جی این این سوشل

پاکستان

صوبائی وزیر پی ایچ ای و واسا نور محمد دمڑ نے وزارت سے استعفی دیدیا

کوئٹہ: نور محمد دمڑ نے وزارت سے استعفی کا اعلان کردیا۔

پر شائع ہوا

کی طرف سے

صوبائی وزیر پی ایچ ای و واسا نور محمد دمڑ نے وزارت سے استعفی دیدیا
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

تفصیلات کے مطابق صوبائی وزیر پی ایچ ای و واسا نور محمد دمڑ نے وزارت سے استعفی دیدیا ہے، نور محمد دمڑ  نے کہا کہ  اسمبلی فلور پر کھڑے ہوکر استعفی دیتا ہوں۔

باپ پارٹی کے رکن اسمبلی  نور محمد دمڑ  نے  میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ  میں  اپنی پارٹی کو بچانے کے لئے استعفی دے رہا ہوں۔  وزیر اعلی کے پاس پہلے ہی بہت سے محکمے ہیں یہ محکمہ بھی ان کے حوالے،   اپوزیشن کی جانب سے تحریک عدم اعتماد کا حصہ نہ بننے کی وجہ وزیر اعلی کو موقع فراہم کرنا تھا،   ایک ماہ کی مہلت کے باوجود وزیر اعلی کے رویئے میں تبدیلی نہیں آئی۔

نور محمد دمڑ  کا کہنا تھا کہ   پہلے جام کمال کے ساتھ تھا لیکن انھوں نے پارٹی قیادت کے فیصلوں کی خلاف ورزی کی،  وزیر اعلی نے پہلے ٹوئٹر پر استعفا دیا پھر بچہ گانہ حرکت کرکے واپس لیا،  وزیر اعلی بلوچستان سیاسی بحران کا خاتمہ کرسکتے کہ استعفا دیں۔

قبل ازیں  اسپیکر میر عبدالقدوس بزنجو کی زیر صدارت بلوچستان اسمبلی کا اجلاس ہوا،  اجلاس میں وزیر اعلی جام کمال سمیت اپوزیشن اور ناراض اراکین شریک ہوئے۔ایوان میں ناراض رکن سردار عبدالرحمن کھیتران نے وزیر اعلی بلوچستان کے خلاف تحریک عدم عدم پیش کی۔ایوان میں 33 اراکین نے کھڑے ہوکر تحریک عدم اعتماد کی حمایت کی۔

خیال رہے کہ 11 اکتوبر کو تحریک عدم اعتماد بلوچستان عوامی پارٹی (بی اے پی) کے 11، بی این پی کے 2 اور پی ٹی آئی کے ایک رکن اسمبلی نے جمع کرائی تھی ۔  تحریک عدم اعتماد کامیاب کروانے کے لیے ناراض اراکین کو سادہ اکثریت کی ضرورت ہو گی۔

علی رضا گزشتہ ڈیڑھ سال سے ویب جرنلسٹ کے طور پر کام کر رہے ہیں۔ انہوں نے پنجاب یونیورسٹی سے گریجویشن کیا ہے۔ علی رضا اس سے قبل معروف نیوز آرگنائزیشنز کے لیے کام کر چکے ہیں اور اب جی این این کے ساتھ بطور سینئر کنٹینٹ رائٹر وابستہ ہیں۔

پاکستان

پاکستان میں کورونا سے اموات اور کیسز کی شرح میں کمی کارجحان  برقرار 

اسلام آباد:  پاکستان میں کورونا وائرس سے اموات اور کیسز کی شرح میں بتدریج کمی آرہی ہے،   گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران کورونا کے مثبت کیسز کی شرح 1.1فیصد رہی۔

پر شائع ہوا

Asma Rafi

کی طرف سے

پاکستان میں کورونا سے اموات اور کیسز کی شرح میں کمی کارجحان  برقرار 

نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر کی جانب سے جاری کیے گئے تازہ اعداد و شمارکے مطابق  ملک میں کورونا وائرس کی  چوتھی  لہر کے دوران ملک میں  مزید10 افراد  انتقال  کرگئے جبکہ 475نئے کیسز رپورٹ ہوئے ۔ 

ملک میں کورونا سے  اموات کی تعداد 28ہزار 728 ہوگئی ہے اور مجموعی کیسز 12 لاکھ 42ہزار 236تک جاپہنچے ہیں۔  

این سی اوسی  کے مطابق پاکستان میں کوروناکے905مریضوں کی حالت تشویشناک ہے ۔جبکہ چوبیس گھنٹے کے دوران  42 ہزار 577افراد کے ٹیسٹ کئےگئے گئے ۔

ملک میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران مزید 327افراد کورونا وائرس سے صحتیاب ہوئے ہیں ۔ اب تک  95.9 فیصد مریض کوویڈ سے صحت یاب ہوئے ، اب تک   مجموعی طور پر 12 لاکھ 42ہزار 236 مریض کورونا سےصحت یاب ہوچکےہیں۔

واضح رہے کہ پاکستان میں کورونا وائرس کا پہلا کیس 26 فروری 2020 کو ملک کے سب سے بڑے شہر کراچی میں سامنے آیا تھا۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹیکنالوجی

ٹوئٹر کے  سی ای او اپنے عہدے سے مستعفی

جیک ڈور نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر کے سی ای او کی حیثیت سے الگ ہونے کا اعلان کردیا ہے۔

پر شائع ہوا

Umar Nawaz

کی طرف سے

ٹوئٹر کے  سی ای او اپنے عہدے سے مستعفی

تفصیلات کے مطابق جیک ڈورسے کو اس سے قبل بھی 2008 میں ٹوئٹر سی ای او کا عہدہ چھوڑ چکے ہیں مگر وہ 2015 میں دوبارہ سی ای او بنے۔

جیک ڈور اسکوائر نامی کمپنی کے سی ای او کے طور پر کام کرتے رہیں گے۔

ایک بیان میں انہوں نے کہا ہے کہ میں نے ٹوئٹر کو چھوڑنے کا فیصلہ اس لیے کیا کیونکہ میرا ماننا ہے کہ کمپنی اب اپنے بانیوں کے بغیر آگے بڑھنے کے لیے تیار ہے، پراگ پر ٹوئٹر کے سی ای او کے طور پر میرا اعتماد بہت زیادہ ہے، گزشتہ 10 برسوں کے دوران ان کا کام کمپنی کو بدل دینے والا تھا۔

کمپنی کے مطابق  سی ٹی وی پراگ اگروال سی ای او کا عہدہ سنبھالیں گے جبکہ جیک ڈورسے بورڈ آف ڈائریکٹرز میں موجود رہیں گے۔

پراگ اگروال نے 2011 میں ایڈ انجنیئر کے طور پر کمپنی میں شمولیت اختیار کی تھی اور 2018 میں سی ٹی او بن گئے تھے۔

 

 

 

 

پڑھنا جاری رکھیں

صحت

فائزر نے کورونا کی امیکرون قسم کیخلاف ویکسین پر کام شروع کردیا، سی ای او

سی ای او فائزر کا کہنا ہے کہ  ہم کورونا کے امیکرون ویرینٹ کے خلاف ویکسین پر کام شروع کردیا ہے۔

پر شائع ہوا

Ali Raza

کی طرف سے

فائزر نے کورونا کی امیکرون قسم کیخلاف ویکسین پر کام شروع کردیا، سی ای او

بورلا نے غیرملکی خبر رساں ادارے کو بتایا کہ ان کی کمپنی نے امیکرون  ویریئنٹ کے خلاف موجودہ ویکسین کی جانچ شروع کردی ہے۔

بورلا نے کہا ، "مجھے نہیں لگتا کہ نتیجہ یہ نکلے گا کہ ویکسین حفاظت نہیں کرتی ہیں۔" لیکن تجربے سے یہ ظاہرہوسکتا ہے کہ موجودہ شاٹس "کم حفاظت کرتے ہیں،" جس کا مطلب ہے کہ "ہمیں ایک نئی ویکسین بنانے کی ضرورت ہے۔"

انہوں نے کہا، "جمعہ کو ہم نے اپنا پہلا ڈی این اے ٹیمپلیٹ بنایا، جو کہ ایک نئی ویکسین کی نشوونما کے عمل کا پہلا ممکنہ اثر ہے۔"

بورلا نے صورتحال کو اس سال کے شروع میں اس منظر نامے سے تشبیہ دی جب فائزر اور اس کے جرمن پارٹنر BioNTech نے 95 دنوں میں ایک ویکسین تیار کی جب یہ خدشات تھے کہ پچھلا فارمولا ڈیلٹا ویرینٹ کے خلاف کام نہیں کرے گا۔

ان کا کہنا تھا کہ موجودہ ویکسین ڈیلٹا کے خلاف "بہت موثر" ہے، انہوں نے مزید کہا کہ کمپنیاں 2022 میں ویکسین کی چار بلین خوراکیں تیار کرنے کے قابل ہو جائیں گی۔

خیال رہے کہ  عالمی ادارہ صحت نے خبردار کیا کہ امیکرون  کی نئی قسم عالمی سطح پر "بہت زیادہ" خطرہ ہے۔

بورلا نے کہا کہ وہ اس بات پر بھی "بہت پر اعتماد" ہیں کہ فائزر کی حال ہی میں منظر عام پر آنے والی اینٹی وائرل گولی اومیکرون سمیت تغیرات کی وجہ سے ہونے والے انفیکشن کے علاج کے طور پر کام کرے گی۔ فائزر کی گولی سے ہسپتال میں داخل ہونے یا موت کو تقریباً 90 فیصد تک کم کیا گیا ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll