جی این این سوشل

دنیا

عرفات میں لبیک اللھم لبیک کی صدائیں بلند

شیخ مہر بن حمد الموکلی نے قرآنی تعلیمات کو انسانیت کیلئے رہنمائی اور فضل کا ذریعہ قراردیا جن کا مقصد ان کے اعمال درست کرنا اورسچائی کی جانب لے جانا ہے

پر شائع ہوا

کی طرف سے

عرفات میں لبیک اللھم لبیک کی صدائیں بلند
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

لبیک اللھم لبیک کی صدائیں بلند کرتے لاکھوں حجاج نے آج سہ پہر حج کا رکن اعظم وقوف عرفہ ادا کردیا ۔

میدان عرفات کی مسجد نمرہ سے خطبہ حج میں شیخ  مہربن حمد  الملوکی  نے مسلمانوں پراپنی صفوں میں اتحاد پید اکرنے پرزوردیا اورکہا کہ یہ یقینا امت مسلمہ کی نجات کا ذریعہ بنے گا اوراختلاف وتقسیم کا سدباب بھی ہوگا۔

خطبے میں اﷲ پر ایمان اطاعت خداوندی اور اسلام کے بنیادی ارکان پر روشنی ڈالی جو مسلمانوں کے ایمان کومضبوط کرتے ہیں۔

شیخ مہر بن حمد الموکلی نے قرآنی تعلیمات کو انسانیت کیلئے رہنمائی اور فضل کا ذریعہ قراردیا جن کا مقصد ان کے اعمال درست کرنا اورسچائی کی جانب لے جانا ہے ۔

انہوں نے قرآن کی تعلیمات پرروشنی ڈالتے ہوئے کہاکہ جو زیادہ متقی ہیں اورجو نیک کام کریں گے ان کیلئے اجر عظیم کا وعدہ ہے ۔اسلام کے بنیادی عقیدے کا حوالہ دیتے ہوئے شیخ مہر نے اﷲ کی وحدانیت اور حضرت محمد ۖ کی رسالت کی گواہی دی۔انہوں نے خطبے کے آخر میں لوگوں کو تاکید کی کہ ایک دوسرے کے حقوق کا احترام کریں ، ناحق قتل نہ کریں اور انصاف پر مبنی فیصلے کریں۔

حجاج کرام نے ظہر اور عصر کی نمازیں اکٹھی ادا کیں۔میدان عرفا ت میں قیام کے بعد حجاج کنکریاں اکٹھی کرنے کیلئے مزدیفہ جائیںگے جو وہ منیٰ میں علامتی طورپر شیطانوں کو ماریں گے ۔اس کے بعد حجاج عیدالاضحی کے موقع پر تین دن کیلئے منیٰ واپس آئیںگے اور حضرت ابراہیم علیہ السلام اور حضرت اسماعیل علیہ السلام کی پیروی میں جانور قربان کریںگے ۔

موسم

کراچی کے مختلف علاقوں میں بادلوں کے برسنے کا سلسلہ جاری

شہر کے مختلف علاقوں میں کہیں ہلکی اور کہیں تیز بارش جاری ہے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

کراچی کے مختلف علاقوں میں بادلوں کے برسنے کا سلسلہ جاری

کراچی کے مختلف علاقوں میں بادلوں کے برسنے کا سلسلہ ایک بار پھر شروع ہوگیا، شہر کے مختلف علاقوں میں کہیں ہلکی اور کہیں تیز بارش جاری ہے۔

محکمہ موسمیات کی جانب سے آج بھی کراچی میں ہلکی اور تیز بارش کی پیشگوئی کی گئی تھی۔ بارش کا یہ سلسلہ شہر کے مختلف علاقوں میں ریکارڈ کیا گیا، کہیں تیز اور کہیں ہلکی بارش نے گرمی کا زور توڑ دیا۔

شہر کے علاقوں لانڈھی، کورنگی، شاہ فیصل، ملیر، ائیرپورٹ، سہراب گوٹھ، صفورا چورنگی، گلشن اقبال، یونیورسٹی روڈ اور گلستان جوہر سمیت ملحقہ علاقوں میں بارش ریکارڈ کی گئی، اس کے علاوہ شارع فیصل، سرجانی ٹاؤن اور ایف بی ایریا میں بھی بادل برسے۔

محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ بارش برسانے والے بادل ضلع غربی اور وسطی میں پھیل سکتے ہیں۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

سپیکر قومی اسمبلی کی جانب سے کفایت شعاری پر عمل درآمد شروع

سردار ایاز صادق نے قائمہ کمیٹیوں کے سربراہان کو نئی گاڑیاں دینے سے انکار کرتے ہوئے نئی گاڑیاں خریدنے پابندی لگا دی

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

سپیکر قومی اسمبلی کی جانب سے کفایت شعاری پر عمل درآمد شروع

اسپیکر قومی اسمبلی سردار ایاز صادق کی جانب سے کفایت شعاری پالیسی پرعملدرآمد شروع کردیا گیا۔

سردار ایاز صادق نے قائمہ کمیٹیوں کے سربراہان کو نئی گاڑیاں دینے سے انکار کردیا اور نئی گاڑیاں خریدنے پر پابندی لگا دی۔

قومی اسمبلی کے مانیٹائزیشن لینے والے افسران سے گاڑیاں واپس لینے کے احکامات بھی جاری کیے ہیں۔

اسپیکر قومی اسمبلی نے کہا کہ مانیٹائزیشن لینے والے افسران قواعد کے مطابق اداٸیگی کرکے گاڑی استعمال کریں، افسران اور ایم این ایز پرانی سرکاری گاڑیوں کو بھی احتیاط سے چلاٸیں۔

سردار ایاز صادق نے اپنے لیے نئی گاڑی لینے سے بھی انکار کردیا جبکہ وہ بحثیت اسپیکر قومی اسمبلی 10 سال پرانی گاڑی استعمال کر رہے ہیں۔

اسپیکرقومی اسمبلی نے اپنا پروٹوکول انتہائی محدود کردیا، سردار ایاز صادق کا پروٹوکول 2 گاڑیوں پر مشتمل ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

ملک میں منصوبے کے تحت مایوسی اور انتشار کا زہر پھیلایا جا رہا ہے، سعد رفیق

بہت سے لوگ دانستہ اور غیر دانستہ طور پر اس صورت حال کاحصہ بن رہے ہیں، سینئر رہنما پاکستان مسلم لیگ (ن)

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

ملک میں منصوبے کے تحت مایوسی اور انتشار کا زہر پھیلایا جا رہا ہے، سعد رفیق

لاہور: مسلم لیگ (ن) کے سینئر رہنماء اور  سابق وفاقی وزیر سعد رفیق نے کہا کہ سوچےسمجھےمنصوبے کےتحت مایوسی، جھوٹ، تشدد، کنفیوژن اور انتشار کا زہر پھیلایا جارہا ہے۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ (ایکس) پر پیغام میں سعد رفیق نے لکھا کہ بہت سے لوگ دانستہ اور غیر دانستہ طور پر اس صورت حال کاحصہ بن رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ آئینی پامالی، زرد جمہوریت، معاشی بدحالی اور غربت جنگل کی آگ کی طرح پھیل رہی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ توڑنا آسان جب کہ جوڑنا بہت مشکل کام ہے، ایک دوسرے کے گریبان پھاڑنے اور دامن تار تار کرنے سے فرصت ملے تو سوچیے کہ ہم اجتماعی خود کشی پر کیوں تُلے ہیں۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll