جی این این سوشل

پاکستان

عمران حکومت مزید رہتی تو ملک تباہ ہوجاتا، مولانا فضل الرحمان

جمعیت علمائے اسلام (جے یو آئی) ف کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ عمران حکومت مزید رہتی تو ملک تباہ ہوجاتا۔

پر شائع ہوا

کی طرف سے

عمران حکومت مزید رہتی تو ملک تباہ ہوجاتا، مولانا فضل الرحمان
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

ایک جلسے سے خطاب میں انہوں نے کہا کہ ہم نے ملک کی بقا کی جنگ لڑی، مہنگائی اور مشکلات کے دلدل سے ہمیں نکلنا ہے، آئین ابھی بھی ہدف پر ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ فارن فنڈنگ کیس کو دباؤ کے تحت لمبا کیا جا رہا ہے، ملک کے ادارے حکومت کی پشت پر کھڑے ہوں، آئی ایم ایف اور فیٹف کا بھی ڈٹ کر مقابلہ کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ ملک کیخلاف کوئی سازش کامیاب نہیں ہونے دیں گے۔

فضل الرحمان نے کہا کہ کسی ریاست میں سیاسی عدم استحکام ہو تو پہلے وہاں معاشی عدم استحکام پیدا کیا جاتا ہے، یہ پانامہ کا مسئلہ تھا وہ سیاسی تھا ،اس کے بعد انہوں نے معاشی عدم استحکام پیدا کیا ،امریکہ افغانستان میں مکمل ناکام ہوا، ان کا نشانہ اس خطے میں پاکستان تھا۔

ان کا کہنا تھا کہ ایسی پالیسیاں بنائیں جس سے خامی دور ہو اور گھر کی تعمیر کی جائے،نوجوان نسل حاصل کیے گئے علم پر عمل کرے،پوری قوم صرف آئین پر متحد ہو سکتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ گزشتہ نااہل حکومت کیخلاف تمام جماعتوں کو ایک پلیٹ فارم پر اکٹھا کیا،2018کے انتخابات کے بعد سیاسی قوتوں کا ایک جگہ اکٹھا ہونا ضروری تھا۔

دنیا

اٹلی کے خوبصورت جزیرے پر مفت رہائش، خوشخبری آگئی 

اگر آپ نے کبھی یورپی ملک اٹلی میں رہنے کا خواب دیکھا ہے تو آپ کی خواہش اب  پوری ہونے والی ہے ، سونے پر سہاگہ یہ کہ آپ کو اٹلی جانے کے لیے معاوضہ بھی  مل سکتا ہے ۔ 

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

اٹلی کے خوبصورت جزیرے پر مفت  رہائش، خوشخبری آگئی 

 بحیرہ روم کے دوسرے بڑے جزیرے سارڈینیا  کی جانب سے  لوگوں کو حیرت انگیز پیشکش  دی  گئی ہے ، سارڈینیا ، جزیرے پر آ کر بسنے والے افراد کو 15 ہزار یورو (35 لاکھ پاکستانی روپے سے زائد) فی کس دینے کی منصوبہ بندی کررہا ہے ۔

اگرچہ یہ تصور کرنا  ذرا مشکل ہے کہ اتنی خوبصورت جگہ پر منتقل ہونے کے لیے جزیرے کی جانب سے  لوگوں کو ادائیگی کرنے کی ضرورت ہوگی، لیکن سارڈینیا کی حکومت اس کیلئے خاصی سنجیدہ ہے کیونکہ  اس کا مقصد آبادی کی کمی  کا مقابلہ کرنے کے لیے نئے رہائشیوں کو ترغیب دینا  ہے۔

 سارڈینیا کی حکومت نے کروڑوں یورو کی رقم مختص کی ہے جو ہزاروں افراد کو دینے کے لیے کافی ہے۔سارڈینیا کو اٹلی نے علاقائی خود مختاری دی ہوئی ہے اور وہاں کے رہائشی اپنا صدر خود منتخب کرتے ہیں۔

سارڈینیا کے صدر کا اس حوالے سے  کہنا ہے کہ آبادی میں اضافے کے بغیر معاشی ترقی کا خواب ممکن نہیں اور اسی کو مدنظر رکھتے ہوئے نئی پالیسیوں پر کام کیا جارہا ہے۔

اس پروگرام میں دلچسپی رکھنے والے افراد کو سارڈینیا کے کسی ایسے قصبے میں قیام کرنا ہوگا جہاں کی آبادی 3 ہزار سے کم ہوگی اور انہیں جو رقم دی جائے گی وہ گھر کی تزئین و آرائش پر خرچ کی جائے گی اور انہیں اس قصبے میں وہاں کل وقتی قیام کرنا ہوگا،

اسی طرح 18 ماہ کے اندر اس فرد کو سارڈینیا کو اپنے مستقل پتے کے طور پر رجسٹر کروانا ہوگا۔ حکام کو توقع ہے کہ لوگ وہاں آسانی سے رہائش اختیار کرنے کے لیے تیار ہوجائیں گے۔

اگر آپ بھی خوبصورت جزیرے پر زندگی گزارنے  کی  خواہش رکھتے ہیں تو یہ پیشکش آپ ہی کے لیے ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

غلامی سے موت بہتر ہے، عوام اگلی کال کا انتظار کریں، عمران خان

رحیم یار خان : چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے کہا ہے کہ غلامی سے موت بہتر ہے، عوام اگلی کال کا انتظار کریں پاکستانی عوام سیلاب متاثرین کی بھرپور مدد کریں۔ اللہ کا شکر ہے میری قوم میں شعور آرہا ہے۔

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

غلامی سے موت بہتر ہے، عوام اگلی کال کا انتظار کریں، عمران خان

ان خیالات کا اظہار انہوں نے رحیم یار خان میں ایک بڑے جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کیا، انہوں نے کہا کہ سارے پاکستانیوں سے کہتا ہوں کہ سیلاب متاثرین کی جتنی بھی کوشش ہوسکے مدد ضرورکریں۔

جلسے سے خطاب میں عمران خان کا کہنا تھا کہ غلامی سے موت بہتر ہے، عوام اگلی کال کا انتظار کریں، جب میں نے کہا کہ اسلام آباد میں جلسہ کروں گا تو راناثنااللہ نے دھمکیاں شروع کردیں، راناثنا اللہ سن لو اب کی بار کپتان پوری پلاننگ کرکے آئے گا۔

عمران خان نے کہا کہ 8گھنٹے میں پاکستانیوں نے سیلاب متاثرین کیلئے14ارب روپے دیئے ہیں، قوم کو اعتماد ہوجائے کہ ان کا پیسہ درست جگہ پر خرچ ہورہا ہے تو وہ دل کھول کرچندہ دیتی ہے، ہمارے پاکستانی دنیا بھر میں دل کھول کرمدد کرنے والے لوگ ہیں۔

انہوں نے کہا کہ انگریز بھی دو سال میں اردو سیکھ لیتا ہے لیکن افسوس ہوا ہمارے کرائم منسٹر اور اردو سیکھنے والے بلاول بھٹو امریکا گئے ہوئے ہیں، سیلاب متاثرین پریشان ہیں اوریہ لوگ یہاں سے اٹھ کرامریکا چلے گئے ہیں۔

سابق وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ دنیا بھر سے لوگ سیلاب متاثرین کیلئے یہاں مدد کیلئے آرہے ہیں جبکہ یہ لوگ امریکا میں مہنگے ترین ہوٹلز میں قیام رکھے ہوئے ہیں، ایک طرف بھیک مانگنے جارہا ہے اور شو مارنے کیلئے مہنگے ہوٹلز میں رکے ہوئے ہیں۔

عمران خان نے کہا کہ اللہ تعالیٰ کا شکر ہے کہ میری قوم میں شعور آرہا ہے، میں وزیراعظم بننے سے زیادہ اس بات کا شکر گزار ہوں کہ میری قوم باشعورہوگئی ہے۔

عمران خان نے کہا کہ دونوں مریموں کے پاس جھوٹ بولنے کی پی ایچ ڈی ہے، جاوید لطیف کے ذریعے پریس کانفرنس کرائی گئی کہ جیسے میں نے مذہب کی توہین کی ہو، ان کی کوشش ہے کہ میرے پرجو بھی واردات ہوگی تو کہیں گے کہ مذہبی جنونی نے اقدام اٹھایا۔

ان کا کہنا تھا کہ عمران خان کو نااہل کرانے کی انہوں نے پوری کوشش کی، یہ لوگ عمران خان سے ڈرتے ہیں اسی لیے الیکشن سے بھاگ رہے ہیں، ان سب کو معلوم ہے کہ عمران خان آئندہ الیکشن جیت جائیں گا،

چیئرمین پی ٹی آئی نے کہا کہ یہ لوگ30سال سے کرپشن کررہے ہیں اور ایک دوسرے پر کرپشن کے کیسز بنائے، آج یہ باری باری اپنے کیسز ختم کرا رہے ہیں اور باریاں لے رہے ہیں۔ اگرکوئی یہ سمجھتا ہے ہم بھیڑبکریوں کی طرح چپ کرکے تماشہ دیکھیں گے تو ایسا ممکن نہیں، جب تک میری میں جان ہے ان کیخلاف نکلوں گا اور قوم کو بھی نکالوں گا۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

انصاف کی فراہمی کیلئے جدید ٹیکنالوجی سے استفادہ کریں گے، چیف جسٹس عمرعطا بندیال

اسلام آباد : چیف جسٹس سپریم کورٹ عمر عطا بندیال نے کہا ہے کہ عدالتوں میں ویڈیو لنک متعارف کرانے سے مالی بوجھ کم ہوا، جدید ٹیکنالوجی سے مزید استفادہ کریں گے۔

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

انصاف کی فراہمی کیلئے جدید ٹیکنالوجی سے استفادہ کریں گے، چیف جسٹس عمرعطا بندیال

ان خیالات کا اظہار انہوں نے سپریم کورٹ اسلام آباد میں 9 ویں 2روزہ انٹرنیشنل جوڈیشل کانفرنس کے اختتامی سیشن سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ 
انہوں نے کہا کہ کانفرنس کے کامیاب انعقاد پر منتظمین کی کاوشیں لائق تحسین ہیں، انٹرنیشنل جوڈیشل کانفرنس سے بہت کچھ سیکھنے کو ملا۔

چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ کانفرنس میں انصاف کے نظام کو درپیش چیلنجز اور اس کے حل پر تفصیلی بات کی گئی، جوڈیشل کانفرنس میں مندوبین کی شرکت کو سراہتے ہیں۔

جسٹس عمرعطا بندیال نے کہا کہ پاکستانی عدلیہ میں ویڈیو لنک متعارف کرانے سے ادارے پر مالی بوجھ کم ہوا، گزشتہ7ماہ میں ویڈیو لنک کے ذریعے3ہزار391معاملات دیکھے گئے۔

انہوں نے کہا کہ شرکا کی تجاویز اورآرا بہت اہمیت کی حامل ہیں، پوری کوشش کررہے ہیں کہ آئندہ بھی جدید ترین ٹیکنالوجی سے بھرپور استفادہ کریں۔،

چیف جسٹس آف پاکستان کا مزید کہنا تھا کہ پاکستان میں بڑھتی ہوئی آبادی اور موسمی تغیرات کو بھی دیکھنا ہوگا، عوام کو انصاف کی بلا امتیاز فراہمی سے ہی معاشرتی مساوات کا حصول ممکن ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll