جی این این سوشل

پاکستان

معاشی استحکام کےلئے سیاسی استحکام بہت ضروری ہے، خواجہ آصف

کمشنر صاحب کا ضمیر اتنا بے چین تھا تو 9 دن پہلے بات کرتے، رہنما مسلم لیگ ن

پر شائع ہوا

کی طرف سے

معاشی استحکام کےلئے سیاسی استحکام بہت ضروری ہے، خواجہ آصف
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

پاکستان مسلم لیگ (ن) کے رہنما خواجہ آصف نے کہا ہے کہجب تک سیاسی استحکام نہیں آئے گا، معاشی استحکام خواب رہے گا۔  کمشنر صاحبان کا الیکشن سے کوئی تعلق نہیں ہوتا، اگر ان کا ضمیر اتنا بے چین تھا تو 9 دن پہلے بات کرتے، کمشنر کا بیان مشکوک بن گیا جو منصوبے کے تحت دیا۔

سیالکوٹ میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سابق وزیر دفاع خواجہ آصف نے کہا کہ 8 فروری کے بعد حالات ان فولڈ ہورہے ہیں، کل جو واقعہ ہوا اس کی شام تک حقیقت سامنے آچکی تھی، الیکشن کمیشن نے اس بیان کو ٹیک اپ کرلیا کمیٹی بنادی ہے۔ کمشنر راولپنڈی کے بیان پر کمنٹ کرنا غیرمناسب ہوگا، اگر الیکشن کمیشن نے کمیٹی نہ بنائی ہوتی تو ضرور کمنٹ کرتا، الیکشن پراسس آراو، ڈی آراو کے ذریعے ہوتا ہے، کمشنر صاحبان کا الیکشن سے کوئی تعلق نہیں ہوتا، کمشنر راولپنڈی کا بیک گراؤنڈ بھی سامنے آچکا ہے۔

مسلم لیگ ن کے رہنما کا مزید کہنا تھا کہ اگر ان کا ضمیر اتنا بے چین تھا تو 9 دن پہلے بات کرتے، کمشنر کا بیان مشکوک بن گیا جو کسی منصوبے کے تحت دیا، جو حکومتیں بن رہی ہیں اس کے پراسس پر میں نے ٹویٹ بھی کیا تھا۔ مختلف پارٹیاں ماضی کے بیان سے انحراف کررہی ہیں، پارٹیوں کے ایسے رویے سامنے آرہے ہیں جن سے عوام ناراض ہوں گے، پیپلزپارٹی یا جے یو آئی سے ماضی میں بھی شراکت داری رہی ہے، جن کے خلاف دھاندلی کے الزامات لگائے جارہے ہیں ان سے اتحاد ہورہا ہے، یہ رویےاس ساکھ کو اور زیادہ مجروح کررہے ہیں۔

سابق وزیر دفاع کا کہنا تھا کہ پنجاب میں ہمیں اکثریت مل گئی ہے، ن لیگ اکیلے حکومت بنانے کی پوزیشن میں ہے، پنجاب میں حکومت بنانے کے حوالے سے پراسس شروع ہوچکا ہے، جہاں تک وفاق میں حکومت بنانے کی بات ہے کل شام پیشرفت ہوئی ہے۔ جب تک سیاسی استحکام نہیں آئے گا معاشی استحکام خواب ہی رہے گا، معاشی حالات اسی طرح ابتری کا شکار رہے ہیں، سیاسی برادری ذاتی مفادات سے بالاتر ہوکرعوام کے لیے قربانی دے۔

انہوں نے کہا کہ نوازشریف کی طرف سے تمام ہدایات آتی ہیں، نوازشریف نے فیصلہ کیا ہے ایک مرتبہ پھر اتحادی حکومت کی طرف جارہے ہیں، شہبازشریف کو اتحادیوں سے مل کر حکومت کرنے کا تجربہ ہے، نوازشریف کی قیادت میں تمام چیزیں چلیں گی۔ پیپلزپارٹی اور ن لیگ میں گفتگو ہورہی ہے، فارم 45 الیکشن کمیشن کی پراپرٹی بن چکے ہیں، 2018 میں سفید کاغذ پر فارم 45 دیے گئے جو قمرباجوہ کو بھجوادیے تھے، 2018 میں یہ سب کچھ کون کررہا تھا؟، آپ نے اگر ان کے فارم 45 دیکھے ہیں تو مجھے بتادیں۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ مولانافضل الرحمان سے دوریاں پیدا نہیں ہوئیں، ہمارا آج بھی مولاناصاحب سے بڑااچھا تعلق ہے، مولانا صاحب نے پی ٹی آئی سے تعاون کا سلسلہ شروع کیا ہے، جو دھاندلی کے بینفشری ہیں ان سے اتحاد یا احتجاج کرنا سمجھ سے باہر ہے ایم کیوایم نے ایک بار پھر کراچی سے مینڈیٹ لیا ہے، دھاندلی کے الزامات کے باوجود کراچی سے ایم کیوایم کو اکثریت ملی ہے، ظاہر ہوتا ہے کراچی نے ایم کیوایم کے حق میں ووٹ دیے ہیں۔

پاکستان

اگر وفاق خیبر پختو نخواہ پر توجہ نہیں دیتا تو آئینی راستہ اختیارکریں گے ، علی امین گنڈا پور

وزیراعلیٰ خیبرپختونخواعلی امین گنڈاپورنے پشاور میں میڈیا سے گفتگوکرتے ہوئے کہا کہ صوبے کی نمائندگی کیلئے اپیکس کمیٹی اجلاس میں شریک ہوئے، صوبے کے حق پرسمجھوتہ نہیں کریں گے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

اگر  وفاق خیبر پختو نخواہ پر توجہ نہیں دیتا تو آئینی راستہ اختیارکریں گے ، علی امین گنڈا پور

علی امین گنڈا پورنے کہا ہے کہ وفاق سے مطالبہ ہے کہ ہمارے صوبے کے فنڈز ادا کریں، عوام کو ریلیف دینے کیلئے آخری حد تک جاؤں گا۔

وزیراعلیٰ خیبرپختونخواعلی امین گنڈاپورنے پشاور میں میڈیا سے گفتگوکرتے ہوئے کہا کہ صوبے کی نمائندگی کیلئے اپیکس کمیٹی اجلاس میں شریک ہوئے، صوبے کے حق پرسمجھوتہ نہیں کریں گے ، علی امین گنڈاپورنے کہا کہ مطالبہ کیا ہے ضم شدہ اضلاع میں ٹیکس اس بجٹ میں نہ لگایا جائے، اپیکس کمیٹی اجلاس میں فاٹا، پاٹامیں ٹیکس لگانے کی مخالفت کی ہے۔

وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا نے کہا کہ بجلی سے متعلق جو ڈیڈلائن دی گئی تھی اس پربات ہوئی، اسلام آباد میں کے پی کی بجلی سے متعلق تھوڑی دیربعد میٹنگ ہوگی، وفاق سے مطالبہ ہے کہ ہمارے صوبے کے فنڈز ادا کریں۔

علی امین گنڈا پورنے کہا کہ وفاق صوبے پرتوجہ نہیں دیتا توپھرآئینی راستہ اختیارکریں گے، آئینی طورپرجوکرسکتےہیں وہ کریں گے، عوام کو ریلیف دینے کیلئے آخری حد تک جاؤں گا۔ صوبےکےبجٹ کاحجم11ہزارارب کی بنیاد پررکھاہے، وفاق کی جانب سےزیادہ فنڈزآتےہیں توعوام کومزید ریلیف دیں گے۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

کشکو ل توڑ دیا ہے ، وزیر اعظم کاایس آئی ایف سی اجلاس میں اظہار خیال

وزیر اعظم نے کہا کہ اب تجارتی و معاشی تعاون کو اہمیت دے رہے ہیں، دوست ممالک نے بھی ایس آئی ایف سی کے اقدامات کو سراہا ہے، غیر ملکی سرمایہ کاری کی راہ میں حائل کوئی سرخ فیتہ برداشت نہیں

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

کشکو ل توڑ دیا ہے ، وزیر اعظم کاایس آئی ایف سی اجلاس میں اظہار خیال

 

اسلام آباد :  وزیراعظم پاکستان  شہباز  شریف کی زیر صدارت ایس آئی ایف سی کی اپیکس کمیٹی کا دسواں اجلاس  وزیراعظم  ہاؤس میں ہوا جس میں سرمایہ کاری کے اقدامات  پر بات چیت کی گئی اور اطمینان کا اظہار کیا گیا ۔ 

ایپکس کمیٹی کے اجلاس میں آرمی چیف جنرل عاصم منیر، نائب وزیراعظم اور  وزیر خارجہ اسحاق ڈار ، وفاقی وزیر اطلاعات، وزیر خزانہ محمد  اورنگزیب،  وزیر داخلہ محسن نقوی،  وزیر دفاع خواجہ آصف،  وزیر توانائی اویس لغاری  اور  دیگر شریک  ہوئے۔

اجلاس میں وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا علی امین گنڈا پور، وزیر اعلیٰ پنجاب مریم نواز، وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ اور وزیر اعلیٰ بلوچستان سرفراز بگٹی بھی شریک ہوئے ۔ 

وزیر اعظم شہباز شریف نے کہا ہے کہ صوبائی حکومتوں کو ایس آئی ایف سی میں ساتھ لیکر چل رہے ہیں اور  آئندہ بھی ساتھ لے کر چلیں گے ، انہوں نے کہا کہ غیر ملکی سرمایہ کاری کیلئے  دورہ یو اے ای انتہائی کامیاب رہا،  انہوں نے کہا کہ یو اے ای نے 10 ارب ڈالر یو اے ای قیادت نے پاکستان میں سرمایہ کاری کے لیے مختص کردیئے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اب پاکستان کے حالات مزید بہتری کی جانب گامزن ہیں اور  ہم نے کشکول توڑ دیا ہے ، اب تجارتی و معاشی تعاون کو اہمیت دے رہے ہیں، دوست ممالک نے بھی ایس آئی ایف سی کے اقدامات کو سراہا ہے، غیر ملکی سرمایہ کاری کی راہ میں حائل کوئی سرخ فیتہ برداشت نہیں۔

واضح رہے کہ چاروں صوبوں کے چیف سیکرٹریز  بھی اجلاس میں موجود تھے۔

پڑھنا جاری رکھیں

صحت

راولپنڈ ی بینظیر بھٹو اسپتال میں کانگو وائرس کے دو مریض انتقال کر گئے

ملک بھر میں  ایک بار پھر خطرناک وائرس کا خطرہ منڈلا رہا ہے جس کا نام ہے ’کانگو‘ دراصل کریمین کانگو ہیموریجک بخار (سی سی ایچ ایف) نے پاکستان میں تشویش پیدا کر دی ہے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

راولپنڈ ی بینظیر بھٹو اسپتال  میں کانگو وائرس  کے دو مریض انتقال کر گئے

راولپنڈی :  ملک بھر میں  ایک بار پھر خطرناک وائرس کا خطرہ منڈلا رہا ہے جس کا نام ہے ’کانگو‘ دراصل کریمین کانگو ہیموریجک بخار (سی سی ایچ ایف) نے پاکستان میں تشویش پیدا کر دی ہے۔

ملک کے نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف ہیلتھ نے وائرس سے دفاع کے لیے شہریوں کو کچھ مشورے بھی جاری کیے ہیں۔ گزشتہ سال بھی کانگو وائرس سے ہونے والے بخار نے پاکستان کو پریشان کیا تھا، اور اس سال بھی کچھ ایسے ہی حالات پیدا ہوتے ہوئے دکھائی دے رہے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق  راولپنڈی کے  بینظیر بھٹو  اسپتال میں کانگو وائرس سے دو اموات سامنے آئی ہیں  اسپتال ذرائع کے مطابق تین مریضوں کواسپتال لایا گیا جن میں سے دو مریض دم توڑ گئے ہیں جبکہ ایک مریض زیر علاج ہے ۔ 

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll