جی این این سوشل

پاکستان

استعفوں کی منظوری کیس : سپریم کورٹ کا پی ٹی آئی کو قومی اسمبلی میں واپسی کا مشورہ

اسلام آباد: سپریم کورٹ نے ایک بار پھر پاکستان تحریک انصاف کو قومی اسمبلی میں واپسی کا مشورہ دے دیا ۔ 

پر شائع ہوا

کی طرف سے

استعفوں کی منظوری کیس :  سپریم   کورٹ   کا پی ٹی آئی کو قومی   اسمبلی میں واپسی کا مشورہ
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

تفصیلات کے مطابق تحریک انصاف  اراکین کی قومی اسمبلی سے مرحلہ وار استعفوں کی منظوری کے خلاف درخواست پر سماعت چیف جسٹس عمر عطا بندیال کی سربراہی میں دو رکنی بینچ نے کی. 

 دوران سماعت چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ عوام نے ارکان اسمبلی کو پانچ سال کیلئے منتخب کیا ہے ،  پی ٹی آئی پارلیمنٹ میں اپنا کردار ادا کرے۔ پارلیمان میں کردار ادا کرنا ہی اصل فریضہ ہے۔ کروڑوں لوگ اس وقت سیلاب سے بے گھر ہوچکے ہیں۔

 پی ٹی آئی کے وکیل فیصل چودھری نے بتایا کہ عمران خان نے سیلاب متاثرین کیلئے ساڑھے 13 ارب روپے جمع کیے،پی ٹی آئی کے ارکان اپنے حلقوں میں سیلاب متاثرین کی مدد کر رہے ہیں۔

چیف جسٹس عمر عطابندیال  نے اپنے ریمارکس میں کہا کہ سیلاب متاثرین کے پاس پینے کا پانی ہے نہ کھانے کو روٹی۔ بیرون ملک سے لوگ متاثرین کی مدد کیلئے آ رہے ہیں ۔  ملکی کی معاشی حالت بھی دیکھیں۔ پی ٹی آئی کو اندازہ ہے 123 نشستوں پر ضمنی انتخابات کے کیا اخراجات ہونگے؟ ۔

جسٹس اطہر من اللہ نے گہرائی سے قانون کا جائزہ لیکر فیصلہ دیا ہے۔ اسپیکر کا اپنا طریقہ کار ہے ہم کیسے مداخلت کر سکتے ہیں ، ہر ادارے کی اپنی صلاحیت ہوتی ہے، عام انتخابات کیلئے پورا نظام ہوتا ہے، ضمنی انتخابات میں ٹرن آئوٹ بھی کم ہوتا ہے۔

چیف جسٹس عمر عطا بندیال نے کہا کہ اسپیکر کے کام میں اس قسم کی مداخلت عدالت کیلئے کافی مشکل کام ہے ۔ ہائیکورٹ کے حکم میں واضح کہا گیا ہے کہ اسپیکر کے مرحلہ وار استعفوں کی منظوری کی قانونی حیثیت ہے ۔ بظاہر اسپیکر کے اختیار میں مداخلت سے آرٹیکل 69 متاثر ہو سکتا ہے ۔ عدالت کو مطمئن کریں کہ ہائیکورٹ کے حکم میں کیا کمی ہے ۔

وکیل فیصل چوہدری نے کہا کہ قاسم سوری نےتحریک انصاف کےاستعفےمنظورکرلیےتھے ،استعفےمنظورہو جائیں تو دوبارہ تصدیق نہیں کی جا سکتی۔

جس پر چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ قاسم سوری کا فیصلہ اسی ارادے سے لگتا ہے جیسےتحریک عدم اعتماد پر کیا تھا۔ جسٹس عائشہ ملک نے ریمارکس میں کہا کہ قاسم سوری کےفیصلےمیں کسی رکن کانام نہیں جن کااستعفیٰ منظور کیا گیا ہو، تحریک انصاف بطورجماعت کیسےعدالت آ سکتی ہے ؟ استعفیٰ دیناارکان کاانفرادی عمل ہوتاہے۔

چیف جسٹس نے کہا کہ ریاست کےمعاملات میں وضع داری اور برداشت سے چلنا پڑتا ہے ، سوچنے کا ایک اور موقع دے رہے ہیں، پارٹی سے ہدایات لیں۔ عدالت نے  پی ٹی آئی وکیل فیصل چوہدری کو مزید تیاری کا وقت دیتے ہوئے کیس کی سماعت غیر معینہ مدت کے لیے ملتوی کر دی۔

پاکستان

عمران خان کی مبینہ آڈیو لیکس پر فواد چودھری کا بھی ردعمل آ گیا

اسلام آباد : سابق وزیر اطلاعات فواد چودھری نے چیئر مین پاکستان تحریک انصاف کی مبینہ آڈیو لیکس پر کہنا ہے کہ "نئی  لیکس سے صرف یہ کنفرم ہوتا ہے کہ امریکی مراسلہ وزیر اعظم سے چھپانے کی کوشش کی گئی "۔

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

عمران خان کی مبینہ آڈیو لیکس پر فواد چودھری کا بھی ردعمل آ گیا

 

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر فواد چودھری نے عمران خان اور ان کے پرنسپل سیکریٹری اعظم خان کے درمیان ہونے والی مبینہ آڈیو لیکس پر پیغام جاری کرتے ہوئے  کہا کہ یہ لیکس صرف کنفرم کرتی ہے کہ امریکی مراسلہ وزیر اعظم سے چھپانے کی کوشش کی گئی تھی ۔

واضح رہے کہ ایک آڈیو لیک ہو ئی ہے جس میں مبینہ طورپر عمران خان کو یہ کہتے سنا جاسکتا ہے کہ " اب ہم نے صرف کھیلنا ہے۔۔ نام نہیں لینا امریکہ۔۔۔ بس صرف کھیلنا ہے اس کے اوپر کہ یہ ڈیٹ پہلے سے تھی ".

اعظم خان کہتے ہیں کہ" سر! میں یہی سوچ رہا تھا کہ یہ جو سائفر ہے نا۔۔۔ میرا خیال ہے ایک میٹنگ کرلیتے ہیں اس کے اوپر, دیکھیں اگر آپ کو یاد ہے تو آخر میں ایمبیسیڈر نے لکھا ہوا تھا کہ ڈیمارچ کریں, اگر ڈیمارچ نہیں بھی دینا تو کیونکہ رات میں نے بہت سوچا ہے اس کے اوپر۔۔۔ آپ نے کہا کہ انہوں نے اٹھایا لیکن نہیں پھر میں نے سوچا کہ اس کو کور کیسے کرنا ہے؟ ایک میٹنگ کریں شاہ محمود قریشی اور فارن سیکرٹری کی ,

شاہ محمود قریشی یہ کریں گے کہ وہ لیٹر پڑھ کر سنائیں گے تو جو بھی پڑھ کر سنائیں گے  اس کو کاپی میں بدل دیں گے,وہ میں منٹس میں کرلوں گا کہ فارن سیکرٹری نے یہ چیز بنادی ہے۔۔۔ بس اس کا یہ کام ہوگا مگر یہ کہ اس کا اینلسز ادھر ہی ہوگا,پھر اینلسز اپنی مرضی کے منٹس میں کردیں گے تاکہ منٹس آفس کے ریکارڈ میں ہو،اینلسز یہ ہوگا کہ یہ تھریٹ ہے، ڈپلومیٹک لینگوئج میں اسے تھریٹ کہتے ہیں دیکھیں منٹس تو پھر میرے ہاتھ میں ہیں نا وہ اپنی مرضی سے منٹس ڈرافٹ کرلیں گے "۔

 عمران خان پھر پوچھتے ہیں کہ "  تو پھر کس کس کو بلائیں اس میں؟ شاہ محمود، آپ ،  میں اور سہیل ؟ ٹھیک ہے کل ہی کرتے ہیں"۔اعظم خان کہتے  ہیں کہ تاکہ وہ چیزیں ریکارڈ میں آجائیں،  آپ یہ دیکھیں کہ وہ قونصلیٹ فار سٹیٹ ہیں ، وہ پڑھ کر سنائے گا تو میں کاپی کرلوں گا آرام سے، تو آن ریکارڈ آجائے گی کہ یہ چیز ہوئی ہے،آپ فارن سیکرٹری کو بلائیں تاکہ پولیٹیکل نا رہے اور بیوروکریٹک ریکارڈ پہ چلا جائے"۔

عمران خان  نےپھر استفسار کیا کہ " نہیں تو اسے  ایمبیسیڈر نے ہی لکھا ہے؟ جس پر اعظم خان کہتے ہیں کہ  ہمارے پاس تو کاپی نہیں ہے نا یہ کس طرح انہوں نے نکال دیا؟

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

صدر سے وزیراعظم  کی ملاقات ، ملکی صورتحال پر تبادلہ خیال

اسلام آباد: صدر مملکت  عارف علوی کی وزیر اعظم  شہبازشریف سے ملاقات ہوئی ہے۔ 

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

صدر سے وزیراعظم  کی ملاقات ، ملکی صورتحال پر تبادلہ خیال

تفصیلات کے مطابق آج ایوان صدر میں صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی کی وزیر اعظم شہباز شریف سے ملاقات ہوئی ہے۔

ملاقات کے دوران ملک کی مجموعی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا  ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

کھیل

فاسٹ بولر نسیم شاہ میں نمونیا کی تشخیص

پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) نے فاسٹ بولر نسیم شاہ میں نمونیا تشخیص ہونے کی تصدیق کی ہے۔

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

فاسٹ بولر نسیم شاہ میں نمونیا کی تشخیص

لاہور سے جاری بیان میں پی سی بی نے کہا کہ فاسٹ بولر نسیم شاہ میں نمونیا کی تشخیص ہوئی ہے۔

پی سی بی اعلامیے کے مطابق نسیم شاہ آج رات اسپتال میں ہی قیام کریں گے، ان کی نگرانی کرکٹ بورڈ کا میڈیکل پینل کر رہا ہے۔

اعلامیے کے مطابق انگلینڈ کے خلاف نسیم شاہ کی آئندہ میچز میں شرکت اور نیوزی لینڈ روانگی کا فیصلہ میڈیکل رپورٹس پر ہوگا۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll