جی این این سوشل

دنیا

ایران کا یورپی یونین کی جانب سےغیر قانونی پابندیاں عائد کرنے کے فیصلے پر اظہار افسوس

یورپی یونین ایران کے بجائے اسرائیل پر پابندیاں عائد کرے، ایرانی وزیر خارجہ

پر شائع ہوا

کی طرف سے

ایران کا یورپی یونین کی جانب سےغیر قانونی پابندیاں عائد کرنے کے فیصلے پر اظہار  افسوس
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

ایرانی وزیر خارجہ حسین امیر عبداللہیان نے یورپی یونین کی جانب سے اسرائیل کے حملے کے پیش نظر اپنے "دفاع کے حق" کو استعمال کرنے کے لیے ایران پر مزید "غیر قانونی" پابندیاں عائد کرنے کے فیصلے پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔

غیر ملکی میڈیا رپورٹس کے مطابق اس پر رد عمل دیتے ہوئے امیر عبداللہیان نے ’ایکس‘ پلیٹ فارم پر ایک پوسٹ میں کہا کہ یورپی یونین سے مطالبہ کیا کہ اس کے ملک کے بجائے اسرائیل پر پابندیاں عائد کرے۔

یورپی یونین کے وزرائے خارجہ نے گذشتہ ہفتے لکسمبرگ میں ملاقات کے دوران تہران کے اسرائیل پر بیلسٹک میزائل اور ڈرون حملے کے تناظر میں اس کے خلاف پابندیوں کو بڑھانے پر اتفاق کیا تھا۔

گذشتہ جمعے کو وسطی ایران کے شہر اصفہان میں دھماکے ہوئے تھے اور ایرانی فوج کے کمانڈر انچیف عبدالرحیم موسوی نے کہا تھا کہ وہ فضائی دفاع کی وجہ سے متعدد "اڑنے والی اشیاء" کو تباہ کرنے کے نتیجے میں ہوئے جبکہ سرکاری ٹیلی ویژن نے ایک ویڈیو کلپ شائع کیا جس میں کہا گیا ہے کہ اصفہان میں فضائی دفاع کو فعال کیا گیا تھا۔

یہ تازہ ترین پیش رفت اس وقت سامنے آئی ہے جب ایران نے اسرائیل پر سینکڑوں ڈرونز اور میزائلوں سے حملہ کیا تھا، جب کہ پاسداران انقلاب کے ایک سینیر کمانڈر کی ہلاکت کے بعد ایران نے رد عمل دیا۔

یورپی یونین کے رکن ممالک نے ایرانی میزائل اور ڈرون بنانے والوں کے خلاف پابندیوں کا دائرہ بڑھانے کے لیے ایک سیاسی سمجھوتہ کیا ہے۔ یہ بات یورپی یونین کی خارجہ اور سکیورٹی پالیسی کے سربراہ جوزپ بوریل نے لکسمبرگ میں یورپی یونین کونسل کے اجلاس کے بعد ایک پریس کانفرنس میں کہی۔

بوریل نے پیر کو کہا کہ "ہم ایرانی ڈرون اور میزائل بنانے والے اداروں اور روس کو ممکنہ میزائل سپلائی کے خلاف پابندیوں کے نظام کو وسعت دینے کے لیے ایک سیاسی معاہدے پر پہنچ گئے ہیں۔

 بوریل نے مزید کہا کہ "نظام ایک ہی ہے۔ میزائل بنانے والوں کے خلاف پابندیاں عاید کی جائیں گی۔ روس اس کے پراسکیوں اور ایران کی پراسکیوں پر پابندیوں کا دائرہ بڑھایا جائےگا۔

پاکستان

یوم تکبیر آج ملی جوش و جذبے سے منایا جا رہا ہے، ملک بھر میں عام تعطیل

26 برس قبل 28 مئی کو پاکستان نے بھارتی ایٹمی دھماکوں کے جواب میں اپنی جوہری طاقت کا مظاہرہ کیا تھا

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

یوم تکبیر آج ملی جوش و جذبے سے منایا جا رہا ہے، ملک بھر میں عام تعطیل

 ملک بھر میں آج یوم تکبیر منایا جارہا ہے۔ 26 برس قبل 28 مئی کو پاکستان نے بھارتی ایٹمی دھماکوں کے جواب میں اپنی جوہری طاقت کا مظاہرہ کیا تھا۔ 28 مئی کی مناسبت سے شہر شہر تقریبات اور کانفرنسز کا انعقاد کیا جائے گا۔

پڑوسی ملک کی دھمکیوں کے بعد پاکستان نے بھی ایٹمی دھماکوں کے تجربات کا فیصلہ کیا اور 28 مئی 1998 کو پاکستان کے سائنسدانوں نے بھارت کے 43 کلوٹن کے مقابلہ میں کلو ٹن قوت سے یکے بعد دیگرے 5 دھماکے کیے۔

28 مئی 1998 کو پاکستان نے بلوچستان کے علاقے چاغی میں دھماکوں کے ذریعے بھارت کے ایٹمی دھماکوں کا جواب دیا تھا۔

ایٹمی دھماکوں کے بعد پاکستان نے مسلم دنیا کی پہلی اور دنیا کی ساتویں ایٹمی طاقت بننے کا اعزاز حاصل کیا تھا اور اسی دن کو’’یوم تکبیر‘‘ کے نام سے یاد کیا جاتا ہے۔

ڈاکٹر عبدالقدیر خان کے مطابق پاکستان کے جوہری سائنسدانوں نے 1984 میں جوہری بم تیار کرنے کی صلاحیت حاصل کر لی تھی۔

وزیر اعظم شہباز شریف نے آج یوم تکبیر پر عام تعطیل کا اعلان کر دیا، تعطیل کا نوٹیفکیشن بھی جاری ہو گیا جس کے تحت تمام سرکاری و نجی ادارے بند رہیں گے جبکہ تعلیمی اداروں اور بینکوں میں بھی چھٹی ہو گی، تعلیمی بورڈز میں آج شیڈول پرچے ملتوی کر دیئے گئے۔

شہباز شریف نے اپنے پیغام میں کہا کہ یوم تکبیر ملکی دفاع کو ناقابل تسخیر بنانے کیلئے اتحاد کی یاد دلاتا ہے، آج کے دن پوری قوم نے ملکی سالمیت کیلئے فیصلہ کیا، ملکی دفاع پر کسی قسم کا بیرونی دباؤ قبول کر کے سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا۔

پڑھنا جاری رکھیں

کھیل

انگلینڈ کے کپتان بٹلر کا پاکستان کے خلاف تیسرا ٹی ٹوئنٹی نہ کھیلنے کا امکان

بٹلر برمنگھم میں دوسرے ٹی ٹوئنٹی میں انگلینڈ کو پاکستان کے خلاف 23 رنز سے آسانی سے شکست دینے کے بعد لندن روانہ ہوئے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

انگلینڈ کے کپتان بٹلر کا پاکستان کے خلاف تیسرا ٹی ٹوئنٹی نہ کھیلنے کا امکان

انگلینڈ کی کرکٹ ٹیم کے کپتان جوس بٹلر پاکستان کے خلاف چار میچوں کی سیریز کے تیسرے ٹی ٹوئنٹی سے محروم ہوں گے۔

میڈیارپورٹ کے مطابق  بٹلر برمنگھم میں دوسرے ٹی ٹوئنٹی میں انگلینڈ کو پاکستان کے خلاف 23 رنز سے آسانی سے شکست دینے کے بعد لندن روانہ ہوئے۔

انگلینڈ کے کپتان اور ان کی اہلیہ لوئس جلد ہی اپنے تیسرے بچے کی پیدائش کی توقع کر رہے ہیں۔

قابل ذکر بات یہ ہے کہ جوس بٹلر پیر کی سہ پہر کارڈف میں انگلینڈ کے تربیتی سیشن سے غیر حاضر تھے اور منگل کی شام کو شیڈول پاکستان کے خلاف تیسرے T20 میچ میں شرکت کرنے کا امکان نہیں ہے۔

علاوہ ازیں ابھی صورتحال واضح نہیں ہے کہ بٹلر پاکستان کے خلاف سیریز کے آخری T20 کے لیے وقت پر واپس آئیں گے یا نہیں ۔ جمعہ کو جوس بٹلر آئی سی سی مینزٹی 20 ورلڈ کپ 2024 کے لیے ویسٹ انڈیز کے لیے روانگی کے وقت انگلینڈ کے اسکواڈ کے ساتھ جانے کا زیادہ امکان ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

وزیر قانون کا 28 مئی کے موقع پر قوم کے نا م اہم پیغام

انہوں نے کہا کہ اس اہم موقع پر ہم ان تمام لوگوں کی قربانیوں اور شراکت کا احترام کرتے ہیں جنہوں نے اس کامیابی کو ممکن بنایا

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

وزیر قانون کا 28 مئی کے موقع پر قوم کے نا م اہم پیغام

وزیر قانون و انصاف اعظم نذیر تارڑ نے کہا ہے کہ آ ج جبکہ ہم 26واں یوم تکبیر منا رہے ہیں، میں سیاسی اورعسکری قیادت، سائنسدانوں، انجینئرز اور ہر اس شخص کو دل کی گہرائیوں سے خراج تحسین پیش کرتا ہوں جنہوں نے ہمارے ایٹمی پروگرام میں اہم کردار ادا کیا۔

یوم تکبیر کے موقع پر اپنے پیغام میں انہوں نے کہا کہ آج ہم اس غیر متزلزل لگن اور استقامت کی یاد کاجشن منارہے ہیں جس کی بدولت پاکستان بیرونی خطرات سے اپنی خودمختاری اور آزادی کو محفوظ بنانے کے قابل بنا۔ یوم تکبیر کیلنڈر کی ایک تاریخ سےبھی کہیں زیادہ اہم ہے کیونکہ یہ ایٹمی دفاعی صلاحیت حاصل کرنے کی طرف ہماری قوم کے مشکل لیکن غیر معمولی سفر کی علامت ہے۔ یہ دن قومی دفاعی قوت کے تمام پہلوئوں کے ساتھ ساتھ ہمیں اس اتحاد اور تعاون کو حقیقت میں بدلنے کی مثال دیتا ہے، جو کبھی ایک ناقابل حصول مقصد کے طور پر نظر آتا تھا۔

انہوں نے کہا کہ میاں نواز شریف کی جرات مندانہ قیادت میں پاکستان دشمن قوتوں کے خلاف ڈٹ کر کھڑا ہوا اور بالآخر ایٹمی طاقت بن گیا۔ اس پوری کوشش کے دوران، ہماری مسلح افواج چوکنا محافظ رہی ہیں، جو ہمارے ایٹمی پروگرام کو دشمنوں کے عزائم سے بچا رہی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اس اہم موقع پر ہم ان تمام لوگوں کی قربانیوں اور شراکت کا احترام کرتے ہیں جنہوں نے اس کامیابی کو ممکن بنایا۔ ان کی میراث ہماری اجتماعی کوششوں اور قومی قوت کی مضبوط یاد دہانی کے طور پر کام کرتی ہے۔

 

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll