جی این این سوشل

پاکستان

امپورٹڈ حکومت نے عمران خان کیخلاف مقدمات کا لنڈا بازار لگا دیا، بابر اعوان

اسلام آباد: پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے رہنما اور عمران خان کے وکیل بابر اعوان نے کہا ہے کہ امپورٹڈ حکومت نے عمران خان کے خلاف مقدمات کا لنڈا بازار لگا دیا۔

پر شائع ہوا

کی طرف سے

امپورٹڈ حکومت نے عمران خان کیخلاف مقدمات کا لنڈا بازار لگا دیا، بابر اعوان
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

 

چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان کے وکیل بابر اعوان نے عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ امپورٹڈ حکومت نے عمران خان کے خلاف مقدمات کا لنڈا بازار لگا دیا لیکن عمران خان نے ایک بار بھی نہیں کہا کہ میں بیمار ہوں پیش نہیں ہوسکتا۔ مریم نواز نے اب یہ مؤقف لیا ہے کہ یہ گھر ہی میرا نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان کے خلاف تمام مقدمات جھوٹے ہیں اور ساری سازشیں ہم نے ناکام بنائیں۔ بابر اعوان نے کہا کہ یہ حکومت صرف اٹک کا پل ہی پار کر کے دکھا دیں لیکن یہ صرف سیکیورٹی حصار میں بیٹھ کر بڑھکیں مارتے ہیں۔ آئین کے 62 ایف آرٹیکل میں ترامیم کی ضرورت ہے اور اگر تبدیلی لانی ہے تو دو تہائی اکثریت سے سینیٹ اور نیشنل اسمبلی میں لائیں۔

بابر اعوان نے کہا کہ اگر کوئی تبدیلی لا سکتا ہے تو وہ عمران خان ہیں اور ہم لوگ دو تہائی اکثریت سے واپس آ رہے ہیں۔ اب باپ بیٹی دونوں کہتے ہیں کہ سائفر ہے اور لکھا ہوا بھی مان گئے۔ قومی سلامتی کی جو کمیٹی ہے سب نے کہا سائفر ہے اور سب نے کہا زبان مناسب نہیں۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان کو حقیقی آزادی دلانے کے لیے تاریخی لانگ مارچ کریں گے اور ہم لانگ واک ٹو فریڈم کریں گے لیکن کیا صورت ہو گی عمران خان بتائیں گے۔ قوم عمران خان کے ساتھ جاگی ہوئی ہے اور سب سے بڑا عوامی، جمہوری پر امن احتجاج کرنے جا رہے ہیں۔ پاکستان کو سیاست کی ٹیسٹنگ لیب نہ بنائیں۔

تجارت

ایکسپوٹرز کا ملکی معیشت میں کلیدی کردار،نظر انداز نہیں کیا جاسکتا، جام کمال

جام کمال خان اور علی پرویز ملک سے پاکستان کارپٹ مینو فیکچررز اینڈ ایکسپورٹر زایسوسی ایشن کے وفد نے الگ الگ ملاقاتیں

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

ایکسپوٹرز کا ملکی معیشت میں کلیدی کردار،نظر انداز نہیں کیا جاسکتا، جام کمال

وفاقی وزیر تجارت جام کمال خان نے کہا کہ ایکسپورٹرز کا ملکی معیشت میں کلیدی کردار ہے جسے نظر انداز نہیں کیا جا سکتا ،حکومت اس سے آگاہ ہے کہ پاکستان کی ترقی کے لئے ایکسپورٹ میں اضافہ نا گزیر ہے اور اس کے لئے ہر ممکن اقدامات اٹھائے جارہے ہیں۔

وفاقی وزیر تجارت جام کمال خان اوروزیر مملکت خزانہ علی پرویز ملک سے پاکستان کارپٹ مینو فیکچررز اینڈ ایکسپورٹر زایسوسی ایشن کے وفد نے الگ الگ ملاقاتیں کیں۔ جس میں انہوں نے ایکسپورٹرز کیلئے ٹیکس رجیم کی تبدیلی پر تحفظات اورہاتھ سے بنے قالینوں کی صنعت کو درپیش مسائل کے حوالے سے آگاہ کیا ۔

سینئر وائس چیئرمین عثمان اشرف کی قیادت میں عبد اللطیف ملک ، میجر (ر) اختر نذیر اور شاہد حسن شیخ پر مشتمل وفد نے وفاقی وزیر تجارت جام کمال خان اور وزیر مملکت خزانہ علی پرویز ملک کو آگاہ کیا کہ بجٹ میں ایکسپورٹرز کے لئے ٹیکس رجیم میں تبدیلی کا جو فیصلہ کیا گیا ہے یہ ماضی میں بھی واپس لیا گیا تھا ۔

وفد نے وفاقی وزیر تجارت جام کمال خان اور وزیر مملکت خزانہ علی پرویز ملک کو ہاتھ سے بنے قالینوں کی صنعت کو درپیش مسائل ، اس صنعت کی ایکسپور ٹ کے کم ہونے کی وجوہات اور رواں سال اکتوبر میں پاکستان میں منعقد ہونے والی کارپٹ کی عالمی نمائش کے حوالے سے بھی آگاہ کیا ۔

وفاقی وزیر تجارت جام کمال خان نے کہا کہ ایکسپورٹرز کا ملکی معیشت میں کلیدی کردار ہے جسے نظر انداز نہیں کیا جا سکتا ،حکومت اس سے آگاہ ہے کہ پاکستان کی ترقی کے لئے ایکسپورٹ میں اضافہ نا گزیر ہے اور اس کے لئے ہر ممکن اقدامات اٹھائے جارہے ہیں ۔

انہوں نے کہا کہ حکومت کی بھرپور کوشش ہے کہ معیشت میں حصہ ڈالنے والے اسٹیک ہولڈرز کے مسائل کو سنا جائے اور انہیں حل کیا جائے ۔ انہوں نے وفد کو یقین دہانی کرائی کہ ہاتھ سے بنے قالینوں کی صنعت کو درپیش مسائل کے حل اورمطالبات کے حوالے سے پیشرفت کریں گے۔

وزیر مملکت خزانہ علی پرویز ملک نے کہا کہ حکومت نے دیگر اقدامات کے ساتھ ایکسپورٹ کے ذریعے معیشت کو فروغ دینے پر توجہ مرکوز کر رکھی ہے ۔ انہوں نے اکتوبر میں پاکستان میں ہاتھ سے بنے قالینوں کی عالمی نمائش کے انعقاد پر خوشی کا اظہار کرتے ہوئے اس امید کا اظہار کیا کہ ا س میگا ایونٹ سے پاکستان کی ہاتھ سے بنے قالینوں کی مصنوعات کی موثر تشہیر میں مدد ملے گی ۔

علی پرویز ملک نے کہا کہ کارپٹ ایسوسی ایشن کے وفد نے اپنے جن مطالبات سے آگاہ کیا ہے ان پر سنجیدگی سے غور کیا جائے گا اور اسے متعلقہ فورم پر سامنے بھی لایا جائے گا۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

کے پی حکومت کاعمران خان اور بشریٰ بی بی پر نئے توشہ خانہ کیس کے خلاف عدالت جانے کا فیصلہ

کے پی حکومت کا چیئرمین نیب، پراسیکیوٹر اور معاون ٹیم کے خلاف کارروائی کا فیصلہ

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

کے پی  حکومت کاعمران خان اور  بشریٰ بی بی پر نئے توشہ خانہ کیس کے خلاف عدالت جانے کا فیصلہ

خیبرپختونخوا حکومت نے سابق وزیر اعظم عمران خان اور ان کی اہلیہ بشریٰ بی بی پر نئے توشہ خانہ کیس کے خلاف عدالت جانے کا فیصلہ کیا ہے۔

کے پی حکومت نے چیئرمین نیب، پراسیکیوٹر اور معاون ٹیم کے خلاف کارروائی کا فیصلہ کر لیا۔

خیبر پختونخوا حکومت کے معاون خصوصی برائے اینٹی کرپشن مصدق عباسی نے کہا کہ عدت میں نکاح کیس کی طرح توشہ خانہ کیس بھی بے بنیاد ہے،عدت کیس کی طرح توشہ خانہ کیس بھی بوگس ہے، ایک جیسےکیسز کو الگ الگ چلا کر بانی پی ٹی آئی کو جیل میں رکھا جا رہا ہے۔

مصدق عباسی کا کہنا تھا توشہ خانہ کیس میں بانی پی ٹی آئی اور بشریٰ بی بی کو گرفتار کیا گیا، فرد جرم یہ ہے کہ تحائف توشہ خانہ کے ذریعے نہیں لیے گئے، یہ بھی فرد جرم عائد کی گئی کہ تحائف کے قیمت کم لگائی گئی اور تحائف کے ریکارڈ کو تبدیل کیا گیا۔

واضح رہے کہ اس سے قبل بھی عمران خان اور بشریٰ بی بی کو توشہ خانہ کیس میں عدالت نے سزا سنائی تھی جسے بعد میں دوسری عدالت نے ختم کرتے ہوئے دونوں کو کیس سے بری کر دیا تھا۔

گزشتہ روز ایڈیشنل سیشن عدالت اسلام آباد نے عمران خان اور بشریٰ بی بی کو عدت میں نکاح کیس میں دی گئی سزائیں معطل کرتے ہوئے دونوں کو بری کرنے کا حکم دیا تھا۔

پڑھنا جاری رکھیں

علاقائی

ملکی تاریخ میں پہلی بار اسلام آباد کے لیے ماحولیاتی تبدیلی فنڈ قائم

اسلام آباد کلائیمٹ چینج انیشیٹیو کے تحت سی ڈی اے نے خصوصی فنڈ قائم کیا

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

ملکی تاریخ میں پہلی بار اسلام آباد کے لیے ماحولیاتی تبدیلی فنڈ قائم

وفاقی دارالحکومت کو ماحولیاتی تبدیلیوں سے بچانے کے مشن کے تحت وفاقی وزیر داخلہ محسن نقوی کی ہدایت پر کیپٹل ڈیولپمنٹ اتھارٹی (سی ڈی اے) نے پہلی بار اسلام آباد کے لیے ماحولیاتی تبدیلی فنڈ قائم کر دیا۔

اسلام آباد کلائیمٹ چینج انیشیٹیو کے تحت سی ڈی اے نے خصوصی فنڈ قائم کیا، چیئرمین سی ڈی اے محمد علی رندھاوا نے کہا کہ انیشیٹو کے تحت شہر میں کاربن کریڈٹ پروگرام بھی شروع کیا جائے گا.

انہوں نے کہا کہ کاربن کریڈٹ پروگرام کے تحت شہر میں درخت لگانے کے لئے 2000 سے 10،000 کنال پر محیط مقامات مختص کردیے ہیں، مختص مقا مات پر 40 لاکھ سے 50 لاکھ درخت لگائے جائیں گے، درخت لگانے کے لیے مقامات نئے سیکٹرز، ایونیوز اور دیگر کھلے علاقوں میں مختص کیے گئے ہیں۔

محمد علی رندھاوا نے مزید کہا کہ مارگلہ ہلز پر واقع تفریحی مقامات پر مارگلہ ہلز فنڈ کی منظوری دے دی، یہ فنڈ تفریحی مقامات کی آمدن کا 1.5 فیصد حصہ ہوگا، حاصل رقم سے مارگلہ ہلز کی حفاظت اور خوبصورتی کو یقینی بنایا جائے گا۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll