جی این این سوشل

پاکستان

آزاد کشمیر میں 31 سال بعد بلدیاتی انتخابات، پولنگ جاری

مظفر آباد: آزاد کشمیر میں 31 سال بعد ہونے والے بلدیاتی انتخابات میں پولنگ کا عمل جاری ہے۔

پر شائع ہوا

کی طرف سے

آزاد کشمیر میں 31 سال بعد بلدیاتی انتخابات، پولنگ جاری
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

 

آزاد کشمیر کے بلدیاتی انتخابات کے پہلے مرحلے میں مظفرآباد ڈویژن میں انتخابات ہو رہے ہیں جس کے لیے پولنگ کا عمل شام 5 بجے تک بغیر کسی وقفے کے جاری رہے گا۔

مظفرآباد ڈویژن 3 اضلاع پر مشتمل ہے جس میں ضلع مظفرآباد، ضلع نیلم اور ضلع جہلم ویلی شامل ہیں۔ ضلع مظفرآباد میں ایک ہزار 643 امیدوار الیکشن میں حصہ لے رہے ہیں جہاں 15 امیدوار بلا مقابلہ منتخب ہو چکے ہیں۔

ضلع مظفرآباد میں پولنگ اسٹیشنز کی کل تعداد 791 ہے جن میں سے 199 کو حساس اور 142 اسٹیشنز کو نہایت حساس قرار دیا گیا ہے۔ مظفر آباد میں ووٹرز کی کل تعداد 4 لاکھ 8 ہزار 868 ہے جس میں 616 مہاجرین ووٹرز بھی شامل ہیں۔ مظفرآباد میں مرد ووٹرز کی تعداد 2 لاکھ 19 ہزار 173 جبکہ خواتین ووٹرز کی تعداد ایک لاکھ 89 ہزار 695 ہے۔

مظفرآباد کے حلقہ دو لچھراٹ کھتیلی پولنگ اسٹیشن پر پولنگ کے دوران لڑائی ہوئی جس میں 5 افراد زخمی ہو گئے جنہیں فوری طور پر قریبی اسپتال منتقل کر دیا گیا۔ لڑائی کے بعد کھتیلی پولنگ اسٹیشن پر پولنگ کا عمل روک دیا گیا۔ لڑائی تحریک انصاف اور آزاد امیدوار کے حامیوں کے درمیان ہوئی تھی۔

ضلع نیلم میں 529 امیدوار الیکشن میں حصہ لے رہے ہیں جہاں ایک امیدوار بلا مقابلہ منتخب ہو چکا ہے۔ ضلع نیلم میں ووٹرز کی تعداد ایک لاکھ 29 ہزار 298 ہے جس میں مرد ووٹرز کی تعداد 69 ہزار 475 اور خواتین ووٹرز کی تعداد 59 ہزار 823 ہے۔ ضلع نیلم میں 243 پولنگ اسٹیشز قائم کیے گئے ہیں۔

ضلع جہلم ویلی میں 544 امیدوار الیکشن میں حصہ لے رہے ہیں اور 4 امیدوار بلا مقابلہ منتخب ہو چکے ہیں۔ جہلم ویلی میں ووٹرز کی تعداد ایک لاکھ 54 ہزار 774 ہے جس میں 16 مہاجرین ووٹرز بھی شامل ہیں۔

ضلع جہلم ویلی میں مرد ووٹرز کی تعداد 83 ہزار545 اور خواتین ووٹرز کی تعداد 71 ہزار 229 ہے۔ ضلع جہلم ویلی میں 276 پولنگ اسٹیشز قائم کیے گئے ہیں۔

پاکستان

شیخ رشید پر تین دفعات، ایک قابل ضمانت، دو ناقابل ضمانت

شیخ رشید پر درج ایف آئی آر سامنے آگئی

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

شیخ رشید پر تین دفعات، ایک قابل ضمانت، دو ناقابل ضمانت

اسلام آباد: عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید پر مقدمے میں ایک قابل ضمانت اور دو ناقابل ضمانت دفعات لگائی گئی ہیں، سابق وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید پر درج ایف آئی آر سامنے آگئی۔

شیخ رشید پر عائد دفعہ 120نفرت انگیز تقریرکی قابل ضمانت دفعہ ہے جس کی سزا 6 ماہ قیدیاجرمانہ ہے، دفعہ 153 ایبغاوت پراکسانیکی ناقابل ضمانت دفعہ ہیجس کی سزا 5 سال قید ہے جب کہ دفعہ 505 عوام کو اشتعال دلانیکی ناقابل ضمانت دفعہ ہے جس کی سزا 7 سال قید ہے۔

 سابق وزیر داخلہ شیخ رشید کو پنڈی پولیس نے موٹر وے سے گرفتار کر کے اسلام آباد کے تھانہ آبپارہ منتقل کیا۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

نوازشریف چند ہفتوں میں وطن واپس آئیں گے،مریم نواز

ٹکٹ کنفرم ہونے تک نوازشریف کی واپسی کی حتمی تاریخ نہیں دے سکتے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

نوازشریف چند ہفتوں میں وطن واپس آئیں گے،مریم نواز

بہالپور: مسلم لیگ ن کی چیف آرگنائزر اور نائب صدر مریم نواز نے کہا کہ نوازشریف آنے والے چند ہفتوں میں وطن واپس آئیں گے، ٹکٹ کنفرم ہونے تک نوازشریف کی واپسی کی حتمی تاریخ نہیں دے سکتے۔

مریم نواز نے چیئرمین پاکستان تحریک انصاف کی کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ عمران خان نے حکومت سے نکلتے ہی تنقید شروع کردی،عمران خان کو اقتدار کی کرسی تک پہنچنے کیلئے بیساکھیوں کی ضرورت تھی۔

انہوں نے مزید کہا کہ عمران خان اگر معاہدے کی پاسداری کرتے تو عوام پر بوجھ نہ آتا، آئی ایم ایف کا معاہدہ عمران خان نے کیا تھا۔

مسلم لیگ ن کی رہنما نے کہا کہ آئی ایم ایف معاہدے نے حکومت کے ہاتھ باندھے ہوئے ہیں،اگر آئی ایم ایف معاہدے پر عمل درآمد نہیں کیا تو ملک ڈیفالٹ ہوسکتا ہے،اگر حکومت چاہے بھی تو عوام کوریلیف نہیں دے سکتی۔

 عوام کو پتہ ہے کہ 4سال ملک کس کے پاس تھا،اگر ملک میں آج مہنگائی ہے تو عمران خان کی وجہ سے ہے،ہم پی ٹی آئی کارویہ نہیں اپنا ئیں گے، ن لیگ بیساکھیوں کا سہارانہیں لے گی۔

انہوں نے عوام سے اپیل کرتے ہوئے کہا کہ تمام طبقات کو رضاکارانہ طور پر آگے آنا چاہیے۔

بہاولپور،کارکن کی طر ح کام کرکے مجھے تسلی ہوئی ہے ، صرف حقائق پر بات کرینگے، ہمارا بیانیہ حقائق پر مبنی ہے، صحافیوں کیساتھ آج بھی کھڑی ہوں۔

یہ بھی پڑھیں:

مریم نواز کی میڈیا سے گفتگو کے دوران ایک خاتون نے شور مچا دیا، پاس بلانے پر کہا کہ  مریم نواز کی سیکرٹری نے مجھے تھپڑ مارا اور دھکے دیئے، 25 سال سے مسلم لیگ ن کی کارکن ہوں۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

عمران خان نا اہلی کیس: سماعت کیلیے لارجر بنچ تشکیل دینے کا فیصلہ

اسلام آباد ہائیکورٹ نے عمران خان نا اہلی کیس کی سماعت کے لیے لارجر بنچ بنانے کا فیصلہ سنا دیا۔

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

عمران خان نا اہلی کیس: سماعت کیلیے لارجر بنچ تشکیل دینے کا فیصلہ

اسلام آباد ہائیکورٹ میں عمران خان کی  مبینہ بیٹی ٹیریان جیڈ کو ظاہر نہ کرنے پر نااہلی کی درخواست پر سماعت ہوئی۔ عدالت نے عمران خان کی نااہلی کی درخوست پر سماعت کیلئے لارجر بینچ تشکیل دینے کا فیصلہ سنادیا۔

چیف جسٹس عامر فاروق نے ریمارکس دیے کہ عمران خان کا اعتراض ہے کہ وہ اب پبلک آفس ہولڈر نہیں، الیکشن کمیشن سے کنفرم کرنا ہے کہ موجودہ پوزیشن کیا ہے۔

الیکشن کمیشن سے ڈی نوٹیفائی ہونے کا نوٹیفکیشن منگوا لیتے ہیں۔ درخواست گزار نے عمران خان کا 2018 والا بیان حلفی چیلنج کیا تھا۔

سماعت کے دوران چیف جسٹس اسلام آباد ہائیکورٹ عامر فاروق نے  عمران خان کے وکلا سے مکالمہ کیا کہ آپ کی جانب سے بینچ پر اعتراض اٹھایا گیا ہے؟

2018میں کیس سننے سے معذرت ذاتی وجوہات پر نہیں کی تھی۔اس وقت درخواست گزار نے مخصوص بینچ کے سامنے لگانے کی استدعا کی تھی۔

چیف جسٹس عامر فاروق نے ریمارکس دیے کہ آپ نے اعتراض اٹھایا تو بینچ کی تشکیل نو کر دیتے ہیں۔ہم لارجر بینچ کے سامنے معاملہ رکھیں گے۔

خیال رہے کہ چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے اپنی مبینہ بیٹی ٹیریان سے متعلق کیس میں تحریری جواب عدالت میں جمع کروایا تھا جس میں انہوں نے کہا تھا کہ اسلام آباد ہائیکورٹ یہ مقدمہ سننے کی مجاز ہی نہیں۔

جو جج پہلے یہ کیس سننے سے معذرت کر چکا ہے وہ دوبارہ کیسے اس کیس کو سن سکتا ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll