جی این این سوشل

پاکستان

رانا ثنا اللہ نے دھمکی دی ہے، میرا وعدہ ہے اسلام آباد میں چھپنے کی بھی جگہ نہں ملے گی، عمران خان

اسلام آباد: چیئرمین پاکستان تحریک انصاف عمران خان نے کہا ہے کہ احتجاج کے لیے کال کب دینی ہے؟ یہ صرف مجھے پتہ ہے لیکن احتجاج کی کال تب دوں گا جب مجھے لگے گا کہ کارکنان تیار ہیں۔

پر شائع ہوا

کی طرف سے

رانا ثنا اللہ نے دھمکی دی ہے، میرا وعدہ ہے اسلام آباد میں چھپنے کی بھی جگہ نہں ملے گی، عمران خان
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

پی ٹی آئی کے کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے سابق وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ یہ امتحان کا وقت ہے، رانا ثنا اللہ نے دھمکی دی ہے، میرا وعدہ ہے کہ رانا ثنا اللہ کو اسلام آباد میں چھپنے کی جگہ نہیں ملے گی۔

انہوں نے کہا کہ آزادی پلیٹ میں رکھ کرنہیں ملتی، قربانیاں دینا پڑتی ہیں، یہ لوگ ہمیں آرام سےآزادی نہیں دیں گے، میں ایک آزادانسان ہوں، کبھی کسی کے سامنے نہیں جھکا، کبھی بزدل آدمی لیڈرنہیں بن سکتا۔

چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان نے کہا کہ اب حکومت روس سے تیل اور گندم لینے کی بات کر رہی ہے، آج ملک پر مہنگائی کا سمندر ہے، سازش کر کے ہماری حکومت گرائی گئی۔

 عمران خان نے کہا کہ ملک میں آج بدترین مہنگائی ہے، جو لوگ ان کو لے کر آئے یہ ان سے ڈرے ہوئے تھے، انہوں نے بھی ہمارے دور میں دھرنے دیئے ہم نے کسی کو نہیں روکا۔

پاکستان

سائفر اب بھی موجود ہے سیکیورٹی رسک کی وجہ سے پبلک نہیں کیا : عمران خان

چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے کہا ہے کہ سائفر اب بھی موجود ہے سیکیورٹی رسک کی وجہ سے پبلک نہیں کیا۔

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

سائفر اب بھی موجود ہے سیکیورٹی رسک کی وجہ سے پبلک نہیں کیا : عمران خان

نجی ٹی وی کو دیئے گئے انٹرویو میں انہوں نے کہا کہ آڈیو لیکس بہت بڑی سیکیورٹی بریچ ہے،بڑی بات ہے کہ وزیراعظم کی گفتگو محفوظ نہیں،پبلک ہوگئی،وزیراعظم کی ریکارڈنگ ہمارے دشمنوں کے پاس بھی پہنچ گئی ہوں گی۔

ان کا کہنا تھا کہ سائفر میں جو بھی باتیں ہوئیں وہ جلسوں میں کر چکا ہوں، او آئی سی اجلاس میں سائفرمعاملے کو نہیں لاناچاہتاتھا،ڈی مارش کرنے سےپہلے ہم نے کسی ملک کا نام نہیں لیا۔

عمران خان نے کہا کہ سائفر کی کاپی صدرمملکت کے پاس بھی ہے جو انہوں نے چیف جسٹس کو بھجوائی،اسپیکر کی جانب سے بھی سائفر کی کاپی چیف جسٹس کو بھجوائی گئی۔

انہوں نے کہا کہ اعظم خان کے ساتھ میری گفتگو فون پر ہوئی جو لیک ہو گئی۔

ان کا کہنا تھا کہ جب ان لوگوں کی حکومت آئی تو تیاری کرلی تھی یہ مقدمات بنائیں گے،آخری مرتبہ گرفتاری دینےکے لیے تیار تھا،بیگ بھی تیار تھا،شاید لوگوں کی بڑی تعداد دیکھ کر یہ لوگ نہیں آئے۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

آڈیو لیکس: وفاقی کابینہ کی عمران خان کیخلاف کارروائی کی منظوری

وفاقی کابینہ نے آڈیو لیکس معاملے پر چیئر مین پی ٹی آئی عمران خان کیخلاف کارروائی کی منظوری دے دی۔

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

آڈیو لیکس: وفاقی کابینہ کی عمران خان کیخلاف کارروائی کی منظوری

 

وفاقی کابینہ نے آڈیو لیکس کیس میں عمران خان، ان کے ساتھی وزرا اور اعظم خان کے خلاف قانونی کارروائی کی باضابطہ منظوری دے دی۔کابینہ کمیٹی نے یکم اکتوبر کو اجلاس میں قانونی کارروائی کی سفارش کی۔

کابینہ کمیٹی کی سفارشات کو سمری کی شکل میں کابینہ کی منظوری کیلئے پیش کیا گیا تھا۔وفاقی کابینہ نے سرکولیشن کے ذریعے کابینہ کمیٹی کی سفارشات کی منظوری دیدی۔

کابینہ کمیٹی کا کہنا ہے کہ یہ قومی سلامتی کا معاملہ ہے جس کے قومی مفادات پر سنگین مضر اثرات ہیں، قانونی کارروائی لازم ہے۔

کابینہ کمیٹی کی جانب سے سمری میں سفارش کی گئی ہے کہ ایف آئی اے سینئر حکام پر مشتمل کمیٹی تشکیل دے۔ایف آئی اے دیگر اداروں سے بھی اہلکاروں کو ٹیم میں شامل کر سکتی ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

جج دھمکی کیس:عمران خان کی عبوری ضمانت منظور

اسلام آباد ہائیکورٹ  نے خاتون جج کو دھمکی دینے کے کیس میں  عمران خان کی عبوری ضمانت منظور کر لی۔

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

جج دھمکی کیس:عمران خان کی عبوری ضمانت منظور

 

اسلام آباد ہا ئیکورٹ نے  جج دھمکی کیس میں سابق وزیر اعظم عمران خان کی عبوری ضمانت منظور کر لی۔اسلام آباد ہائیکورٹ کے جسٹس محسن اختر کیانی نے عبوری ضمانت منظور کی۔

عدالت نے عمران خان  کو دس ہزار کے مچلکے جمع کرانے کا حکم دے دیا۔ عمران خان کو کیس میں10 اکتوبر سے پہلے متعلقہ عدالت میں پیش ہونے کا حکم بھی دیا گیا۔

درخواست  میں استدعا کی گئی تھی کہ عمران خان کے خلاف ابتدائی طور پر دہشت گردی کا مقدمہ بنایا گیا۔ہائی کورٹ نے دہشت گردی کی دفعات ختم کیں تو کیس منتقل ہو گیا۔انسداد دہشتگردی عدالت سے کیس منتقل ہونے پر ضمانت بھی مسترد ہو گئی۔

درخواست میں موقف اپنایا گیا کہ سیاسی مخالف حکومت نے بدنیتی کے تحت جھوٹا مقدمہ بنایا۔کیس درج کرنے کا مقصد کرپشن مافیا کے خلاف پرامن تحریک کو روکنا ہے۔مقدمے کا مقصد عمران خان کو گرفتار کر کے پرامن سیاسی تحریک کو روکنا ہے۔

جج دھمکی کیس میں عمران خان کے وارنٹ گرفتاری  جاری کیے جانے کے معاملے پراسلام آباد ہائی کورٹ  چھٹی کے روز کھلی ۔درخواست دائر کرنے کے لیے عمران خان کے وکیل ڈاکٹر بابر اعوان ہائیکورٹ پہنچے تھے۔عمران خان کی جانب سے بائیو میٹرک سے استثنی کی درخواست بھی دائر کی گئی۔

واضح  رہے کہ  گزشتہ روزاسلام آباد کی مقامی عدالت نے عمران خان کے خلاف   خاتون جج  کو دھمکی  دینے کےکیس میں وارنٹ گرفتاری جاری کیے تھے۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll