جی این این سوشل

پاکستان

لاہور ہائی کورٹ کی پنجاب اسمبلی کی بحالی کےلئے سپریم کورٹ سے رجوع کرنے کی ہدایت

معاملہ سپریم کورٹ میں زیر سماعت ہے،اس کے لیے مناسب فورم سپریم کورٹ ہے،عدالت

پر شائع ہوا

کی طرف سے

لاہور ہائی کورٹ کی پنجاب اسمبلی کی بحالی کےلئے سپریم کورٹ سے رجوع کرنے کی ہدایت
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

لاہور ہائیکورٹ نے پنجاب اسمبلی کی بحالی کے سنگل بینچ کے فیصلے کے خلاف اپیل میں درخواست گزار کو سپریم کورٹ سے رجوع کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے درخواست نمٹا دی۔

 

لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس علی باقر نجفی کی سربراہی میں 2رکنی بینچ نے سماعت کی۔ درخواست گزار شفقت علی کے وکیل محمد عادل چٹھہ نے سنگل بنچ کے فیصلے کے خلاف اپیل دائر کی۔ درخواست میں پنجاب حکومت، سابق وزیر اعلیٰ چوہدری پرویز الٰہی اور گورنر پنجاب کو فرق بنایا گیا ہے۔

عادل چھٹہ ایڈووکیٹ نے بتایا کہ سنگل بینچ نے ان کے خلاف متاثرہ فریق نہ ہونے پر درخواست خارج کی۔عدالت نے استفسار کیا کہ آپ متاثرہ فریق کیسے ہیں؟،جس پر عادل چھٹہ ایڈووکیٹ نے بتایا کہ اعلیٰ عدالتوں کے متعدد فیصلے موجود ہیں جن میں متاثرہ فریق ہونا ضروری نہیں،سپریم کورٹ اور ہائیکورٹ قرار دے چکی ہیں کہ اسمبلی تحلیل مفاد عامہ کا معاملہ ہے،لاہور ہائیکورٹ نے سیاسی ورکر کی درخواست پر اسمبلی تحلیل کے معاملے کو پرکھا ہے۔

سنگل بینچ کے فیصلے کے خلاف دائر درخواست میں مؤقف اختیار کیا گیا ہے کہ سنگل بینچ نے حقائق کے منافی فیصلے جاری کیا، سنگل بینچ فیصلے کے مطابق درخواست گزار متاثرہ فریق نہیں ہے،مفاد عامہ کے مقدمے میں براہ راست متاثرہ فریق ہونا ضروری نہیں،پنجاب اسمبلی کی تحلیل غیر قانونی و غیر آئینی تھی،لاہور ہائیکورٹ نے 1988 میں اسمبلی کی تحلیل غیر قانونی قرار دیا تھا۔

درخواست میں مزید کہا گیا کہ سابق وزیر اعلیٰ پرویز الٰہی کی جانب سے بھیجی گئی ایڈوائس آئینی اور قانونی تقاضے پورے نہیں کرتی،ایک لائن کی تجویز میں اسمبلی تحلیل کرنے کی وجوہات کا ذکر نہیں،اختیارات کا اس قسم کا استعمال آئین اور عدالتی فیصلوں کے منافی ہے۔درخواست میں استدعا کی گئی کہ پنجاب اسمبلی تحلیل ایڈوائس کو غیر آئینی قرار دے کر کالعدم قرار دیا جائے، عدالت پنجاب اسمبلی کو بحال کرنے کا حکم دے۔

عدالت نے ریمارکس دئیے کہ یہ معاملہ سپریم کورٹ میں زیر سماعت ہے،اس کے لیے مناسب فورم سپریم کورٹ ہے،آپ سپریم کورٹ سے رجوع کریں۔عدالت نے درخواست گزار کو سپریم کورٹ سے رجوع کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے درخواست نمٹا دی۔

 

دنیا

مکہ مکرمہ ،کلاک ٹاور پر آسمانی بجلی گرنے کے مناظر کی ویڈیو وائرل

مقامی شہر ی عبدالعزیز الحربی اور محمد الھذلی کی جانب سے ایکس پر جاری کی گئی ویڈیوز میں دیکھا جاسکاتا ہے

پر شائع ہوا

Baqar Gillani

کی طرف سے

مکہ مکرمہ ،کلاک ٹاور پر آسمانی بجلی گرنے کے مناظر کی ویڈیو وائرل

مکہ مکرمہ: مسجد اجرام کے قریب واقع کلاک ٹاور پر آسمانی بجلی گرنے کے مناظر کی ویڈیو وائرل ہو گئی۔

سعودی خبررساں ادارے کے مطابق کلاک ٹاور پر آسمانی بجلی گرنے کے مناظر کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی ہے، مقامی شہر ی عبدالعزیز الحربی اور محمد الھذلی کی جانب سے ایکس پر جاری کی گئی ویڈیوز میں دیکھا جاسکاتا ہے کہ ٹاور پر بجلی گرنے کے بعد شاخیں بنادی گئی ہوں۔

انہوں نے کہا کہ بجلی گرنے کے باعث کسی قسم کا نقصان نہیں ہوا۔

پڑھنا جاری رکھیں

دنیا

مودی حکومت پر مسلم مخالف پروپیگنڈے کو ہوا دینے کا الزام

ایک امریکی اخبار واشنگٹن پوسٹ نے بھارت میں مسلمانوں کے خلاف مودی حکومت کے شرمناک پروپیگنڈے کا انکشاف کیا ہے

پر شائع ہوا

Baqar Gillani

کی طرف سے

مودی حکومت پر مسلم مخالف پروپیگنڈے کو ہوا دینے کا الزام

نئی دہلی: وزیر اعظم نریندر مودی کی قیادت میں ہندوستانی حکومت کے بارے میں چونکا دینے والے انکشافات سامنے آئے ہیں، جس سے سوشل میڈیا پلیٹ فارمز کے ذریعے بنائے گئے مسلم مخالف پروپیگنڈے اور غلط معلومات پھیلانے والے ہتھکنڈوں کے ایک جال کو بے نقاب کیا گیا ہے۔

یہ انکشافات امریکی اخبار واشنگٹن پوسٹ کی طرف سے سامنے آئے ہیں، جس میں بھارت میں جمہوریت کی حالت کے بارے میں شدید تشویش کا اظہار کیا گیا ہے کیونکہ قوم اپنے آئندہ عام انتخابات کے قریب پہنچ رہی ہے۔

واشنگٹن پوسٹ کی تحقیقات کے مطابق حکمران جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) مبینہ طور پر مختلف سوشل میڈیا چینلز پر مسلم مخالف بیانیے کو فعال طور پر فروغ دے کر انتہا پسند ہندو گروپوں کی حمایت حاصل کر رہی ہے۔

رپورٹ سے پتہ چلتا ہے کہ بی جے پی نے اپنے پیغامات کو پھیلانے کے لیے تقریباً 150,000 سوشل میڈیا کارکنوں کا ایک وسیع نیٹ ورک ترتیب دیا ہے۔

تحقیقاتی رپورٹ مزید اس بات پر زور دیتی ہے کہ مودی حکومت نے مسلم کمیونٹی کو نشانہ بناتے ہوئے جعلی خبروں کو پھیلانے میں اہم کردار ادا کیا ہے۔

اس خطرناک رجحان نے نفرت انگیز تقاریر اور بھارت کے اندر گمراہ کن معلومات کی گردش میں نمایاں اضافہ دیکھا ہے۔

ایک انکشاف میں، بی جے پی لیڈروں کو ممکنہ ووٹروں کو پیغامات پہنچاتے ہوئے پکڑا گیا ہے، جس میں یہ تجویز کیا گیا ہے کہ پارٹی کو ووٹ دینے سے ان کے بچوں اور ہندو برادری کی حفاظت اور بہبود کو یقینی بنایا گیا ہے۔

مزید برآں یہ انکشاف کیا گیا ہے کہ بی جے پی 'تیسرے فریق' یا 'ٹرول' پیجز کی آڑ میں کام کرنے والے افراد کے ساتھ تعاون کرتی ہے، جس سے سوشل میڈیا پر ان کی رسائی اور اثر بڑھتا ہے۔

واشنگٹن پوسٹ کی رپورٹ میں تفصیلی چونکا دینے والے انکشافات نے اقوام متحدہ کی جانب سے سخت تنقید سمیت بین الاقوامی سطح پر مذمت کی ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

صحت

حکومت کا مضر صحت انجیکشن بنانے والے اسپتال مالک کے خلاف کارروائی کا فیصلہ

نگران وزیر صحت نے میڈیا سے غیر رسمی گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اس گھناؤنے دھندے میں ملوث کسی بھی فرد سے نرمی نہیں برتی جائے گی ۔

پر شائع ہوا

Web Desk

کی طرف سے

حکومت کا  مضر صحت انجیکشن بنانے والے   اسپتال  مالک کے خلاف کارروائی کا فیصلہ

لاہور :ڈاکٹر جمال ناصر  کا کہنا ہے کہ  نجی اسپتال کے مالک کے خلاف کاروائی کا فیصلہ کر لیا گیا ہے ۔

نجی اسپتال کے دوسرے فلور پر مضر صحت انجیکشن تیار کیے جاتے رہے ، صوبائی وزیر صحت جمال ناصر کا کہنا ہے کہ نجی اسپتال کے مالک کے خلاف انکوائری کا حکم دے دیا گیا ہے ۔

انہوں نے میڈیا سے غیر رسمی گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اس گھناؤنے دھندے میں ملوث کسی بھی فرد سے نرمی نہیں برتی جائے گی ۔

نگران صوبائی وزیر نےکہا کہ کسی کو بھی اجازت نہیں ہے کہ کسی نجی اسپتال میں انجیکشن بنائے اور مارکیٹ میں فروخت کرے جس سے انسانوں کی صحت متاثر ہو قانون کے مطابق کاروائی کر کے ملزمان کو جلد سے جلد قرار واقعے سزا دلوائیں گے ۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll