جی این این سوشل

پاکستان

سپریم کورٹ نے ارشد شریف قتل کا مقدمہ درج کرنے کا حکم دے دیا

اسلام آباد : سپریم کورٹ نے ارشد شریف قتل کا مقدمہ درج کرنے کا حکم دے دیا۔

پر شائع ہوا

کی طرف سے

سپریم کورٹ  نے   ارشد شریف قتل  کا مقدمہ درج کرنے کا حکم دے دیا
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

جی این این کےمطابق ارشد شریف قتل پر ازخود نوٹس کیس کی سماعت چیف جسٹس عمر عطا بندیال کی سربراہی مین 5 رکنی لارجر بینچ نے کی، پانچ رکنی لارجر بینچ میں جسٹس اعجازالاحسن، جسٹس جمال خان مندوخیل، جسٹس مظاہرعلی اکبرنقوی اور جسٹس محمد علی مظہر  شامل تھے۔

سپریم کورٹ  نے  حکومت کو آج ہی فیکٹ فائنڈنگ رپورٹ پیش کرنے کا حکم دے دیا ۔

دوران سماعت چيف جسٹس نے استفسار کیا کہ سپریم کورٹ کا انسانی حقوق سیل ارشدشریف کی والدہ کےخط پر کام کررہا ہے ، فیکٹ فائنڈنگ کمیٹی کوواپس آئےکافی عرصہ ہوگیا، حکومتی کمیشن کی حتمی رپورٹ تاحال سپریم کورٹ کو کیوں نہیں ملی؟۔

چیف جسٹس کے استفسار پر ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے کہا کہ جب رپورٹ آئی وزیر داخلہ فیصل آباد میں تھے، رانا ثناء اللہ کے دیکھنے کے بعد رپورٹ سپریم کورٹ کو دی جائے گی۔

ایڈیشنل اٹارنی جنرل کی بات پر چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ کیا وزیر داخلہ نے رپورٹ تبدیل کرنی ہے؟ وزیرداخلہ کو ابھی بلا لیتے ہیں،  تحقیقاتی رپورٹ تک رسائی سب کا حق ہے، صحافی قتل ہو گیا، سامنے آنا چاہیے کہ کس نے قتل کیا۔

ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے کہا کہ کل تک رپورٹ سپریم کورٹ ميں جمع کروادیں گے، جس پر چیف جسٹس نے ہدایت کی کہ 43 دن سے رپورٹ کا انتظار کررہے ہیں، آج جمع کرائیں تاکہ کل اس پر سماعت ہو سکے۔

اس سے قبل  سپریم کورٹ کی جانب سے وزارت داخلہ، وزارت خارجہ اور اطلاعات کے سیکرٹریز کو نوٹس جاری کردیے گئے ہیں، ڈی جی ایف آئی اے، ڈی جی آئی اور پی ایف یو جے کے صدر کو بھی نوٹس جاری کیے گئے ہیں۔

یاد رہے کہ کچھ روز قبل  سابق وزیر اعظم عمران خان نے سینیئر صحافی ارشد شریف کے قتل کیس کی تحقیقات کے لیے چیف جسٹس آف پاکستان کو خط لکھا تھا۔

واضح رہے کہ پاکستان کے نامور صحافی اور اینکر پرسن ارشد شریف کو کینیا میں قتل کر دیا گیا تھا۔

پاکستان

مینڈیٹ چوری کرکے ایوان میں آنا جمہوریت کے منافی ہے، بیرسٹر گوہر

پارلیمان میں صرف وہ لوگ جائیں جو لوگوں کے مینڈیٹ پر آئے ہیں، رہنما پی ٹی آئی

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

مینڈیٹ چوری کرکے ایوان میں آنا جمہوریت کے منافی ہے، بیرسٹر گوہر

پاکستان تحریک انصاف کے رہنماؤں بیرسٹر گوہر نے کہا کہ پارلیمنٹ میں صرف وہی نمائندہ کہلا سکتا ہے جس کے پاس مینڈیٹ ہو، مینڈیٹ چوری کرکے ایوان میں آنا جمہوریت کے منافی ہے۔پارلیمنٹ کو ہمیشہ اپنی مدت پوری کرنی چاہیے۔

بیرسٹر گوہر نے پارلیمنٹ آمد پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اس مرتبہ ففتھ جنریشن والی دھاندلی ہوئی ہے کسی کا مینڈیٹ چوری کر کے پارلیمان میں نہیں آنا چاہیے۔ پارلیمان میں صرف وہ لوگ جائیں جو لوگوں کے مینڈیٹ پر آئے ہیں۔ 

انہوں نے کہا کہ اصل مقصد یہ ہونا چاہیے کہ پارلیمان مضبوط ہو اور یہی اصل مقصد جمہوریت کا ہوتا ہے۔ کسی کا مینڈیٹ چوری کرکے ایوان میں آنا جمہوریت کی روح کےمنافی ہے۔

 

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

مولانا فضل الرحمان کا اسپیکر و ڈپٹی اسپیکر کے انتخابات کا بائیکاٹ کا اعلان

اسمبلی میں اپوزیشن میں بیٹھیں گے، سربراہ جمعت علماء اسلام

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

مولانا فضل الرحمان کا اسپیکر و  ڈپٹی اسپیکر کے انتخابات کا بائیکاٹ کا اعلان

جمعیت علمائے اسلام (جے یو آئی )کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کا قومی اسملبی میں انتخابی عمل کے بائیکاٹ کا اعلان  کردیا۔

مولانا فضل الرحمان نے صدر، وزیراعظم، سپیکر اور ڈپٹی سپیکر کے انتخابی عمل کاحصہ نہ بننے کا فیصلہ کیا، مولانا فضل الرحمان کا کہناتھا کہ ہماری یہ پالیسی بنی ہے کہ ہم ووٹ استعمال نہیں کریں گے اور اسمبلی میں اپوزیشن میں بیٹھیں گے۔

جمعیت علماء اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ اسمبلی پانچ سال پورے کرتی نظر نہیں آتی۔ یہ اسمبلی تو نہیں، کوئی اور چیز ہے۔

 

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

پی ٹی آئی کے متعدد اراکین کا اپنے قائد سے محبت کا انوکھا اندار

علی محمد خان سمیت متعدد اراکین کی عمران خان کے چہرے کا ماسک پہن کر قومی اسمبلی اجلاس میں شرکت

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

پی ٹی آئی کے متعدد اراکین  کا اپنے قائد   سے محبت کا انوکھا  اندار

قومی اسمبلی کے سولہویں اجلاس میں کئی ارکان ایوان میں بانی پی ٹی آئی عمران خان کا ماسک پہن کر پہنچ گئے۔

 قومی اسمبلی کے اجلاس میں پی ٹی آئی رہنما  شیر افضل مروت اور علی محمد خان نے  اپنے قائد عمران خان کا روپ اختیار کرلیا۔

 پی ٹی آئی نے اپنے آفیشل ٹوئٹر اکاؤنٹ  پر ارکان کی ماسک پہنے تصویر شیئر کی جس کے کیپشن میں لکھا کہ "عمران تو ہو گا کیونکہ قوم نے مینڈیٹ صرف عمران خان کو ہی دیا ہے"۔

علی محمد خان نےسماجی رابطے کی سائٹ ایکس پر جاری پیغام میں اپنے چاہنے والوں سے سوال کیا کہ "کون بچائے گا پاکستان؟" ساتھ ہی اپنی تصویر شیئر کی۔

 موجودہ قومی اسمبلی کا ایوان 336 ارکان پر مشتمل ہے، قومی اسمبلی کی 266 نشستوں پر براہِ راست انتخابات کے ذریعے ارکان منتخب ہوتے ہیں، باقی ارکان مخصوص نشستوں پر ایوان کا حصہ بنتے ہیں.

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll