جی این این سوشل

پاکستان

چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان  کا چیف جسٹس آف پاکستان کو خط لکھنے کا فیصلہ

عمران خان نے کہا تھا کہ جب ان کو کچھ نہیں ملے گا تو یہ گھر کی عورتوں کے بارے میں بات کرے گے، وکیل عمیر نیازی

پر شائع ہوا

کی طرف سے

چیئرمین پی ٹی آئی  عمران خان  کا چیف جسٹس  آف پاکستان کو خط لکھنے کا فیصلہ
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

عمران خان کے وکیل عمیر نیازی اڈیالہ جیل کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا سانحہ 9 مئی کے حوالے سے عمران خان نے جلد اوپن لیٹر جاری کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان کے وکیل عمیر نیازی نے خاور مانیکا کے انٹرویو پر کہا کہ عمران خان نے کہا تھا کہ جب ان کو کچھ نہیں ملے گا تو یہ گھر کی عورتوں کے بارے میں بات کرے گے، یہ کسی بھی لیول پر جا سکتے ہیں۔ یہ لوگوں کو گرفتار کرتے ہیں پھر ان سے انٹرویو کرواتے ہیں اور ضمانت پر چھوڑ دیتے ہیں۔ یہ سب عمران خان کے لئے کوئی پریشانی کا باعث نہیں، ان کی پوری توجہ 8 فروری کے انتخابات پر ہے اور بھرپور طریقے سے تحریک انصاف الیکشن میں حصہ لے گی۔

ان کا کہنا تھا کہ نیب 190 ملین پاؤنڈ کیس کی سماعت  ابھی ہوگی۔  نو مئی کو عمران خان کی ہتک آمیز گرفتاری عوام کو مشتعل کرنے کے لئے تھی۔ عسکری ٹاور مقدمہ آگ لگانے کا ٹائم 11 بجے کا ہے یہ کس نے لگائی؟ اسلام آباد ہائی کورٹ سے چیئرمین گرفتاری کی رپورٹ سامنے کیوں نہیں لائی گئی؟

انہوں ںے اعلان کیا کہ 9 مئی بابت چیئرمین پی ٹی آئی جلد اوپن لیٹر جاری کرنے والے ہیں۔ گرفتاریاں اور تشدد کر کے سیاسی وفاداریاں تبدیل کرائی جا رہی ہیں۔ تمام جماعتیں انتخابی مہم چلا رہی ہیں تحریک انصاف کی گرفتاریاں ہورہی ہیں۔ مشرقی پاکستان والی غلطی پھر دہرائی جارہی ہے۔ وہاں عوامی مینڈیٹ تسلیم نہیں کیا گیا۔ ووٹ پراسس سے تبدیلی لانا ضروری ہے۔ ٹکٹوں کی تقسیم کا پراسس ہوگیا ہر حلقہ میں تین تین نام شارٹ لسٹ کئے گئے ہیں۔ جب کچھ نہیں ملتا تو گھر کی خواتین تک جاتے ہیں،سوشل میڈیا پر کل کا انٹرویو پٹ چکا ہے۔

انہوں نے کہا کہ 8 فروری کو شفاف الیکشن ضروری ہیں تحریک انصاف ہر سیٹ پر امیدوار کھڑا کرے گی۔ القادر ٹرسٹ میں نیب کی تفتیشی ٹیمیں اڈیالہ جیل گپ شپ کیلئے آتی ہیں۔

پاکستان

پی ٹی آئی میں کوئی فارورڈ بلاک نہیں، ہم سب متحد ہیں، بیرسٹر گوہر

صنم جاوید کو آج رہائی کے بعد دوبارہ گرفتارکرلیا گیا ہے جس کی مذمت کرتے ہیں، چیئرمین پی ٹی آئی

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

پی ٹی آئی میں کوئی فارورڈ بلاک نہیں، ہم سب متحد ہیں، بیرسٹر گوہر

چیئرمین تحریک انصاف بیرسٹر گوہر علی نے کہا کہ پی ٹی آئی میں کوئی فارورڈ بلاک نہیں، متحد ہے اور رہے گی۔

بیرسٹر گوہر علی نے اسلام آباد میں عاطف خان، رؤف حسن اور شیخ وقاص کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ سپریم کورٹ کی ڈائریکشن کے مطابق 39 ایم این ایز میں سے25 کےبیان حلفی الیکشن کمیشن میں جمع کروادیئے، باقی ایم این ایزکےبیان حلفی کل تک جمع کرادیں گے۔ سپریم کورٹ کے فیصلےکے بعد صاحبزادہ امیرسلطان کواغوا کرلیا گیا، ایم این اے کولاپتا کرنے کی شدید مذمت کرتےہیں، ایم این اے فیاض چھجڑہ کےبھائی اوراس کےبیٹےکو بھی اٹھالیا گیا ہے۔

بیرسٹر گوہر علی نے کہا کہ بانی پی ٹی آئی پرسیاسی انتقام کی بنیاد پر 200 سے زائد کیسز بنائے گئے، ہم عدلیہ کی طرف دیکھ رہے ہیں،عدلیہ لوگوں کواٹھانےکا سلسلہ روکے، صنم جاوید کو آج رہائی کے بعد دوبارہ گرفتارکرلیا گیا ہے جس کی مذمت کرتے ہیں۔ سپریم کورٹ کی ڈائریکشن پرہماری مخصوص سیٹوں کا مسئلہ حل کیا جائے، مخصوص نشستیں ملنے کے بعد تحریک انصاف لارجر پارٹی بن جائے گی، ریویو فائل کرنا ہرپارٹی کا حق ہے، گفتگو کے دوران انہوں نے ڈونلڈ ٹرمپ پر حملے کی بھی شدید مذمت کی۔

پی ٹی آئی رہنما عاطف خان نے کہا کہ گزشتہ ایک سال سے گرفتاریوں کا سلسلہ جاری ہے، ایک بار پھر تحریک انصاف کے رہنماؤں پر پارٹی چھوڑنے کا دباؤ ڈالا جارہا ہے، نومئی کے بعد بھی ایسے ہی واقعات اور پریس کانفرنسیں کروائی گئیں۔

پی ٹی آئی کے سیکرٹری انفارمیشن رؤف حسن نے کہا کہ سپریم کورٹ کےفیصلے میں مجرموں کی نشاہدہی کی گئی ، فراڈ الیکشن کرانے والوں پرآرٹیکل 6لگایا جائے ، شریف، زرداری ان کےحواری ملک کوتباہی کے دہانے پرلے گئے ہیں،ان کی سوچ انسانوں والی نہیں گٹرکے کیڑوں والی ہے۔تحریک انصاف پر دو سال سے ظلم کا سلسلہ جاری ہے، ایم این اے کے بیٹے کی چیخوں کی آوازاس کی ماں کوسنائی جارہی ہے، کب تک جنگل کا قانون چلائیں گے، سپریم کورٹ ان سب کواپنی عدالت میں بلائے، سپریم کورٹ فراڈ الیکشن پرچیف الیکشن کمشنرکوسزا دے۔

رہنما تحریک انصاف شیخ وقاص نے کہا کہ سپریم کورٹ کے فیصلے پرعمل کرنے کے بجائے رکاوٹ ڈالنے کی کوشش کی جارہی ہے، صاحبزادہ امیرسلطان کو جوتے بھی نہیں پہننے دیئے گئے، مختلف اداروں سے ہمارے ایم این ایز کو فون آرہے ہیں، مسلم لیگ کی بدمعاشی نہیں چلے گی، مسلم لیگ کوتنبیہ کررہے ہیں ایسا وقت تم پربھی آئےگا۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

لوگوں کی وفاداریاں تبدیل کرنے کے لیے ان پر زور ڈالا جا رہا ہے، اسد قیصر

عدلیہ کے فیصلے کے بعد حکومت تصادم کی طرف بڑھ رہی ہے، رہنما پی ٹی آئی

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

لوگوں کی وفاداریاں تبدیل کرنے کے لیے ان پر زور ڈالا جا رہا ہے، اسد قیصر

سابق سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے کہا ہے کہ لوگوں کی وفاداری کی تبدیلی کرنے کے لیے ان پر زور ڈالا جا رہا ہے، ہمارے جھنگ سے ایم این اے امیر سلطان کو کل رات اغوا کیا گیا ہے، عدلیہ کے فیصلے کے بعد حکومت تصادم کی طرف بڑھ رہی ہے۔

سوشل میڈیا پلیٹ فارم ایکس پر اپنے ٹویٹ میں رہنما تحریک انصاف اسد قیصر نے کہا ہے کہ جس کے پاس اختیار ہے وہ طاقت کے زور پر فیصلے کر رہا ہے ،لوگوں کی وفاداریاں تبدیل کرنے کے لیے ان پر زور ڈالا جا رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ فیصلوں کے خلاف بغاوت ہورہی ہے، قانون اور آئین کے مطابق ملک کو نہ چلایا گیا تو ملک قائم نہیں رہے گا، آپ پاکستان کو کس طرف لے کر جارہے ہیں، ملک کو خطرات سے دوچار نہ کریں، ہم پاکستانی ہیں آئین اور قانون کی جدوجہد جاری رکھیں گے۔

اسد قیصرکا کہنا تھا کہ میں بحیثیت پاکستان تحریک انصاف کا کارکن بتانا چاہتا ہوں ہم اپنی جدوجہد جاری رکھیں گے، تحریک انصاف اپنے موقف سے پیچھے نہیں ہٹے گی، تحریک انصاف کے ایم این ایز کو عوام کی امنگوں کے مطابق فیصلہ کرنے کا حق دیا جائے۔

رہنما پی ٹی آئی نے کہا کہ میری سپریم کورٹ اور اعلیٰ عدلیہ سے درخواست ہے کہ فارم 45 اور 47 کا فیصلہ جلد کیا جائے، ملک میں دھاندلی زدہ جعلی انتخاب ہوا اور اس میں چیف الیکشن کمیشن کا کلیدی کا کردار ہے، سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد الیکشن کمشنر کو استعفیٰ دینا چاہیے۔

انہوں نے مزید کہا کہ وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا علی امین گنڈاپور سے کہوں گا کہ چیف الیکشن کمشنر کے خلاف جوڈیشل کمیشن میں جائیں۔

 

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

بانی چیئرمین پی ٹی آئی کی لاہور میں درج 9 مئی کے مقدمات میں گرفتاری ڈال دی گئی

لاہور پولیس کی ٹیم نے بانی پی ٹی آئی سے تفتیش کا آج کا مرحلہ مکمل کرلیا جس کے بعد وہ اڈیالہ جیل سے روانہ ہوگئی

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

بانی چیئرمین پی ٹی آئی کی لاہور میں درج 9 مئی کے مقدمات میں گرفتاری ڈال دی گئی

بانی پی ٹی آئی عمران خان کی لاہور میں درج 9 مئی کے مقدمات میں گرفتاری ڈال دی گئی۔

لاہور پولیس کی 12 رکنی ٹیم قانونی ضابطے مکمل کرکے اڈیالہ جیل کے اندر گئی اور عمران خان سے مقدمات کی تفتیش کی۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق ڈی ایس پی احمد عثمان کی سربراہی میں پولیس ٹیم میں 11 تفتیشی انسپکٹر شامل تھے۔ تفتیشی ٹیم نے بانی پی ٹی آئی سے 9 اور 10 مئی کے واقعات پر سوالات کیے۔

لاہور پولیس ٹیم نے جناح ہاؤس، عسکری ٹاور  اور شادمان تھانہ حملہ کیس پر سوالات کیے، تفتیش میں ڈیجیٹل شواہد اور گرفتار ملزمان کے بیانات کی روشنی میں پوچھ گچھ کی گئی۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ  عمران خان کی لاہور میں درج 9 مئی کے مقدمات میں گرفتاری ڈال دی گئی ہے۔ لاہور پولیس کی ٹیم نے بانی پی ٹی آئی سے تفتیش کا آج کا مرحلہ مکمل کرلیا جس کے بعد وہ اڈیالہ جیل سے روانہ ہوگئی۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll