جی این این سوشل

پاکستان

اوگرا کی سمری مسترد: حکومت کاپیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں برقرار رکھنے کا فیصلہ

اسلام آباد: وزیر اعظم شہبازشریف نے اوگرا کی سمری مسترد کرتے ہوئےپیٹرولیم مصنوعات کی موجودہ قیمتیں برقرار رکھنے کا فیصلہ کیا ہے۔

پر شائع ہوا

کی طرف سے

اوگرا کی سمری مسترد: حکومت کاپیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں برقرار رکھنے کا فیصلہ
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

حکومت کا پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں رد و بدل نہ کرنے کا فیصلہ۔

ذرائع کے مطابق حکومت نے بوجھ خود برداشت کرنے اور عوام پر بوجھ نہ ڈالنے کا فیصلہ کیا ہے۔

بتایا گیا ہے کہ پیٹرولیم مصنوعات کی موجودہ قیمتیں برقرار رہیں گی، ان میں اضافہ نہیں کیا جائے گا۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز اوگرا نے 16 اپریل سے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں رد و بدل کی تجویز دی تھی۔

اوگرا نے پیٹرول 83 اور ڈیزل 119 روپے فی لیٹر مہنگا کرنے کی سفارش کی تھی۔

بتایا گیا کہ تجویزجی ایس ٹی اور لیوی کی موجودہ شرح پربھیجی گئی ہے، اوگرا کی جانب سے تجویز 70 فیصد جی ایس ٹی اور 30 روپے فی لیٹرلیوی کی بنیاد پر بھیجی گئی۔

فل لیوی اور ٹیکسوں کی بنیاد پرپیٹرول فی لیٹر83.50 روپے بڑھانےکی تجویز دی گئی، اسی طرح ڈیزل کی قیمت میں بھی 119 روپے فی لیٹر اضافے کی تجویز دی گئی۔

فل ٹیکس اورلیوی پر مٹی کے تیل کی قیمت 77.56 روپے بڑھانے کی تجویز دی گئی جبکہ لائٹ ڈیزل 77 روپے 13 پیسے مہنگا ہونے کا امکان ظاہر کیا گیا تھا۔

پاکستان

وزیراعظم کا پرامن افعانستان کیلئے  پاکستان کے عزم کااعادہ

وزیراعظم شہباز شریف نے پرامن افغانستان کے لئے پاکستان کے عزم کا اعادہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان اس ضمن میں افغان عوام کی ہر ممکن معاونت کرے گا۔

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

وزیراعظم کا پرامن افعانستان کیلئے  پاکستان کے عزم کااعادہ

وزیراعظم  نے یہ بات آج اسلام آباد میں امور خارجہ کی وزیر مملکت حنا ربانی کھر سے گفتگو کرتے ہوئے کہی جنہوں نے وزیراعظم سے ملاقات کی اور اپنے افغانستان کے اپنے حالیہ دورے کے بارے میں بریفنگ دی۔

وزیراعظم شہبازشریف نے عالمی برادری پر زور دیا کہ اسے افغانستان میں صورتحال بہتر کرنےکے لئے اپناکردار ادا کرنا چاہئے۔

انہوں  نے کہا کہ پاکستان افغان بھائی بہنوں کی ہر ممکن مدد اور حمایت جاری رکھے گا۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹیکنالوجی

گوگل ایپس بند ہونے کا خطرہ ٹل گیا ، پاکستان ادائیگیوں پر رضامند

صارفین کیلئے خوشخبری آگئی ، گوگل کوادائیگیاں شیڈول کے مطابق کی جاسکیں گی، پیڈ گوگل ایپس بند نہیں ہوں گی۔

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

گوگل ایپس بند ہونے کا خطرہ  ٹل گیا ،    پاکستان ادائیگیوں پر رضامند

حکومت پاکستان نے اس حوالہ سے کریڈ ٹ کارڈ کے ذریعے ادائیگیوں کے بجائے ایپس  کےتحت ادائیگیوں کی اجازت جاری رکھنے کا فیصلہ کیا ہے ۔

وزارت خزانہ نے وزیر آئی ٹی سید امین الحق کی تجویز مانتے ہوئے گوگل کو ادائیگیوں کے حوالے سے رضا مندی ظاہر کردی ۔ 

وزارت آئی ٹی کی طرف سے آج (جمعرات) کو جاری کردہ اطلاعات کے مطابق وفاقی وزیر انفارمیشن وٹیکنالوجیز سید امین الحق نے کہا ہے کہ گوگل کوادائیگیاں شیڈول کے مطابق کی جاسکیں گی، پیڈ گوگل ایپس بند نہیں ہوں گی۔

اس حوالے سےوزیر آئی ٹی و ٹیلی کمیونیکیشن امین الحق سے معاون خصوصی برائے خزانہ طارق باجوہ نے رابطہ کیا اور بتایا کہ سٹیٹ بینک کو اس حوالے سے ہدایات جاری کردی گئی ہیں۔

امین الحق نے کہا کہ فی الحال ایک ماہ تک پالیسی پر عملدرآمد مؤخر کردیا گیا ہے ۔ ٹیلی کام آپریٹرز کو ادائیگیوں کے طریقہ کار پر عملدرآمد کیلئے ایک ماہ کا وقت دیا گیاہے۔

ایک ماہ کے اندر وزارت آئی ٹی، خزانہ اور سٹیٹ بینک باہمی مشاورت سے مستقل لائحہ عمل مرتب کریں گے۔

انہوں نے کہ ٹیلی کام آپریٹرز نے وزارت آئی ٹی سے معاملے پر معاونت کی اپیل کی تھی جس کے پیش نظروزیرخزانہ اسحاق ڈار کو ادائیگیاں کرنے اور ٹائم فریم دینے کیلئے مراسلہ لکھا گیا تھا۔

انہوں نے کہا کہ بروقت فیصلے پر وزیرخزانہ اسحاق ڈار اور وزیر اعظم کے معاون خصوصی طارق باجوہ کے شکر گزار ہیں۔

گزشتہ ماہ وفاقی وزیر آئی ٹی امین الحق نے وزیر خزانہ اسحاق ڈار کو خط لکھ کر اسٹیٹ بینک کی جانب سے گوگل کو ادائیگی روکنے کے خدشات کا اظہار کیا تھا۔

واضح رہے کہ یہ بات سامنے آئی تھی کہ اسٹیٹ بینک آف پاکستان کی جانب سے بین الاقوامی سروس فراہم کرنے والوں کو 34 ملین ڈالر کی ادائیگی منسوخ کرنے کے بعد موبائل صارفین یکم دسمبر 2022 سے پاکستان میں گوگل پلے اسٹور کی سروسز ڈاؤن لوڈ نہیں کر سکیں گے۔

پڑھنا جاری رکھیں

صحت

ایڈزسے بچاؤ اور آگاہی کا عالمی دن آج منایا جارہا ہے

پاکستان سمیت دنیا بھر میں ایڈز (ایچ آئی وی )سے بچاؤ اور آگاہی کا دن آج منایا جارہا ہے۔

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

ایڈزسے بچاؤ اور  آگاہی کا عالمی  دن آج منایا جارہا ہے

ایڈز کا عالمی دن دنیا میں پہلی مرتبہ 1987ء میں منایا گیا ، ا س  بیماری کا عالمی دن منانے کا مقصد اس انتہائی مہلک مرض کے بارے میں آگاہی دینا اور ایڈز سے بچاؤ سے متعلق حفاظتی احتیاطی تدابیر کے بارے میں شعور اجاگر کرنا ہے ۔ 

اس حوالے سے  ماہرین طب کا کہنا ہے کہ دنیا بھر میں ایڈز کے مریضوں میں کمی آرہی ہے لیکن پاکستان میں ایچ آئی وی وائرس میں ہولناک اضافہ ہورہا ہے۔

ملک میں وائرس سے متاثرہ مریضوں کی تعداد 2 لاکھ 10 ہزار ہوگئی ہے، جنوری سے نومبر 2022 تک کراچی میں 970 مریض رپورٹ ہوئے۔

رپورٹس کے مطابق کوئٹہ اور گوادر سمیت بلوچستان کے 6 اضلاع ہائی رسک قرار دیے گئے ہیں ۔

استعمال شدہ سرنج، غیرمحفوظ انتقال خون، اسکریننگ کے نامناسب انتظامات، جراثیم زدہ آلات جراحی، حجامت کے دوران آلودہ آلات اور غیرمحفوظ جنسی تعلقات ایچ آئی وی پھیلانے کا بڑا سبب ہیں۔

ایڈز کا مرض ایک وائرس ایچ آئی وی کے ذریعے پھیلتا ہے جو انسانی مدافعتی نظام کو تباہ کر دیتا ہے۔ ایسی حالت میں کوئی بھی بیماری انسانی جسم میں داخل ہوتی ہے تو مہلک صورت اختیار کر لیتی ہے۔

ماہرین کے مطابق صرف احتیاط ہی کے ذریعے اس بیماری سے محفوظ رہا جا سکتا ہے۔

 ایک تحقیق کے مطابق ایچ آئی وی کا شکار ہونے کے چند دن بعد 85 فیصد افراد کو انفیکشن کی علامات ظاہر ہوتی ہیں جن کا بروقت علاج مرض کو جان لیوا ہونے سے بچا سکتا ہے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ ایڈز کا علاج بروقت تشخیص اور احتیاط کے ساتھ ساتھ مثبت رویہ اپنائے بغیر ممکن نہیں، یہی وجہ ہے کہ عام آدمی کو اس مرض کے بارے میں شعور حاصل کرنے کی ضرورت ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll