جی این این سوشل

پاکستان

سنی اتحاد کونسل کا پارٹی قیادت اور کارکنوں کی رہائی کے لیے پارلیمنٹ تا سپریم کورٹ پیدل مارچ

احتجاجی مارچ میں بیرسٹر گوہر، اسد قیصر، علی محمد خان، ریاض فتیانہ، عاطف خان شامل تھے

پر شائع ہوا

کی طرف سے

سنی اتحاد کونسل کا پارٹی قیادت اور کارکنوں کی رہائی کے لیے پارلیمنٹ تا سپریم کورٹ پیدل مارچ
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

سنی اتحاد کونسل کے اراکین نے پارٹی قیادت اور کارکنوں کی رہائی کے لیے پارلیمنٹ تا سپریم کورٹ پیدل مارچ کیا اور ان کی رہائی کے لیے نعرے لگائے۔

سنی اتحاد کونسل اور پاکستان تحریک انصاف کے پارلیمنٹیرینز نے بانی پی ٹی آئی عمران خان کی رہائی کے لیے احتجاج کیا، ارکان قومی اسمبلی نے پارلیمنٹ سے سپریم کورٹ تک پیدل مارچ کیا۔

احتجاجی مارچ میں بیرسٹر گوہر، اسد قیصر، علی محمد خان، ریاض فتیانہ، عاطف خان شامل تھے، ارکان نے بانی پی ٹی آئی کو رہا کرو کے نعرے لگائے، ممبران کی جانب سے ہاتھوں میں بینرز بھی اٹھائے گئے تھے۔

مظاہرے میں گفتگو کرتے ہوئے چئیرمین پی ٹی آئی بیرسٹر گوہر نے کہا کہ تحریک انصاف کے قید کارکنان اور لیڈر شپ کو رہا کیا جائے، ہماری بہنیں اور خواتین پابند سلاسل ہیں انہیں فوری رہا کیا جائے۔ ایک بار پھر بجٹ اجلاس سے پاکستان تحریک انصاف کے پارلیمنٹیرینز احتجاجاً واک کرنے پر مجبور ہیں۔

انہوں نے کہا کہ عوام کو بروقت انصاف نہ ملنا ناانصافی ہے، 2009 میں جج صاحبان اپنے مطالبات کے لیے خود بھی سڑکوں پر آئے اس وقت نعرہ یہی تھا کہ بروقت انصاف ہی اصل انصاف ہے۔ خان صاحب ایک سال سے ناکردہ گناہ میں پابند سلاسل ہیں، سائفر کیس ختم ہونے کے باوجود جیل میں ہیں عدت کے کیس میں تاریخ پر تاریخ پڑ رہی ہے۔ ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ خان صاحب کو جلد سے جلد رہا کریں وہ ملک کے مقبول ترین لیڈر ہے۔تین کروڑ ووٹر نے صرف عمران خان کو ووٹ دیا ہے۔

اسد قیصر نے کہا کہ ملٹری کورٹ کے حوالے سے اب تک نیا بینچ نہیں بنایا گیا، آج تک جو بے گناہ لوگ جیلوں میں ہیں ان کے حوالے سے کس کے سامنے جائیں، ابھی تک بے گناہ جیلوں میں قید لوگوں کے لئے انصاف کا دروازہ نہیں کھولا گیا، ان کے انصاف کے لئے کیا اب ہمیں اقوام متحدہ کے پاس جانا ہوگا؟

انہوں ںے مزید کہا کہ چیف جیٹس سے ان لوگوں کو انصاف دلانے کی درخواست کرتے ہیں، چیف جسٹس بینج تشکیل دیں تاکہ بے گناہ جیلوں میں قید لوگوں کو انصاف مل سکے۔

کھیل

ویمنز ایشیا کپ: پاکستان کا آج نیپال سے مقابلہ ہوگا

میچ سری لنکا کے شہر دمبولا میں شام کو 06:30 پر کھیلا جائے گا

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

ویمنز ایشیا کپ: پاکستان کا آج نیپال سے مقابلہ ہوگا

سری لنکا:ایشین کرکٹ کونسل (اے سی سی) ویمنز ایشیا کپ میں پاکستان کو بھارت سے شکست کے بعد آج نیپال کا سامنا کرنا ہوگا۔ یہ میچ سری لنکا کے شہر دمبولا میں کھیلا جائے گا۔

آج کے میچوں میں بھارت کا یو اے ای سے مقابلہ جاری ہے،جبکہ 06:30 پر پاکستان کا مقابلہ نیپال سے ہوگا۔

گروپ اے میں بھارت 2 پوائنٹس کے ساتھ سرفہرست ہے جبکہ پاکستان ابھی تک کوئی پوائنٹ حاصل نہیں کر سکا۔ نیپال 1 پوائنٹ کے ساتھ دوسرے اور یو اے ای 0 پوائنٹ کے ساتھ تیسرے نمبر پر ہیں۔

گروپ بی میں تھائی لینڈ 2 پوائنٹس کے ساتھ پہلے اور سری لنکا 2 پوائنٹس کے ساتھ دوسرے نمبر پر ہیں۔

پاکستان کے لیے نیپال کے خلاف میچ ایک چیلنج ہوگا۔ نیپال نے ٹورنامنٹ کا آغاز اچھا کیا ہے اور وہ پاکستان کو شکست دے کر حیران کر سکتا ہے۔ پاکستان کو جیتنے کے لیے اپنے بلے بازوں اور گیند بازوں سے بہتر کارکردگی کا مظاہرہ کرنا ہوگا۔

یاد رہے کہ ٹورنامنٹ کے پہلے میچ میں بھارت نے پاکستان کو 7 وکٹوں سے شکست دے کر اپنے مہم کا آغاز شاندار انداز میں کیا۔ بھارتی بلے بازوں نے شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے ہدف کو صرف 16.3 اوورز میں حاصل کر لیا۔

دوسرے روز کے دیگر میچوں میں سری لنکا نے بنگلادیش کو 7 وکٹوں سے اور تھائی لینڈ نے ملائشیا کو 22 رنز سے شکست دے کر اپنے گروپ میں اچھی پوزیشن حاصل کر لی۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

فارغ بیٹھے گورنر توجہ حاصل کرنے کے لیے ہمارے خلاف نفرت انگیز بیانات دے رہے ہیں ، بیرسٹر سیف

صوبے میں لاقانونیت اس وقت عروج پر تھی جب وفاق اور یہاں آپ کی پارٹی کی حکومت تھی، مشیر اطلاعات

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

فارغ بیٹھے گورنر  توجہ حاصل کرنے کے لیے ہمارے خلاف نفرت انگیز بیانات دے رہے ہیں ، بیرسٹر سیف

مشیر اطلاعات  خیبر پختونخواہ بیرسٹر ڈاکٹر سیف کا کہنا ہے کہ فارغ بیٹھا گورنر میڈیا کی توجہ حاصل کرنے کے لیے صوبائی حکومت کے خلاف نفرت انگیز بیانات دے رہے ہیں۔  

سوشل میڈیا پلیٹ فارم ایکس پر اپنے پیغام میں بیرسٹر سیف کا گورنر کے پی کے فیصل کریم کنڈی کے بیان پر رد عمل دیتے ہوئے کہنا تھا کہ صوبے میں لاقانونیت اس وقت عروج پر تھی جب وفاق اور یہاں آپ کی پارٹی کی حکومت تھی، آپ کے دور حکومت میں پشاور ٹو ڈی آئی خان سفر کرنا ممکن نہیں تھا۔

میشر اطلاعات نے مزید کہا کہ فارغ گورنر وہ دن بھول گئے جب وہ خود ڈی آئی خان سے پشاور کا سفربراستہ اسلام آباد کرتے تھے، فارغ گورنر عہدہ سنبھالنے کے بعد خیبر پختونخوا میں انوکھے بن بلائے مہمان بن چکے ہیں، گورنر بغیر دعوت تقریبات میں شرکت کرنے سے پہلے اپنا نا صحیح عہدے کا لحاظ تو رکھیں۔ 

انہوں نے مزید کہا گورنر 12 سال تک مسلسل مسترد اور بے روزگار بیٹھنے کے بعد اب مجھے کام بتاؤ میں کیا کروں والا جن بن چکے ہیں، فارغ بیٹھے گورنر کے پاس کرنے کو کام نہیں اس لیے الٹے سیدھے بیانات سے کام ڈھونڈ رہے ہیں، گورنر 3بار علی امین گنڈاپور سمیت تینوں بھائیوں سے شکست خوردہ شخص ہے۔

رہنما پی ٹی آئی کا کہنا تھا کہ جعلی سرکار نے فیصل کریم کنڈی کو صرف اور صرف خیبر پختونخوا میں ترقی کی راہ میں رخنہ ڈالنے کے لئے گورنر کا عہدہ دیا ہے، علی امین گنڈاپور کی سربراہی میں صوبہ ترقی کی راہ پر گامزن ہے، وزیر اعلی علی امین گنڈاپور انکے فضول باتوں پر کان نہیں دھرتے ہیں۔    

واضح رہے کہ گورنر خیبر پختونخوا فیصل کریم کنڈی نے وزیراعلیٰ کے پی علی امین گنڈا پور کو پی ٹی آئی حکومت کی 10 سالہ کارکردگی پر مناظرے کا چیلنج دیا تھا۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

بنوں میں فائرنگ پی ٹی آئی کے لوگوں نے کی، جس سے بھگڈر مچی، وفاقی وزیر اطلاعات

کے پی حکومت کا انکوائری کا حکم سمجھ سے بالاتر ہے، عطاء تارڑ

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

بنوں میں فائرنگ پی ٹی آئی کے لوگوں نے کی، جس سے بھگڈر مچی، وفاقی  وزیر اطلاعات

وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات عطا اللہ تارڑ نے کہا ہے کہ بنوں میں فائرنگ پی ٹی آئی کے لوگوں نے کی، جس سے بھگڈر مچی، مارچ میں تحریک انصاف کے مسلح افراد شامل تھے، واقعے میں سکیورٹی ادارے اور عوام کو لڑانے کی کوشش کی گئی، بنوں حملے کو پی ٹی آئی نے غلط رنگ دیا، کے پی حکومت کا انکوائری کا حکم سمجھ سے بالاتر ہے۔

اسلام آباد میں نیوز کانفرنس کرتے ہوئے عطا تارڑ نے کہا کہ کچھ حقائق عوام کے سامنے رکھنا چاہتا ہوں ، پی ٹی آئی نے ہمیشہ انتشار اور تشدد کی سیاست کی، ملک میں عدم استحکام اور انتشار پیدا کرنا ہی پی ٹی آئی کا منشور اور مشن ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ بنوں میں تاجروں کا امن مارچ تھا اس میں سیاسی جماعتوں کے لوگ شامل ہوئے، تاجروں کے احتجاج میں تحریک انصاف بھی شامل ہوئی، پی ٹی آئی نے لوگوں کو تشدد پر اکسایا، کیا امن مارچ میں لوگ مسلح ہو کر آتے ہیں، جہاں دہشتگردی ہوئی وہاں جا کر فائرنگ کی گئی، بنوں میں دنگا فساد کرانے کی کوشش کی گئی، بنوں واقعہ تحریک انصاف نے خود کیا ہے، بنوں واقعہ میں آپ کے لوگ ملوث ہیں،آپ خود ہی کیسے انکوائری کراسکتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ 2014 میں دھرنے کے دوران پی ٹی وی پر حملے اور توڑ پھوڑ کے بعد مبارکبادیں دی گئیں، یہ لوگ ہمیشہ لاشوں کی تلاش میں رہتے ہیں، کسی جلسے میں لوگ بےہوش ہوئے تو بانی پی ٹی آئی خوش ہوئے، ان کی کوشش رہی کہ اپنے لوگوں کو مروا کرالزام حکومت پر لگایا جائے، یہ لوگ شہداء کی قربانیوں کا بھی پاس نہیں رکھتے۔

وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ بانی پی ٹی آئی کو جیل میں جدید سہولیات میسر ہیں، حکومت نے انھیں جیل میں اذیت پہنچانے کا کوئی حکم نہیں دیا۔

جرمنی میں پاکستانی سفارتی مشن پر افغان شہریوں کے دھاوا بولنے سے متعلق سوال پر ان کا کہنا تھا کہ فرینکفرٹ جرمنی میں پاکستانی قونصلیٹ پر حملے کے واقعہ پر دفترخارجہ نے اپنا احتجاج ریکارڈ کرایا ہے، دفترخارجہ نے جرمن حکام سے کہا ہے کہ واقعہ میں ملوث عناصر کو گرفتار کیا جائے۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll