جی این این سوشل

پاکستان

آئی ایم ایف کا شکنجہ سخت ،پاکستان سے 500ارب کے ٹیکسز لگانے کا مطالبہ

تکنیکی سطح کے مذاکرات میں آئی ایم ایف کا ڈومور کا مطالبہ

پر شائع ہوا

کی طرف سے

آئی ایم ایف کا شکنجہ سخت ،پاکستان سے 500ارب کے ٹیکسز لگانے کا مطالبہ
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

اسلام آباد: تکنیکی سطح کے مذاکرات میں عالمی مالیاتی فنڈز(آئی ایم ایف) نے معاشی ٹیم سے ڈو مور کا مطالبہ کر دیا، اضافی ٹیکس نہ لگائے گئے تو اخراجات پورے نہیں ہوں گے۔

عالمی مالیاتی فنڈزنے مذاکرات میں 200 ارب کے بجائے 500 ارب تک نئے ٹیکسز لگانے کی تجویز دیدی، نجکاری پروگرام میں سست روی، گردشی قرضہ کے باعث اضافی ٹیکس لگیں گے۔

آئی ایم ایف نے ڈیزل پر فوری لیوی بڑھا کر ٹارگٹ پورا کرنے کا بھی مطالبہ کیا ہے، پٹرولیم مصنوعات پر سیلز ٹیکس کا حتمی فیصلہ پالیسی سطح کے مذاکرات میں ہوگا، وزارت خزانہ حکام آئی ایم ایف کے مطالبات وزیراعظم کے سامنے رکھیں گے۔

پاکستان اور آئی ایم ایف کے پالیسی سطح کے مذاکرات میں آرڈیننس پر بات چیت طے پاجائیگی جائے گی۔

علاقائی

ایرانی صدر کی پاکستان آمد پر کل لاہور میں مقامی تعطیل کا اعلان

نوٹیفکیشن کے مطابق ایران کے صدر ابراہیم رئیسی کے دورہ لاہور کے باعث کل شہر میں مقامی عام تعطیل ہوگی ،کل تمام تعلیمی ادارے سکول کالج یونیورسٹی بند ہونگے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

ایرانی صدر کی  پاکستان آمد پر کل لاہور میں مقامی تعطیل کا اعلان

لاہور: ایرانی  صدر ابراہیم رئیسی اور وفد کے دورے  کے باعث لاہور میں کل مقامی تعطیل ہو گی ۔ 

تفصیلات کے مطابق تعطیل کا نوٹیفکیشن بھی  پنجاب حکومت کی جانب سے جاری کر دیا گیا ہے ، نوٹیفکیشن کے مطابق ایران کے صدر ابراہیم رئیسی کے دورہ لاہور کے باعث کل شہر میں مقامی عام تعطیل ہوگی ،کل تمام تعلیمی ادارے سکول کالج یونیورسٹی بند ہونگے ،تاہم پنجاب سو ل سیکرٹریٹ اور ڈویژنل دفاتر کھلے رہیں گے ۔ 

واضح رہے کہ  ڈی سی آفس اور ضلعی دفاتر بھی  بند ہونگے۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

پاکستان اور ایران کے مابین سکیورٹی اور تجارت سمیت مختلف ایم او یوز پر دستخط

سائنس و ٹیکنالوجی، ویٹرنری ہیلتھ، ثقافت اور عدالتی امور سمیت مختلف شعبوں میں تعاون کے فروغ کے لئے 8 معاہدوں اور مفاہمت کی یادداشتوں پر دستخط کر دیئے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

پاکستان اور ایران کے مابین سکیورٹی اور تجارت سمیت مختلف ایم او یوز  پر دستخط

پاکستان اور ایران نے سکیورٹی، تجارت، سائنس و ٹیکنالوجی، ویٹرنری ہیلتھ، ثقافت اور عدالتی امور سمیت مختلف شعبوں میں تعاون کے فروغ کے لئے 8 معاہدوں اور مفاہمت کی یادداشتوں پر دستخط کر دیئے۔

دستخطوں کی تقریب پیر کو وزیراعظم ہائوس میں منعقد ہوئی۔ اس موقع پر وزیراعظم شہباز شریف اور ایران کے صدر ڈاکٹر سید ابراہیم رئیسی بھی موجود تھے۔ دونوں ممالک کے درمیان سکیورٹی کے شعبے میں تعاون کے معاہدے کی توثیق کر دی گئی۔

سول معاملات میں تعاون کے لئے عدالتی معاونت کے معاہدے پر وفاقی وزیر قانون و انصاف اعظم نذیر تارڑ اور ایرانی کے وزیر انصاف امین حسین رحیمی نے دستخط کیے۔ دونوں ممالک کے درمیان ویٹرنری و حیوانات کی صحت کے شعبے میں تعاون کے معاہدے پر بھی دستخط کیے گئے۔ معاہدے پر نیشنل فوڈ سکیورٹی اینڈ ریسرچ کے وزیر رانا تنویر حسین اور ایران کے وزیر زراعت جہاد محمد علی نیک بخت نے دستخط کئے۔

پاکستان اور ایران کے درمیان جوائنٹ فری اکنامک زون؍سپیشل اکنامک زون کے قیام کے لئے مفاہمت کی یادداشت پر سیکرٹری سرمایہ کاری بورڈ عنبرین افتخار اور ایران کے مشیر برائے صدر و سپریم کونسل آف فری ٹریڈ انڈسٹریل اینڈ سپیشل اکنامک زونز کے سیکرٹری حجت اللہ عبد المالکی نے دستخط کئے۔

ایران کی وزارت کوآپریٹو لیبر اینڈ سوشل ویلفیئر اور وزارت سمندر پار پاکستانیز و پاکستان کی انسانی وسائل کی ترقی کے درمیان تعاون کے ایک مفاہمت کی یادداشت پر وفاقی وزیر اوورسیز پاکستانیز چوہدری سالک حسین اور ایران کے وزیر برائے روڈ و شہری ترقی مہرداد بازرپاش نے دستخط کیے۔

دونوں فریقین نے پاکستان سٹینڈرڈ اینڈ کوالٹی کنٹرول اتھارٹی وزارت سائنس و ٹیکنالوجی اور ایران کی نیشنل سٹینڈرڈ آرگنائزیشن کے درمیان تعاون کے لئے مفاہمت کی یادداشت پر دستخط کئے۔

مفاہمت کی یادداشت پر وفاقی وزیر سائنس و ٹیکنالوجی ڈاکٹر خالد مقبول صدیقی اور ایران کے وزیر برائےسڑکیں و شہری ترقی مہرداد بازرپاش نے دستخط کیے۔ پاکستان اور ایران نے میوچل لیگل کو آپریشن کے لئے مفاہمت کی یادداشت پر بھی دستخط کئے ہیں۔

مفاہمت کی یادداشت پر وزیر قانون و انصاف اعظم نذیر تارڑ اور وزیر انصاف امین حسین رحیمی نے دستخط کیے۔ پاکستان کی وزارت اطلاعات و نشریات اور ایران کی آرگنائزیشن آف سینما اینڈ آڈیو ویژوئل افیئرز کے درمیان دونوں ممالک میں فلموں کے تبادلے اور تعاون کو فروغ دینے کے لیے ایک مفاہمت کی یادداشت پر دستخط کیے گئے۔ اس ایم او یو پر وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات عطا اللہ تارڑ اور ایران کے وزیر ثقافت و اسلامی رہنمائی محمد مہدی اسماعیلی نے دستخط کئے

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

علی امین گنڈا پور کا الیکشن کمیشن سے مخصوص نشستوں کی واپسی کا مطالبہ

ضمنی انتخابات میں ہم نے سنی اتحاد کونسل کے ٹکٹ پر سیٹیں حاصل کیں، اس لیے اب انہیں یہ حق حاصل ہے کہ وہ مخصوص نشستیں واپس مانگیں، وزیر اعلیٰ کے پی

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

علی امین گنڈا پور کا الیکشن کمیشن سے مخصوص نشستوں کی واپسی کا مطالبہ

وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا علی امین گنڈا پور نے الیکشن کمیشن آف پاکستان (ای سی پی) پر سخت تنقید کرتے ہوئے کہا کہ اب وہ بے نقاب ہو گئے ہیں، ہم  آپ سے درخواست کرتا ہوں کہ ہمیں ہماری مخصوص نشستیں واپس دیں۔

پشاور میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا علی امین گنڈا پور نے کہا کہ چیف الیکشن کمشنر قانون پر عمل کریں اور پی ٹی آئی کی حمایت یافتہ سنی اتحاد کونسل کو ان کے جائز حقوق دیں۔ انہوں نے خبردار کیا کہ اگر ای سی پی نے انہیں ان کا حق واپس نہ دیا تو وہ اپنے حقوق کی واپسی کے لیے ہر حد تک جائیں گے۔

انہوں نے مزید کہا کہ مخصوص نشستوں کے حوالے سے اپنے حقوق کے لیے اپیل دائر کرنے کے لیے متعلقہ فورم سے رجوع کریں گے۔ضمنی انتخابات میں ہم نے سنی اتحاد کونسل کے ٹکٹ پر سیٹیں حاصل کیں، اس لیے اب انہیں یہ حق حاصل ہے کہ وہ مخصوص نشستیں واپس مانگیں۔

کے پی کے وزیراعلیٰ نے کہا کہ جو لوگ مینڈیٹ کے بغیر اقتدار میں بیٹھے ہیں وہ ہمیں مجبور نہ کریں۔ خیبر پختونخوا کے لیے ان کی واجب الادا رقم بھی حاصل کریں گےاور صوبے کے حقوق کے لیے آواز اٹھاتے رہیں گے۔ہم اس لاقانونیت کو مزید نہیں ہونے دیں گے۔ ہم اپنے صوبے کے لیے کھڑے ہوں گے۔

ضمنی انتخابات سے متعلق سوال کے جواب میں کے پی کے کے وزیراعلیٰ گنڈا پور نے کہا کہ پنجاب میں کل ہونے والے انتخابات میں بڑے پیمانے پر دھاندلی کی گئی۔

علی امین گنڈاپور کا کہنا تھا کہ ہمارےامیدواروں کوانتخابی مہم نہیں چلانےدی گئی ، ہم نےخیبرپختونخوامیں سب کومکمل آزادی دی ، پنجاب میں کچھ نشستوں پرپہلےسےزیادہ ووٹ ملے۔

بجلی کی بدترین لوڈشیڈنگ پرعلی امین گنڈاپور کا کہنا تھا کہ وفاق سےخط ملا کہ بجلی چوری پربات کرناچاہتےہیں، لیکن یہاں بات چیت سے پہلے ہی واپڈا کے ذریعے وفاق نے کارروائیاں شروع کر دیں۔

انہوں نے کہاکہ ہمارے لوگوں کوچورچورنہ کہا جائے، چوری ہم نہیں کرتے،آپ کاڈپارٹمنٹ کرواتاہے، مجھ سےبات کریں،عوام سےمیں بات کروں گا، اپنی عوام کیلئےچورکا لفظ برداشت نہیں کروں گا، اگر میں صوبے کا حق نہیں لےسکتا تو کرسی پر بیٹھنے کا کوئی حق نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ وہ صوبے لوگوں کو زیادہ سے زیادہ ریلیف فراہم کریں گے، اور انہوں نے انہیں ہیلتھ کارڈ کی سہولت فراہم کی کیونکہ وہ علاج کے اخراجات برداشت نہیں کر سکتے تھے۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll