جی این این سوشل

دنیا

اسرائیل فلسطین تنازعہ کے دوران غزہ میں اب تک 63صحافی جان کی بازی ہار گئے

7 اکتوبر سے اب تک 56 فلسطینی میڈیا ورکرز، 4 اسرائیلی اور 3 لبنانی صحافی جان سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں جبکہ 11 صحافی زخمی ہوئے اور 3 لاپتہ ہیں، کمیٹی ٹو پروٹیکٹ جرنلسٹس

پر شائع ہوا

کی طرف سے

اسرائیل فلسطین تنازعہ کے دوران غزہ میں اب تک 63صحافی جان کی بازی ہار گئے
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

صحافیوں کے تحفظ کے لئے کام کرنے والی بین الاقوامی تنظیم کمیٹی ٹو پروٹیکٹ جرنلسٹس (سی پی جے)نے کہا ہے کہ 7اکتوبر سے شروع ہونے والے اسرائیل فلسطین تنازعہ کے دوران غزہ میں اب تک 63صحافی مارے جا چکے ہیں۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے نے تنظیم کی رپورٹ کے حوالے سے بتایا کہ حال ہی میں شہید ہونے والے صحافیوں میں القدس ٹی وی کے رپورٹر حسن فراج اللہ اور المجدات نیٹ ورک کی صحافی شیما الغزار بھی شامل ہیں۔

سی پی جے نے واضح کیا کہ 7 اکتوبر سے اب تک 56 فلسطینی میڈیا ورکرز، 4 اسرائیلی اور 3 لبنانی صحافی جان سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں جبکہ 11 صحافی زخمی ہوئے اور 3 لاپتہ ہیں۔

سی پی جے کے مشرق وسطی اور شمالی افریقہ کے پروگرام کوآرڈینیٹر شیریف منصور نے کہا کہ سی پی جے اس بات پر زور دیتا ہے کہ صحافی بحران کے وقت لوگوں کو تازہ ترین حالات سے آگاہ کرتے ہیں اور متحارب فریقین کی طرف سے انہیں نشانہ نہیں بنایا جانا چاہیے۔

فلسطینی صحافیوں کے سنڈیکیٹ نے اس سے قبل اطلاع دی تھی کہ غزہ میں اسرائیل کی فوجی کارروائیوں کے آغاز کے بعد سے اب تک 63 فلسطینی میڈیا کارکن شہید ہو چکے ہیں۔

تجارت

ایل این جی کی درآمدات میں 5 فیصد کا اضافہ

2023 میں ایل این جی کی درآمدات پر 2.29 ارب ڈالر کا زرمبادلہ خرچ ہوا

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

ایل این جی کی درآمدات میں 5 فیصد کا اضافہ

اسلام آباد: ملک میں ایل این جی کی درآمدات میں جاری مالی سال کے پہلے 7 ماہ میں سالانہ بنیادوں پر 5 فیصد کا اضافہ ریکارڈ کیاگیا ہے۔

پاکستان بیورو شماریات کے اعدادوشمار کے مطابق جولائی سے جنوری 2023 تک کی مدت میں ایل این جی کی درآمدات پر 2.29 ارب ڈالر کا زرمبادلہ خرچ ہوا جو پیوستہ مالی سال کی اسی مدت کے مقابلے میں 5 فیصد زیادہ ہے۔

گزشتہ مالی سال کی اسی مدت میں 2.19 ارب ڈالر مالیت کا ایل این جی درآمد کیا گیا تھا۔ جنوری میں ایل این جی کی درآمدات پر 445 ملین ڈالر کا زرمبادلہ خرچ ہوا جو گزشتہ سال جنوری کے مقابلے میں 83 فیصد زیادہ ہے۔

گزشتہ سال جنوری میں ایل این جی کی درآمدات پر 243 ملین ڈالر کا زرمبادلہ خرچ ہوا تھا۔ دسمبر کے مقابلے میں جنوری میں ایل این جی کی درآمدات میں ماہانہ بنیادوں پر 15 فیصد کی نمو ہوئی۔

دسمبر میں ایل این جی کی درآمدات کا ججم 387 ملین ڈالر ریکارڈ کیا گیا جو جنوری میں بڑھ کر 445 ملین ڈالر ہوگیا۔ واضح رہے کہ جاری مالی سال کے پہلے 7 ماہ میں پیٹرولیم مصنوعات کی مجموعی درآمدات کا حجم 9.33 ارب ڈالر ریکارڈ کیا گیا ہے جو گزشتہ مالی سال کی اسی مدت کے مقابلے میں 12 فیصد زیادہ ہے۔ گزشتہ مالی سال کی اسی مدت میں پیٹرولیم مصنوعات کی درآمدات پر 10.61 ارب ڈالر کا زرمبادلہ خرچ ہوا تھا۔

پڑھنا جاری رکھیں

دنیا

امریکا گاڑیاں آپس میں ٹکرانے سے 8افراد ہلاک

تحقیقاتی افسران نے بتایا ہے کہ حادثے کے وقت وین میں سوار متعدد افراد نے سیٹ بیلٹ نہیں باندھی تھی

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

امریکا   گاڑیاں آپس میں ٹکرانے سے 8افراد ہلاک

امریکا : امریکا میں دو گاڑیاں آپس میں ٹکرانے سے 8افراد ہلاک ہوگئے ہیں ۔

چینی خبررساں ادارے کے مطابق کیلیفورنیا ہائی وے پٹرول نے ایک بیان میں بتایا کہ یہ واقعہ مقامی وقت کے مطابق صبح 6:30 بجے کے قریب پیش آیا جس میں شیورلیٹ پک اپ اور جی ایم سی وین آپس میں ٹکرا گئیں۔

انہوں نے بتایا کہ ابتدائی تحقیقات سے پتہ چلتا ہے کہ پک اپ تیز رفتاری میں بے قابو ہوکر وین سے ٹکرا گئی جس سے پک اپ کا ڈرائیور اور وین میں سوار 7افراد ہلاک ہو گئے۔انہوں نے مزید بتایا کہ تحقیقاتی افسران نے بتایا ہے کہ حادثے کے وقت وین میں سوار متعدد افراد نے سیٹ بیلٹ نہیں باندھی تھی۔

پڑھنا جاری رکھیں

صحت

دنیا کی نصف سے زیادہ آبادی کو خسرہ کا شدیدیاانتہائی شدید خطرہ ہے،عالمی ادارہ صحت

خسرہ کے بارے میں ہم انتہائی فکر مند ہیں

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

دنیا کی نصف سے زیادہ آبادی کو خسرہ کا شدیدیاانتہائی شدید خطرہ ہے،عالمی ادارہ صحت

جنیوا: عالمی ادارہ صحت(ڈبلیو ایچ او)نے دنیا بھر میں خسرہ کے پھیلاؤ بارے میں خبردار کرتے ہوئے کہا ہے کہ گزشتہ سال دنیا بھر میں اس بیماری کے 30 لاکھ 6,000 سے زیادہ کیس رپورٹ ہوئے جو 2022 کے مقابلے میں 79 فیصد زیادہ تھے۔

امریکی نشریاتی ادارے کے مطابق عالمی ادارہ صحت میں خسرہ اور روبیلا کے بارے میں ٹیکنیکل ایڈوائزر نتاشا کروکرافٹ نے کہا ہے کہ خسرہ کے بارے میں ہم انتہائی فکر مند ہیں۔ قاہرہ سے ویڈیو لنک کے ذریعے انہوں نے جنیوا میں صحافیوں کو بتایا کہ 2022 میں خسرہ کے کیسز میں اتنے زیادہ اضافے کو سامنے رکھتےہوئے ہم اندازہ لگا سکتے ہیں کہ یہ سال بہت زیادہ مشکل ہونے والا ہے۔

انہوں نے انتباہ کیا کہ اس وقت دنیا بھر کے نصف سے زیادہ ملکوں کے بارے میں خیال ہے کہ اس سال کے آخر تک ان میں خسرہ کی وبا کے پھوٹنے کا بہت زیادہ خطرہ ہوگا اور ایک اندازے کے مطابق لگ بھگ 14 کروڑ بیس لاکھ بچوں کو بیماری کا خطرہ لاحق ہوگا۔

انہوں نے مزید بتایا کہ کسی بھی علاقے میں اس وبا کو روکنے کے لیے کم از کم 95 فیصد بچوں کو اس بیماری سے بچاؤ کے لیے مکمل حفاظتی ٹیکے لگانے کی ضرورت ہوتی ہے ، لیکن عالمی سطح پر ویکسینیشن کی شرح 83 فیصد تک کم ہو گئی ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll