جی این این سوشل

پاکستان

الیکشن میں پی ڈی ایم کی ضمانتیں ضبط ہوں گی،شیخ رشید

پی ٹی آئی چھوڑنے والے ممبران سے قاسم کے ابو کو کوئی فرق نہیں پڑے گا،سربراہ عوامی مسلم لیگ

پر شائع ہوا

کی طرف سے

الیکشن میں پی ڈی ایم کی ضمانتیں ضبط ہوں گی،شیخ رشید
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

عوامی مسلم لیگ کے سربراہ اور سابق وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید نے کہا ہے کہ پی ڈی ایم دھاندلی کےالیکشن بھی کرالے تب بھی اُن کی ضمانتیں ضبط ہوں گی اور زیاده ملبہ مسلم لیگ ن پرگرےگا۔

اپنے ٹویٹ میں شیخ رشید کا کہنا تھا کہ بزدار بزدلوں کا امام نکلا، قاسم کےابونے ہمیشہ اُس کےلیے بڑا سٹینڈ لیا لیکن وہ بس اسٹینڈ نکلا۔ ایمانداری سےجیتنےوالےکوعزت ملتی ہے۔توڑ پھوڑ میں قاسم کےابو کو چھوڑنے والے منحرف ممبران کےنئے سیاسی جوڑ توڑسےکوئی فرق نہیں پڑےگا۔

سربراہ عوامی مسلم لیگ نے کہا کہ پی ڈی ایم دھاندلی کےالیکشن بھی کرالےتب بھی اُنکی ضمانتیں ضبط ہوں گی اور  زیاده ملبہ مسلم لیگ ن پےگرےگا۔ پیپلز پارٹی جس داؤ پربیٹھی ہےوہ بھی رسواہوگی ۔اگرکراچی کےمیئرکی سیٹ پرریگ مال استعمال ہو گا تو قومی الیکشن میں ریتی استعمال ہوگی۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ آئی ٹی سیکٹرپر چند روزه بندش سےاربوں روپےکانقصان ہوا۔ دوستوں سےمالیاتی مددکی چھٹی اور آئی ایم ایف سےکٹی ہے۔یہ بجٹ خاک پیش کریں گے۔زرمبادلہ کےذخائر، ترسیلات، اجناس، بجلی گیس کےبل اور منفی گروتھ ہے۔

منفی سرمایہ کاری ملک کدھرجائےگا۔ بکرا خریدنےکی ضروت نہیں کیونکہ غریب قربانی کا بکرا بنےگا اور  چادراورچاردیواری کو بلڈوز کیا جا چکا ہے۔ بیٹا بیٹی اوروالدین کواغواکیا قانون کا احترام سیاسی استحکام لازم وملزوم ہے۔زمینی حقائق بدل چکےہیں، بہار آکر رہے گی۔

 

پاکستان

ہمارےکارکنوں کوبغیر مقدمات کے اٹھا یا جا رہا ہے ، تحریک انصاف کے رہنماؤں کی پریس کانفرنس

انہوں نے کہا کہ ہمیں بتایا گیا تھا کہ رؤف حسن کے خلاف کوئی بھی مقدمہ نہیں ہے تو انہیں کیوں گرفتار کیا گیا

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

ہمارےکارکنوں کوبغیر مقدمات کے اٹھا یا جا رہا ہے ، تحریک انصاف کے رہنماؤں کی پریس کانفرنس

اسلام آباد میں پی ٹی آئی رہنماؤں نے پریس کانفرنس کی انہوں نے کہا کہ ہمارے کاکنوں کو اٹھا یا جا رہا ہے ۔ 

تحریک انصاف کےجنرل سیکرٹری عمرایوب نے کہا کہ تحریک انصاف نے دہشت گردی کی ہر صورت مذمت کی ہے ۔ 

انہوں نے کہا کہ رؤف حسن کو تحریک انصاف کے مرکزی دفترست گرفتار کیا گیا ۔ 

انہوں نے کہا کہ ہمیں بتایا گیا تھا کہ رؤف حسن کے خلاف کوئی بھی مقدمہ نہیں ہے تو انہیں کیوں گرفتار کیا گیا ۔

عمرایوب نے کہا کہ فارم 47 والی حکومت نے سپریم کورٹ کے فیصلوں کی توہین کی ہے ان پر عملدآمد نہیں کیا جا رہا ۔ 

انہوں نے کہا کہ ہمیں بتایاجائے کہ ہمارے خلاف کون کسیز بنا رہا ہے انہوں نے کہا ہم اپنےمرکزی دفتر پر چھاپے کی بھر پور مذمت کرتے ہیں ۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

توشہ خانہ ریفرنس ، عمران خان اور بشریٰ بی بی کا مزید 7 روز کا جسمانی ریمانڈ منظور

اسلام آباد کی احتساب عدالت نےدونوں کے جسمانی ریمانڈ میں 29 جولائی تک توسیع کر دی

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

توشہ خانہ ریفرنس ، عمران خان اور بشریٰ بی بی کا مزید 7 روز کا جسمانی ریمانڈ منظور

اسلام آباد کی احتساب عدالت نے توشہ خانہ کے نئے ریفرنس میں پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے بانی چیئرمین عمران خان اور ان کی اہلیہ بشریٰ بی بی کا مزید 7 روز کا جسمانی ریمانڈ منظور کرلیا۔

احتساب عدالت کے جج محمد علی وڑائچ نے عمران خان اور بشریٰ بی بی کے خلاف توشہ خانہ کے نئے ریفرنس سے متعلق اڈیالہ جیل میں سماعت کی۔بانی پی ٹی آئی اور بشریٰ بی بی کو 8 روزہ جسمانی ریمانڈ مکمل ہونے پر عدالت پیش کیا گیا۔نیب ٹیم نے ملزمان کی تفتیش سے متعلق پیشرفت رپورٹ عدالت میں پیش کی اور نیب کے تفتیشی افسر کی جانب سے ملزمان کے مزید 14 روزہ ریمانڈ کی استدعا کی گئی۔

احتساب عدالت بانی پی ٹی آئی اور بشریٰ بی بی کا توشہ خانہ کے نئےکیس میں مزید 7 روز کا جسمانی ریمانڈ منظور کر لیا، عدالت نے دونوں کے جسمانی ریمانڈ میں 29 جولائی تک توسیع کر دی۔

واضح رہے کہ 14 جولائی کو اسلام آباد کی احتساب عدالت نے توشہ خانے کے نئے ریفرنس میں سابق وزیر اعظم عمران خان اور ان کی اہلیہ بشریٰ بی بی کا 8 روزہ جسمانی ریمانڈ منظور کرلیا تھا۔

اس سے ایک روز قبل (13 جولائی) گزشتہ روز نیب نے عمران خان اور ان کی اہلیہ کو عدت نکاح کیس میں ضمانت ملنے کے فوری بعد توشہ خانہ کے ایک نئے ریفرنس میں گرفتار کرلیا تھا۔

نیب کی انکوائری رپورٹ کے مطابق نیا کیس 7 گھڑیوں سمیت 10 قیمتی تحائف خلاف قانون پاس رکھنے اور بیچنے سے متعلق ہے۔

قبل ازیں قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر عمر ایوب اور پی ٹی آئی کے دیگر رہنما اڈیالہ جیل کے گیٹ پہنچے تو انہیں سابق وزیر اعظم اور ان کی اہلیہ کی نئے ریفرنس میں گرفتاری کا بتایا گیا تھا۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

چاہے بجلی خریدیں یا نہ خریدیں پیسے تو دینے ہی پڑیں گے

حکومت نے ایک سال میں ایک یونٹ بجلی تو نہیں خریدی مگر معاوضے میں 1929 ارب روپے کی کپیسٹی پیمنٹ کر دی

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

چاہے بجلی خریدیں یا نہ خریدیں پیسے تو دینے ہی پڑیں گے

چاہے بجلی خریدیں یا نہ خریدیں پیسے تو دینے ہی پڑیں گے، حکومت نے ایک سال میں ایک یونٹ بجلی تو نہیں خریدی مگر معاوضے میں 1929 ارب روپے کی کپیسٹی پیمنٹ کر دی۔

حکومت کی جانب سے آئی پی پیز کو کی جانے والی کپیسٹی پیمنٹ کے ہوشربا اعدادو شمار سامنے آ گئے، مہنگائی کے اس دور میں بجلی کی تقسیم کار آزاد کمپنیاں (آئی پی پیز) کو کی جانے والی کپیسٹی پیمنٹ نے عوام کا خون نچوڑ لیا۔

حکومت نے ایک سال میں ایک یونٹ بجلی تو نہیں خریدی مگر معاوضے میں 1929 ارب روپے کی کپیسٹی پیمنٹ کر دی، مجموعی طور پر آئی پی پیز سے 1198 ارب روپے کی بجلی خریدی گئی مگر 3127 ارب کی ادائیگیاں کی گئیں۔

چاہے بجلی خریدیں یا نہ خریدیں پیسے تو دینے ہی پڑتے ہیں اور حکومت ایسا ہی کرتی آرہی ہے۔ گزشتہ سال آئی پی پیز سے 1198 ارب روپے کی بجلی خریدی گئی مگر 3127 ارب کی ادائیگیاں کی گئیں، یعنی بجلی خریدے بغیر 1929 ارب روپے کی کپیسٹی پیمنٹ کر دی گئی۔ آئی پی پیز کو کی گئی کل ادائیگیوں میں 38 فیصد پیداواری لاگت آئی اور 62 فیصد کپیسٹی پیمنٹ کا انکشاف ہوا۔

افسر شاہی کا اندازہ یہاں سے لگایا جا سکتا ہے کہ 85 فیصد آئی پی پیز کی پیداوار 50 فیصد سے کم مگر ادائیگیاں 100 فیصد کی گئیں، صرف زیرو فیصد پلانٹ فیکٹر والے پاور پلانٹس کو ایک سال میں 46 ارب 40 کروڑ روپے کیپسٹی پیمنٹ ادا کی گئی۔حکومت کو جانب سے جنہیں بھر پور انداز میں نوازا گیا ان زیرو فیصد پلانٹ فیکٹر والے پلانٹس میں حبکو، کیپکو، ایچ سی پی سی شامل ہیں۔

4 فیصد پلانٹ فیکٹر رکھنے والے ایک پلانٹ کو 7 ارب روپے سے زائد کی ادائیگی کی گئی، 8 فیصد پیداوار والے نندی پور پلانٹ کو 15 ارب روپے جبکہ گنجائش سے 25 فیصد کم بجلی پیدا کرنے والے پلانٹس کو 568 ارب روپے کی ادائیگی کی گئی۔اسی طرح 25 سے 83 فیصد تک بجلی پیدا کرنے والے پلانٹس کو 1314 ارب روپے، چائنا پاور حب جنریشن کمپنی کو 9 ماہ میں 103 ارب روپے کپیسٹی پیمنٹ کی گئی۔

چینی کمپنی نے 5 ماہ سے کوئی بجلی پیدا نہیں کی جبکہ 4 ماہ پیداوار 18 فیصد تک رہی، ہوانینگ شانڈنگ روئی انرجی کو 9 ماہ میں 95 ارب روپے ،پورٹ قاسم الیکٹرک پاور کمپنی کو83 ارب روپے، پنجاب تھرمل پاور پرائیویٹ کمپنی کو26 ارب اور واپڈا ہائیڈل کو 76 ارب روپے کی کپیسٹی پیمنٹ کی گئی، بند نیلم جہلم ہائیڈرو پاور پراجیکٹ کو 10 ارب روپے سے نوازا گیا۔

وزارت توانائی نے انڈیپینڈنٹ پاور پروڈیوسرز (آئی پی پیز) سے معاہدوں پر وضاحت پیش کرتے ہوئے کہا کہ حبکو کے ساتھ پاور پرچیز ایگریمنٹ کی مدت مارچ 2027 کو ختم ہو جائے گی، حبکو کے ساتھ کسی بھی معاہدے میں کوئی توسیع نہیں کی گئی۔حکام کے مطابق حبکو پلانٹ فرنس آئل پر چلتا ہے، پلانٹ کو کوئلے پر چلانے کے لیے کوئی تبدیلی نہیں کی گئی۔ کیپکو نے 2022 میں اپنی 25 سال کی مدت مکمل کی، کیپکو کے ساتھ بجلی کی خرید و فروخت کے معاہدے میں کوئی توسیع نہیں کی گئی۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll