جی این این سوشل

دنیا

مودی کی ڈگری دکھانے کے مطالبے پر وزیراعلیٰ دہلی پر جرمانہ عائد

احمد آباد: بھارتی وزیراعظم نریندر مودی سے ڈگری دکھانے کے مطالبے پر دہلی کے وزیراعلیٰ اروند کیجریوال پر جرمانہ عائد کردیا گیا۔

پر شائع ہوا

کی طرف سے

مودی کی ڈگری دکھانے کے مطالبے پر وزیراعلیٰ دہلی پر جرمانہ عائد
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

احمد آباد: بھارتی وزیراعظم نریندر مودی سے ڈگری دکھانے کے مطالبے پر دہلی کے وزیراعلیٰ اروند کیجریوال پر جرمانہ عائد کردیا گیا۔

غیرملکی میڈیا کے کے مطابق  ریاست گجرات  ہائی کورٹ نے وزیراعظم نریندر مودی کی ڈگری کی تفصیل مانگنے پر  دہلی کے وزیراعلیٰ اروند کیجریوال پر 25,000 روپے جرمانہ عائد کردیا۔ عدالت نے وزیراعلیٰ دہلی کے ارادے پربھی شک کا اظہار کیا۔

گجرات ہائی کورٹ کا کہنا تھا کہ اروند کیجریوال کو اس معاملے کو متنازع بنانے کی ضرورت کیوں پیش آئی جب کہ وزیراعظم کی ڈگریاں پہلے ہی عام کی جا چکی ہیں۔عدالت کا یہ بھی کہنا تھا کہ وزیر اعظم کو کسی بھی بڑے عوامی مفاد کی عدم موجودگی میں اپنی تعلیمی ڈگریاں دکھانے کے معاملے میں استثنیٰ حاصل ہے۔

بھارت کے موجودہ وزیراعظم نریندر مودی گجرات کے وزیر اعلیٰ  رہ چکے ہیں۔ ان کے دور حکومت میں ہوئے مسلم کش فسادات میں 2 ہزار سے زائد مسلمان شہید ہوئے تھے اس بنیاد پر مودی کو غیرملکی میڈیا نے ’ گجرات کا قصائی‘ کا خطاب دیا تھا۔

تجارت

عید قربان آتے ہی مصالحہ جات کی قیمتوں میں بڑا اضافہ

شہریوں کا کہنا ہے کہ پرائس کنٹرول کمیٹیاں مصالحہ جات کی قیمتوں کو کنٹرول کریں

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

عید قربان آتے ہی مصالحہ جات کی قیمتوں میں بڑا اضافہ

عید قربان قریب آتے ہی مصالحہ جات کی قیمتوں میں خود ساختہ اضافہ کردیا گیا ۔ 

سبزی منڈی میں پیاز ، ٹماٹر ، لہسن اور ادرک  کی قیمتیں آسمانوں سے باتیں کرنے لگیں ، ٹماٹر 100 سے بڑھ کر 110 روپے فی کلو میں فروخت ہونے لگا ، سبز مرچ کی قیمت میں بھی 30 روپے فی کلو کا اضافہ کر دیا گیا ہے ادرک کی قیمت 700 روپے سے بڑھا کر 740 سے 750 روپے فی کلو کر دی گئی ہے  ۔ 

شہریوں کا کہنا ہے کہ پرائس کنٹرول کمیٹیاں مصالحہ جات کی قیمتوں کو کنٹرول کریں ۔ 

پڑھنا جاری رکھیں

دنیا

کشمیر کے حق میں بیان: بھارت کی معروف مصنفہ کیخلاف کارروائی کی منظوری

حکم نامے میں غیر قانونی سرگرمیاں (روک تھام) ایکٹ (یو اے پی اے) کی دفعہ 13 کا حوالہ دیا گیا ہے، رپورٹ

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

کشمیر کے حق میں بیان: بھارت کی معروف مصنفہ کیخلاف کارروائی کی منظوری

دہلی کے لیفٹیننٹ گورنر نے ممتاز بھارتی مصنفہ اور انسانی حقوق کی کارکن اروندھتی رائے اور سینٹرل یونیورسٹی آف کشمیر کے سابق پروفیسر ڈاکٹر شیخ شوکت حسین کے خلاف سخت گیر انسدادِ دہشت گردی قانون یو اے پی اے کے تحت مقدمہ چلانے کی منظوری دے دی ہے۔

ان پر الزام ہے کہ انہوں نے اکتوبر 2010 میں نئی دہلی میں منعقدہ ایک کانفرنس میں مسئلہ کشمیر سے متعلق ایک انتہائی اشتعال انگیز تقریر کی تھی۔

رپورٹ کے مطابق دی بھارتی اخبار نے کہا کہ حکم نامے میں غیر قانونی سرگرمیاں (روک تھام) ایکٹ (یو اے پی اے) کی دفعہ 13 کا حوالہ دیا گیا ہے، وی کے سکسینہ نے گزشتہ سال تعزیرات ہند کی کئی دفعات کے تحت مقدمہ چلانے کی منظوری دے دی تھی۔

اروندھتی رائے عالمی شہرت یافتہ مصنفہ ہیں اور انہیں معروف ادبی انعام بکر پرائز بھی مل چکا ہے۔ وہ انسانی حقوق کی کارکن بھی ہیں اور بھارت کی حکمران جماعت بی جے پی کی سخت ناقد تصور ہوتی ہیں۔

نئی دہلی میں لیفٹیننٹ گورنر ونائے کمار سکسینہ کے دفتر کے ایک عہدیدار نے بتایا کہ اروندھتی رائے اور پروفیسر شوکت حسین پر مقدمہ چلانے کے سلسلے میں یو اے پی اے کی دفعہ 45(1) کا اطلاق ہو گا۔

اس سے پہلے لیفٹیننٹ  گورنر نے اکتوبر 2023 میں ان دونوں شخصیات کے خلاف تعزیراتِ ہند کی نفرت انگیزی سے متعلق دفعات کے تحت عدالتی کارروائی شروع کرنے کی اجازت دی تھی۔

منافرت پھیلانے کی دفعات کے تحت کسی کے خلاف مقدمہ چلانے کے لیے حکومت کی اجازت لینا ضروری ہوتا ہے۔

یاد رہے کہ مدعی نے الزام عائد کیا تھا کہ کانفرنس کے مقررین کا کہنا تھا کہ کشمیر کبھی بھی بھارت کا حصہ نہیں تھا اور بھارت کی مسلح افواج نے زبردستی اس پر قبضہ کر رکھا ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

دنیا

غزہ میں جنگ بندی کیلئے مصر اور قطر جلد دوبارہ کوشش کریں گے، امریکہ

ہم سمجھتے ہیں کہ مسئلے کے حل کے کیے ہر وقت راستہ اور امکان رہتا ہے، سلیوان

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

غزہ میں جنگ بندی کیلئے  مصر اور قطر جلد دوبارہ کوشش کریں گے، امریکہ

امریکی قومی سلامتی کے مشیر جیک سلیوان نے کہا ہے کہ مصر اور قطر جلد اسرائیل اور حماس کے درمیان جنگ بندی کوشش کو دوبارہ شروع کریں گے تاکہ صدر جوبائیڈن کے منصوبے کے تحت معاہدہ ممکن ہو سکے۔

جیک سلیوان نے امن کانفرنس کے دوران پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ مصر اور قطر سے غزہ میں جنگ بندی اور یرغمالیوں کی رہائی کے لیے کوششوں کے بارے میں پوچھا گیا تھا۔

امریکی سلامتی کے مشیر نے کہا کہ ایک ایسی جنگ بندی تجویز کی گئی ہے جس کی مدت کم از کم چھ ہفتے ہو گی ۔ قطری وزیر اعظم شیخ محمد بن عبدالرحمان الثانی سے اتوار کے روز دوبارہ بات چیت ہو گی۔

فلسطینی مزاحمتی گروپ حماس نے صدر جوبائیڈن کی طرف سے سامنے لائے گئے امن منصوبے کا ابتدائی طور پر خیر مقدم کیا ہے مگر ساتھ ہی کہا ہے کہ اس معاہدے کے نتیجے میں جنگ کا مکمل خاتمہ ہونا چاہیے اور اسرائیلی فوج کا انخلا کیا جانا چاہیے۔

سلیوان نے مزید کہا کہ ہم سمجھتے ہیں کہ مسئلے کے حل کے کیے ہر وقت راستہ اور امکان رہتا ہے۔ اس لیے اب اگلا قدم قطر اور مصر کے حکام کی طرف سے مذاکرات کی نئی کوشش ہو گی۔ جہاں تک حماس کے نکات کا تعلق ہے ہم اسرائیل کے ساتھ بھی مشورہ جاری رکھے ہوئے ہیں۔

خیال رہے غزہ جنگ سات اکتوبر 2023 سے جاری ہے اور اسرائیلی یرغمالی بھی اسی روز سے غزہ میں قید ہیں۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll