جی این این سوشل

پاکستان

ججز خط پر سپریم کورٹ کے ازخودنوٹس کی سماعت آج ہو گی

سپریم کورٹ عدلیہ کے معاملات میں خفیہ ایجنسیوں کی مداخلت کے الزامات پر ازخود نوٹس کیس کی سماعت کرے گی

پر شائع ہوا

کی طرف سے

ججز خط پر سپریم کورٹ کے ازخودنوٹس کی سماعت آج ہو گی
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

چیف جسٹس آف پاکستان قاضی فائز عیسیٰ کے یکم اپریل کو اسلام آباد ہائی کورٹ کے 6 ججز کے خط پر لیے گئے پہلے از خود نوٹس کی سماعت آج سپریم کورٹ کے کمرہ نمبر ایک میں ہوگی۔

سپریم کورٹ آج اسلام آباد ہائی کورٹ کے چھ ججوں کی جانب سے عدلیہ کے معاملات میں خفیہ ایجنسیوں کی مداخلت کے الزامات پر ازخود نوٹس کیس کی سماعت کرے گی۔

چیف جسٹس قاضی فائز عیسیٰ سات رکنی لارجر بینچ کی سربراہی کریں گے جس میں جسٹس منصور علی شاہ کے علاوہ جسٹس یحییٰ آفریدی، جسٹس جمال خان مندوخیل، جسٹس اطہر من اللہ، جسٹس مسرت ہلالی اور جسٹس نعیم اختر افغان شامل ہیں۔ اس معاملے پر مختلف وکلاء اور لاہور ہائی کورٹ بار نے بھی سپریم کورٹ میں آئینی درخواستیں دائر کر رکھی ہیں۔

لاہور ہائیکورٹ بار کی جانب سے پاکستان تحریک انصاف کے سینئر وکیل حامد خان نے حکومت کے انکوائری کمیشن کو غیر آئینی قرار دینے اور الزامات اور سزا کی انکوائری کے لیے سپریم کورٹ کے ججز پر مشتمل جوڈیشل کمیشن بنانے کی درخواست دائر کی ہے۔ 

سینئر وکیل اعتزاز احسن کی جانب سے دائر آئینی درخواست میں میمو کمیشن کی طرز پر جوڈیشل کمیشن بنانے کی استدعا کی گئی ہے۔

میاں داؤد ایڈووکیٹ کی جانب سے دائر درخواست میں جوڈیشل کمیشن بنانے کی بھی استدعا کی گئی ہے۔

واضح رہے کہ 26 مارچ کو اسلام آباد ہائی کورٹ کے چھ ججوں نے سپریم جوڈیشل کونسل کو خط لکھ کر عدلیہ میں خفیہ ایجنسیوں کی مداخلت کا الزام لگایا تھا۔پہلے وزیراعظم شہباز شریف نے اس معاملے پر چیف جسٹس کی مشاورت سے انکوائری کمیشن تشکیل دیا تاہم بعد ازاں چیف جسٹس نے از خود نوٹس لیتے ہوئے کیس کو سماعت کے لیے مقرر کردیا۔

پاکستان

وزیر داخلہ محسن نقوی کی ایرانی ہم منصب سے ملاقات

ملاقات میں ایران میں پاکستانی زائرین کے لیے سہولتوں اور قیدیوں کے تبادلے سمیت مختلف امور پر بھی تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

وزیر داخلہ محسن نقوی کی ایرانی  ہم منصب سے ملاقات

اسلام آباد: وفاقی وزیر داخلہ محسن نقوی نے ایرانی ہم منصب ڈاکٹر احمد واحدی اور ایرانی وزیر قانون امین حسین رحیمی سے ملاقات کی۔

دونوں ممالک کے رہنماؤں کے درمیان ہونے والی ملاقات میں سیکیورٹی تعاون، انسداد دہشت گردی کی کوششوں، اسمگلنگ اور بارڈر مینجمنٹ پر بات چیت ہوئی۔

ملاقات میں ایران میں پاکستانی زائرین کے لیے سہولتوں اور قیدیوں کے تبادلے سمیت مختلف امور پر بھی تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا۔

وفاقی وزیر محسن نقوی نے کہا کہ ایرانی صدر کا دورہ پاکستان دوطرفہ تعلقات کے لیے انتہائی اہمیت کا حامل ہے۔ انہوں نے پاکستانی قوم کی جانب سے ایرانی صدر اور ان کے وفد کا پرتپاک استقبال کیا۔

پڑھنا جاری رکھیں

علاقائی

ایرانی صدر کی پاکستان آمد پر کل لاہور میں مقامی تعطیل کا اعلان

نوٹیفکیشن کے مطابق ایران کے صدر ابراہیم رئیسی کے دورہ لاہور کے باعث کل شہر میں مقامی عام تعطیل ہوگی ،کل تمام تعلیمی ادارے سکول کالج یونیورسٹی بند ہونگے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

ایرانی صدر کی  پاکستان آمد پر کل لاہور میں مقامی تعطیل کا اعلان

لاہور: ایرانی  صدر ابراہیم رئیسی اور وفد کے دورے  کے باعث لاہور میں کل مقامی تعطیل ہو گی ۔ 

تفصیلات کے مطابق تعطیل کا نوٹیفکیشن بھی  پنجاب حکومت کی جانب سے جاری کر دیا گیا ہے ، نوٹیفکیشن کے مطابق ایران کے صدر ابراہیم رئیسی کے دورہ لاہور کے باعث کل شہر میں مقامی عام تعطیل ہوگی ،کل تمام تعلیمی ادارے سکول کالج یونیورسٹی بند ہونگے ،تاہم پنجاب سو ل سیکرٹریٹ اور ڈویژنل دفاتر کھلے رہیں گے ۔ 

واضح رہے کہ  ڈی سی آفس اور ضلعی دفاتر بھی  بند ہونگے۔

پڑھنا جاری رکھیں

دنیا

اسرائیلی فوج پر کسی بھی قسم کی پابندی کو مسترد کرتے ہیں ، اسرائیلی وزیر اعظم

بی بی سی کے مطابق اسرائیلی وزیر اعظم نے گزشتہ روز کہا کہ وہ اپنی پوری طاقت کے ساتھ ان حالات کا مقابلہ کریں گے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

اسرائیلی فوج پر کسی بھی  قسم کی پابندی کو مسترد کرتے ہیں ، اسرائیلی وزیر اعظم

اسرائیل کے وزیراعظم بینجمن نیتن یاہو نے اعلان کیا ہے کہ وہ اپنی فوج پر عائد کی جانے والی کسی بھی قسم کی ممکنہ پابندیوں کو مسترد کر دیں گے، اُن کی جانب سے یہ بیان ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب اس بات کا خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے کہ امریکی انتظامیہ اسرائیلی فوج کی ایک یونٹ کو فراہم کی جانے والی فوجی امداد پر پابندی عائد کرنے پر غور کر رہی ہے۔

بی بی سی کے مطابق اسرائیلی وزیر اعظم نے گزشتہ روز کہا کہ وہ اپنی پوری طاقت کے ساتھ ان حالات کا مقابلہ کریں گے۔ قبل ازیں ایکسیوس نیوز کی ویب سائٹ پر یہ خبر دی گئی کہ امریکا مقبوضہ مغربی کنارے میں انسانی حقوق کی مبینہ خلاف ورزیوں پر اسرائیل کی نیتزہ یہودا بٹالین کو پابندیوں کی صورت میں نشانہ بنائے گا۔ گزشتہ ہفتے مقبوضہ مغربی کنارے میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کے الزامات پر اسرائیلی فوج کے یونٹس کو دی جانے والی امریکی فوجی امداد میں کٹوتی کی اطلاعات بارے امریکی وزیر خارجہ انٹونی بلنکن سے پوچھا گیا تھا جس پر انہوں نے کہا تھا کہ انہوں نے اس بارے میں سوچ بچار کی ہے اور فیصلہ کر لیا ہے جس کے بارے میں آپ آنے والے دنوں جان سکیں گے۔

اسرائیل کے وزیر دفاع یواو گیلنٹ نے امریکا سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ نیتزہ یہودا بٹالین پر پابندی عائد کرنے کا اپنا ارادہ ترک کر دے ۔ انہوں نے کہا کہ دنیا امریکا اور اسرائیل کے درمیان تعلقات کو پہلے سے کہیں زیادہ قریب اور توجہ سے دیکھ رہی ہے۔بیان میں کہا گیا ہے کہ یونٹ پر تنقید کی کسی بھی کوشش سے اسرائیلی فوج کے اقدامات پر بُرے اثرات مرتب ہوں گے، دوستوں اور شراکت داروں کے درمیان ایسے اقدامات درست اور مناسب نہیں ۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll