جی این این سوشل

پاکستان

قومی اسمبلی میں بجٹ پر بحث کے دوران حکومتی اتحادی بھی پھٹ پڑے

ظلم بند کریں، عوام پر حد سے زیادہ ٹیکس نہ لگائیں، فاروق ستار

پر شائع ہوا

کی طرف سے

قومی اسمبلی میں بجٹ پر بحث کے دوران حکومتی اتحادی بھی پھٹ پڑے
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

قومی اسمبلی میں بجٹ پر بحث کے دوران حکومتی اتحادی بھی پھٹ پڑے، ایم کیو ایم کے رہنما فاروق ستار نے بجٹ کو ملکی سلامتی اور بقا کے لیے خطرہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ ظلم بند کریں، عوام پر حد سے زیادہ ٹیکس نہ لگائیں۔

قومی اسمبلی کا اجلاس ڈپٹی اسپیکر سید غلام مصطفی شاہ کی صدارت میں شروع ہوا۔

قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف عمر ایوب نے نکتہ اعتراض پر بات کرتے ہوئے کہا کہ آج پورے پنجاب میں دفعہ 144 نافذ کر دی گئی ہے تمام اپوزیشن الائنس پارٹیوں نے آج احتجاج کی کال دے رکھی ہے، آئی جی پنجاب وزیر وزیراعلی پنجاب کا ٹاؤٹ ہے، ہم پنجاب میں دفعہ 144 نافذ کرنے کی مذمت کرتے ہیں، ہمارے اراکین احتجاج میں شرکت کریں گے ہمارے اراکین کا استحقاق مجروح ہو رہا ہے، ان کی گرفتاریوں کا خدشہ ہے۔

 ڈپٹی اسپیکر قومی اسمبلی غلام مصطفیٰ شاہ نے صوبائی معاملہ قرار دیتے ہوئے کہا امید ہے کہ وہ خود ہی معاملہ حل کر لیں گے جس پر جمشید دستی اپنی نشست پر کھڑے ہو کر کہنے لگے کہ ہماری بات کو سنا جائے یہ سیدھی سیدھی بدمعاشی ہے۔ اجلاس کے دوران ڈپٹی اسپیکر قومی اسمبلی غلام مصطفیٰ شاہ اور جمشید دستی کے درمیان تلخ جملوں کا تبادلہ ہوا۔

ڈپٹی اسپیکر نے جمشید دستی کو فلور دینے سے انکار کرتے ہوئے کہا کہ آپ کی بدمعاشی نہیں چلنے دوں گا، اگر آپ شور شرابہ اور بدمعاشی کرنا چاہتے ہیں تو میں اجلاس ملتوی کردوں گا، آپ مجھے ڈکٹیٹ نہیں کر سکتے کہ کیسے اجلاس چلانا ہے۔ بعد ازاں اسپیکر نے بجٹ 2024-25پر بحث کا آغاز کرواتے ہوئے مائیک ڈاکٹر فاروق ستار کے حوالے کردیا۔

قومی اسمبلی میں اظہار خیال کرتے ہوئے ایم کیو ایم کے رہنما فاروق ستار نے کہا کہ ملک میں ایک بار پھر روایتی بجٹ دے دیا گیا، ملکی سلامتی کے خلاف ایسا بجٹ نقصان دہ ہے، اسٹیٹس کو کی کوک سے روایتی بجٹ جنم لیتا ہے، 77 سال سے ہر سال ایک جیسا بجٹ پیش کیا جارہا ہے۔ پی ٹی آئی کی 4 سال کی حکومت میں بھی روایتی بجٹ پیش کیا گیا، روایتی بجٹ دینا ملک کی سلامتی اور بقا کے لیے خطرہ ہے، عوام دوست، کاروبار دوست بجٹ نہیں بنایا گیا، زمینداروں اور سرمایہ کاروں کو کیا ٹیکسز میں چھوٹ دیتے رہیں؟ دنیا ٹیکس فری رجیم پر جارہی ہے۔

رہنما ایم کیوایم نے کہا کہ بجٹ میں تنخواہ دار طبقے پر ہی بھاری ٹیکسز لگائے گئے ہیں، پی ٹی آئی کی حکومت میں بھی پیٹرولیم لیوی میں اضافہ کیا، پیپلزپارٹی، مسلم لیگ جب اپوزیشن میں تھی تو پیٹرولیم لیوی کی مخالفت کی، ہمیں بجٹ میں تیل، گیس اور پانی کے بلوں میں کمی کرنا ہوگی۔ پاکستان سے سرمایہ باہر جارہا ہے، ملیں بند ہورہی ہیں، 12 لاکھ نوجوان پاکستان چھوڑ کر دوسرے ممالک میں جارہے ہیں، ظلم بند کریں، عام شہریوں پر حد سے زیادہ ٹیکس نہ لگائیں، بجٹ میں جاگیرداروں، وڈیروں کو استثنیٰ دیا گیا ہے۔

فاروق ستار نے کہا کہ معیشت قرضوں کے بوجھ تلے دبی ہوئی ہے، آپ بجلی کی قیمتوں میں خوفناک اضافہ کرتے جارہے ہیں، مہنگائی، بےروزگاری پاکستانی عوام کے بنیادی مسائل ہیں، بے روزگاری کی شرح میں 15 فیصد ہے۔ کراچی میں اسٹریٹ کرائم میں اضافہ ہوا ہے، بچے شہید ہورہے ہیں، احساس محرومی اب احساس بغاوت میں بدل رہا ہے، ڈریں اس وقت سے جب مظفرآباد کی طرح باقی ملک میں عوام سڑکوں پر آجائے، صرف قومی مفاہمت اور ایجنڈے سے ہی آگے بڑھا جاسکتا ہے، سب سیاسی جماعتیں سرجوڑکر بیٹھیں یہ کسی ایک جماعت کے بس میں نہیں۔

دنیا

یو اے ای میں شیخ حسینہ کے خلاف مظاہرہ کرنے پر 57 بنگلہ دیشی گرفتار

تین ملزمان کو گلیوں میں فسادات بھڑکانے کے جرم میں عمر قید جب کہ 53 دیگر کو 10 سال اور ایک کو 11 سال قید کی سزا سنائی گئی

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

یو اے ای میں  شیخ حسینہ کے خلاف مظاہرہ کرنے پر 57 بنگلہ دیشی گرفتار

متحدہ عرب امارات کی ایک عدالت نے خلیجی ریاست میں بنگلادیشی وزیراعظم شیخ حسینہ کے خلاف مظاہرہ کرنے پر 57 بنگلہ دیشیوں کو طویل قید کی سزا سنائی ہے۔

بی بی سی کی رپورٹ میں سرکاری خبر رساں ادارے کا حوالہ دیا گیا جس کے مطابق تین نامعلوم ملزمان کو ”جمعہ کو متحدہ عرب امارات کی کئی گلیوں میں فسادات بھڑکانے“ کے جرم میں عمر قید کی سزا سنائی گئی، جب کہ 53 دیگر کو 10 سال اور ایک کو 11 سال قید کی سزا سنائی گئی۔

مقدمے کی سماعت کے دوران ملزمان کے وکیل کا حوالہ دیا کہ ان اجتماعات کا کوئی مجرمانہ ارادہ نہیں تھا۔ ایمنسٹی انٹرنیشنل متحدہ عرب امارات کے عدالتی فیصلے کی مذمت کی ہے۔

واضح رہے کہ بنگلہ دیش میں سرکاری ملازمتوں کے کوٹا سسٹم کے خلاف احتجاج اور پرتشدد مظاہروں میں فورسز کو امن و امان کی خلاف ورزی کرنے والوں کو دیکھتے ہی گولی مارنے کا حکم دیا ہے جبکہ پُرتشدد مظاہروں میں اموات کی تعداد 150 سے تجاوز کرچکی ہے اور بنگلادیشی وزیراعظم شیخ حسینہ کی حکومت بچانے کیلئے بھارتی فوج بنگلہ دیش پہنچنے کی خبریں ہیں۔ ذرائع کے مطابق بھارتی فوج کی ایک کمپنی مغربی بنگال سے بنگلہ دیش میں داخل ہوئی ہے۔

خیال رہے کہ متحدہ عرب امارات میں احتجاج مؤثر طور پر غیر قانونی ہیں، جہاں غیر ملکی آبادی کا تقریباً 90 فیصد حصہ ہیں۔ بنگلہ دیشی تارکین وطن کا تیسرا سب سے بڑا گروپ ہے۔

 

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

بشریٰ بی بی کی مقدمات کی تفصیلات فراہمی کیلئے درخواست پر اعتراض ختم، سماعت کیلئے مقرر

درخواست گزار نے عدالت عالیہ سے استدعا کی کہ تمام مقدمات اور انکوائریوں کی تفصیلات فراہم کرنے کا حکم دیا جائے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

بشریٰ بی بی کی مقدمات کی تفصیلات فراہمی کیلئے درخواست پر اعتراض ختم، سماعت کیلئے مقرر

لاہور ہائیکورٹ نے بانی پاکستان تحریک انصاف عمران خان کی اہلیہ بشریٰ بی بی کی مقدمات اور انکوائریز کی تفصیلات فراہمی کیلئے دائر درخواست پر رجسٹرار آفس کا اعتراض ختم کر تے ہوئے اپیل کو کل سماعت کے لیے مقرر کرنے کی ہدایت کر دی۔

لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس طارق سلیم نے بشریٰ بی بی کی درخواست پر بطور اعتراض سماعت کی۔

بشریٰ بی بی کی جانب سے دائر درخواست میں مؤقف اختیار کیا گیا کہ بانی پی ٹی آئی کو وزیر اعظم کے عہدے سے ہٹانے کے بعد مقدمات درج کیے جا رہے ہیں، میرے خلاف درج مقدمات اور انکوائریز کی تفصیلات فراہم نہیں کی جا رہیں۔

درخواست گزار نے عدالت عالیہ سے استدعا کی کہ تمام مقدمات اور انکوائریوں کی تفصیلات فراہم کرنے کا حکم دیا جائے۔

درخواست پر رجسٹرار آفس لاہور ہائیکورٹ نے بشریٰ بی بی کی دستاویزات پر انگوٹھے کے نشان نہ ہونے کا اعتراض عائد کیا۔

لاہور ہائیکورٹ نے بشری بی بی کیخلاف درج مقدمات اور انکوائریز کی تفصیلات فراہمی کیلئے درخواست پر رجسٹرار آفس کا اعتراض ختم کرتے ہوئے درخواست کو کل سماعت کے لیے لگانے کی ہدایت کر دی۔

پڑھنا جاری رکھیں

دنیا

اسرائیلی فوج کی ایک بار پھر رہائشی علاقوں پر بمباری، 81 فلسطینی شہید

لاکھوں بے گھر فلسطینیوں کو اسرائیلی فوج کی جانب سے جبری بے دخلی کا حکم دے دیا جبکہ غزہ کے دیگر علاقوں میں بھی صہیونی افواج کے حملے جاری ہیں

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

اسرائیلی فوج کی ایک بار پھر رہائشی علاقوں پر بمباری، 81 فلسطینی شہید

اسرائیلی فوج نے خان یونس میں تیسری بار آپریشن کے دوران رہائشی علاقوں پربمباری کردی، جس کے نتیجے میں 81 نہتے فلسطینی شہید جبکہ 200 سے زائد زخمی ہو گئے۔

لاکھوں بے گھر فلسطینیوں کو اسرائیلی فوج کی جانب سے جبری بے دخلی کا حکم دے دیا جبکہ غزہ کے دیگر علاقوں میں بھی صہیونی افواج کے حملے جاری ہیں۔

غزہ شہر میں اقوام متحدہ امدادی ایجنسی (انروا) کا قافلہ بھی اسرائیلی حملوں کی زد میں آیا۔

علاوہ ازیں غزہ میں مزید 2اسرائیلی یرغمالی ہلاک ہو گئے، اسرائیلی فوج نے یر غمالیوں کی ہلاکت کی تصدیق کر دی، غزہ میں دستی بم دھماکے میں ایک اسرائیلی فوجی بھی ہلاک ہو گیا۔

دوسری طرف لبنان سے حزب اللہ کی جانب سے اسرائیلی فوج کے بنکرز کو ڈرون حملے کا نشانہ بنایا گیا ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll