جی این این سوشل

پاکستان

چائے کی دعوت بالکل برقرار ہے، ترجمان پاک فوج

راولپنڈی : ترجمان پاک فوج بابر افتخار نے نجی ٹی وی کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ پاکستان کے عوام اور میڈیا افواج اور اداروں سےمحبت کرتے ہیں، چائےکی دعوت بالکل برقرار ہے۔

پر شائع ہوا

کی طرف سے

چائے کی دعوت بالکل برقرار ہے، ترجمان پاک فوج
چائے کی دعوت بالکل برقرار ہے، ترجمان پاک فوج

ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل بابر افتخار نے  نجی ٹی وی کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا  کہ  انگلیاں ‏اٹھانےوالوں کو حکومت اچھےسےجواب دےرہی ہے جہاں جواب کی ضرورت ہوتی ہےوہاں جواب ‏دیتےہیں، الزامات کاکوئی وجود ہی نہیں توان کاجواب دینےکافائدہ نہیں۔انہوں نے کہا کہ   پاکستان  کے عوام اور میڈیا افواج اور اداروں سےمحبت کرتے ہیں، چائےکی دعوت بالکل برقرار ہے۔

ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل بابر افتخار کا کہنا ہے کہ   جیسے بھی حالات ہوں ڈی جی ایم اوز کا ہاٹ لائن پر رابطہ رہتا ہے،کسی پریشر کے تحت ہاٹ لائن پر رابطہ نہیں ہوا یہ ایک ٹیکٹیکل لیول کا رابطہ ہے،ہاٹ لائن پر ملٹری ٹو ملٹری رابطہ ہوتا ہے،کوئی ایمرجنسی حالات نہیں تھے جس پر رابطہ ہوا۔

ترجمان پاک فوج  بابر افتخار  نے کہا  سیز فائر معاہدہ 2003 میں ہوا تھا،2013تک سیز فائر معاہدہ بہترین تھا،2013کے بعد سیز فائر معاہدے کی خلاف ورزیوں میں اضافہ ہوا،ہر مہینے میں ایک بار ڈی جی ایم اوز کا رابطہ ہوتا ہے،دونوں جانب سے سیز فائر معاہدے کو دوبارہ بحال کرنے پر زور دیا گیا، سیز فائر کی خلاف ورزی سے سب سے زیادہ سویلین آبادی کا نقصان ہوتا تھا۔

آئی ایس پی آر کا کہنا ہے کہ  آپریشن رد الفسادآرمی چیف  جنرل قمرجاوید باجوہ کے حکم پر شروع کیا گیا تھا،آپریشن ردالفساد سے پاکستان میں دہشت گردی میں کمی آئی ہے۔

پاکستان

شیخ رشید پر تین دفعات، ایک قابل ضمانت، دو ناقابل ضمانت

شیخ رشید پر درج ایف آئی آر سامنے آگئی

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

شیخ رشید پر تین دفعات، ایک قابل ضمانت، دو ناقابل ضمانت

اسلام آباد: عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید پر مقدمے میں ایک قابل ضمانت اور دو ناقابل ضمانت دفعات لگائی گئی ہیں، سابق وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید پر درج ایف آئی آر سامنے آگئی۔

شیخ رشید پر عائد دفعہ 120نفرت انگیز تقریرکی قابل ضمانت دفعہ ہے جس کی سزا 6 ماہ قیدیاجرمانہ ہے، دفعہ 153 ایبغاوت پراکسانیکی ناقابل ضمانت دفعہ ہیجس کی سزا 5 سال قید ہے جب کہ دفعہ 505 عوام کو اشتعال دلانیکی ناقابل ضمانت دفعہ ہے جس کی سزا 7 سال قید ہے۔

 سابق وزیر داخلہ شیخ رشید کو پنڈی پولیس نے موٹر وے سے گرفتار کر کے اسلام آباد کے تھانہ آبپارہ منتقل کیا۔

پڑھنا جاری رکھیں

تجارت

روپے کی قدر میں کمی،ڈالر کا تیسری سنچری کی طرف سفر جاری

حکومت کی طرف سے مارکیٹ کے رحم و کرم پر چھوڑنے کے بعد  ڈالر ملکی تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گیا۔

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

روپے کی قدر میں کمی،ڈالر کا تیسری سنچری  کی طرف سفر جاری

حکومت کی طرف سے مارکیٹ کے رحم و کرم پر چھوڑنے کے بعد  ڈالر ملکی تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گیا۔آج مارکیٹ کے اختتام پر ڈالر کی قیمت 271.35  روپے تک پہنچ گئی ۔ 

کاروباری ہفتے کے چوتھے روز انٹربینک میں ڈالر ملکی تاریخ کی بلند ترین سطح پر  ٹریڈ ہوتا رہا۔ انٹر بینک میں ڈالر کی قیمت میں 2 روپے  سے زائد کا اضافہ ہوا اور  271 روپے 33 پیسےپر بند ہوا۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

عمران خان نا اہلی کیس: سماعت کیلیے لارجر بنچ تشکیل دینے کا فیصلہ

اسلام آباد ہائیکورٹ نے عمران خان نا اہلی کیس کی سماعت کے لیے لارجر بنچ بنانے کا فیصلہ سنا دیا۔

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

عمران خان نا اہلی کیس: سماعت کیلیے لارجر بنچ تشکیل دینے کا فیصلہ

اسلام آباد ہائیکورٹ میں عمران خان کی  مبینہ بیٹی ٹیریان جیڈ کو ظاہر نہ کرنے پر نااہلی کی درخواست پر سماعت ہوئی۔ عدالت نے عمران خان کی نااہلی کی درخوست پر سماعت کیلئے لارجر بینچ تشکیل دینے کا فیصلہ سنادیا۔

چیف جسٹس عامر فاروق نے ریمارکس دیے کہ عمران خان کا اعتراض ہے کہ وہ اب پبلک آفس ہولڈر نہیں، الیکشن کمیشن سے کنفرم کرنا ہے کہ موجودہ پوزیشن کیا ہے۔

الیکشن کمیشن سے ڈی نوٹیفائی ہونے کا نوٹیفکیشن منگوا لیتے ہیں۔ درخواست گزار نے عمران خان کا 2018 والا بیان حلفی چیلنج کیا تھا۔

سماعت کے دوران چیف جسٹس اسلام آباد ہائیکورٹ عامر فاروق نے  عمران خان کے وکلا سے مکالمہ کیا کہ آپ کی جانب سے بینچ پر اعتراض اٹھایا گیا ہے؟

2018میں کیس سننے سے معذرت ذاتی وجوہات پر نہیں کی تھی۔اس وقت درخواست گزار نے مخصوص بینچ کے سامنے لگانے کی استدعا کی تھی۔

چیف جسٹس عامر فاروق نے ریمارکس دیے کہ آپ نے اعتراض اٹھایا تو بینچ کی تشکیل نو کر دیتے ہیں۔ہم لارجر بینچ کے سامنے معاملہ رکھیں گے۔

خیال رہے کہ چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے اپنی مبینہ بیٹی ٹیریان سے متعلق کیس میں تحریری جواب عدالت میں جمع کروایا تھا جس میں انہوں نے کہا تھا کہ اسلام آباد ہائیکورٹ یہ مقدمہ سننے کی مجاز ہی نہیں۔

جو جج پہلے یہ کیس سننے سے معذرت کر چکا ہے وہ دوبارہ کیسے اس کیس کو سن سکتا ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll