جی این این سوشل

پاکستان

وزیراعظم نے سیلاب متاثرین کی مدد کیلئے  امدادی فنڈ قائم کر دیا

اسلام آباد:وزیراعظم شہباز شریف نے سیلاب متاثرین کی مدد کے لیے امدادی فنڈ قائم کر دیا۔

پر شائع ہوا

کی طرف سے

وزیراعظم نے سیلاب متاثرین کی مدد کیلئے  امدادی فنڈ قائم کر دیا
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

تفصیلات کے مطابق  وزیراعظم شہباز شریف کی زیر صدارت سیلاب سے متاثرہ علاقوں میں امدادی سرگرمیوں کا جائزہ لینے کے لیے اجلاس ہوا۔

وزیراعظم نے اس موقع پر کہا کہ تاریخی بارشوں نے سیلاب کی صورت میں قیامت صغریٰ برپا کی ہے، بلوچستان میں سیلاب سے غیرمعمولی تباہی ہوئی ہے جبکہ سندھ، خیبر پختونخوا اور پنجاب میں بھی سیلاب سے بے تحاشہ نقصان ہوا ہے۔  

انہوں نے کہا کہ حکومت نے مشکل معاشی حالات کے باوجود 5 ارب روپے سیلاب متاثرین کے لیے فوری جاری کر دیے ہیں ، عوام بالخصوص مخیر حضرات سیلاب متاثرین کی دل کھول کر مدد کریں اور مشکلات میں گھرے ان افراد کو دوبارہ آباد کرنے میں حکومت کا ہاتھ بٹائیں۔

شہباز شریف نے مزید کہا کہ سیلاب متاثرہ بھائیوں، بہنوں اور بچوں کی مدد انصار مدینہ والے جذبے سے کرنے کی ضرورت ہے، سیلاب کی تباہی کا شکار اہل وطن کی دل کھول کر مدد کریں ۔

سیلاب زدگان کیلئے رقوم اکاؤنٹ نمبر 'جی 12164' میں جمع کرائی جاسکتی ہیں۔ 

علاقائی

بلوچستان : طوفانی بارشوں ، سیلاب سے ہلاکتوں کی تعداد 180 سے تجاوز

کوئٹہ : بلوچستان میں طوفانی بارشوں اور سیلاب سے ہلاکتوں کی تعداد 180 سے تجاوز کرگئی ہے۔

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

بلوچستان : طوفانی بارشوں ،  سیلاب سے ہلاکتوں کی تعداد 180 سے تجاوز

تفصیلات کے مطابق بلوچستان میں بارشیں اور سیلابی صورتحال تاحال برقرار ہے جس کے بعد گزشتہ  رات بارشوں سے مزید 6 افراد جاں بحق ہوگئے ہیں۔

پی ڈی ایم اے کا کہنا ہے کہ صوبے میں کل تک گرج چمک کے ساتھ تیز بارشوں کا امکان ہے جبکہ قلعہ سیف اللہ، لورالائی، بارکھان ،کوہلو اور موسی خیل میں سیلابی صورتحال متوقع ہے۔

 پی ڈی ایم اے  کے مطابق کہ شیرانی ،سبی، ڈیرہ بگٹی، بولان ،قلات، خضدار،  لسبیلہ، آوران، خاران، تربت ،پنجگور، ہرنائی اور سوراب میں بھی سیلابی صورتحال ہو سکتی ہے۔

پی ڈی ایم اے کا کہنا ہے کہ یکم جون سے 6 اگست تک مختلف حادثات میں 176 افراد جاں بحق ہوئے جبکہ جاں بحق ہونے والوں میں 77 مرد، 44 خواتین اور 55 بچے شامل ہیں۔

 

 

 

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

مادر وطن کی ڈائمنڈجوبلی ملی جوش و جذبے کیساتھ منانے کیلئے تمام تیاریاں مکمل

اسلام آباد: مادر وطن کی ڈائمنڈجوبلی اتوار کو ایک نئے جوش و جذبے کے ساتھ منانے کیلئے تمام تیاریاں مکمل ہیں تاکہ ایک آزادملک میں رہنے کے احساس سے لطف اٹھایا جا سکے۔

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

مادر وطن کی ڈائمنڈجوبلی ملی جوش و جذبے کیساتھ منانے کیلئے تمام تیاریاں مکمل

دن کا آغاز وفاقی دارالحکومت میں اکتیس اور صوبائی دارالحکومتوں میں اکیس اکیس توپوں کی سلامی سے ہو گا ۔ مساجد میں نماز فجر کے بعد ملک کی خوشحالی، یک جہتی اور امن کیلئے خصوصی دعائیں کی جائیں گی ۔

پاکستان کی پہلی دستور ساز اسمبلی کی ڈائمنڈ جوبلی کے سلسلہ میں پارلیمنٹ ہائوس میں بھی کنونشنز منعقد کئے جا رہے ہیں۔ 

ملک کے تمام شہروں میں پرچموں، بیجز اور سٹیکرز کے علاوہ بچوں بڑوں کے کپڑوں کے سٹال قائم کئے گئے ہیں ۔ ملک بھر میں مختلف سرکاری عمارتوں پر قومی پرچم لگایا گیا ہے۔ 

مختلف سرکاری اور نجی عمارتوں کوبھی رنگا رنگ روشنیوں سے سجایا گیا ہے، سکول، کالج اور نجی شعبے کے علاوہ سرکاری ادارے اور نجی تنظیمیں مختلف تقریبات کا اہتمام کریں گی ۔  بچے اپنے گھروں کو سجانے کیلئے Badges اور جھنڈیاں خرید رہے ہیں جبکہ نوجوان اپنی کاروں اور موٹرسائیکل پر لگانے کیلئے بڑے جھنڈے خرید رہے ہیں۔

یوم آزادی پر ہر عمر اور ہر طبقہ جشن آزادی کے جذبے سے سرشار ملک اور قوم کی سلامتی کیلئے کسی بھی قربانی سے دریغ نہ کرنے کی عزم کی تجدید کر رہا ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

تجارت

آئی ایم ایف قرض کی قسط رواں ماہ کے آخر میں ملنے کا امکان

 پاکستان کو اگست کے آخر میں  آئی ایم ایف قرض پروگرام کی قسط ملنے کا امکان ہے۔

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

آئی ایم ایف قرض کی قسط رواں ماہ کے آخر میں ملنے کا امکان

 

پاکستان کو قرض پروگرام کی قسط جاری کرنےکیلئے آئی ایم ایف ایگزیکٹو بورڈ اجلاس 29 اگست کوطلب کر لیا گیا۔ اکتیس اگست کودفتری اوقات کارختم ہونے سےپہلے رقم پاکستان کےاکاؤنٹ میں منتقل ہونے کاامکان ہے۔

وزیرخزانہ مفتاح اسماعیل کہتے ہیں کہ اظہارآمادگی کالیٹر جلد دستخط کرکے آئی ایم ایف کو بھیج دیں گے۔ ان کا کہنا ہے کہ گزشتہ ماہ دستخط کیے گئے اسٹاف لیول معاہدے اور اقتصادی اور مالیاتی پالیسیوں کی میمورینڈم کے تحت پروگرام کی بحالی کے لیے آئی ایم ایف کی جانب سے اظہارِ آمادگی کا خط موصول ہو گیا ہے۔ یہ اقدام 4 دوست ممالک کی جانب سے 4 بلین ڈالر کی  مالی اعانت کی تکمیل کے بعد کیا گیا ہے۔ 

یاد رہے کہ آئی ایم ایف نے پاکستان کو ایک ارب 17کروڑ ڈالر  کی قسط ادا کرنی ہے جس کے لیے پاکستان عالمی مالیاتی فنڈ کی پیشگی شرائط بھی پوری کر چکا ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll