جی این این سوشل

پاکستان

سپریم کورٹ کا چار رکنی بنچ ایک بار پھر تحلیل

جسٹس جمال نے کہا کہ ان کی مشاورت سے کچھ نہیں ہوا

پر شائع ہوا

کی طرف سے

سپریم کورٹ کا چار رکنی بنچ ایک بار پھر تحلیل
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

اسلام آباد: سپریم کورٹ آف پاکستان کا پانچ رکنی بینچ جمعہ کو دوبارہ تحلیل ہوگیا جب جسٹس جمال خان مندوخیل نے پنجاب اور خیبر پختونخواہ کے انتخابات کی تاریخ میں تاخیر کے کیس کی سماعت سے خود کو بچا لیا۔

تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس پاکستان (سی جے پی) عمر عطا بندیال کی سربراہی میں 4 رکنی بینچ جسٹس اعجاز الاحسن، جسٹس منیب اختر اور جسٹس جمال خان مندوخیل پر مشتمل تھا۔

جسٹس جمال نے اختلافی نوٹ جاری کیا تھا جس میں کہا گیا تھا کہ یہ حکم کھلی عدالت میں نہیں لکھا گیا اور آرڈر لکھتے وقت ان سے مشاورت نہیں کی گئی۔

ان کے نوٹ میں مزید کہا گیا کہ جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کے فیصلے پر کھلی عدالت میں نظرثانی کی جائے۔

تاہم چیف جسٹس عمر نے کہا کہ کچھ عرصے میں دوبارہ بنچ تشکیل دیا جائے گا۔

اس سے قبل جمعرات کو سپریم کورٹ کا پانچ رکنی لارجر بنچ تحلیل ہو گیا تھا کیونکہ جسٹس امین الدین خان نے پنجاب اور خیبر پختونخواہ (کے پی) میں انتخابات کی تاریخ میں تاخیر کے کیس کی سماعت سے معذرت کر لی تھی۔

جسٹس امین الدین نے فیصلہ جسٹس فائز عیسیٰ کیس کے بعد واضح کیا۔

کوئی تفصیلات فراہم کیے بغیر، انہوں نے واضح طور پر کہا: ’’میں بینچ پر نہیں بیٹھ سکتا‘‘۔

توقع کی جارہی تھی کہ انتخابات کی تاریخ کا حتمی اعلان آج کی سماعت میں کیا جائے گا جو آج (جمعہ کو) 11:30 بجے شروع ہونا تھا۔ گزشتہ تین دنوں سے سماعت جاری تھی۔

قابل ذکر بات یہ ہے کہ عدالت نے 1 مارچ کو جو فیصلہ دیا تھا اسے 3-4 یا 2-3 کے مارجن سے تقسیم کیا گیا تھا۔ تاہم توقع ہے کہ اٹارنی جنرل حتمی فیصلہ سنانے میں عدالت کی معاونت کریں گے۔

جرم

پنجاب میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 1358 سڑک حادثات میں 3 افراد جاں بحق

ٹریفک پولیس نے کہا  کہ 808 ڈرائیورز، 56 کم عمر ڈرائیورز، 153 پیدل چلنے والے، اور 516 مسافر سڑکوں پر ٹریفک حادثات کا شکار ہوئے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

پنجاب میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 1358 سڑک حادثات میں 3 افراد جاں بحق

لاہور: ایمرجنسی سروسز ڈیپارٹمنٹ  نے گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران پنجاب کے تمام 37 اضلاع میں 1358 روڈ ٹریفک کریشز کا ان آر ٹی سی جمع کرادیا ۔

ان آر ٹی سی میں 13 لوگوں کی موت ہوئی، جب کہ 1464 زخمی ہوئے ، ان میں سے 686 شدید زخمیوں کو مختلف ہسپتالوں میں منتقل کیا گیا جبکہ 778 معمولی زخمیوں کو ریسکیو میڈیکل ٹیموں نے جائے حادثہ پر ہی طبی امداد دی ۔اکثریت (76%) میں موٹر بائیکس شامل ہیں، اس لیے ٹریفک قوانین کا موثر نفاذ اور لین ڈسپلن سڑکوں پر ٹریفک حادثات کی بڑھتی ہوئی تعداد کو کم کرنے کے لیے ضروری ہے۔

ٹریفک پولیس نے کہا  کہ 808 ڈرائیورز، 56 کم عمر ڈرائیورز، 153 پیدل چلنے والے، اور 516 مسافر سڑکوں پر ٹریفک حادثات کا شکار ہوئے، تفصیلات میں مزید بتایا گیا ہے کہ روڈ ٹریفک حادثات میں 1477 متاثرین متاثر ہوئے جن میں 1210 مرد اور 267 خواتین شامل ہیں، جب کہ متاثرین کی عمر کے گروپ کے مطابق 220 کی عمریں 18 سال سے کم تھیں، 808 کی عمریں 18 سے 40 سال کے درمیان تھیں اور باقی 449 متاثرین تھے۔  اعداد و شمار کے مطابق مذکورہ سڑک ٹریفک حادثات میں 1209 موٹر سائیکلیں، 66 آٹو رکشے، 152 موٹر کاریں، 35 وین، 19 مسافر بسیں، 42 ٹرک اور 117 دیگر اقسام کی آٹو گاڑیاں اور سست رفتاری سے چلنے والی گاڑیاں شامل تھیں۔

اعداد و شمار سے پتہ چلتا ہے کہ لاہور میں 267 آر ٹی سیز رپورٹ ہوئے جن میں 293 افراد متاثر ہوئے جس میں صوبائی دارالحکومت فہرست میں سب سے اوپر ہے، اس کے بعد ملتان 100 متاثرین کے ساتھ 107 اور تیسرے نمبر پر فیصل آباد 85 آر ٹی سیز اور 86 متاثرین کے ساتھ تیسرے نمبر پر ہے۔



پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

حکومت پنجاب نے بارکونسل کے لیے ایک ارب  روپے مختص کیے، وزیر قانون

اعظم نذیر تارڑ نے کہا کہ   نہتے وکلاء پر لاہور میں تشدد کیا گیا، وکلاء دہشت گرد نہیں آئین اور قانون کے محافظ ہیں

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

حکومت پنجاب نے بارکونسل کے لیے ایک ارب  روپے مختص کیے، وزیر قانون

وفاقی وزیر قانون  اعظم نذیر تارڑ کا کہنا ہے کہ  وکلاء دہشت گرد نہیں آئین اور قانون کے محافظ ہیں۔

پنجاب بار کونسل میں  تقریب سے خطاب کرتے ہوئے  وفاقی وزیر قانون اعظم نذیر تارڑ کا  کہنا تھا کہ  وکلاء کی فلاح کے لیے حکومت کام کررہی ہے،حکومت پنجاب نے بارکونسل کے لیے ایک ارب  روپے مختص کیے ہیں۔

اعظم نذیر تارڑ نے کہا کہ   نہتے وکلاء پر لاہور میں تشدد کیا گیا۔وکلاء دہشت گرد نہیں آئین اور قانون کے محافظ ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ اٹک میں وکلاء کے قتل پر وزیر اعلیٰ مریم نواز نے فوری نوٹس لیا۔ وزیر اعلیٰ کے حکم پر پولیس نے ملزم کو فوری حراست میں لیا۔

وفاقی وزیر قانون نے کہا کہ  ملک میں جمہوری عمل کو رکنے نہیں دیں گے۔ہم نے صعوبتیں برداشت کیں لیکن جمہوری عمل کو رکنے نہیں دیا۔

 

پڑھنا جاری رکھیں

تفریح

زینب جمیل قاتلانہ کیس:ملزم کی ضمانت منظور

ملزم محمد جمیل کو 20 جون تک عدالت نے گرفتارنہ کرنےکا حکم دے دیا ہے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

زینب جمیل قاتلانہ کیس:ملزم کی ضمانت منظور

پاکستان کی سابقہ اداکارہ و ماڈل زینب جمیل پر قاتلانہ حملے میں اہم پیشرفت ہوئی ہے۔ عدالت نے سابقہ اداکارہ زینب جمیل کے قاتلانہ حملے میں ملوث مرکزی ملزم کی ضمانت منظور کر لی۔

ذرائع کے مطابق مذہب اسلام کی خاطر شوبز انڈسٹری کو خیر باد کہنے والی پاکستانی اداکارہ و ماڈل زینب جمیل پر جان لیوا حملے میں ملوث ملزم انکے شوہر محمد جمیل کی ضمانت منظور کرتےہوئے گرفتاری سے روک دیا۔

لاہور کی سیشن عدالت نے زینب جمیل پر قاتلانہ حملے سے متعلق کیس کی سماعت کی۔ ایڈیشنل سیشن جج قمر عباس نے سماعت کرتے ہوئے ملزم شوہرمحمد جمیل کی عبوری ضمانت منظور کر لی ہے ۔

ملزم محمد جمیل کو 20 جون تک عدالت نے گرفتارنہ کرنےکا حکم دے دیا ہے، دوسری جانب ملزم کو شامل تفتیش ہونے کا حکم دے دیا ہے۔

علاوہ ازیں عدالت نے کیس کی آئندہ سماعت پر پولیس سے رپورٹ بھی طلب کرلی ہے۔

یاد رہے کہ گزشتہ ماہ لاہور کے علاقے ڈیفنس میں زینب جمیل پر قاتلانہ حملہ اس وقت ہوا جب وہ اپنے سیلون کے باہر اپنی گاڑی میں آ کر رکی ہی تھیں، اسی دوران 2 موٹر سائیکل سوار حملہ آور فائرنگ کر کے موقع سے فرار ہو گئے تھے۔

اداکارہ زینب جمیل کو اس حملے میں 6 گولیاں لگی تھیں، ہسپتال میں علاج کے دوران انہوں نے اپنے شوہر پر حملے کا الزام لگایا تھا۔لاہور کے تھانہ ڈیفنس میں پولیس نے انکے شوہر محمد جمیل کے خلاف مقدمہ درج کر کے تحقیقات شروع کر دیں تھیں۔ 

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll