جی این این سوشل

پاکستان

لسبیلہ: پولیس موبائل کی گاڑی کو حادثہ، 5 اہلکار جاں بحق

لاشوں اور زخمی ہونے والوں کو ڈسٹرکٹ ہسپتال اوتھل منتقل کر دیا جہاں زخمیوں کو طبی امداد دی جا رہی ہے

پر شائع ہوا

کی طرف سے

لسبیلہ: پولیس موبائل کی گاڑی کو حادثہ، 5 اہلکار جاں بحق
لسبیلہ: پولیس موبائل کی گاڑی کو حادثہ، 5 اہلکار جاں بحق

لسبیلہ میں پولیس موبائل کو حادثہ ٹائر پھٹنے کی وجہ سے پیش آیا جس کے نتیجے میں 5 اہلکار جاں بحق جبکہ 2 زخمی ہو گئے۔

ذرائعکے مطابق پولیس موبائل کو افسوسناک حادثہ بلوچستان کے علاقے لسبیلہ میں دبئی مسجد کے قریب پیش آیا جہاں معمول کی گشت پر موجود پولیس موبائل کا ٹائر اچانک پھٹ گیا جس کی وجہ سے گاڑی الٹ گئی، حادثے کے نتیجے میں 5 افراد موقع پر دم توڑ گئے جبکہ 2 زخمی ہوئے۔

حادثے کی اطلاع ملنے پر پولیس کی نفری اور ریسکیو اہلکار موقع پر پہنچ گئے، لاشوں اور زخمی ہونے والوں کو ڈسٹرکٹ ہسپتال اوتھل منتقل کر دیا جہاں زخمیوں کو طبی امداد دی جا رہی ہے، مرنے والے اہلکاروں کا تعلق بیلہ اور اوتھل سے ہے، پولیس موبائل دریجی سے اوتھل جا رہی تھی۔

دنیا

چین نے  امریکا کیساتھ جوہری ہتھیاروں کے پھیلاؤ سے متعلق مذاکرات روک دیئے

چین نے مذاکرات کی تعطل کی وجہ امریکا کی جانب سے تائیوان کو ہتھیاروں کی فروخت کو قرار دیا

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

چین نے  امریکا کیساتھ جوہری ہتھیاروں کے پھیلاؤ سے متعلق مذاکرات روک دیئے

چین نے امریکا کی جانب سے تائیوان کو ہتھیاروں کی فروخت کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے امریکا کے ساتھ جوہری ہتھیاروں کے پھیلاؤ سے متعلق مذاکرات روک دیے ہیں۔

چین نے مذاکرات کی تعطل کی وجہ امریکا کی جانب سے تائیوان کو ہتھیاروں کی فروخت کو قرار دیا ہے۔ چین تائیوان کو اپنا صوبہ سمجھتا ہے اور اسے ہتھیاروں کی فروخت کو اپنی خودمختاری اور علاقائی سالمیت کی خلاف ورزی کے طور پر دیکھتا ہے۔

امریکہ کا کہنا ہے کہ تائیوان کو ہتھیاروں کی فروخت اس کے خود دفاع کے حق کے تحت ہے۔ امریکہ تائیوان کے ساتھ غیر رسمی تعلقات رکھتا ہے اور اسے چین سے الگ ایک آزاد جزیرہ سمجھتا ہے۔

مذاکرات کی تعطل کا دونوں ممالک کے درمیان تعلقات پر منفی اثر پڑ سکتا ہے۔ چین نے پہلے ہی تائیوان کے خلاف فوجی مشقیں تیز کر دی ہیں اور اس نے امریکا کو تائیوان کو مزید ہتھیار نہ بیچنے کی وارننگ دی ہے۔

مذاکرات کی تعطل کا وسیع پیمانے پر جوہری عدم پھیلاؤ پر بھی اثر پڑ سکتا ہے۔ امریکہ اور چین دنیا کے دو بڑے جوہری ہتھیاروں کے حامل ممالک ہیں۔ ان دونوں ممالک کے درمیان جوہری ہتھیاروں کے کنٹرول اور عدم پھیلاؤ پر تعاون دنیا بھر میں جوہری سلامتی کے لیے ضروری ہے۔

میڈیا رپورٹ کے مطابق یہ واضح نہیں ہے کہ مذاکرات کب دوبارہ شروع ہوں گے۔ دونوں ممالک کو اپنے اختلافات کو حل کرنے اور بات چیت کے لیے واپس آنے کا ایک راستہ تلاش کرنے کی ضرورت ہوگی۔

پڑھنا جاری رکھیں

دنیا

فلسطینی ریاست کے قیام کے خلاف اسرائیلی پارلیمنٹ میں قرارداد منظور

قرارداد میں فلسطینی ریاست کے قیام کےخلاف 68 اراکین پارلیمنٹ نے ووٹ دیا جب کہ  9 اراکین نے قرار داد کی مخالفت کی

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

فلسطینی ریاست کے قیام کے خلاف اسرائیلی پارلیمنٹ میں قرارداد منظور

اسرائیلی پارلیمنٹ کینسیٹ نے فلسطینی ریاست کے قیام کو مسترد کردیا۔

اسرائیلی پارلیمنٹ نے مشرق وسطیٰ میں امن کے لیے دو ریاستی منصوبے کےخلاف قراردار منظور کی اور اسرائیل کی تاریخ میں پہلی بار پارلیمنٹ نے ایسی قرارداد منظور کی ہے۔

اسرائیلی میڈیا کے مطابق قرارداد میں فلسطینی ریاست کے قیام کےخلاف 68 اراکین پارلیمنٹ نے ووٹ دیا جب کہ  9 اراکین نے قرار داد کی مخالفت کی، اسرائیلی اپوزیشن لیڈر یائرلپید کی پارٹی نے ووٹنگ میں حصہ نہیں لیا۔

کینسیٹ کی قرارداد میں کہا گیا ہے کہ فلسطینی ریاست اسرائیل کے وجود اور اسرائیلی شہریوں کے لیے خطرے کےطور پر رہے گی۔

اسرائیلی میڈیا کے مطابق قرارداد سے اسرائیلی اور عرب ممالک میں امن کے لیے سفارتی کوششوں کا دھچکا لگا ہے۔ 

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

پارلیمنٹ میں مخصوص نشستوں پر حلف لینے والے ممبران کا عدالت جانے کا فیصلہ

ہمیں سنے بغیر ان کے خلاف فیصلہ دیا گیا، ممبران کا موقف

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

پارلیمنٹ میں مخصوص نشستوں پر حلف لینے والے ممبران کا  عدالت جانے کا فیصلہ

پارلیمنٹ میں مخصوص نشستوں پر حلف لینے والے ممبران نے ذاتی طور پر عدالت جانے کا فیصلہ کرلیا۔ اس سے قبل ان ممبرانِ قومی و صوبائی اسمبلی کو حلف لینے کے بعد سپریم کورٹ نے معطل کردیا تھا۔

مخصوص نشستوں پر منتخب نمائندے،  جنہوں نے مسلم لیگ ن، پی پی پی، ایم کیو ایم-پی، جے یو آئی-ایف اور دوسری جماعتوں کی سفارشات پر حلف اٹھایا تھا اور اب سپریم کورٹ آف پاکستان کے فیصلے کی وجہ سے انہیں نکالے جانے کا سامنا ہے، نے اس کے خلاف اپیلٹ کورٹ میں جانے کا فیصلہ کیا ہے۔ 

یہ ممبران علیحدہ علیحدہ سپریم کورٹ میں رٹ پٹیشن دائر کریں گے جس میں ممبران موقف اپنائیں گے کہ ان کو سنے بغیر ان کے خلاف فیصلہ دیا گیا۔ ان ممبران نے رٹ پٹیشن کے مندرجات پر مشاورت مکمل کرلی ہے اور ان اراکین کو رٹ پٹیشن دائر کرنے کا حکم سیاسی پارٹیوں نے دیا۔

بظاہر ممبران ذاتی طور پر رٹ دائر کریں گے لیکن پارٹیوں کی در پردہ حمایت حاصل ہوگی، یہ رٹ پٹیشن آئندہ ہفتے سپریم کورٹ میں دائر کیے جانے کا امکان ہے۔

واضح رہے کہ 12 جولائی کو سپریم کورٹ آف پاکستان نے سنی اتحاد کونسل کی مخصوص نشستوں سے متعلق درخواست پر محفوظ فیصلہ سناتے ہوئے پشاور ہائیکورٹ اور الیکشن کمیشن کا فیصلہ کالعدم قرار دیا تھا اور مخصوص نشستیں پی ٹی آئی کو دینے کا حکم دیا گیا تھا۔

 

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll