جی این این سوشل

پاکستان

پاکستان نے آئی ایم ایف کو 300 ارب روپے کے نئے ٹیکس لگانے کی یقین دہانی کرادی

 اسلام آباد: پاکستان نے آئی ایم ایف کو 300 ارب روپے کے نئے ٹیکس لگانے کی یقین دہانی کرادی۔

پر شائع ہوا

کی طرف سے

پاکستان نے آئی ایم ایف کو 300 ارب روپے کے نئے ٹیکس لگانے کی یقین دہانی کرادی
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

میڈیا رپورٹس کے مطابق حکومت نے آئی ایم ایف کو ریونیو بڑھانے، گردشی قرضہ میں کمی اور معاشی و توانائی کے شعبے میں اصلاحات کے ساتھ ساتھ انرجی کنزرویشن اور مالی کفایت شعاری کے ذریعے اخراجات میں کمی کی یقین دہانی کرائی ہے۔

فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) نے ٹیکس قوانین ترمیمی آرڈیننس 2023 کے ذریعے تقریباً 300 ارب روپے کے نئے ٹیکس اقدامات کی تجاویز سے بھی آئی ایم ایف کو  آگاہ کیا، آئی ایم ایف نے سیلاب کے نقصانات، گردشی قرضے اور دیگر نقصانات کے باعث پانچ سے ساڑھے 500 ارب روپے کے اضافی ریونیو و نان ٹیکس ریونیو اقدامات کی تجویز دی ہے۔

پاکستان کی اقتصادی ٹیم اور آئی ایم ایف کے درمیان نویں اقتصادی جائزے پر مذاکرات جاری ہیں اور اگلے ہفتے پالیسی سطح کے مذاکرات مکمل ہونے کی توقع ہے، جس میں آئی ایم ایف کے ساتھ معاہدہ طے پانے کے روشن امکانات ہیں۔

علاقائی

شدید بارشوں کے باعث سیلاب کا خدشہ ، پی ڈی ایم اے کا الرٹ جاری

آئندہ 48 گھنٹوں کے اندر دریائے راوی کے ندی نالوں میں پانی کا بہاؤ بڑھے گا، جس سے سیلابی صورتحال پیدا ہو سکتی ہے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

شدید بارشوں کے باعث سیلاب کا خدشہ ، پی ڈی ایم اے کا الرٹ جاری

پی ڈی ایم اے نے پنجاب میں شدید بارشوں کے باعث سیلابی صورتحال کا خدشہ ظاہر کرتے ہوئے الرٹ جاری کر دیا۔

حکومت نےآئندہ چند ہفتوں میں سیلابی صورتحال کے امکان کے پیش نظر حادثات سے بچنے کے لیے تمام متعلقہ محکموں سے ایکشن پلان مانگ لیا۔

ذرائع کے مطابق آئندہ 48 گھنٹوں کے اندر دریائے راوی کے ندی نالوں میں پانی کا بہاؤ بڑھے گا، جس سے سیلابی صورتحال پیدا ہو سکتی ہے۔  

پی ڈی ایم اے کے مطابق دریائے چناب کے بالائی علاقوں میں بھی پانی کے بہاؤ میں اضافہ متوقع ہے، جس کے نتیجے میں دریائے چناب کے قریبی علاقوں میں شدید سیلاب کے آنے کا امکان ہے۔

15 جولائی تک ڈیرہ غازی خان اور راجن پور کے پہاڑی سلسلے میں نچلے درجے کی فلیش فلڈنگ کا امکان ظاہر کیا جا رہا ہے۔

دوسری جانب حکومت نے ممکنہ سیلاب سے بچاؤ کے اقدامات کے لیے متعلقہ محکموں میں ایمرجنسی نافذ کر دی۔

کسی بھی ہنگامی صورتحال سے بچنے کے لیے ندی نالوں کے مضافات میں رہنے والے لوگوں کو نقل مکانی کرنے کے احکامات جاری کر دیے گئے۔ 

پڑھنا جاری رکھیں

تجارت

فلور ملزمالکان کی ود ہولڈنگ ٹیکس کے خلاف تیسرے روز بھی ہڑتال جاری 

آٹے کی چکیاں بند ہونے کے باعث گندم کی پسائی نہ ہو سکی، آٹے کی قلت پیدا ہو گئی

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

فلور ملزمالکان کی ود ہولڈنگ ٹیکس کے خلاف تیسرے روز بھی ہڑتال جاری 

فلور ملز کی جانب سے ود ہولڈنگ ٹیکس کے خلاف ہڑتال تیسرے روز بھی جاری ہے۔ ملک کے بیشتر علاقوں میں آٹے کی قلت پیدا ہو گئی۔

سندھ سمیت ملک بھر میں میں آٹے کی چکیاں بند ہونے کے باعث گندم کی پسائی نہ ہو سکی۔

ملز مالکان نے ود ہولڈنگ ٹیکس کے خلاف مطالبات تسلیم کیے جانے تک ہڑتال جاری رکھنے کا اعلان کیا ہے جس سے آٹے کی ملز میں تالے لگ گئے اور کام بند ہوگیا ہے، کام بند ہونے کی وجہ سے مقامی مارکیٹوں کو آٹے کی ترسیل بند ہونے سے قلت پیدا ہونے کا خدشہ ہے۔

اس حوالے سے آٹا ملز ایسوسی ایشن کا کہنا ہے کہ اب تک ان سے حکومت نے کوئی رابطہ نہیں کیا ہے۔

دوسری جانب ملک بھر میں تمام فلور ملز بند ہیں،گندم کی پسائی بند ہونے سے مارکیٹ میں آٹا سپلائی رک گئی ہے، کوئٹہ شہر کی تمام فلور ملز سے آٹے کی پسائی اور سپلائی معطل ہونے کے بعد آٹے کی قیمتوں 200 سے 1000 ہزار روپے تک کا اضافہ ہوگیا ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

دنیا

جنگلی ہاتھی کا جنگل میں رحم دلی کا مظاہرہ ، ہاتھی  شیرنی کے بچوں پر حملہ کرنے سے گریزاں 

ہاتھی کو دیکھ کر شیرنی نے بدحواسی میں اپنے چھوٹےبچوں سمیت  بھاگنا شروع کیا، مگر بدقسمتی سے شیرنی کے بچے پیچھے رہ گئے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

جنگلی ہاتھی کا جنگل میں رحم دلی کا مظاہرہ ، ہاتھی  شیرنی کے بچوں پر حملہ کرنے سے گریزاں 

ایک جنگلی ہاتھی نے جنگل کے قانون میں انسانیت کی شق متعارف کروا دی۔  شیرنی کے بچوں کو تنہا دیکھتے ہوئے ایک جنگلی ہاتھی  حملہ کرنے سے پیچھے ہٹ گیا۔   
تفصیلات کےمطابق ایک سوشل میڈیا صارف نے ایک ویڈیو شیئر کی، جس میں ایک شیرنی اپنے بچوں کے ساتھ جنگل میں چہل قدمی کر رہی تھی۔ اچانک ایک بڑے ہاتھی نے شیرنی کو اس کے بچوں سمیت  دیکھ لیا۔ ہاتھی، شیرنی کو دیکھ کر شیرنی کی جانب لپکا۔ ہاتھی کے اچانک حملے سے شیرنی بدحواس ہو گئی۔ 
ہاتھی کو دیکھ کر شیرنی نے بدحواسی میں اپنے چھوٹےبچوں سمیت  بھاگنا شروع کیا، مگر بدقسمتی سے شیرنی کے بچے پیچھے رہ گئے۔ 
ہاتھی نے شیرنی کا تعاقب کیا، مگر شیرنی تب تک دور جا چکی تھی۔ 
شیرنی تو ہاتھی کی پہنچ سے دور نکل گئی، مگر شیرنی کے بچے ہاتھی کی دسترس میں آگئے۔ 
عین اسی لمحے ایک حیرت انگیز بات یہ ہوئی کہ ہاتھی نے شیرنی کے تنہا بچوں پر حملہ نہیں کیا اور واپس پلٹ گیا۔ 
جنگل کے ایک جنگلی جانور نے چھوٹے بچوں پر حملہ نہ کر کے  انسانیت کا اعلیٰ درس دے دیا۔ انسانی معاشرے کے لیے اس واقعے میں ایک بڑا درس ہے۔ انسانی معاشرے میں بچوں کے ساتھ انسانیت سوز واقعات اکثر رپورٹ ہوتے رہتے ہیں۔   

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll