جی این این سوشل

تجارت

کے الیکٹرک کی بجلی 11 روپے 34 پیسے فی یونٹ مہنگی کرنے کی درخواست

نیپرا درخواست کی سماعت کے بعد فیول پرائس ایڈجسٹمنٹ  کی مد میں قیمت  11 روپے 34 پیسے فی یونٹ  بڑھانے سے متعلق حتمی فیصلہ کرے گا۔

پر شائع ہوا

کی طرف سے

کے الیکٹرک کی بجلی 11 روپے 34 پیسے فی یونٹ مہنگی کرنے کی درخواست
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

کے الیکٹرک  نے بجلی 11 روپے 34 پیسے فی یونٹ مہنگی کرنے کی درخواست کر دی۔

کراچی والوں کو بجلی کا ایک اور جھٹکا دینے کی تیاری کر لی گئی۔کے الیکٹرک  نے ماہانہ فیول پرائس ایڈجسٹمنٹ کی مد میں بجلی  مہنگی کرنے کی درخواست دائر کر دی۔

نیپرا کو بجلی 11 روپے 34 پیسے فی یونٹ مہنگی کرنے کی درخواست دی گئی ہے۔کے الیکٹرک نے مئی کی ماہانہ فیول پرائس ایڈجسٹمنٹ کی مد میں درخواست دائر کی ہے۔

نیپرا فیول پرائس ایڈجسٹمنٹ کے بارے میں 4جولائی کو درخواست کی سماعت کرے گا۔ درخواست منظور ہونے کی صورت میں کراچی کے عوام کو 22ارب 65کروڑ روپےکا اضافی بوجھ برداشت کرنا پڑے گا۔

نیپرا درخواست کی سماعت کے بعد فیول پرائس ایڈجسٹمنٹ  کی مد میں قیمت  11 روپے 34 پیسے فی یونٹ  بڑھانے سے متعلق حتمی فیصلہ کرے گا۔

پاکستان

آئی ایم ایف ہمیں تگنی کا ناچ نچا رہا ہے، وزیر داخلہ

وفاقی وزیر داخلہ رانا ثنا اللہ نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ملک میں امن و سلامتی شہدا کی مرہون منت ہے اور امن کے لیے جان قربان کرنے والوں کو خراج عقیدت پیش کرتے ہیں۔

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

آئی ایم ایف ہمیں تگنی کا ناچ نچا رہا ہے، وزیر داخلہ

اسلام آباد: وفاقی وزیر داخلہ رانا ثنا اللہ نے کہا ہے کہ آئی ایم ایف ہمیں تگنی کا ناچ نچا رہا ہے۔

وفاقی وزیر داخلہ رانا ثنا اللہ نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ملک میں امن و سلامتی شہدا کی مرہون منت ہے اور امن کے لیے جان قربان کرنے والوں کو خراج عقیدت پیش کرتے ہیں۔ جو ان کا قرض ہمارے ذمہ تھا اسے ادا کر چکے اور شہدا کی قربانیاں قوم کی تقدیر بدل دیتی ہیں۔ شہدا کا قرض بھی دعا سے پہلے ادا ہونا چاہیے۔

انہوں نے کہا کہ ایک ارب ڈالر کے لیے عالمی مالیاتی ادارے (آئی ایم ایف) سے بحث پر پڑے ہوئے ہیں لیکن آئی ایم ایف ہمیں تگنی کا ناچ نچا رہا ہے۔ ہم نے بھرپور کوشش کی کہ تیل کی قیمتیں نہ بڑھانا پڑیں اور ہماری حکومت پیٹرول کی قیمتیں بڑھانا نہیں چاہتی تھی۔ پھر ہم نے سوچا اس کے بجائے الیکشن میں چلا جایا جائے لیکن الیکشن کی طرف جاتے تو معاملہ نگراں حکومت کے پاس جاتا اور ملک ڈیفالٹ کی طرف جاتا۔

رانا ثنا اللہ نے کہا کہ کہا گیا ہر قیمت پر آئی ایم ایف سے معاہدہ کرنا ہے اور ملک کو دیوالیہ ہونے سے بچانا ہے پھر یہ وہ لمحہ تھا جس کے لیے یہ کرنا پڑا۔ کوئی شبہ نہیں کہ معاہدہ ناقابل بحث تھا لیکن پھر تاخیر کا شکار ہوا۔

تقریب میں شریک افراد کو مخاطب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ میں کوئی سیاسی بات نہیں کرنا چاہتا کہ آپ بھی مہنگائی سے متاثر ہیں۔ ملک کی معیشت اور امن و امان کی صورتحال سیاسی ہم آہنگی کے بغیر ممکن نہیں۔ جب تک سیاسی جماعتیں مل کر نہیں بیٹھیں گی مسئلہ حل نہیں ہو گا۔

انہوں نے کہا کہ کہتا ہے فلاں کو نہیں چھوڑوں گا، فلاں کو نہیں چھوڑوں گا لیکن اس قسم کی گفتگو انسانوں کو تباہ کرتی ہے اور ایسے بیانات قوموں کے لیے تباہی کا باعث ہوتے ہیں۔ جب تک سب لوگ مل کر نہیں بیٹھیں گے ملک آگے نہیں جا سکتا۔

وزیر داخلہ نے کہا کہ صرف ایک شخص کہتا ہے لانگ مارچ کروں گا یہ کروں گا وہ کروں گا لیکن 4 سال میں ملک کی تقدیر نہ بدلی اور جن کی تقدیر بدلی ان کا تو جواب نہیں دیتے کہ وہ کون تھی اور کون تھا۔

انہوں نے کہا کہ ضروری ہے کہ ہم سب مل کے کام کریں اور صرف سیاسی جماعتوں کا نہیں بلکہ ہر فرد کا کام ہے۔ ہمیں اپنا حق رائے دہی استعمال کرنا چاہیے اور قوم اس وقت بہتر فیصلہ کرے گی اور وہ ان کا ساتھ دے گی جو ملک کو بہتر انداز میں آگے بڑھانا چاہتے ہیں۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

امپورٹڈ حکومت چاہتی ہے ہم فوج اور عدلیہ کے سامنے کھڑے ہوجائیں :عمران خان

اسلام آباد: پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا کہ امپورٹڈ حکومت چاہتی ہے ہم فوج اور عدلیہ کے سامنے کھڑے ہوجائیں۔

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

امپورٹڈ حکومت چاہتی ہے ہم فوج اور عدلیہ کے سامنے کھڑے ہوجائیں :عمران خان

اسلام آباد: پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا کہ عوام نہیں ایمپائرز ان کے ساتھ ہیں، دھاندلی کے باوجود ان کو شکست دیں گے۔

پریڈ گراونڈ جلسے سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان  نے کہا کہ اللہ نیوٹرلز سے پوچھے گا کہ چوروں کو کیسے ملک پر مسلط ہونے دیا؟  چوروں کو مسلط کرنے پر عدلیہ کو سو موٹو لینا چاہیئے تھا،  طاقت آپ کے پاس تھی کیسے چوروں کو ملک پر مسلط ہونے دیا گیا۔

ان کا کہنا تھا کہ میں اداروں سے پوچھتا ہوں کہ کیا کرپشن کے خلاف میں نے اکیلے ٹھیکا لیا ہوا ہے؟ کیا یہ آپ کا پاکستان نہیں ہے؟

انہوں نے نیب قوانین میں ترمیم کر کے 1100 ارب روپیہ معاف کیا،  انہوں نے اپنے کیس بچانے کیلئے نیب کو ختم کر دیا،  کیا ساری ذمہ داری میری ہے، قانون کی بالادستی یقینی بنانا عدلیہ کا کام ہے۔

انہوں نے کہا کہ امپورٹڈ حکومت چاہتی ہے ہم فوج اور عدلیہ کے سامنے کھڑے ہوجائیں۔ امپورٹڈ حکومت میں بیٹھے سب سن لیں ہمارا جینا مرنا پاکستان میں ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ کبھی نہیں سوچا کہ باہر کا پاسپورٹ لے لوں، پاکستان کے علاوہ کہیں اور رہنے کا سوچا بھی نہیں، امپورٹڈ حکومت میں بیٹھے لوگوں کا جینا مرنا پاکستان میں نہیں۔

عمران خان نے کہا کہ نواز شریف اب پاکستان آنے کے لیے این آر او کے انتظار میں ہے۔ ملک نیچے جانے سے ان کو کوئی فرق نہیں پڑتا۔

سابق وزیراعظم نے کہا کہ آصف زرداری نے صدر ہوتے ہوئے حسین حقانی کے ذریعے امریکی سپہ سالار کو پیغام دیا کہ مجھے بچا لو۔

انہوں نے کہا کہ اگر 25 مئی کو پولیس چھاپے نہ مارتی تو ایسا ہی عوام کا سمندر نےاسلام آباد آنا تھا، عوام نے صرف ایک ہی نعرہ لگانا تھا کہ امپورٹڈ حکومت نامنظور، قوم امریکا کی سازش اور انہیں قبول نہیں کرتی،انہوں نے ہمیں پرامن احتجاج نہیں کرنے دیا۔

عمران خان نے کہا کہ آج صرف اسلام آباد نہیں پورے ملک میں لوگ جمع ہوئے ہیں، قوم پیغام دے رہی ہے کہ ابھی بھی وقت ہے ملک کو بچا لو۔ میرے والدین ایک غلام ملک میں پیدا ہوئے تھے، آزاد قومیں ہی بڑا کام کرتی ہیں، انگریزوں کی غلامی سے آزادی کیلئے پاکستان بنا تھا۔

ان کا کہنا تھا کہ اگر امریکیوں کی غلامی کرنی تھی تو پھر آزادی کی جنگ کیوں لڑی، امریکیوں کے غلاموں کو یہ قوم کبھی تسلیم نہیں کرے گی۔

سابق وزیراعظم نے کہا کہ کئی سال تک یہ دو خاندان اس ملک پر حکومت کرتے رہے ہیں، انہی لوگوں نے تو ملک کو وینٹی لیٹر پر ڈالا ہے، یہ پیسے کی پوجا کرتے ہیں۔

عمران خان نے کہا کہ جب وزیراعظم ہاتھ پھیلاتا ہے تو ساری قوم کو ذلیل کرتا ہے، وزیراعظم خود ہی کہتا ہے کہ ہم تو بھکاری ہیں۔ ان کے بیٹے کہتے ہیں ہم تو پاکستان کے شہری ہی نہیں برطانیہ کے شہری ہیں۔

انہوں نے کہا کہ  نواز شریف نے 2 دفعہ زرداری پر کیس کر کے اسے جیل میں ڈالا،  آج سارے اکٹھے ہو کر پاکستانیوں کا خون چوسنے آئے ہیں، ان کی چوری پر تو کتابیں لکھی ہوئی ہیں۔

چیئرمین پی ٹی آئی نے کہا کہ پاکستان کے اداروں سے سوال ہے کہ کیسے آپ نے ان ڈاکوؤں کو ہمارے اوپر مسلط ہونے دیا؟ میں اداروں سے پوچھتا ہوں کہ کیا کرپشن کے خلاف میں نے اکیلے ٹھیکا لیا ہوا ہے؟ کیا یہ آپ کا پاکستان نہیں ہے؟

ان کا کہنا تھا کہ بلاول بھٹو کو اس کی والدہ نے فون پر بتایا کہ کون کون سے بینکوں میں پیسہ رکھا ہوا ہے۔

عمران خان نے کہا کہ ہمیں اپنی ساڑھے 3سالہ کارکردگی پر فخر ہے، مجھے خوف ہے انہوں نے الیکشن کمیشن کے ذریعے دھاندلی کرنی ہے، سندھ کے بلدیاتی انتخاب میں سب نے دیکھا کتنی دھاندلی ہوئی، ان کے ہوتے ہوئے کبھی بھی صاف و شفاف الیکشن نہیں ہو سکتے۔

انہوں نے کہا کہ 2سال سے کہہ رہے ہیں کہ ای وی ایم کا استعمال کیا جائے، انہوں نے ملک کے ساتھ وہ کیا ہے جو کوئی دشمن بھی نہ کرے، میں نے کبھی کسی کی غلامی تسلیم کی نہ کسی کے سامنے جھکا، کبھی بھی ایک امپورٹڈ حکومت کو ہم نہیں مانیں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ دھاندلی کے باوجود ہم نے پنجاب کے ضمنی الیکشن میں ان کو شکست دینی ہے، یہ لوگ صرف اورصرف دھاندلی سے ہی جیتیں گے۔

سابق وزیر داخلہ شیخ رشید نے کہا ہے کہ تمام دوستوں کو سلام علیکم کہہ دیا میں عمران خان کے ساتھ ہوں۔

پریڈ گراونڈ جلسے سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ عمران خان آج سارے پاکستان کی آواز ہے، جس طرح پاک فوج سارے ملک کی آواز اسی طرح عمران خان بھی سارے ملک کی آواز ہے۔

انہوں نے کہا کہ جولائی کو پی ٹی آئی کو جتوا کر امپورٹڈ حکومت کو لکشمی چوک پر دفن کرنا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ  پاکستان کی بہتری اسی میں ہے کہ جلدی الیکشن کا اعلان کر دیا جائے،  یہ لوگ ملک کو نہیں چلا سکتے۔

شیخ رشید نے کہا کہ فضل الرحمان اپنے بھائی کو گورنر لگانا چاہتا ہے،  ایک چور نے اپنے بیٹے کو وزیر مواصلات بنا دیا، دوسرے چور نے اپنے بیٹے کو وزیر خارجہ بنا دیا۔

جلسے سے خطاب میں وزیر دفاع پرویز خٹک نے کہا کہ ہماری سوچ سے بڑھ کر عوام مہنگائی کے خلاف نکلی، عمران خان کو مبارکباد دیتا ہوں۔

انہوں نے کہا کہ پنجاب میں 17 کو الیکشن ہونے جا رہا ہے،پنجاب کے لوگوں سے کہتا ہوں انہیں گھر بھیجو۔

ان کا کہنا تھا کہ عمران خان نے مہنگائی کو کنٹرول کیا، تیل اور بجلی سستی کئے،  انہیں تکلیف تھی کہ ملک میں بہتری کیوں آ رہی ہے۔عوام سمجھ دار ہے عمران خان خان کو دو تہائی اکثریت دیں گے۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

پنجاب : مارکیٹوں، بازاروں کو رات 9 بجے بند کرنے کی پابندی ختم

وزیر اعلی پنجاب حمزہ شہباز  نے عوام اور تاجر برادری کے لئے بڑی عید کا بڑا تحفہ دے دیا۔

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

پنجاب : مارکیٹوں، بازاروں کو رات 9 بجے بند کرنے کی پابندی ختم

وزیر اعلی پنجاب حمزہ شہباز نے پنجاب بھر کی مارکیٹوں اور بازاروں کو 9 بجے رات بند کرنے کی پابندی ختم کرنے کا اعلان کر دیا۔

اپنے پیغام میں انہوں نے کہا کہ فیصلے کا اطلاق پنجاب بھر میں آج سے ہو گا۔ چاند رات تک مارکیٹوں اور بازاروں پر وقت کی پابندی کا اطلاق نہیں ہو گا۔

ان کا کہنا تھا کہ پنجاب حکومت نے یہ فیصلہ تاجر برادری اور عوام کی سہولت کیلئے کیا ہے۔کاروبار اور شاپنگ میں آسانیاں پیدا ہوں گی۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll