جی این این سوشل

پاکستان

آزاد اراکین اکثریت ثابت کرسکیں تواپوزیشن میں بیٹھ جائیں گے، شہباز شریف

صدر علوی پی ٹی آئی اراکین کو حکومت بنانے کی دعوت نہیں دے سکتےبلکہ وزیراعظم کا فیصلہ ایوان نے کرنا ہے، صدر مسلم لیگ ن

پر شائع ہوا

کی طرف سے

آزاد اراکین  اکثریت ثابت کرسکیں تواپوزیشن میں بیٹھ جائیں گے، شہباز شریف
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

صدر مسلم لیگ ن شہباز شریف کا کہنا ہے کہ پی ٹی آئی کے حمایت یافتہ آزاد اراکین ایوان میں اکثریت ثابت کرسکیں تو شوق سے حکومت بنا لیں، ہم اپوزیشن میں بیٹھ جائیں گے۔ اگرنہیں بنائی تو ہم اپنا آئینی کردار ادا کریں گے۔

منگل کو لاہور میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے شہباز شریف نے اس بات پر بھی زور دیا کہ صدر علوی پی ٹی آئی اراکین کو حکومت بنانے کی دعوت نہیں دے سکتے، بلکہ وزیراعظم کا فیصلہ ایوان نے کرنا ہے۔

شہباز شریف نے کہا کہ الیکشن کمیشن پر دھاندلی سمیت طرح طرح کے الزامات لگائے گئے، 35 پنکچرز کا الزام لگا کر اس کی آڑ میں دھرنے ، پارلیمنٹ پر حملہ اور کوریج روکنے کا ڈرامہ پوری قوم کے سامنے ہے۔

پریس کانفرنس میں انہوں نے کہا کہ الیکشن میں ثابت ہوگیا کہ ن لیگ سب سے بڑی سیاسی جماعت ہے۔ آزاد امیدوار آگے ہیں اور آپ حقائئق سے نظر نہیں چُرا سکتے لیکن ن لیگ پہلے نمبر پر سیاسی جماعت ہے، اس کے بعد پیپلزپارٹی اور پھر دیگر جماعتیں آتی ہیں۔

انہوں نے حکومت سازی کے حوالے سے بات کرتے ہوئے واضح کیا کہ آزاد ارکان حکومت بنانا چاہتے ہیں تو شوق سے بنائیِ آئین کا تقاضا ہے کہ جو اکثریت میں ہے وہ حکومت بنائے، ہم شوق سے اپوزیشن میں بیٹھ کر آئینی کردار ادا کریں گے، اگر آزاد امیدواروں نے حکومت نہیں بنائی تو ہم اپنا آئینی کردارادا کریں گے۔

شہباز شریف کے مطابق 2018 کا منظرنامہ یاد ہوگا، 66 گھنٹوں بعد زرلٹ آنا شروع ہوئے تھے اور تاریخ میں پہلی بار شہری نتیجےتاخیر او دیہی نتیج فی الفور آئے۔ خواجہ سعد رفیق کے رزلٹ کو روکا گیا۔

انہوں نے کہا کہ 2018 میں کراچی کے میرےحلقے میں بدترین دھاندلی کی گئی، گزشتہ الیکشن آپ کے سامنے ہیں، کون سا الیکشن ہے جس میں دھاندلی نہیں کی گئی، حالیہ انتخابات پر چیف الیکشن کمشنر کو مبارکباد دیتا ہوں۔ پولنگ والی رات 10 سے 12 فیصد رزلٹ آنے پر شور مچایا گیا کہ ازاد امیدوار جیت رہے ہیں اور سیاسی جماعتیں ہار رہی ہیں۔

سابق وزیراعظم کا کہنا تھا کہ حقائق کا سامنا کریں تو جواب مل جاتا ہے کہ اس الیکشن میں دھاندلی کاالزام لگایا گیا۔ ایک طرف دھاندلی کا الزام لگایا جارہا ہے اور دوسری جانب آزاد امیدوار جیت ریے ہیں اور ہمارے سینیئر سیاستدان ہار رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ دوباریہ گنتی کی درخواستیں صرف مخالفین کی نہیں ہمارے امیدواروں کی بھی منظور کی گئی ہیں۔

پاکستان

پی ٹی آئی کے انٹرا پارٹی انتخابات کیلئے کاغذاتِ نامزدگی جمع کروانے کا وقت ختم

عمران خان کے امیدوار برائے چیئرمین بیرسٹر گوہر نے انٹرا پارٹی انتخابات کیلئے اپنے کاغذات نامزدگی جمع کروا دیئے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

پی ٹی آئی کے انٹرا پارٹی انتخابات کیلئے کاغذاتِ نامزدگی جمع کروانے کا وقت ختم

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے انٹرا پارٹی انتخابات کیلئے کاغذاتِ نامزدگی جمع کروانے کا وقت ختم ہوچکا ہے۔

انٹرا پارٹی انتخابات کیلئے کاغذات نامزدگی داخل کرنے کا وقت آج 25 فروری سہ پہر 3 بجے تک تھا۔

عمران خان کے امیدوار برائے چیئرمین بیرسٹر گوہر نے انٹرا پارٹی انتخابات کیلئے اپنے کاغذات نامزدگی جمع کروا دیئے ہیں۔مرکزی تنظیم کیلئے عمران خان کے امیدوار برائے مرکزی سیکرٹری جنرل عمر ایوب کی قیادت میں 15 رکنی پینل کے کاغذاتِ نامزدگی بھی جمع ہوگئے ہیں۔

سندھ سے اشرف قریشی، بلوچستان سے محمد اسلم اور خیبرپختونخوا سے نوید انجم نے چیئرمین کےعہدے کیلئے کاغذاتِ داخل کروائے ہیں۔ یاسمین راشد، محمد خان اور اسد حنیف نے صوبائی تنظیم کیلئے کاغذات جمع کروائے۔ سندھ کیلئے حلیم عادل شیخ اور خاوند بخش غلام کی قیادت میں دو پینلز کے کاغذاتِ نامزدگی موصول ہوئے۔

بلوچستان سے ڈاکٹر منیر بلوچ اور پانچ دیگر افراد نے اپنے پینلز کے ہمراہ کاغذاتِ نامزدگی جمع کروائے۔ بلوچستان سے کاغذاتِ نامزدگی داخل کروانے والوں میں سید جعفر آغا، نوابزادہ امین اللہ جوگیزئی، داؤد شاہ، سید عبدالصادق اور بابر مرغزانی شامل ہیں۔خیبرپختونخوا سےعلی امین گنڈا پورکی قیادت میں خیبرپختونخوا کی تنظیم کیلئے پینل کے کاغذاتِ نامزدگی بھی موصول ہوئے۔

پاکستان تحریک انصاف کے فیڈرل الیکشن کمیشن کی جانب سے انٹرا پارٹی انتخابات میں شرکت کے خواہاں امیدواروں سے کاغذاتِ نامزدگی کی وصولی کیلئے مرکز اور صوبوں میں الگ الگ ریٹرننگ افسران مقرر کئے گئے۔پی ٹی آئی کی طرف سے جاری شیڈول کے مطابق انٹرا پارٹی انتخابات کے لیے کاغذات نامزدگی 23 اور 24 فروری کو جمع کرائے جاسکتے تھے، کاغذات نامزدگی کی جانچ پڑتال 25 فروری کو ہوگی۔

پی ٹی آئی انٹراپارٹی انتخابات میں کاغذات نامزدگی پر فیصلے 27 فروری تک ہوں گے۔شیڈول کے مطابق پی ٹی آئی انٹراپارٹی انتخابات کیلئے پولنگ 3مارچ کو ہوگی، پی ٹی آئی انٹراپارٹی انتخابات کے لیے پولنگ سینٹرل آفس سمیت چاروں صوبائی سیکریٹریٹ میں ہوگی۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

ساتویں بین الاقوامی پاکستان آرمی ٹیم سپرٹ مشق 2024ء کا افتتاح

ڈائریکٹر جنرل ملٹری ٹریننگ نے 60 گھنٹے طویل مشق کا افتتاح کیا، آئی ایس پی آر

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

ساتویں بین الاقوامی پاکستان آرمی ٹیم سپرٹ مشق 2024ء کا افتتاح

ساتویں بین الاقوامی پاکستان آرمی ٹیم سپرٹ مشق 2024ء کی افتتاح کر دیا گیا۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق ٹیم سپرٹ مشق 2024ء کی تقریب نیشنل کاؤنٹر ٹیررازم سینٹر پبی میں منعقد ہوئی، ڈائریکٹر جنرل ملٹری ٹریننگ نے 60 گھنٹے طویل مشق کا افتتاح کیا۔

آئی ایس پی آر نے مزید بتایا کہ تقریب میں فوجی مبصرین سمیت 20 دوست ممالک نے شرکت کی، شریک ممالک میں بحرین، اردن، قازقستان، سعودی عرب، مالدیپ، مراکش شامل ہیں۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ کے مطابق قطر، سری لنکا، تھائی لینڈ، ترکی، امریکہ اور ازبکستان بھی شامل ہیں، آذربائیجان، بیلاروس، چین، میانمار، جرمنی، انڈونیشیا، جاپان اور عمان کے فوجی مبصرین بھی شریک ہیں۔

آئی ایس پی آر کے مطابق مشقوں کا مقصد پیچیدہ بین الاقوامی سکیورٹی ماحول کے تحت فوجی تعاون کو بڑھانا ہے، پاکستان آرمی ٹیم سپرٹ فوجی مشق پاکستان میں ہر سال منعقد کی جاتی ہے۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ نے مزید بتایا کہ مشق میں ذہنی چستی، جسمانی فٹنس اور پیشہ ورانہ فوجی مہارت کے اعلیٰ معیار کا مظاہرہ کیا جاتا ہے، مشق کے مقاصد میں جدید چیلنجز سے نمٹنے کے علاوہ فوجی اشتراک کو بہتر بنانا ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

پاکستان آرمی سپرٹ مشق آج پبی کے قومی انسداد دہشتگردی مرکز میں شروع

پاکستان آرمی ٹیم سپرٹ مشق اورمتعین کام پرمبنی پیشہ ورانہ فوجی مشق ہے جوہرسال پاکستان میں منعقد ہوتی ہے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

پاکستان آرمی  سپرٹ مشق آج پبی کے قومی انسداد دہشتگردی مرکز میں شروع

ساتویں انٹرنیشنل پاکستان آرمی ٹیم سپرٹ مشق آج پبی کے قومی انسداد دہشتگردی مرکز میں شروع کر دی گئی ہے ۔ 

ڈائریکٹر جنرل ملٹری ٹریننگ نے 60 گھنٹے پرمحیط پٹرولنگ مشق کاافتتاح کیاجس کامقصد پیچیدہ بین الاقوامی سلامتی کے ماحول میں دوست ملکوں کے درمیان فوجی تعاون کو بڑھاناہے۔

اس مشق میں مجموعی طورپرفوجی مبصرین سمیت بیس ملک شرکت کررہے ہیں ۔شرکاء میں پاکستان ،بحرین، اردن، قازقستان،سعودی عرب ،مالدیپ ،مراکش، قطر، سری لنکا، تھائی لینڈ، ترکیہ، امریکہ اورازبکستان شامل ہیں جبکہ آذربائیجان، بیلاروس ،چین ،میانمار، جرمنی، انڈونیشیا ، جاپان اورعمان بطورفوجی مبصرشرکت کررہے ہیں۔

پاکستان آرمی ٹیم سپرٹ مشق اورمتعین کام پرمبنی پیشہ ورانہ فوجی مشق ہے جوہرسال پاکستان میں منعقد ہوتی ہے ۔یہ مشق بھرپورجسمانی مستعدی، ذہنی پھرتی واستعداداورپیشہ وارانہ مہارت کی متقاضی ہے تاکہ حقیقی ماحول میں دشوارمشن کے دوران صورتحال کے مطابق فوری فیصلے کئے جاسکیں۔

اس مشق کے اغراض ومقاصد میں مشترکہ ٹیم جذبے کے ذریعے استقامت کا حصول شامل ہے۔اس مشق سے جدت پرمبنی اورمفیدتصورات کے اشتراک کے ذریعے ایک دوسرے سے تعاون کے علاوہ فوجی جوانوں کے بنیادی کردارکوآگے بڑھانے میں مددملے گی۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll