جی این این سوشل

پاکستان

مجھے زہر دینے کا پروگرام ہے، سب چاہتے ہیں کہ عدالتوں کے اندر ریفارمز ہوں: عمران خان

لاہور: چیئرمین پاکستان تحریک انصاف عمران خان نے کہا ہے کہ جنرل (ر) باجوہ نے فیصلہ کیا عمران خان مجھے پسند نہیں اسے ہٹانا ہے، جنرل باجوہ کو شہباز شریف بہت پسند تھا۔

پر شائع ہوا

کی طرف سے

مجھے زہر دینے کا پروگرام ہے، سب چاہتے ہیں کہ عدالتوں کے اندر ریفارمز ہوں: عمران خان
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

لاہور: چیئرمین پاکستان تحریک انصاف عمران خان نے کہا ہے کہ جنرل (ر) باجوہ نے فیصلہ کیا عمران خان مجھے پسند نہیں اسے ہٹانا ہے، جنرل باجوہ کو شہباز شریف بہت پسند تھا۔

انہوں نے ویڈیو لنک کے ذریعے خطاب کرتے ہوئے کہا جنرل باجوہ سمجھتا تھا شہباز شریف بڑا جیینس ہے، جنرل  باجوہ نے ان کے ساتھ مل کر میری حکومت گرائی، ایک لوٹے کو اپوزیشن لیڈر بنایا ہوا ہے جس نے ن لیگ کا ٹکٹ لینا ہے ۔

سابق وزیراعظم عمران خان نے کہا سپریم کورٹ پر پریشر ڈالنے کیلئے اس طرح کے فیصلے کئے جا رہے ہیں، یہ پریشر ڈال کر الیکشن سے بھاگنا چاہتے ہیں، یہ وہ لوگ ہیں جنہوں نے سپریم کورٹ کے جسٹس پر حملہ کیا، انہوں نے سارے اداروں میں اپنے لوگ بٹھائے، حکومت میں آتے ہی نیب میں اپنا آدمی رکھوایا، یہ جج وہ چاہتے ہیں جو ان کے ساتھ ہو، یہ 30 سال سے ملک کو لوٹ رہے تھے اب ان کے کیسز ختم ہو گئے ہیں۔

انہوں نے کہا سب چاہتے ہیں کہ عدالتوں کے اندرریفارمز ہوں، ان کو 30 سال سے قوم جانتی ہے ان کی کرپشن پر کتابیں لکھی گئی ہیں، سیاسی کارکنوں کے ساتھ انگریزوں نے بھی ایسا نہیں کیا تھا جو انہوں نے کیا، ایک بدمعاش کو وزیر داخلہ رکھا ہوا ہے، سب سے زیادہ پولیس مقابلے میں شہباز شریف نے لوگوں کو قتل کروایا، لوگوں کو بغیر وارنٹ کے گرفتار کیا جارہا ہے، اگر کارکنان نہ ملیں تو ان کے بھائی اور باپ کو اٹھا کر لے جاتے ہیں۔

عمران خان نے کہا ان کو پتہ ہی نہیں کہ سوشل میڈیا کیسے کام کرتا ہے؟ جس کے پاس موبائل ہے اس کے پاس آواز ہے، پاکستان میں جنگل کا قانون ہے، یہاں لوگوں کو اغوا کیا جارہا ہے، یہاں کوئی قانون نہیں ہے، وزارت داخلہ خود کہتی ہے مجھ پر ایک اور حملہ ہو گا، مجھ پر دہشت گردی کے 40 مقدمات بنائے گئے ہیں، ان کی پوری کوشش تھی کسی طریقہ سے ٹریپ کر کے مجھے مروایا جائے۔

سابق وزیراعظم نے کہا جوپارٹی الیکشن چاہتی ہے وہ تصادم نہیں چاہتی، ہمارے لوگوں کو جیل میں ڈالا، جیل میں ہمارے لوگوں پر تشدد کیا جاتا ہے، شہباز گل کو پکڑ کر پوچھا گیا عمران خان کھانا کیا کھاتا ہے؟ انہوں نے الزام عائد کیا کہ ا ن کا مجھے زہر دینے کا پروگرام ہے۔

چیئرمین پی ٹی آئی نے کہا جمہوریت کے اندر تنقید ہوتی ہے، جلسہ فیل کروانے کیلئے کنٹینرز سے لاہور کو سیل کیا گیا لیکن رکاوٹوں کے باجود لوگ بڑی تعداد میں جلسے میں پہنچے، کبھی آپ نے سوچا جن کو آپ پکڑتے ہیں ان کے گھر والوں کا کیا بنے گا؟ چوروں کو بچانے کیلئے ساری پالیسیز بن رہی ہیں، ظل شاہ کو قتل کیا گیا۔

ویڈیو لنک کے ذریعے خطاب کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ ایسی مہنگائی پاکستان کی تاریخ میں کبھی نہیں دیکھی، بیروزگاری بڑھتی جا رہی ہے، آئی ایم ایف سے معاہدے نہیں ہو پا رہے ہیں، ان کے پاس کوئی روڈ میپ نہیں  ہے۔

پاکستان

شہباز شریف متفقہ طور پر مسلم لیگ (ن) کے قائم مقام صدر نامزد

مسلم لیگ (ن) کی سینٹرل ورکنگ کمیٹی کا اجلاس پارٹی سیکرٹریٹ ماڈل ٹاؤن میں ہوا

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

شہباز شریف متفقہ طور پر مسلم لیگ (ن) کے قائم مقام صدر نامزد

وزیراعظم شہباز شریف کو متفقہ طور پر مسلم لیگ (ن) کا قائم مقام صدر نامزد کر دیا گیا۔

مسلم لیگ (ن) کی سینٹرل ورکنگ کمیٹی کا اجلاس پارٹی سیکرٹریٹ ماڈل ٹاؤن میں ہوا جس میں شہباز شریف کو قائم مقام صدر نامزد کیا گیا۔ نواز شریف ، شہباز شریف، وزیراعلیٰ پنجاب مریم نواز، رانا ثناء اللہ، احسن اقبال، اسحاق ڈار اور دیگر نے اجلاس میںشرکت کی۔

شہباز شریف اور احسن اقبال نے قائم مقام صدر کے لیے نواز شریف کا نام تجویز کیا، مریم نواز، رانا ثناء اللہ، اسحاق ڈار، پرویز رشید اور دیگر اراکین نے حمایت کی تاہم نواز شریف نے شہباز شریف کو قائم مقام صدر نامزد کر دیا۔

شہباز شریف 28 مئی تک مسلم لیگ (ن) کے قائم مقام صدر رہیں گے، اس موقع پر جنرل کونسل اجلاس کی تاریخ کا بھی اعلان کیا گیا، 28 مئی کو ہونے والے اجلاس میں آج کے اجلاس کے فیصلوں کی توثیق کی جائے گی۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

این اے 148 ضمنی انتخابات کل ہونگے، تیاریاں مکمل

275 پولنگ اسٹیشنز کی حفاظت کے لیے 3829 پولیس افسران و جوان فرائض سر انجام دیں گے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

این اے 148 ضمنی انتخابات کل ہونگے، تیاریاں مکمل

ملتان میں ضمنی الیکشن قومی اسمبلی این اے - 148 کے سکیورٹی انتظامات کو حتمی شکل دے دی گئی ہے۔ اس سلسلے میں حلقے میں کل پولنگ اسٹیشنز 275 کی حفاظت کے لیے 3829 پولیس افسران و جوان فرائض سر انجام دیں گے۔

 اس موقع پر آ ر پی او کا کہنا تھا کہ ملتان ریجن پولیس مکمل غیر جانبداری سے فرائض سر انجام دے گی۔ گورنمنٹ کی جانب سے جاری کردہ الیکشن ضابطہ اخلاق پر سختی سے عمل درآمد کروایا جائے گا۔ خلاف ورزی کی صورت میں قانون کے مطابق کاروائی عمل میں لائی جائے گی۔

انہوں نے کہا کہ امن و امان کا قیام پولیس کی بنیادی ذمہ داری ہے۔جرائم کی بیخ کنی کے علاہ امن و امان بھی پولیس کی ذمہ داری ہے۔

 انہوں نے مزید کہا کہ یہ الیکشن آ پ کے لئے چیلنج کی حیثیت رکھتا ہے۔ مجھے امید ہے آپ ایک منظم فورس کے فرض شناس عہد دار کی حیثیت سے اس چیلنج کو قبول کریں گے اور اپنی ڈیوٹی میں کسی قسم کی لاپرواہی کوتاہی نہیں کریں گے.

دوسری جانب الیکشن کمیشن آف پاکستان نے 19 مئی کو قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 148 میں ہونے والے ضمنی انتخابات میں عوام الناس کی سہولت کے لیے الیکشن مانیٹرنگ اینڈ کنٹرول سنٹر قائم کر دیا ہے۔

الیکشن کمیشن کے ترجمان کے مطابق اس سنٹر میں عوام الناس کو ان الیکشن کے حوالے سے رابطہ کرنے اور اپنی شکایات درج کرانے کی سہولت ہو گی۔ شکایات کے بروقت اَزالہ کے لیے فوری طور پر کارروائی کی جائے گی اور اِس مقصد کے لیے سنٹر میں تربیت یافتہ عملہ تعینات کردیا گیا ہے ۔

الیکشن کمیشن نے عوام کی شکایات کے اندراج اور ان کے فوری حل کے لیے 4 سطحوں پر کنٹرول سنٹر قائم کئے ہیں جس میں الیکشن کمیشن سیکرٹیریٹ اسلام آباد کے علاوہ صوبائی، ڈویژن اور ضلعی سطح پر کنٹرول روم قائم کیاگیا ہے۔

عوام مذکورہ ضمنی انتخابات کے سلسلے میں شکایات کے اندراج کے لیے ای ایم سی سی (EMCC)سنٹر کے عملہ سے ای میلcomplaints@ecp.gov.pk پربھی رابطہ کر سکتے ہیں۔کمیشن نے عوام کی سہولت کے لیے (EMCC)میں ایک مخصوص ہیلپ لائن کی سہولت بھی دی ہے جس کا رابطہ نمبر 051111327000 ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

دبئی لیکس: ایف آئی اے اور نیب سے تحقیقات کرانے کیلئے درخواست دائر

دبئی لیکس میں کئی پاکستانی سیاستدانوں اور کاروباری شخصیات کے نام آئے، ہر سیاستدان پر اپنی تمام ملکی و غیر ملکی پراپرٹی ظاہر کرنا لازم ہے، درخواست

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

دبئی لیکس: ایف آئی اے اور نیب سے تحقیقات کرانے کیلئے درخواست دائر

لاہور ہائی کورٹ (ایل ایچ سی) میں فیڈرل انویسٹی گیشن ایجنسی (ایف آئی اے)، فیڈرل بیورو آف ریونیو (ایف بی آر) اور قومی احتساب بیورو (نیب) سے دبئی لیکس کی تحقیقات کے لیے درخواست دائر کردی گئی۔

لاہور ہائیکورٹ میں درخواست شہری مشکور حسین کی جانب سے دائر کی گئی جسے ندیم سرور ایڈووکیٹ کے ذریعے پیش کیا گیا،درخواست میں وفاقی حکومت، نیب، ایف آئی اے اور دیگر کو فریق بنایا گیا ہے۔

درخواست میں کہا گیا کہ دبئی لیکس میں کئی پاکستانی سیاستدانوں اور کاروباری شخصیات کے نام آئے، ہر سیاستدان پر اپنی تمام ملکی و غیر ملکی پراپرٹی ظاہر کرنا لازم ہے، عدالت ایف آئی اے، نیب اور دیگر متعلقہ اداروں کو دبئی لیکس کی تحقیقات کا حکم دے۔

درخواست میں استدعا کی گئی کہ تحقیقات ہونی چاہیے کہ دبئی میں خریدی گئی پراپرٹیز منی لانڈرنگ سے تو نہیں بنائی گئیں، دبئی میں غیر قانونی پراپرٹی ثابت ہونے پر مالکان کے خلاف کارروائی کا حکم بھی دیا جائے۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll