جی این این سوشل

پاکستان

تحریک انصاف نے سپریم کورٹ کے 2 آپشنز میں سے ایک پر اتفاق کر لیا

اسلام آباد:بابر اعوان نے کہا ہے کہ سابق وزیر اعظم عمران خان نے حمزہ شہباز کو  قائم مقام  وزیر اعلیٰ کے طور پر 17 جولائی تک قبول کیا ہے۔

پر شائع ہوا

کی طرف سے

تحریک انصاف نے سپریم کورٹ کے 2 آپشنز میں سے ایک پر اتفاق کر لیا
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

سپریم کورٹ آف پاکستان نے وزیر اعلیٰ پنجاب کے انتخاب کے معاملے پر 2 آپشنز دیے تھے، پہلا آپشن یہ ہے کہ 2 دن میں وزیراعلیٰ پنجاب کا دوبارہ انتخاب کرایا جائے جبکہ دوسرے آپشن کے مطابق حمزہ شہباز ہی 17 جولائی تک وزیراعلیٰ پنجاب برقرار رہیں گے۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعلیٰ پنجاب کے انتخاب کے معاملے کو لے کر لاہور ہائی کورٹ کے فیصلے کے خلاف سپریم کورٹ میں پاکستان تحریک انصاف کی درخواست پر سماعت چیف جسٹس عمر عطا بندیال کی سربراہی میں 3 رکنی بینچ نے کی۔

دوران سماعت چیف جسٹس عمرعطا بندیال نے کہا کہ 2 آپشن ہیں یا حمزہ شہباز کو وزیراعلیٰ تسلیم کرنا ہوگا یا پھر مناسب وقت میں دوبارہ الیکشن ہوگا، پکڑ دھکڑ نہیں ہوگی یہ احکامات ہم جاری کریں گے، مسئلے کا قانونی حل نکالیں گے، معلوم ہے کہ ایک دن کا وقت بہت کم ہے، قانون کی خلاف ورزی ہوئی تو عدالتیں موجود ہیں۔

سماعت میں وقفے کے دوران پاکستان تحریک انصاف کی قانونی ٹیم نے چیئرمین تحریک انصاف عمران خان سے ان کی رائے جاننے کے لیے مشاورت کی، سماعت دوبارہ شروع ہوئی تو تحریک انصاف کے وکیل بابر اعوان نے عدالت کو عمران خان سے بات چیت کا احوال بتایا کہ عمران خان نے کہا ہے وہ ملکی اداروں کا احترام کرتے ہیں، انہوں نے حمزہ شہباز کو قائم مقام وزیر اعلیٰ کے طور پر 17 جولائی تک قبول کیا ہے۔

بابر اعوان نے عدالت کو بتایا کہ عمران خان نے کہا ہے کہ آئی جی پولیس قانون پر عمل کریں، پنجاب الیکشن کمشنر اور چیف سیکرٹری قانون پر عمل کریں، عمران خان کا کہنا ہے جن حلقوں سے الیکشن لڑ رہے ہیں وہاں پبلک فنڈز استعمال نہیں ہوں گے جس پر چیف جسٹس نے کہا کہ اگر پنجاب ضمنی الیکشن کی شفافیت پر خدشات ہیں تو ہم الیکشن کمیشن کو ضابطہ اخلاق پر سختی سے عمل کروانے کا کہہ دیتے ہیں۔

پاکستان

عمران خان کی صدارت سازشی بیانیہ بنا جسے شہباز گل کے ذریعے آگے بڑھایا گیا: رانا ثنا

وزیرداخلہ رانا ثنا اللہ نے پاکستان تحریک انصاف کے رہنما شہباز گل پر مقدمہ درج ہونے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ عمران خان کی صدارت میں سازشی بیانیہ بنایا گیا، نجی چینل کو سازش میں شامل کیا گیا۔

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

عمران خان کی صدارت سازشی بیانیہ بنا جسے شہباز گل کے ذریعے آگے بڑھایا گیا: رانا ثنا

اسلام آباد میں وفاقی وزیر اطلاعات مریم اورنگزیب کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے رانا ثنا اللہ کا کہنا تھاکہ محرم الحرام کے جلوسوں کے دوران کہیں بھی ناخوشگوار واقعہ نہیں ہوا، وزارت داخلہ نے تمام صوبائی حکومتوں سے بیٹھ کر سکیورٹی انتظامات پر بات کی، یکم سے 9 ویں محرم تک 6 ہزار سے زائد مجالس کا انعقاد ہوا، انٹیلیجنس اداروں اور سیکیورٹی اداروں نے بھر پور اقدامات کیے۔

شہباز گل کی گرفتاری کی تصدیق کرتے ہوئے وزیر داخلہ کا کہنا تھاکہ ایک نجی چینل کے ساتھ باقاعدہ سازش کی گئی اور اس میں سیاسی عنصر یہ تھا کہ توشہ خانہ ریفرنس اور فارن فنڈنگ میں پھنس چکی ہے اور شہدائے لسبیلہ کے خلاف ان کی گمراہی سامنے آئی ہے، اس سے دھیان ہٹانے کیلئے ایک سازش کے تحت بیانیہ بنایا گیا۔ 

انہوں نے بتایا کہ عمران خان کی صدارت میں سازشی بیانیہ بنایا گیا، نجی چینل کو سازش میں شامل کیا گیا، فواد چوہدری اور شہباز گل کے ذریعے سازشی بیانیے کو آگے بڑھایا گیا، شہباز گل کو فون کیا گیا اور اس نے لکھی ہوئی تحریر پڑھی۔

ان کا کہنا تھاکہ خاص رینکس کو پکارا گیا اور مخاطب کرتے ہوئے کہا گیا کہ وہ پی ٹی آئی کے ساتھ ہیں، آپ کا ضمیر ہے اور آپ جانور نہیں، ادارے کے اندر بغاوت کرانے کی کوشش کی گئی۔

وفاقی وزیر کا کہنا تھاکہ شہباز گل کے خلاف تھانہ کوہسار میں مقدمہ درج ہے، ان کے خلاف قانون کے تحت درج شکایت پرکارروائی کی گئی ہے اور درج شکایت کی روشنی میں قانون کے مطابق کارروائی ہوئی ہے۔

انہوں نے شہباز گل پر مقدمے میں لگنے والی دفعات پڑھ کر سنائیں اور کہا کہ شہباز گل کو صبح عدالت میں پیش کریں گے اور فیصلہ عدالت کرے گی۔

ایک سوال کے جواب میں رانا ثنا اللہ کا کہنا تھاکہ شہباز گل کے خلاف مقدمہ درج ہے یہ اغواکیسے ہوا؟ شہباز گل نے نجی چینل پر بیان دیا ان کے بیان کی حدتک مزید انکوائری کی ضرورت نہیں، شہبازگل اورنجی چینل کے پیچھے کون کون ہیں اس کی انکوائری ہونا ہے۔

ایک سوال پر ان کا کہنا تھاکہ فواد چوہدری سمجھدار آدمی ہیں وہ آگے نہیں آئے۔

شیخ رشید کے حوالے سے سوال پر وزیر داخلہ کا کہنا تھاکہ شیخ رشید چلے ہوئے کارتوس ہیں ان کی گرفتاری کا کوئی ارادہ نہیں، ان کو عمران خان بھی اب میٹنگز میں نہیں بلاتے۔

خیال رہے کہ اسلام آباد پولیس نے شہباز گل کو بنی گالا کے علاقے سے گرفتار کیا تھا اور ان پر غداری کی دفعات کے تحت تھانہ کوہسار میں مقدمہ درج کیا گیا ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

ملک کے مختلف حصوں میں بارشوں کی پیشگوئی ، الرٹ جاری 

اسلام آباد ، پنجاب ، خیبر پختون خوا اور بلوچستان میں آج سے 13 اگست تک تیز ہواؤں اور گرج چمک کے ساتھ  بارشوں کا امکان ہے ۔  

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

ملک کے مختلف حصوں میں بارشوں کی پیشگوئی ، الرٹ جاری 

تفصیلات کے مطابق محکمہ موسمیات نے ملک کے بیشتر حصوں میں آج سے بارشوں کی  پیش گوئی کردی ہے ۔ شہر قائد میں  بارش کا سلسلہ 14 اگست تک جاری رہ سکتا ہے جس دوران سمندر میں شدید طغیانی ہوسکتی ہے۔ بارش سے کراچی کے نشیبی علاقے بھی زیر آب آنے کا خدشہ ہے۔ 

محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ مون سون سسٹم وسطی بھارت اور گجرات کے قریب موجود ہے، مون سون کے کم دباو کی شدت تاحال برقرار ہے جس کے باعث آج دوپہر میں ہلکی بارش ہوسکتی ہے۔ چار سے پانچ دن کے اس اسپیل میں کراچی میں  100 سے 150 ملی میٹر بارش کی امید کی جارہی ہے ، بلوچستان میں بارش کا سلسلہ وقفے وقفے سے 16 یا 17 اگست تک جاسکتا ہے۔

کراچی میں بدھ کے روز بھی بعض علاقوں میں علی الصبح بوندا باندی ہوئی جبکہ  شہر  میں چند مقامات پر موسلا دھار بارش کا بھی امکان ہے۔ 

اندرون سندھ بارشوں سے ٹھٹھہ ، بدین ، دادو، جام شورو ، لاڑکانہ ، شہید بینظیرآباد اور میرپور خاص میں نشیبی علاقے زیر آب آ سکتے ہیں۔

محکمہ  موسمیات  کے مطابق بلوچستان میں آج سے 13 اگست تک مون سون کے نئے اسپیل سے متعلق الرٹ جاری کیا گیا ہے۔  ژوب، بارکھان ، آواران، واشک ، خاران، قلات ، پنجگور، کیچ،خضدار اور لسبیلہ میں کہیں ہلکی اور کہیں موسلادھار بارش کی پیش گوئی  ہے۔  

پڑھنا جاری رکھیں

تجارت

ڈالر مزید سستا ہوگیا

جمعہ کے روز کاروبار کے اختتام پر ڈالر 224 روپے 4 پیسے پر بند ہوا تھا

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

ڈالر مزید سستا ہوگیا

انٹر بینک میں ڈالر کو ایک بار پھر ریورس گئیر لگ گیا، ڈالر کے مقابلے میں روپے کی قدر میں 2 روپے 29 پیسے اضافہ ہوا ہے۔

بدھ کے روز کاروبار کے آغاز پر امریکی ڈالر کے سامنے روپے کی قدر میں بہتری دیکھنے میں آئی اورانٹربینک میں ایک ڈالر 221 روپے 75 پیسے پر آگیا۔

جمعہ کے روز کاروبار کے اختتام پر ڈالر 224 روپے 4 پیسے پر بند ہوا تھا۔ دوسری طرف پاکستان اسٹاک ایکسچینج کے 100انڈیکس میں 639پوائنٹس کا اضافہ ہوا ہے،کاروبار کےدوران انڈیکس 42ہزار735پوائنٹس پر ٹریڈ کرتے دیکھا گیا ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll