جی این این سوشل

دنیا

قرض کی حد کا معاہدہ: امریکی ایوان نے بھاری اکثریت سے بل منظور کر لیا

اس اقدام نے چیمبر کو 314-117 کے ووٹوں سے پاس کیا

پر شائع ہوا

کی طرف سے

قرض کی حد کا معاہدہ: امریکی ایوان نے بھاری اکثریت سے بل منظور کر لیا
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

واشنگٹن: ایوان نمائندگان نے ایک معاہدے کی منظوری دے دی ہے جس سے امریکہ کو مزید رقم ادھار لینے کی اجازت دی جائے گی، اس سے کچھ دن پہلے کہ دنیا کی سب سے بڑی معیشت اپنے قرضے کی ادائیگی شروع کرنے والی ہے۔

اس اقدام نے چیمبر کو 314-117 کے ووٹوں سے پاس کیا، جس میں گلیارے کے دونوں اطراف انحراف تھے۔

امریکی سینیٹ کو اس ہفتے کے آخر میں اس بل پر ووٹ دینا ہوگا اس سے پہلے کہ صدر جو بائیڈن اس پر دستخط کر سکیں۔

حکومت نے پیر 5 جون کو اپنی قرض لینے کی حد تک پہنچنے کی پیش گوئی کی ہے۔

اس نے غلطی کا بہت کم فرق چھوڑا ہے کیونکہ قانون سازوں نے اپنے $31.4tn (£25tn) کے قرض کے نادہندہ ہونے سے بچنے کے لیے دوڑ لگا دی ہے، جو عالمی مالیاتی نظام کو تقویت دیتا ہے۔

بدھ کی شام، 165 ڈیموکریٹس نے 149 ریپبلکنز نے قرض کی حد کو بڑھانے کے لیے 99 صفحات پر مشتمل بل کی منظوری میں شمولیت اختیار کی، جس سے اسے ایوان سے مطلوبہ سادہ اکثریت سے پاس کرنے کی اجازت دی گئی۔

دنیا

سعودی عرب کےشہریوں پر سولر پینلز سے متعلق خاص پابندی عائد

عمارت کی چھت کے سائز سے تجاوز کرتے شمسی پینلز کی اجازت نہیں ہوگی

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

سعودی عرب کےشہریوں پر سولر پینلز سے متعلق خاص پابندی عائد

دنیا بھر میں بڑھتی گرمی کے باعث جہاں شمسی توانائی سے چلنے والے پینلز کا استعمال بڑھ گیا ہے، وہیں اب سعودی عرب نے شہریوں پر سولر پینلز سے متعلق خاص پابندی عائد کر دی ہے۔

عرب میڈیا کے مطابق شمسی پینلز لگانے سے قبل ان کے لیے مختص کی گئی جگہ کو اہم قرار دے دیا گیا ہے، سعودی حکومت کی جانب سے شمسی پینلز کو گھروں کے آگے لگانے پر پابندی عائد کر دی گئی ہے۔ دوسری جانب عمارت کی چھت کے سائز سے تجاوز کرتے شمسی پینلز کی بھی اجازت نہیں ہوگی۔

وزارت میونسپل، دیہی تعلقات اور ہاؤسنگ کی جانب سے واضح کیا گیا ہے کہ شمسی پینلز کا سائز گھر کی چھت سے بڑا نہیں ہونا چاہیے۔

مقامی میڈیا کے مطابق پابندی اس لیے عائد کی گئی ہے تاکہ تیز ہواؤں کے باعث پینلز کسی گھر پر نہ گر جائیں۔

جبکہ سعودی وزارت کا مزید کہنا تھا کہ اگر ایک شمسی پینل کی برقی صلاحیت 50 کلو واٹ یا اس سے زائد ہے، تو اس صورتحال میں سعودی الیکٹرک کمپنی سے منظوری درکار ہوگی۔

ساتھ ہی وزارت کا کہنا تھا کہ اگر شمسی پینل کی برقی صلاحیت 50 کلو واٹس سے کم ہے، تو ایسے میں لائسنس کے اجرا کی ضرورت درکار نہیں۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

روشن پاکستان پروگرام سے توانائی بحران کا خاتمہ ہوگا، وفاقی وزیر توانائی

لوڈ شیڈنگ کے خاتمے کے لیے ہرممکن اقدامات یقینی بنارہے ہیں، اویس لغاری

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

روشن پاکستان پروگرام سے توانائی بحران کا خاتمہ  ہوگا، وفاقی وزیر توانائی

وفاقی وزیر توانائی اویس لغاری نے کہا ہے کہ روشن پاکستان پروگرام سے توانائی بحران کا خاتمہ ممکن ہوگا ۔

اسلام آباد میں علی پرویز ملک کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے وفاقی وزیر توانائی اویس لغاری نے کہا کہ پاکستان بھر میں گزشتہ روز بجلی کی 25 ہزار 820 میگا واٹ کی مانگ تھی جس میں 21 ہزار 588 میگا واٹ ہم نے اپنے سسٹم کے اندر سے پیدا کرکے سپلائی کی، جب کہ 4 ہزار 232 میگا واٹ سپلائی نہیں کی گئی اور 4 ہزار 232 میگا واٹ کی لوڈ شیڈنگ ہوئی۔

انہوں نے کہا کہ یہ لوڈ شیڈنگ صرف ان فیڈرز پر کی گئی، جہاں نقصانات ہورہے ہیں، 20 فیصد سے لے کر 100 فیصد تک جہاں جہاں ہمارے نقصانات ہو رہے ہیں، 4 ہزار 232 میگا واٹ بجلی وہاں فراہم نہیں کی گئی۔

اویس لغاری نے بتایا کہ  جہاں 20 فیصد سے کم نقصانات ہیں، بدقسمتی سے ان فیڈرز پر بھی کچھ گھنٹے بجلی بند رہی، مثال کے طور پر لیسکو میں ایک ہزار 978 ایسے فیڈرز ہیں جہاں نقصانات کم ہیں، لیکن 188 فیڈرز پر بھی لوڈ شیڈنگ ہوئی جو قابل قبول نہیں ہے۔

وفاقی وزیر توانائی کا کہنا تھا کہ اگر ہم یہ بجلی ان علاقوں کو فراہم کرنا شروع کردیں تو نقصان اس حد تک بڑھ جائیں گے کہ پاکستانی معیشت مزید تباہ ہوجائے گی، جب تک ہماری ڈسٹری بیوشن کمپنیاں اپنے رخ کا تعین نہیں کرتیں اور صوبائی حکومتوں کی مدد سے ان نقصانات کا ازالہ نہیں کرتی، تب تک یہ لوڈ شیڈنگ جاری رہے گی۔

انہوں نے کہا کہ توانائی کے شعبے میں مزید اقدامات کررہے ہیں، لوڈ شیڈنگ کے خاتمے کے لیے ہرممکن اقدامات یقینی بنارہے ہیں، روشن پاکستان پروگرام سے توانائی بحران کا خاتمہ ممکن ہوگا، صوبائی حکومتوں کی مدد سے توانائی کے شعبے میں اصلاحات ناگزیر ہیں۔

وفاقی وزیر کا مزید کہنا تھا کہ ہم نے صوبوں کے ساتھ رابطے کیے، اور انہیں بتایا کہ بجلی چوری کی روک تھام میں مثال قائم کریں، میں آپ کو اپنے علاقے کی مثال دیتا ہوں ڈیر غازی خان میں ایک مقام پر 24 گھنٹوں میں صرف 3 گھنٹے بجلی آتی ہے، میرے لیے بہت آسان ہے کہ وہاں مکمل بجلی فراہم کروں لیکن ہم نے سیاست کے بجائے اصول کو ترجیح دی۔

پڑھنا جاری رکھیں

صحت

 کراچی سمیت کوئٹہ اور کوہاٹ  کے ماحولیاتی نمونوں میں پولیو وائرس کی تصدیق

جون سے ملک کے 70 مخصوص اضلاع میں پولیو مہم شروع کی جارہی ہے، سربراہ پاکستان پولیو پروگرام

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

 کراچی سمیت کوئٹہ اور کوہاٹ  کے ماحولیاتی نمونوں میں پولیو وائرس کی تصدیق

 کراچی کے 3 اضلاع سمیت کوئٹہ اور کوہاٹ  کے ماحولیاتی نمونوں میں پولیو وائرس کی تصدیق ہوئی ہے۔

 ترجمان ایمرجنسی آپریشن سینٹر (ای او سی) کے مطابق رواں سال مجموعی طور پر 39 اضلاع کے 153 سیمپلز پولیو پازیٹو  نکلے ہیں،5 اضلاع سے پولیو ٹیسٹ کیلئے سیمپلنگ 9 تا 15 مئی ہوئی تھی۔

ذرائع وزارتِ صحت  کے مطابق کراچی ایسٹ راشد منہاس روڈ، مچھر کالونی کی سیوریج پولیو پازیٹو ، سنٹرل حاجی مرید گوٹھ کی سیوریج  اور کراچی ایسٹ، سنٹرل کی سیوریج میں بھی  پولیو وائرس پایا گیا ہے۔

کوئٹہ کے علاقہ طاؤس آباد کی سیوریج پولیو پازیٹو ہے،کوئٹہ کی سیوریج کے پولیو وائرس کا جینیاتی تعلق چمن سے ہے، کوہاٹ کے علاقہ فقیر آباد کی سیوریج پولیو وائرس سے متاثرہ ہے جبکہ کوہاٹ کی سیوریج کے پولیو وائرس کا جینیاتی تعلق پشاور سے ہے۔

سربراہ پاکستان پولیو پروگرام ڈاکٹر شہزاد ملک نے کہا کہ جون سے ملک کے 70 مخصوص اضلاع میں پولیو مہم شروع کی جارہی ہے۔ پولیو مہم میں ایک کروڑ 70 لاکھ سے زائد بچوں کو پولیو سے بچاؤ کے قطرے پلائے جائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ متاثرہ علاقوں میں خصوصی توجہ دی جارہی ہے تاکہ ملک کے مستقبل کو محفوظ بنایا جاسکے۔ والدین سے اپیل ہے کہ اپنے 5 سال سے کم عمر بچوں کو پولیو ویکسین لازمی پلوائیں۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll