جی این این سوشل

دنیا

نیوزی لینڈ ، وزیراعظم کی حلف برداری تقریب

کرس ہپکنز نے نیوزی لینڈ کے نئے وزیر اعظم کے طور پر حلف اٹھا لیا

پر شائع ہوا

کی طرف سے

نیوزی لینڈ ، وزیراعظم کی حلف برداری تقریب
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

ویلنگٹن: جیسنڈا آرڈرن کے استعفیٰ دینے کے بعد کرس ہپکنز نے نیوزی لینڈ کے نئے وزیر اعظم کے طور پر حلف اٹھا لیا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق نیوزی لینڈ کی گورنر جنرل اور بادشاہ چارلس کی نمائندہ ڈیم سنڈی کیرو نے بدھ کے روز دارالحکومت ویلنگٹن میں باضابطہ طور پر کرس ہپکنز سے وزارت عظمی کے عہدے کا حلف لیا۔

تقریب کے دوران کارمل سیپولونی نے بھی بطور نائب وزیر اعظم حلف اٹھایا۔

  کرس ہپکنز نے کہا کہ یہ میری زندگی کا سب سے بڑا اعزاز اور ذمہ داری ہے، میں آگے آنے والے چیلنجوں سے نمٹنے کیلئے پرجوش ہوں۔

کورونا وائرس کی روک تھام کے لیے نیوزی لینڈ کی حکمت عملی میں اہم کردار ادا کرنے والے 44  سالہ ہپکنز کو آرڈرن کے استعفے کے بعد اتوار کے روز پارٹی کی سربراہی کے لیے منتخب کیا گیا تھا۔ 

جرم

رانا ثنا اللہ اور بھارتی وزیر داخلہ میں کیا فرق ہے؟ فواد چودھری

لاہور: پاکستان تحریک انصاف کے ہیڈ آف میڈیا افیئرز فواد چودھری نے استفسار کیا ہے کہ رانا ثنا اللہ اور بھارتی وزیرداخلہ میں کیا فرق ہے؟

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

رانا ثنا اللہ اور بھارتی وزیر داخلہ میں کیا فرق ہے؟ فواد چودھری

انہوں نے کہا جیسے بھارت میں مودی کی زبردستی حکومت ہے، کشمیر پر ہندوستان نے غاصبانہ قبضہ کیا ہوا ہے، اسی طرح پاکستان میں ان کی حکومت ہے، چوں چوں کا مربہ اکٹھا کر کے پاکستان پر زبردستی کی سرکار مسلط کی گئی ہے۔

سابق وفاقی وزیر فواد چودھری نے کہا کہ مشرف نے صحیح پہچانا تھا، نواز شریف اور زرداری کے ہوتے ہوئے آئین پر عمل نہیں ہو سکتا، گزشتہ 9 ماہ سے آئین کے ساتھ کھلواڑ کیا جا رہا ہے، مشرف نے 1999 میں نواز شریف کو نکال کر پاکستان پر احسان کیا تھا۔

انہوں نے کہا کہ نواز شریف ،شہباز شریف اور زرداری کو پاکستان سے کوئی دلچسپی نہیں، نواز شریف اور زرداری کو باہر نکالنے کیلئے جو بھی کام ہو وہ جائز ہے۔

فواد چودھری نے کہا کہ جب سے یہ حکومت آئی ڈالر اور تیل کی قیمتوں میں اضافہ ہی کیا جا رہا ہے، رات کے اندھیروں میں یہ گھروں میں گھستے ہیں۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

پاکستان اور افغانستان کی ٹیموں کے درمیان تین ٹی ٹوئنٹی میچز پر مشتمل سیریز کھیلی جائے گی: نجم سیٹھی

پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کی منیجمنٹ کمیٹی کے سربراہ نجم سیٹھی نے اعلان کیا ہے کہ پاکستان اور افغانستان کی ٹیموں کے درمیان تین ٹی ٹوئنٹی میچز پر مشتمل سیریز کھیلی جائے گی۔

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

پاکستان اور افغانستان کی ٹیموں کے درمیان تین ٹی ٹوئنٹی میچز پر مشتمل سیریز کھیلی جائے گی: نجم سیٹھی

پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کی منیجمنٹ کمیٹی کے سربراہ نجم سیٹھی نے اعلان کیا ہے کہ پاکستان اور افغانستان کی ٹیموں کے درمیان تین ٹی ٹوئنٹی میچز پر مشتمل سیریز کھیلی جائے گی۔

نجم سیٹھی کا کہنا تھا کہ پاکستان کرکٹ ٹیم مارچ کے آخر میں افغانستان کےخلاف تین ٹی ٹوئنٹی میچز کھیلے گی۔

انہوں نے بتایا کہ تینوں میچز شارجہ میں کھیلے جائیں گے۔

خیال رہے کہ آسٹریلیا  نے رواں سال مارچ میں افغانستان کا دورہ کرنا تھا اور 3 ایک روزہ میچز پر مشتمل سیریز  متحدہ عرب امارات میں ہونا تھی تاہم آسٹریلیا نے دورہ افغانستان سے انکار کردیا۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

جنرل باجوہ نے اعتراف کیا عمران خان جیسا بلنڈر ہم سے ہوا، اعتراف کافی نہیں، سیاست سے باہر پھینکنا ہو گا، مریم نواز

ملتان: پاکستان مسلم لیگ (ن) کی چیف آرگنائزر مریم نواز نے چیئرمین پاکستان تحریک انصاف پر کڑی نکتہ چینی کرتے ہوئے کہا ہے کہ گھڑی چور نے نہ صرف گھڑی چوری کی بلکہ پاکستان کو ہرجگہ نقصان پہنچایا۔

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

جنرل باجوہ نے اعتراف کیا عمران خان جیسا بلنڈر ہم سے ہوا، اعتراف کافی نہیں، سیاست سے باہر پھینکنا ہو گا، مریم نواز

انہوں نے ورکرز کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ جنرل باجوہ نے اعتراف کیا عمران خان جیسا بلنڈر ہم سے ہوا، اعتراف کافی نہیں ،عمران خان کو سیاست سے باہر نکال پھینکنا پڑے گا،ملک پر لگا داغ دھونا ہوگا، یہ تجربہ ملک کو لے ڈوبا۔

مریم نواز نے کہا کہ پانچ کا ٹولہ اس سانپ کو لایا اور اب یہ ان کو ڈس رہا ہے، یہ اب ایک دوسرے کا گریبان پکڑرہے ہیں، ٹینکوں کے آگے لیٹنے کا دعویٰ کرنے والے بار بار بلک بلک کر رور ہے ہیں ، پہلی بار بے فیض ہوئے ہیں تو ان کو سمجھ نہیں آرہی ہے، یہ فیض کے سر پر اور اس کی بیساکھیوں پر سیاست کرتے رہے ہیں۔

انہوں نے شرکا سے استفسار کیا کہ بیٹی کو باپ کے سامنے گرفتار کیا گیا  تو کیا کسی نے نواز شریف کو روتے دیکھا؟ ان کی روتی شکلیں دیکھ کر مجھے نوازشریف پر فخر ہوتا ہے، ہم نے کئی ماہ جیل میں گزارے مگر ان کی طرح روئے نہیں۔

وفاقی وزیر داخلہ کا حوالہ دیتے ہوئے مریم نواز نے کہا کہ رانا ثنااللہ پر منشیات کا جھوٹا مقدمہ بنا، جس میں سزائے موت ہو سکتی تھی، کیا کبھی کسی نے شاہد خاقان عباسی، راناثنااللہ اور مفتاح اسماعیل کو روتے دیکھا؟ کسی نے نوازشریف، شہباز شریف اور حمزہ شہباز کو روتے ہوئے دیکھا؟

میں نے اپنے باپ کو حوصلہ دیا کہ آپ گھبرائیں نہیں آپ کے ساتھ ہوں، البتہ مجھے میرے والد کے سامنے گرفتا کیا گیا تو میری چھوٹی بیٹی روئی۔

ن لیگ کی چیف آرگنائزر نے کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ نوازشریف اور شہبازشریف عمران خان کی طرح بنی گالہ میں رو پوش نہیں ہوتے، مشکلات ضرور ہیں لیکن ہم ان مشکلات سے ضرور باہر نکلیں گے، تھوڑا وقت لگے گا مگر ملک کو بحرانوں سے نکالیں گے۔

انہوں نے کہا کہ کراچی میں ہوٹل کے کمرے کا دروازہ توڑ کر اندر آگئے تھے، لوگوں کو جیل بھرو تحریک کا کہنے والا زمان پارک میں چھپ کر بیٹھا ہے، چار سال کےدوران جو کہتا تھا سب کو رلاؤں گا وہ آج خود رو رہا ہے، ایسا کرتے ہیں چندہ جمع کر کے ان کو ٹشو پیپر لے کر دیتے ہیں۔

مریم نوازنے ورکرز کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آج کشمیریوں کے ساتھ یکجہتی کا دن ہے، کشمیریوں کی لازوال قربانیوں کو سلام، ایک دن کشمیر بنے گا پاکستان، انشااللہ۔

انہوں نے کہا کہ ملتان کے بھائیوں گھڑی دیکھ کر بتاو وقت کیا ہوا ہے؟ گھڑی کی بات آئی تو سب کو گھڑی چور یاد آیا، سارے حقائق بتاؤں گی اور سچ بتاؤں گی۔

سابق وزیراعظم میاں نواز شریف کی صاحبزادی مریم نواز نے کہا کہ نواز شریف، شہباز شریف اور مجھے احساس ہے کہ مہنگائی ہے، روٹی، بجلی اور گیس سمیت تمام چیزیں مہنگی ہیں لیکن پاکستان کے عوام کو پتہ ہے کہ یہ مہنگائی کس کی لائی ہوئی ہے؟ عوام کی مشکلات کو دیکھ کر ہمیں بہت دکھ ہے۔

انہوں نے کہا کہ نوازشریف کی حکومت جب آئی تو ملک میں بڑے بڑے منصوبے لگائے گئے، تاریخ گواہ ہے جب جب نواز شریف کی حکومت آئی عوام کو ہر چیز میں ریلیف دیا گیا، نوازشریف کی حکومت جب آئی تو عوام کو روزگار اور سہولتیں ملیں، جب بھی ن لیگ کی حکومت آئی تو پاکستان نے ترقی کی۔

ن لیگ کی چیف آرگنائزر مریم نواز انہوں نے کہا کہ 2013 میں بھی پاکستان کو ڈوبی ہوئی معیشت ملی، نوازشریف کے دور میں غریب کو تین وقت روٹی ملتی تھی،

آئی ایم ایف کے ساتھ نوازشریف نے بھی معاہدہ کیا مگر عوام پر بوجھ نہیں ڈالا لیکن ایک معاہدہ عمران خان نے آئی ایم ایف کے ساتھ کیا جس کی وجہ سے مشکلات کا سامنا ہے،

معاہدے کی وجہ سے ہمیں قیمتیں بڑھانی پڑرہی ہیں، ن لیگ کو 2022 میں بھی اجڑا ہوا پاکستان ملا ہے لیکن ہم اس صورتحال سے باہر نکلیں گے۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll