جی این این سوشل

پاکستان

عدالتی اصلاحاتی بل کے قانون بننے سےکس کس کو فائدہ ہوگا ؟

قومی اسمبلی سے منظور ہونے والے عدالتی اصلاحات کے بل کے قانون بننے کے بعد کئی اہم شخصیات کو اپیل کو حق مل جائے گا۔

پر شائع ہوا

کی طرف سے

عدالتی اصلاحاتی بل کے قانون بننے سےکس کس کو فائدہ ہوگا ؟
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

سپریم کورٹ پریکٹس اینڈ پروسیجر بل کے قانون بننے کے بعد نوازشریف اورپی ٹی آئی کے منحرف رکن جہانگیر خان ترین سمیت کئی اہم سیاسی شخصیات کو نااہلی کے خلاف اپیل دائر کرنے کا حق مل جائےگا ۔

نوازشریف ، جہانگیرترین نااہلی کیخلاف اپیلیں دائرکرسکیں گے، اورنوازشریف کوپارٹی صدارت کیس میں بھی اپیل کا حق مل جائے گا،تاحیات نااہلی کے فیصلے کیخلاف بھی اپیل دائرہوسکے گی۔

اس کے علاوہ قاسم سوری رولنگ اورمنحرف ارکان ووٹ کیسز میں بھی اپیلیں ہو سکیں گی،حمزہ شہبازاپنی حکومت کے خاتمے کیخلاف بھی اپیل دائر کر سکیں گے۔

عدالتی اصلاحات کے بل کے قانون بننے سےجعلی ڈگری پر نااہل سابق ارکان اسمبلی کو بھی اپیل کا حق حاصل ہو جائےگا۔

یاد رہے کہ آج (29 مارچ) وفاقی حکومت کی جانب سے قومی اسمبلی میں پیش کیاگیا عدالتی اصلاحات سے متعلق سپریم کورٹ پریکٹس اینڈ پروسیجر بل 2023ء متفقہ طور پر منظور کر لیا گیا ۔

قبل ازیں قائمہ کمیٹی قانون وانصاف نے اضافی ترامیم کیساتھ بل متفقہ طور پر منظور کیا تھا۔

اس کے علاوہ گزشتہ روز وزیراعظم کی زیرصدارت ہونے والے وفاقی کابینہ کے اجلاس میں بھی عدالتی اصلاحات سے متعلق بل کی توثیق کی گئی تھی۔

پاکستان

وزیر خا رجہ اسحاق ڈار کی ایرانی صدر ڈاکٹر سید ابراہیم رئیسی سے ملاقات

وزیر خارجہ پاکستان اسحاق ڈار  نے کہاکہ پوری قوم ایرانی صدر کی پاکستان آمد پر ان کا خیر مقدم کرتی ہے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

وزیر خا رجہ اسحاق ڈار کی ایرانی صدر ڈاکٹر سید ابراہیم رئیسی سے ملاقات

اسلام آباد : وزیر خارجہ اسحاق ڈار نے آج اسلام آباد میں ایرانی صدر ڈاکٹر سید ابراہیم رئیسی سے ملاقات کی اور دوطرفہ تعلقات سمیت علاقائی اوربین الاقوامی امورپر تبادلہ خیال کیا۔

 انہوں نے مختلف شعبوں میں دوطرفہ تعلقات مزید مستحکم کرنے کے لئے کوششیں تیز کرنے کی اہمیت پر زوردیا۔

 انہوں نے علاقائی چیلنجز سے نمٹنے ، امن کےلئے کوششوں اور تعمیری بات چیت کے عزم کا اعادہ کیا۔

وزیر خارجہ پاکستان اسحاق ڈار  نے کہاکہ پوری قوم ایرانی صدر کی پاکستان آمد پر ان کا خیر مقدم کرتی ہے انہوں نےکہا پاکستان میں عا م انتخابات کے بعد کسی سربراہ مملکت کا یہ پہلا دورہ ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

ایرانی صدر ڈاکٹر سید ابراہیم رئیسی کل لاہور کا دورہ کریں گے

لاہور کے دورے کے بعد صدر رئیسی کراچی روانہ ہوں گے جہاں وہ قائد اعظم محمد علی جناح کے مزار پر حاضری دیں گے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

ایرانی صدر ڈاکٹر سید ابراہیم رئیسی کل لاہور کا دورہ کریں گے

لاہور: ایرانی صدر ڈاکٹر سید ابراہیم رئیسی جو اس وقت پاکستان کے تین روزہ دورے پر ہیں آج لاہور پہنچیں گے۔ اپنے دورے کے دوران وہ گورنر بلیغ الرحمان اور وزیر اعلیٰ مریم نواز سمیت پنجاب کی اعلیٰ قیادت سے ملاقاتیں کریں گے اور کاروباری نمائندوں اور تاجروں سے بھی بات چیت کریں گے۔

صدر رئیسی کے وفد کی آمد کے پیش نظر پنجاب حکومت نے ضلع لاہور اور اس کے ماتحت دفاتر کے لیے مقامی تعطیل کا اعلان کیا ہے۔ تاہم چھٹی پنجاب سول سیکرٹریٹ، اس سے منسلک محکموں، یا علاقائی دفاتر میں نہیں کی جائے گی ۔


پیر کو اسلام آباد پہنچنے والے صدر ابراہیم  رئیسی پہلے ہی صدر آصف علی زرداری، وزیر اعظم شہباز شریف، وزیر خارجہ اسحاق ڈار اور دیگر معززین سے اہم ملاقاتیں کر چکے ہیں۔ ان کے لاہور کے سفر نامے میں صوبائی کابینہ کے وزراء، اعلیٰ حکام اور محکموں کے سربراہان کے ساتھ سخت حفاظتی اقدامات کے تحت مصروفیات بھی شامل ہوں گی۔

واضح رہے کہ لاہور کے دورے کے بعد صدر رئیسی کراچی روانہ ہوں گے جہاں وہ قائد اعظم محمد علی جناح کے مزار پر حاضری دیں گے۔

پڑھنا جاری رکھیں

جرم

حکومت کے اسمگلنگ اور ٹیکس چوری کے واقعات کے خلاف قانونی اقدامات

اس ٹریک اینڈ ٹریس سسٹم کے نفاذ کی کوشش ریگولیٹری سالمیت ریگولیٹری انٹیگرٹی  کو یقینی بنائے گی جو معاشی ترقی کیلئے حکومت پاکستان کے عزم کی عکاسی کرتی ہے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

حکومت کے اسمگلنگ اور ٹیکس  چوری کے واقعات کے خلاف قانونی  اقدامات

خصوصی سرمایہ کاری سہولت کونسل  کی اسمگلنگ اور ٹیکس چوری کو روکنے کیلئے اقدامات ، ٖحکومت پاکستان جامع ٹریک اینڈ ٹریس سسٹم کے ذریعے سمگلنگ اور ٹیکس چوری کو روکنے کی کوشش کر رہی ہے۔

اس سسٹم کو خصوصی سرمایہ کاری سہولت کونسل کی طرف سے سپورٹ کیا جا رہا ہے تاکہ ٹریک اینڈ ٹریس سسٹم کے ذریعے شفافیت قائم کی جائے جس سے مزید سرمایہ کاری کی رغبت بڑھے گی۔

ٹریک اینڈ ٹریس سسٹم تمباکو، کھاد اور چینی کی سمگلنگ کی روک تھام کیلئے کلی اور سیمنٹ کے شعبے میں جزوی طور پر لاگو کیا جا رہا ہے۔

اس مہم کا مقصد غیر قانونی تجارتی سرگرمیوں کو ناکام بنانا، محصولات میں اضافہ، شفافیت کو بڑھانا اور منصوبہ بندی میں سہولت فراہم کرنا ہے ، اس سسٹم کا نفاذ سروس فراہم کرنے والے اداروں، صنعت اور حکومت پر عمل درآمد کرنے والی ایجنسیوں سمیت تمام سٹیک ہولڈرز کیلئے ایک چیلنج ہے جس سے نمٹنے کیلئے سرتوڑ کوشش کی جا رہی ہے۔ 

اس ٹریک اینڈ ٹریس سسٹم کے نفاذ کی کوشش ریگولیٹری سالمیت ریگولیٹری انٹیگرٹی  کو یقینی بنائے گی جو معاشی ترقی کیلئے حکومت پاکستان کے عزم کی عکاسی کرتی ہے۔

 

 

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll