جی این این سوشل

پاکستان

متنازع ٹوئٹس کیس ، ایف آئی اے کی اعظم سواتی کے جسمانی ریمانڈ کی درخواست پر فیصلہ محفوظ

اسلام آباد کی مقامی عدالت نے متنازع ٹوئٹس کے کیس میں اعظم سواتی کے جسمانی ریمانڈ سے متعلق درخواست پر فیصلہ محفوظ کرلیا۔

پر شائع ہوا

کی طرف سے

متنازع ٹوئٹس کیس ، ایف آئی اے کی اعظم سواتی کے جسمانی ریمانڈ کی درخواست پر فیصلہ محفوظ
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

 

میڈیا ذرائع کے مطابق ایف آئی اے نے اعظم سواتی کو جوڈیشل مجسٹریٹ کے سامنے پیش کیا،اعظم سواتی کو ڈیوٹی جج وقاص احمد راجہ کی عدالت میں پیش کیاگیا،

ایف آئی اے پراسیکیوٹر ، پی ٹی آئی کی جانب سے بابراعوان، فیصل چودھری عدالت میں پیش ہوئے۔

ایف آئی اے نے اعظم سواتی کے 8 روزہ جسمانی ریمانڈ کی استدعا کردی،تفتیشی افسر نے کہا کہ کچھ متنازعہ ٹوئٹس ہیں جس کے باعث گرفتار کیاگیا،

بیانیہ بنایا جا رہا ہے ان چیزوں پر پہلے بھی ان پر ایف آئی آر درج کی جا چکی ہے،انہوں نے ٹوئٹ سے انکار نہیں کیا،انہوں نے دوسری بار اس جرم کا ارتکاب کیا ہے۔

بابراعوان نے کہاکہ ٹوئٹس ایف آئی آر میں لگائی گئی دفعات پر پورا نہیں اترتیں،پولیس کی جانب سے لئے گئے بیان کی کوئی قانونی حیثیت نہیں،انہوں نے کہاکہ اعظم سواتی کا 164 کا بیان نہیں لیاگیا،

سینیٹراعظم سواتی پر پچھلی بار بہیمانہ تشدد کیا گیا تھا،اعظم سواتی ابھی تک اس تشدد سے ریکور نہیں ہو سکے، اعظم سواتی کی جان کو بھی خطرہ ہے،

یہ بیان دیں اگر ان کی کسٹڈی میں اعظم سواتی کو کچھ ہوا تو یہ ذمہ دارہوں گے ، یہاں جو ایف آئی اے کے لوگ موجود ہیں ان کا نام آرڈر شیٹ میں ڈالا جائے۔

جج نے کہاکہ صرف ان لوگوں کے نام شامل کروں گا جویہاں موجود ہیں ،عدالت نے ایف آئی اے کی درخواست پر فیصلہ محفوظ کرلیا۔

جرم

بڑی تباہی سے قبل خفیہ اداروں کی کارروائی

سکیورٹی فورسز نے خود کش حملہ آوروں کے بڑے نیٹ ورک کو گرفتار کرلیا

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

بڑی تباہی سے قبل خفیہ اداروں کی کارروائی

پشاور: انٹیلی جنس ایجنسیوں کی بروقت کارروائی، سکیورٹی فورسز نے خود کش حملہ آوروں کے بڑے نیٹ ورک کو گرفتار کرلیا۔

تفصیلات کے مطابق سکیورٹی ایجنسیوں کی کارروائی کے دوران دہشت گرد نیٹ ورک سے افغان موبائل سمز، منشیات اور کرنسی بھی برآمد کی گئی ہیں۔

اطلاعات کے مطابق 19جنوری کو جمرود تختہ بیگ چیک پوسٹ پر خود کش حملہ آور داخل ہوا تھا، اس حملے میں دہشت گرد کی فائرنگ سے 3 پولیس اہلکار شہید ہوئے تھے، فائرنگ کے تبادلے کے دوران حملہ آور نے خود کو بم سے اڑا لیا تھا، حملے کی ذمہ داری کالعدم تحریک طالبان پاکستان نے قبول کی تھی۔

بعد ازاں فورسز نے دہشت گردوں کی گولیوں کے خول اور جسم کے اعضا کو فرانزک ٹیسٹ کیلئے لیبارٹری بھیجا تھا۔

ٹی ٹی پی رکن عمر کو تحصیل جمرود کے رہائشی ستانا جان نے سہولت فراہم کی، 23جنوری کو خودکش حملہ آور سے تعلق رکھنے والے دو ملزمان فرمان اللہ اور عبدالقیوم کو پکڑا گیا، 27 جنوری کو 3 مشتبہ افراد کی پہلے سے موجودگی کی اطلاع پر ایک آپریشن کیا گیا، آپریشن میں سہولت کار فضل امین، فضل احمد، محمد عامر اور حماد اللہ کو حراست میں لیا گیا۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

اب ہم بنانا ریپبلک بن چکے ہیں:عمران خان

سابق وزیراعظم اور چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان نے کہا ہے کہ اب ہم بنانا ریپبلک بن چکے ہیں۔

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

اب ہم بنانا ریپبلک بن چکے ہیں:عمران خان

سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر اپنے ایک پیغام میں پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے فواد چوہدری کی گرفتاری کے  متعلق اپنے خیالات کا اظہار کیا ہے۔

انہوں نے کہا ہے کہ فواد کو ہتھکڑیاں لگا کر اور سر ،چہرے کو دہشت گرد کی طرح ڈھانپ کر عدالت میں لے جانا یہ ظاہر کرتا ہے کہ امپورٹڈ حکومت اور ریاست کس حد تک پہنچ چکی ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ فواد چوہدری اور اعظم سواتی اور شہباز گل کے ساتھ جو سلوک ہوا وہ سب لوگوں کے سامنے ہے اور اس سے لوگوں کے ذہنوں میں کوئی شک باقی نہیں رہا کہ اب ہم بنانا ریپبلک بن چکے ہیں۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

43 ارکان قومی اسمبلی کے استعفوں کی منظوری، پی ٹی آئی کا عدالت میں چیلنج کرنے کا فیصلہ

اسلام آباد: پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) نے 43 ارکان قومی اسمبلی کے استعفوں کی منظوری عدالت میں چیلنج کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے۔ 

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

43 ارکان قومی اسمبلی کے استعفوں کی منظوری، پی ٹی آئی کا عدالت میں چیلنج کرنے کا فیصلہ

تفصیلات کے مطابق پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) نے اسلام آباد ہائیکورٹ سے رجوع کرنے کیلئے پٹیشن تیار کر لی جو آج یا پیر کو دائر کئے جانے کا امکان ہے جس کے ساتھ سپیکر کی جانب سے پی ٹی آئی رہنماءشاہ محمود قریشی کو لکھا گیا خط بھی نتھی کیا جائے گا۔ 

سپیکر نے خط میں کہا کہ مستعفی ارکان کو ہر صورت بلا کر استعفوں کی تصدیق کی جائے گی، استعفوں کی تصدیق کے بغیر کسی کے بھی استعفے منظور نہیں کئے جائیں گے۔

واضح رہے کہ گزشتہ دنوں سپیکر قومی اسمبلی راجہ پرویز اشرف نے پاکستان تحریک انصاف کے 43 ارکان قومی اسمبلی کے استعفے منظور کئے تھے۔

مذکورہ 43 استعفوں کی منظوری کے بعد مجموعی طور پر پاکستان تحریک انصاف کے 122اور شیخ رشید کا ایک استعفیٰ ملا کر 123اراکین کے استعفے منظور ہو چکے ہیں۔ 

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll