جی این این سوشل

دنیا

رفح پرحالیہ حملے کے بعد پالیسی نہیں بدلی ،واقعے کی تحقیقات پر نظر ہے:امریکہ

جنوبی غزہ کی پٹی کے شہر رفح میں ہونے والی ہلاکتوں پر آنکھیں بند نہیں کر رہے ہیں، ترجمان

پر شائع ہوا

کی طرف سے

رفح پرحالیہ حملے کے بعد پالیسی نہیں بدلی ،واقعے کی تحقیقات پر نظر ہے:امریکہ
رفح پرحالیہ حملے کے بعد پالیسی نہیں بدلی ،واقعے کی تحقیقات پر نظر ہے:امریکہ

امریکی محکمہ خارجہ نے کہا ہے کہ امریکہ نے واقعے کی اطلاع ملتے ہی رفح میں حملے کے بارے میں گہری تشویش کا اظہار کرنے کے لیے اسرائیلی حکومت سے رابطہ کیا ہے۔ واشنگٹن اسرائیلی تحقیقات کے نتائج پر گہری نظر رکھے ہوئے ہے۔

امریکی محکمہ خارجہ کے ترجمان میتھیو ملر نے کہا کہ واشنگٹن اسرائیل پر بین الاقوامی انسانی قانون کی مکمل پابندی کرنے، شہریوں پر اس کی کارروائیوں کے اثرات کو محدود کرنے اور انسانی امداد کے بہاؤ کو بڑھانے کی ضرورت پر زور دیتا رہے گا۔

دوسری جانب وائٹ ہاؤس کے ترجمان جان کربی نے کہا کہ رفح پر اسرائیل کا کوئی بھی بڑا زمینی حملہ بلا جواز ہے۔

انہوں نے کہا کہ امریکی صدر جو بائیڈن جنوبی غزہ کی پٹی کے شہر رفح میں ہونے والی ہلاکتوں پر آنکھیں بند نہیں کر رہے ہیں لیکن وہ ایک کیمپ پر اسرائیلی حملے میں ہلاکتوں کے بعد اپنی پالیسی تبدیل کرنے کا ارادہ نہیں رکھتے۔

جلی ہوئی لاشوں کی تعداد کے بارے میں ایک سوال کے جواب میں جان کربی نے صحافیوں کوبتایا کہ یہ ایسی چیز نہیں ہے جس پر ہم نے آنکھیں بند کر رکھی ہیں۔رفح میں بے گھر لوگوں کی خیمہ بستی پر اسرائیلی بمباری کے بعد امریکہ کی پالیسی میں کوئی تبدیلی نہیں آئی ہے۔

پاکستان

پاکستان تحریک انصاف کی کسی بھی ملٹری آپریشن کی مخالفت

اس موقع پر اپوزیشن لیڈر عمر ایوب کا کہنا تھا کہ کسی بھی قسم کا آپریشن کرنے سے پہلے پارلیمان کو اعتماد میں لیں

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

پاکستان تحریک انصاف کی کسی بھی ملٹری آپریشن کی مخالفت

اسلام آباد: پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) نے کسی بھی ملٹری آپریشن کی مخالفت کر دی۔

قومی اسمبلی کے بجٹ اجلاس سے احتجاجاً واک آؤٹ کرنے کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے پی ٹی آئی چیئرمین بیرسٹر گوہر خان نے کہا کہ کسی بھی آپریشن کے لیے پارلیمان کو اعتماد میں لینا ضروری ہے، کوئی بھی کمیٹی کتنی ہی بڑی ہو آئین کے مطابق پارلیمان سپریم ہے۔

بیرسٹر گوہر نے مزید کہا کہ ہم اپنے آئینی فرائض سرانجام دے رہے ہیں، ہمارا مطالبہ یہی ہے کہ پارلیمان کو اعتماد میں لیے بغیر کوئی آپریشن شروع نہ ہو، ہمیں ٹائم نہیں ملا اس لیے ہم نے اجلاس سے واک آوٹ کر دیا۔

انہوں نے کہا کہ اپوزیشن کے بغیرجمہوریت نہیں ڈکٹیٹر شپ ہوتی ہے، اپوزیشن کاسب سے زیادہ کردار ہوتا ہے، پوائنٹ آف آرڈر پر بات کرنے کی اجازت مانگی تھی، کوئی بھی کمیٹی آئین کو نظر انداز نہیں کرسکتی، پہلے بھی فوجی آپریشن کے لیے پارلیمان نے آئین میں ترمیم کی، کسی آپریشن کے لیے پارلیمان کو اعتماد میں لینا ضروری ہے۔

 

“اتنے بڑے فیصلے پر پارلیمان کو اعتماد میں نہیں لیا جارہا”

دوسری جانب میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے پی ٹی آئی کے رہنما اسد قیصر نے کہا کہ اتنے بڑے فیصلے پر پارلیمان کو اعتماد میں نہیں لیا جارہا، ایک طرف آپریشن، دوسری طرف فاٹا، پاٹا پر ٹیکس لگائے جارہے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ یہ مارشل لا ذہنیت ہے، بہت سے آپریشن ہوئے آج تک کونسا آپریشن کامیاب ہوا؟ میڈیا نمائندگان پر پابندیاں لگی ہوئی ہیں۔

“کسی بھی قسم کا آپریشن کرنے سے پہلے پارلیمان کو اعتماد میں لیں”

اس موقع پر اپوزیشن لیڈر عمر ایوب کا کہنا تھا کہ کسی بھی قسم کا آپریشن کرنے سے پہلے پارلیمان کو اعتماد میں لیں، چین سے آئے ساتھیوں نے واضح طور پر کہا تھا سی پیک پر سیکیورٹی خدشات ہیں، بانی پی ٹی آئی کئی بار کہہ چکے ہیں ملک میں امن رول آف لاء سے آئے گا، ملک میں رول آف لاء ہوگا تب ملک ترقی کرے گا۔

انہوں نے کہا کہ ہم عوام کی نمائندگی کررہے ہیں، ان کا رویہ اپوزیشن کے ساتھ ٹھیک نہیں، فارم 45 کےتحت پی ٹی آئی کی 180 سیٹیں بنتی ہیں، ایوان میں بات کرنی چاہی تو اسپیکر نے موقع نہیں دیا۔

عمر ایوب نے مزید کہا کہ موجودہ حکومت اینٹی اسٹیٹ ہے، یہ بجٹ اقتصادی دہشتگرد کا بجٹ ہے اسے مسترد کرتے ہیں۔

 

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

اس وقت ملک میں تاریخ کی سب سے زیادہ مہنگائی اور بے روزگاری ہے، آصفہ بھٹو

نئے سال کا بجٹ عوام کی نمائندگی نہیں کرتا، رہنما پیپلز پارٹی

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

اس وقت ملک میں تاریخ کی سب سے زیادہ مہنگائی اور بے روزگاری ہے، آصفہ بھٹو

پاکستان پیپلز پارٹی کی رکن قومی اسمبلی آصفہ بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ اس وقت ملک میں تاریخ کی سب سے زیادہ مہنگائی اور بے روزگاری ہے۔

قومی اسمبلی میں اظہار خیال کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ نئے سال کا بجٹ عوام کی نمائندگی نہیں کرتا، بجٹ میں کسانوں اور عام آدمی کو ریلیف فراہم کرنا چاہیے تھا۔ کیا پاکستان کے لوگ اس عوام دشمن بجٹ کے مستحق ہیں؟ ، ہمیں عام آدمی کے ریلیف کے لیے آگے بڑھنا ہوگا، ہمیں کسان کو مضبوط کرنا ہوگا۔ پاکستان کے عوام بہتری کے مستحق ہیں، ہمیں بہتر کرنے کے لیے مل کر کام کرنا چاہیے۔

انکا کہنا تھا کہ ایسے وقت میں جب لوگ اپنے نظریاتی عقائد میں تقسیم ہیں، جب اختلافات کو ہتھیار بنا دیا جاتا ہے، اختلاف رائے کو تشدد سے حل کیا جاتا ہے، یہ ضروری ہے کہ ہم اس ایوان کے منتخب اراکین کی حیثیت سے اٹھیں اور اس پر بات کریں۔ رواداری کو تقریروں اور الفاظ تک محدود نہیں ہونا چاہیے، ہمیں اس پر عمل کرنا چاہیے، ہمیں تفرقہ انگیز سیاست کو مسترد کرنا چاہیے، عوام کے لیے اکٹھا ہونا چاہیے۔ ہمیں مل کر لوگوں کو ریلیف دینے کا راستہ تلاش کرنا ہے

آصفہ بھٹو نے کہا ہمیں اپنے انسانی وسائل کو ترقی دینے کے لئے استعمال کرنا چاہے۔ ہمیں ایسے طریقے تلاش کرنے چاہئیں جن سے غریب لوگوں کو براہ راست ریلیف ملے۔ امید ہے ہم سیاست میں ایک نیا دور دیکھنے کے قابل ہوں گے۔ جب صدر پاکستان اتحاد کی بات کرتے ہیں وہ وقت کی ضرورت ہے، کسی بھی مسلئے کا حل الزام تراشی نہیں ہے، اس گرمی میں سندھ میں بجلی نہیں یے، اس قیامت خیز گرمی میں 15 سے 20 گھنٹے کی لوڈ شیڈنگ عذاب ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہمیں کسان کو مضبوط کرنا ہو گا، امید کرتی ہوں ایک نئے سیاسی کلچر آغاز جلد ہم دیکھیں گے، ہمیں تقسیم کی سیاست کو مسترد کرنا ہوگا، ہمیں گندم امپورٹ کرنے کے غلط فیصلوں کا بھی سامنا ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

کھیل

ٹی ٹو ئنٹی ورلڈ کپ : انگلینڈ کا ٹاس جیت کرپہلےفیلڈنگ کافیصلہ

میگاایونٹ میں ایک اوربڑااپ سیٹ ہواجس میں افغانستان کی ٹیم نےکرکٹ کی سپرپاورآسٹریلیاکوسپرایٹ مرحلےمیں شکست دےدی

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

ٹی ٹو ئنٹی ورلڈ کپ : انگلینڈ کا ٹاس جیت کرپہلےفیلڈنگ کافیصلہ

انٹرنیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی) کےزیراہتمام ٹی ٹوئنٹی ورلڈکپ کےسپرایٹ مرحلے میں انگلینڈ نےٹاس جیت کرپہلےفیلڈنگ کافیصلہ کرلیا۔
تفصیلات کےمطابق ٹی ٹوئنٹی ورلڈکپ کےمقابلےامریکاکےبعداب ویسٹ انڈیزمیں جاری ہیں، میگاایونٹ میں پاکستانی ٹیم اپنی ناقص کارکردگی کی وجہ سےگروپ میچزسےہی باہرہوگئی تھی۔

میگاایونٹ میں ایک اوربڑااپ سیٹ ہواجس میں افغانستان کی ٹیم نےکرکٹ کی سپرپاورآسٹریلیاکوسپرایٹ مرحلےمیں شکست دےدی۔
دفاعی چیمپئن انگلینڈنےٹاس جیت کرامریکاکوپہلے بیٹنگ کی دعوت دےدی۔
انگلینڈکوسیمی فائنل تک رسائی کےلئے اس میچ میں کامیابی ضروری ہے۔دوسری جانب امریکا گروپ 2 کے اس میچ میں جیت کے باوجود ایونٹ سے باہر ہوسکتا ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll