جی این این سوشل

پاکستان

اپوزیشن جماعتوں کا پانچ امیدوارمتفقہ طورپر اتارنے کافیصلہ

پشاور:سینیٹ انتخابات کے لیے اپوزیشن کی صف بندی مکمل ہو گئی اوراپوزیشن نے سینیٹ الیکشن کے لیے پانچ امیدوارمتفقہ طورپر اتارنے کافیصلہ کر لیا۔

پر شائع ہوا

کی طرف سے

اپوزیشن جماعتوں کا پانچ امیدوارمتفقہ طورپر اتارنے کافیصلہ
اپوزیشن جماعتوں کا پانچ امیدوارمتفقہ طورپر اتارنے کافیصلہ

تفصیلات کے مطابق خیبرپختونخواکی اپوزیشن جماعتوں نے سینیٹ الیکشن کے لیے امیدواروں کے نام فائنل کردئیے،جنرل سیٹ کے لیے مسلم لیگ ن کے عباس آفریدی اپوزیشن کے متفقہ امیدوار ہوں گے جبکہ عوامی نیشنل پارٹی کے ہدایت اللہ اورجے یوآئی کے عطاالرحمن بھی جنرل سیٹ پر امیدوارہوں گے ،اپوزیشن نے خواتین نشست کے لیے جماعت اسلامی کی عنایت بیگم کے نام کااعلان کردیا جبکہ ٹیکنیٹو کریٹ کی نشست پر فرحت اللہ بابراپوزیشن کے متفقہ امیدوارہوں گے۔

پاکستان

ایم کیو ایم پاکستان کی سیاسی جماعتوں سے رابطے کے لیے پارلیمانی کمیٹی تشکیل

ایم کیو ایم پاکستان کا سندھ کا بجٹ مسترد کرتے ہوئے وفاقی بجٹ پر بھی تحفظات کا اظہار

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

ایم کیو ایم  پاکستان کی  سیاسی جماعتوں سے رابطے کے لیے  پارلیمانی کمیٹی تشکیل

متحدہ قومی موومنٹ (ایم کیو ایم) پاکستان نے سیاسی جماعتوں سے رابطے کے لیے 4 رکنی پارلیمانی کمیٹی تشکیل دے دی جبکہ ایم کیو ایم نے سندھ کا بجٹ مسترد کرتے ہوئے وفاقی بجٹ پر بھی تحفظات کا اظہار کیا ہے۔

ایم کیو ایم کے مرکز بہادرآباد میں چیئرمین ڈاکٹر خالد مقبول صدیقی کی سربراہی میں مرکزی کمیٹی کا اجلاس ہوا، جس میں ملک کی سیاسی و معاشی صورتحال بالخصوص وفاقی اور سندھ کے صوبائی بجٹ کا تفصیلی جائزہ لیا گیا۔ اجلاس میں شرکاء نے سندھ کے بجٹ کو یکسر مسترد کرتے ہوئے کرتے ہوئے اُسے شہری اور سندھ دشمن بجٹ قرار دے دیا۔

اجلاس کے دوران عوامی مسائل کے حوالے سے سیاسی جماعتوں سے رابطے اور ملاقاتوں کے لیے 4 رکنی پارلیمانی کمیٹی تشکیل دی گئی، جس میں سید مصطفیٰ کمال، ڈاکٹر فاروق ستار، سید امین الحق اور سید فیصل سبزواری شامل ہیں۔ کمیٹی حکومتی اور سیاسی قائدین سے مختلف مسائل اور معاملات پر ملاقاتیں کرے گی۔

ترجمان ایم کیو ایم نے کہا کہ سندھ کی متعصب حکومت نے بجٹ میں شہری سندھ کے لیے کوئی بڑا ترقیاتی منصوبہ اور شہری نوجوانوں کے لیے کوئی سکیم نہیں رکھی، کراچی سندھ کے بجٹ کا 97 فیصد پیسہ دیتا ہے اس کے باوجود کراچی کی ترقی، انفراسٹرکچر اور شہریوں کو نظرانداز کیا گیا۔

اجلاس میں مرکزی کمیٹی نے وفاقی بجٹ پر بھی شدید تحفظات کا اظہار کیا جبکہ تنخواہ دار طبقے پر اِنکم ٹیکس کے اضافی بوجھ پر بھی تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ تنخواہ دار طبقے پر ٹیکس بڑھانا ملک کے بڑے جاگیردار، سرمایہ دار اور وڈیروں کو تحفظ فراہم کرنے کے مترادف ہے۔ایم کیو ایم، پی ٹی آئی سے مذاکرات کیلئے تیار، بجٹ حکومتی عہدیداروں اور امیروں کی سہولتکاری قرار دے دیا

ترجمان ایم کیو ایم نے مطالبہ کیا کہ وزیر اعظم پاکستان تنخواہ دار طبقے پر اِنکم ٹیکس کا بوجھ کم کرنے اور ان کا معاشی قتل عام بند کرنے کی ہدایت جاری کریں۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

کل پاکستان میں عید الاضحی ٰ پورے جو ش و خروش کے ساتھ منائی جائے گی

علماء کرام عید کے اپنے خطبات میں حضرت ابراہیم اور حضرت اسماعیل علیہ السلام کی عظیم قربانی کے فلسفے کی اہمیت اجاگر کریں گے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

کل پاکستان میں عید الاضحی ٰ پورے جو ش و خروش کے ساتھ منائی جائے گی

حضرت ابراہیم اور حضرت اسماعیل علیہ السلام کی عظیم قربانی کی یاد میں قوم کل عیدالاضحی مذہبی جوش وخروش کے ساتھ منائے گی۔دن کا آغاز مساجد میں امت مسلمہ کی بہتری اور پاکستان کی ترقی وخوشحالی اور سلامتی کیلئے خصوصی دعائوں کے ساتھ ہوگا۔تمام شہروں، قصبوں اور دیہات میں مساجد، عیدگاہوں اور کھلے مقامات پر عید کے اجتماعات ہونگے۔

علماء کرام عید کے اپنے خطبات میں حضرت ابراہیم اور حضرت اسماعیل علیہ السلام کی عظیم قربانی کے فلسفے کی اہمیت اجاگر کریں گے۔لوگ سنت ابراہیمی کی پیروی کرتے ہوئے جانوروں کی قربانی کرینگے۔شہروں اور قصبوں کے شہری حکام نے عید کے تین روز کے دوران آلائشوں کو ٹھکانے لگانے اور صفائی ستھرائی کے خصوصی انتظامات کئے ہیں۔

پڑھنا جاری رکھیں

دنیا

کشمیر کے حق میں بیان: بھارت کی معروف مصنفہ کیخلاف کارروائی کی منظوری

حکم نامے میں غیر قانونی سرگرمیاں (روک تھام) ایکٹ (یو اے پی اے) کی دفعہ 13 کا حوالہ دیا گیا ہے، رپورٹ

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

کشمیر کے حق میں بیان: بھارت کی معروف مصنفہ کیخلاف کارروائی کی منظوری

دہلی کے لیفٹیننٹ گورنر نے ممتاز بھارتی مصنفہ اور انسانی حقوق کی کارکن اروندھتی رائے اور سینٹرل یونیورسٹی آف کشمیر کے سابق پروفیسر ڈاکٹر شیخ شوکت حسین کے خلاف سخت گیر انسدادِ دہشت گردی قانون یو اے پی اے کے تحت مقدمہ چلانے کی منظوری دے دی ہے۔

ان پر الزام ہے کہ انہوں نے اکتوبر 2010 میں نئی دہلی میں منعقدہ ایک کانفرنس میں مسئلہ کشمیر سے متعلق ایک انتہائی اشتعال انگیز تقریر کی تھی۔

رپورٹ کے مطابق دی بھارتی اخبار نے کہا کہ حکم نامے میں غیر قانونی سرگرمیاں (روک تھام) ایکٹ (یو اے پی اے) کی دفعہ 13 کا حوالہ دیا گیا ہے، وی کے سکسینہ نے گزشتہ سال تعزیرات ہند کی کئی دفعات کے تحت مقدمہ چلانے کی منظوری دے دی تھی۔

اروندھتی رائے عالمی شہرت یافتہ مصنفہ ہیں اور انہیں معروف ادبی انعام بکر پرائز بھی مل چکا ہے۔ وہ انسانی حقوق کی کارکن بھی ہیں اور بھارت کی حکمران جماعت بی جے پی کی سخت ناقد تصور ہوتی ہیں۔

نئی دہلی میں لیفٹیننٹ گورنر ونائے کمار سکسینہ کے دفتر کے ایک عہدیدار نے بتایا کہ اروندھتی رائے اور پروفیسر شوکت حسین پر مقدمہ چلانے کے سلسلے میں یو اے پی اے کی دفعہ 45(1) کا اطلاق ہو گا۔

اس سے پہلے لیفٹیننٹ  گورنر نے اکتوبر 2023 میں ان دونوں شخصیات کے خلاف تعزیراتِ ہند کی نفرت انگیزی سے متعلق دفعات کے تحت عدالتی کارروائی شروع کرنے کی اجازت دی تھی۔

منافرت پھیلانے کی دفعات کے تحت کسی کے خلاف مقدمہ چلانے کے لیے حکومت کی اجازت لینا ضروری ہوتا ہے۔

یاد رہے کہ مدعی نے الزام عائد کیا تھا کہ کانفرنس کے مقررین کا کہنا تھا کہ کشمیر کبھی بھی بھارت کا حصہ نہیں تھا اور بھارت کی مسلح افواج نے زبردستی اس پر قبضہ کر رکھا ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll