جی این این سوشل

پاکستان

مجھے پارٹی چھوڑنے کیلئے کسی کا کوئی دباؤ نہیں تھا نہ ہی مجھے ڈرایا یا دھمکایا گیا: ابرارالحق

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی ) سے علیحدگی اختیار کرنے والے گلوکار ابرار الحق نے لندن میں علیم ڈار کی ہاؤسنگ سوسائٹی  کے زیر اہتمام  ہونے والے پروگرام میں پرفارمنس دی  ہے ۔

پر شائع ہوا

کی طرف سے

مجھے پارٹی چھوڑنے کیلئے کسی کا کوئی دباؤ نہیں تھا نہ ہی مجھے ڈرایا یا دھمکایا گیا: ابرارالحق
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

 پروگرام میں شریک مہمانوں نے ابرار الحق کی خوبصورت آواز  میں گانوں سے پھرپور لطف اٹھایا جس کی ویڈیو بھی سوشل میڈیا پر وائرل ہوگئیں۔

اس موقع پر صحافیوں سے گفتگو میں پی ٹی آئی سے علیحدگی کے اعلان پر آبدیدہ ہونے سے متعلق گلوکار ابرار الحق کا کہنا تھا میں نے پی پی ٹی آئی میں لیڈر شپ اور کارکنان دونوں کے ساتھ بہت اچھا وقت گزارا ہے۔

13 سے 14 سال  تک پی ٹی آئی کے ساتھ کام کیا مجھے سب سے محبت تھی لیکن 9 مئی والا واقعہ ہوگیا اور میں چونکہ سیاست میں ملکی خدمت کیلئے آیا تھا جس کا موقع مجھے اب فی الحال دور دور تک کہیں نظر نہیں آرہا۔

گلوکار ابرار الحق  نےکہا کہ  میرا  آئینی حق ہےکہ میں سیاست دوبارہ جوائن بھی کرسکتا ہوں لیکن فی الحال ابھی میں نےکنارہ کشی کرلی ہے۔

ابرار الحق  نے یہ بھی کہا کہ  مجھے پارٹی چھوڑنے کیلئے کسی کا کوئی دباؤ نہیں تھا نہ ہی مجھے ڈرایا یا دھمکایا گیا، گلوکار نے پارٹی سے علیحدگی کے بعد فی الحال کسی جماعت کو جوائن کرنے یا انتخابات لڑنے سے بھی انکار کردیا۔

دوسری جانب سوشل میڈیا پر وائرل ایک ویڈیو میں  چند افراد کو ابرار الحق  سے بدسلوکی کے ساتھ پیش آتے ہوئے دیکھا گیا تاہم سکیورٹی گارڈز گلوکار کو وہاں سے بحفاظت نکالنے میں کامیاب ہوگئے۔ 

پاکستان

پی ٹی آئی کارکن صنم جاویدمقدمے سے بری ہونے کے بعد دوبارہ گرفتار

ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن کورٹ اسلام آباد نے صنم جاوید کو ایف آئی اےکے مقدمے سے بری کیا تھا

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

پی ٹی آئی کارکن  صنم جاویدمقدمے سے بری  ہونے کے بعد دوبارہ گرفتار

پاکستان تحریک انصاف کی کارکن صنم جاوید کو رہائی کے بعد دوبارہ گرفتار کرلیا گیا۔

صنم جاوید کو اسلام آباد پولیس نے گرفتار کر لیا، وکیل میاں اشفاق نے بھی صنم جاوید کی گرفتاری کی تصدیق کر دی۔

وکیل میاں اشفاق کا کہنا تھا کہ ہم نے بغیر مذاحمت صنم جاوید کو پولیس کے حوالے کر دیا۔

واضح رہے کہ ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن کورٹ اسلام آباد نے آج ہی پاکستان تحریک انصاف کی کارکن صنم جاوید کو وفاقی تحقیقاتی ایجنسی (ایف آئی اے) کے مقدمے سے بری کیا تھا۔

ڈیوٹی مجسٹریٹ ملک عمران نے صنم جاوید کے ریمانڈ پر محفوظ فیصلہ سنا دیا اور عدالت نے صنم جاوید کے وکلا کی مقدمے سے بریت کی استدعا منظور کی اور صنم جاوید کوبری کرنے کا حکم دیا، صنم جاوید رہائی کے بعد وکلا کے ہمراہ عدالت سے روانہ ہوگئیں۔

یاد رہے کہ ایف آئی اے نے صنم جاوید کو گوجرانوالا سینٹرل جیل سے گرفتار کیا تھا۔گزشتہ روز گرفتاری کے بعد  ایف آئی اے سائبر کرائم ونگ نے صنم جاوید کو جوڈیشل مجسٹریٹ کی عدالت میں پیش کیا تھا۔

دوسری جانب ڈسٹرکٹ اینڈ سیشنز کورٹ اسلام آباد نے پی ٹی آئی کارکن صنم جاوید کو ایف آئی اے مقدمے سے ڈسچارج کرنے کا  تحریری فیصلہ جاری کردیا۔

 

پڑھنا جاری رکھیں

تفریح

نامور اسٹیج اور ٹی وی کے اداکار انتقال کر گئے

مجاہد رانا جگر اور مہروں کے عارضے میں مبتلا تھے اور گزشتہ ایک ہفتے سے لاہور کے میو اسپتال میں زیرِ علاج تھے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

نامور اسٹیج اور ٹی وی کے اداکار انتقال کر گئے

لاہور: اسٹیج اور ٹی وی کے نامور اداکار مجاہد رانا انتقال کر گئے۔

تفصیلات کے مطابق مجاہد رانا جگر اور مہروں کے عارضے میں مبتلا تھے اور گزشتہ ایک ہفتے سے لاہور کے میو اسپتال میں زیرِ علاج تھے۔

60 سالہ مجاہد رانا میو ہسپتال کے ایسٹ میڈیکل وارڈ میں زیر علاج تھے، جہاں وہ خالقِ حقیقی سے جا ملے۔

مرحوم کا نماز جنازہ داتا دربار میں ادا کرنے کے بعد مقامی قبرستان میں تدفین کردی گئی ہے۔

واضح رہے کہ مجاہد رانا نے ہزاروں اسٹیج ڈراموں اور لاتعداد ٹی وی ڈراموں میں کام کیا۔

پڑھنا جاری رکھیں

علاقائی

ٹی ایل پی دھرنا: ٹریفک درہم برہم، نظام زندگی مفلوج

ٹی ایل پی کے رہنماوں اور کارکنان کا حکومت سے مطالبہ ہے کہ اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہو کو سرکاری طور پر دہشت گرد قرار دیا جائے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

ٹی ایل پی دھرنا:  ٹریفک درہم برہم،   نظام زندگی مفلوج

اسلام آباد: فیض آباد کے مقام پر تحریک لبیک پاکستان (ٹی ایل پی) کی طرف سے جاری احتجاج اور دھرنے سےعوام کی روز مرہ زندگی اجیرن ہو گئی ارو مشکلات میں اضافہ ہو گیا۔

ایمبولینسوں کو شہر کے اہم اسپتالوں کو جانے والی سڑک سے گزرنے میں بھی پریشانی کا سامنا ہے۔ ٹی ایل پی کے کارکنوں کی جانب سے بہت زیادہ ہجوم اور سڑکوں کی بندش کی وجہ سے عوام کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔

وہ لوگ جو فیض آباد پوائنٹ کے قریب رہتے ہیں یا اسلام آباد یا آس پاس کے علاقوں میں جانے کے لیے اس موڑ کو استعمال کرتے ہیں وہ متبادل راستے استعمال کرنے پر مجبور ہیں، بدقسمتی سے ان کے پاس کوئی متبادل نہیں ہے۔

لوگوں کا کہنا ہے کہ فلسطینیوں کے حق میں احتجاج ضرور ہونا چاہیے لیکن اس کا یہ مطلب نہیں کہ مقامی شہریوں کو مشکلات میں ڈالا جائے۔

ایک مقامی رہائشی بشیر احمد کا کہنا تھا کہ’یہ ایک مذہبی اور سیاسی جماعت ہے اور سڑکیں بلاک کرنا اس جماعت کو زیب نہیں دیتا، کیونکہ اس کا تعلق بنیادی طور پر مذہب سے ہے۔

ٹی ایل پی کے رہنماوں اور کارکنان کا حکومت سے مطالبہ ہے کہ اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہو کو سرکاری طور پر دہشت گرد قرار دیا جائے اور پاکستانی حکام کو قائل کیا جائے کہ وہ غزہ کے لوگوں کو خوراک اور بنیادی اشیاء کی فراہمی یقینی بنائیں۔

 

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll