جی این این سوشل

پاکستان

اقوام متحدہ کے امن دستوں کی فوجی مشقیں  "مشترکہ مقصد 2021  "  کا انعقاد

راولپنڈی : اقوام متحدہ کے امن دستوں کی فوجی مشقیں “مشترکہ مقصد 2021 ء” کا انعقاد کیا گیا ہے۔

پر شائع ہوا

کی طرف سے

اقوام متحدہ کے امن دستوں کی فوجی مشقیں  "مشترکہ مقصد 2021  "  کا انعقاد
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق اقوام متحدہ کے امن دستوں کی فوجی مشقیں “مشترکہ مقصد2021ء” کا چائنیز پیپلز لبریشن آرمی کی کیوشن ٹریننگ بیس پر انعقاد کیا گیا ہے۔ آئی ایس پی آر  کاکہنا ہے کہ اقوام متحدہ کے امن دستوں کی فوجی مشقوں میں پاکستان، چین، منگولیا اور تھائی لینڈ کے فوجی دستوں نے حصہ لیا ہے۔

آئی ایس پی آر کا کہنا ہے کہ اقوام متحدہ کے امن دستوں کی فوجی مشقوں میں پاکستانی دستوں کی مہارتوں کو تمام شرکاء نے بھرپور انداز میں سراہا ہے۔ آئی ایس پی آر نے مطابق پاکستان اقوام متحدہ کے امن مشن میں بڑھ چڑھ کر حصہ لے رہا ہے۔

 

 

 

 

اسماء رفیع گزشتہ 8سالوں سے شعبہ صحافت سے منسلک ہیں، اس عرصے کے دوران وہ پاکستان کے نامور میڈیا ہاؤسز کے مختلف شعبوں سے وابستہ رہی ہیں۔ اسما ء رفیع 2018 سے جی این این میں بطوراُردو نیوز ایڈیٹر، ریسرچر کام کررہی ہیں ۔ اس شعبے میں وہ تحقیق سے لے کر خبر کی نوک پلک سنوارنا ، سماجی اور سیاسی مسائل کو اپنے الفاظ کی طاقت کے ذریعے اُجاگر کرتی ہیں۔

پاکستان

"این اے 133 کا الیکشن ملتوی بھی ہوسکتا ہے" الیکشن کمیشن نے اعلان کردیا

ووٹوں کی خریداری ثابت ہونے پر معاملہ اسلام آباد بھیجا جائے گا۔

پر شائع ہوا

Muhammad Akram

کی طرف سے

"این اے 133 کا الیکشن ملتوی بھی ہوسکتا ہے"  الیکشن کمیشن نے اعلان کردیا

لاہور: الیکشن کمیشن آف پاکستان کا کہنا ہے کہ اگر این اے 133 میں ووٹوں کی خریداری ثابت ہوگئی تو الیکشن ملتوی ہوسکتا ہے، اگر اس حوالے سے کوئی فیصلہ نہ ہوا اور الیکشن کے بعد فیصلہ ہوا تو امیدوار کو نا اہل کردیا جائے گا۔

ترجمان الیکشن کمیشن کے مطابق این اے 133  لاہور میں ضمنی الیکشن کیلئے ووٹوں کی خریداری کی ویڈیوز سامنے آنے کے بعد تحقیقات شروع کردی گئی ہیں۔ چیئرمین پیمرا، چیئرمین نادرا، آئی جی پولیس اور کمشنر لاہور کو خط لکھ  کر ویڈیو کی فرانزک اور افراد کی نشاندہی کا حکم دے دیا گیا ہے۔ریٹرننگ افسر نے منگل  تک فرانزک اور کارروائی کی تحریری رپورٹ جمع کرانے کی ہدایت کی ہے۔ اس حوالے سے مسلم لیگ ن کی  امیدوارشائستہ پرویز ملک سے بھی فوری جواب  طلب کیا گیا ہے۔

ترجمان نے کہا کہ  ووٹوں کی خریداری ثابت ہونے پر معاملہ اسلام آباد بھیجا جائے گا۔ اس کے بعد این اے 133 کا ضمنی انتخاب ملتوی بھی ہو سکتا ہے۔ اگر معاملہ زیر التوا رہا اور الیکشن کے بعد ثابت ہوا تو امیدوار کو نااہل قرار دیا جا سکتا ہے۔

خیال رہے کہ کچھ روز پہلے این اے 133 کی کچھ ویڈیوز سوشل میڈیا پر سامنے آئی تھیں جن میں لوگوں کو پیسے دے کر ان سے قرآن پر حلف لیا جا رہا تھا کہ وہ فلاں امیدوار کو ووٹ دیں گے۔ این اے 133 میں تحریک انصاف کے امیدوار کے کاغذات مسترد ہوگئے تھے جب کہ مسلم لیگ ن اور پیپلز پارٹی کے امیدوار میدان میں ہیں۔ دونوں پارٹیوں کی ہی ووٹ خریدنے کی ویڈیوز سامنے آئی ہیں۔

پڑھنا جاری رکھیں

تجارت

بجلی کی قیمتوں میں 4 روپے 75 پیسے فی یونٹ اضافے کا امکان

اسلام آباد : بجلی  کی قیمت میں فی یونٹ 4 روپے 75 پیسے  اضافہ ہوگا  نہیں ؟ نیپرا  اتھارٹی بجلی کی قیمتوں سے متعلق آج سماعت کرے گی۔

پر شائع ہوا

Asma Rafi

کی طرف سے

بجلی کی قیمتوں میں 4 روپے 75 پیسے فی یونٹ اضافے کا امکان

ذرائع  کے مطابق سنٹرل پاور پرچیزنگ ایجنسی (سی پی پی اے ) نے بجلی کی قیمتوں میں اضافے کی درخواست دے رکھی ہے ،  بجلی کی قیمتوں میں اضافے کی درخواست ماہانہ فیول پرائس ایڈجسٹمنٹ کی مد میں دی گئی۔

ذرائع کے مطابق سنٹرل پاورپرچیزنگ ایجنسی نے درخواست میں موقف اختیار کیا ہے کہ کہ اکتوبر میں ڈیزل سے 25 روپے 22 پیسے فی یونٹ بجلی پیدا کی گئی ۔ فرنس آئل سے 22 روپے 21 پیسے فی یونٹ بجلی پیدا کی گئی۔ پانی سے بجلی کی پیداوار 23.26 فیصد، کوئلے سے 16.69فیصد رہی ۔ فرنس آئل سے 10.88 اور ڈیزل سے پیداوار0.51 فیصد رہی۔ گزشتہ ماہ گیس سے 9.67 اور ایل این جی سے 23.96 فیصد بجلی پیدا کی گئی۔

اسی ماہ میں ماہانہ فیول ایڈجسٹمنٹ کی مد میں حکومت نے بجلی کی قیمتوں میں 2 روپے 52 پیسے فی یونٹ اضافہ کیا تھا۔

نیشنل الیکٹرک پاور ریگولیٹری اتھارٹی (نیپرا) کی جانب سےجاری نوٹی فیکیشن کےمطابق اضافہ ستمبرکی ماہانہ فیول ایڈجسٹمنٹ کی مد میں کیا گیا ہے جو نومبر2021 کے بلوں میں وصول کیا جائے گا۔

اضافے کا اطلاق کے الیکٹرک اور لائف لائن صارفین پرنہیں ہوگا، تاہم دیگر صارفین پر حالیہ اضافے سے40ارب روپےکااضافی بوجھ پڑے گا۔

نیپرا اتھارٹی سی پی پی اے کے اعداد و شمار کا جائزہ لیکر فیصلہ کرے گی۔

پڑھنا جاری رکھیں

صحت

فائزر نے کورونا کی امیکرون قسم کیخلاف ویکسین پر کام شروع کردیا، سی ای او

سی ای او فائزر کا کہنا ہے کہ  ہم کورونا کے امیکرون ویرینٹ کے خلاف ویکسین پر کام شروع کردیا ہے۔

پر شائع ہوا

Ali Raza

کی طرف سے

فائزر نے کورونا کی امیکرون قسم کیخلاف ویکسین پر کام شروع کردیا، سی ای او

بورلا نے غیرملکی خبر رساں ادارے کو بتایا کہ ان کی کمپنی نے امیکرون  ویریئنٹ کے خلاف موجودہ ویکسین کی جانچ شروع کردی ہے۔

بورلا نے کہا ، "مجھے نہیں لگتا کہ نتیجہ یہ نکلے گا کہ ویکسین حفاظت نہیں کرتی ہیں۔" لیکن تجربے سے یہ ظاہرہوسکتا ہے کہ موجودہ شاٹس "کم حفاظت کرتے ہیں،" جس کا مطلب ہے کہ "ہمیں ایک نئی ویکسین بنانے کی ضرورت ہے۔"

انہوں نے کہا، "جمعہ کو ہم نے اپنا پہلا ڈی این اے ٹیمپلیٹ بنایا، جو کہ ایک نئی ویکسین کی نشوونما کے عمل کا پہلا ممکنہ اثر ہے۔"

بورلا نے صورتحال کو اس سال کے شروع میں اس منظر نامے سے تشبیہ دی جب فائزر اور اس کے جرمن پارٹنر BioNTech نے 95 دنوں میں ایک ویکسین تیار کی جب یہ خدشات تھے کہ پچھلا فارمولا ڈیلٹا ویرینٹ کے خلاف کام نہیں کرے گا۔

ان کا کہنا تھا کہ موجودہ ویکسین ڈیلٹا کے خلاف "بہت موثر" ہے، انہوں نے مزید کہا کہ کمپنیاں 2022 میں ویکسین کی چار بلین خوراکیں تیار کرنے کے قابل ہو جائیں گی۔

خیال رہے کہ  عالمی ادارہ صحت نے خبردار کیا کہ امیکرون  کی نئی قسم عالمی سطح پر "بہت زیادہ" خطرہ ہے۔

بورلا نے کہا کہ وہ اس بات پر بھی "بہت پر اعتماد" ہیں کہ فائزر کی حال ہی میں منظر عام پر آنے والی اینٹی وائرل گولی اومیکرون سمیت تغیرات کی وجہ سے ہونے والے انفیکشن کے علاج کے طور پر کام کرے گی۔ فائزر کی گولی سے ہسپتال میں داخل ہونے یا موت کو تقریباً 90 فیصد تک کم کیا گیا ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll