’ڈاٹرز آف ہارٹ آف میری‘ کی جانب سے جب انہوں نے پہلی مرتبہ کراچی کا دورہ کیا تو جذام کے مریضوں کو دیکھ کر انہوں نے فیصلہ کیا کہ وہ پاکستان میں رہ کراس مرض کے خاتمے کے لیے کوشش کریں گی۔

ڈاکٹر رتھ فاؤ نے 1963 میں آئی آئی چندریگر روڈ (پرانا میکلوروڈ) سے ملحقہ جذام کے مریضوں کی بستی میں مفت کلینک کا آغاز کیا تو اس وقت پاکستان میں ہزاروں مریض تھے۔ اس زمانے میں لوگوں کا عمومی رویہ تھا کہ ایسے مریضوں سے میل جول سے اجتناب برتتے تھے۔

عالمی ادارہ صحت کی جانب سے سنہ1996 میں پاکستان کو کوڑھ کے مرض پر قابو پالینے والے ممالک میں شامل کرلیا گیا اور پاکستان کو یہ اعزاز دلانے میں ڈاکٹررتھ فاؤ نے سب سے اہم کردار اداکیا ۔

ڈاکٹر رتھ فاؤ جذام کے مریضوں کی مسیحائی کرنے کے لیے سندھ، خیبر پختونخواہ، بلوچستان اور شمال میں دور دراز علاقوں میں بھی گئیں اورایسے مریضوں جذام کے زیادہ سے زیادہ مریضوں کی مسیحائی کے لیے انہوں نے کراچی کے دوسرے علاقوں میں بھی  چھوٹے کلینک قائم کیے اور یہ نیٹ ورک بڑھتے بڑھتے 157 لیپرسی سینٹرز تک پہنچ گیا۔

ان گراں قدر خدمات کے اعتراف میں پاکستانی حکومت کی جانب سے انہیں 1979 میں ہلال امتیاز اور 1989 میں ہلال پاکستان کے اعزازت سے نوازا گیا جبکہ 1988 میں انہیں پاکستانی شہریت دی گئی ۔

لاکھوں مریضوں کے چہروں پر مسکراہٹ بکھیرنے والی ڈاکٹر رتھ فاؤ 10 اگست 2017 کو طویل علالت کے بعد انتقال کر گئیں۔ 

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll