جی این این سوشل

دنیا

ٹیپو سلطان کی تلوار ایک کروڑ 40 لاکھ پاؤنڈز میں نیلام

یہ شاندار تلوار ان ہتھیاروں میں سے سب عظیم ہے جن کا تعلق ٹیپو سلطان سے ہے،بون ہامز اسلامک اینڈ انڈین آرٹ

پر شائع ہوا

کی طرف سے

ٹیپو سلطان کی تلوار ایک کروڑ 40 لاکھ پاؤنڈز میں نیلام
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

 لندن میں ہونے والی ایک نیلامی میں برصغیر کے مشہور مسلمان حکمران ٹیپو سلطان کی تلوار ایک کروڑ 40 لاکھ پاؤنڈز ( 4ارب 98 کروڑ 70 لاکھ پاکستانی روپے)  میں فروخت ہو گئی ہے۔

رپورٹ کے مطابق نیلامی منعقد کروانے والے ہاؤس بون ہامز  کا کہنا ہے کہ تلوار کی قیمت اندازے کے مقابلے میں سات گنا زیادہ لگی تھی ۔یہ تلوار ٹیپو سلطان کی سب سے اہم تلوار تھی جس سے ان کا خاص تعلق تھا۔

ریاست میسور کے حاکم ٹیپو سلطان کو 18 ویں صدی کے آخر میں ہونے والی جنگوں سے شہرت ملی تھی۔ انہوں نے 1775 اور 1779 کے درمیان کئی مرتبہ مرہٹوں کے خلاف جنگ لڑی۔ بون ہامز اسلامک اینڈ انڈین آرٹ کے ہیڈ اولیور وائٹ کا کہنا ہے کہ ’یہ شاندار تلوار ان ہتھیاروں میں سے سب عظیم ہے جن کا تعلق ٹیپو سلطان سے ہے، ٹیپو سلطان کی اس سے ذاتی وابستگی تھی۔‘یہ تلوار ٹیپو سلطان کے محل کے ذاتی حجرے سے برآمد کی گی تھی۔

 
 
 
 
 
View this post on Instagram
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 

A post shared by Oliver White (@islamic_indian)

ٹیپو سلطان کو اپنی سلطنت کے دفاع کرنے پر ’ٹائیگر آف میسور‘ کا لقب دیا گیا تھا۔بون ہامز کا کہنا ہے کہ انہیں راکٹ آرٹلری میں مہارت حاصل تھی اور انہوں نے میسور کو بھارت کا معاشی گڑھ بنایا تھا۔

آکشن ہاؤس کے مطابق ٹیپو سلطان کی موت کے بعد ان کی تلوار کو ان کی بہادری کے عوض برطانوی میجر جنرل ڈیوڈ بیئرڈ کے سامنے پیش کیا گیا تھا

پاکستان

پاکستان علاقائی سالمیت کے تحفظ کے لیے پرعزم ہے، انوار الحق کاکڑ

نگران وزیر اعظم انوار الحق کاکڑ نے کہا کہ کسی کو کچھ شک نہیں ہونا چاہیے کہ پاکستان ایک امن پسند ملک ہے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

پاکستان علاقائی سالمیت کے تحفظ کے لیے پرعزم ہے، انوار الحق کاکڑ

آپریشن سوئفٹ ریٹورٹ” کے پانچ سال مکمل ہونے پر نگران وزیراعظم انوار الحق کاکڑ نے ایک پیغام جاری کردیا۔

نگران وزیراعظم انوار الحق کاکڑ نے اپنے بیان میں کہا  کہ ہم پاکستان کی مسلح افواج کی پیشہ ورانہ مہارت اور عزم کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں جنہوں نے آج کے دن بھارت کے دعوؤں کو جھوٹا اور غلط ثابت کرتے ہوئے اپنی آپریشنل برتری کا عملی مظاہرہ کیا تھا ۔

نگران وزیر اعظم انوار الحق کاکڑ نے کہا کہ کسی کو کچھ شک نہیں ہونا چاہیے کہ پاکستان ایک امن پسند ملک ہے جو اپنی خودمختاری اور علاقائی سالمیت کے تحفظ کے لیے پرعزم ہے؛ ہم کسی بھی جارحیت کا بھرپور جواب دیں گے۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

سنیٹر سرفراز بگٹی اور پرنس عمر احمد زئی سینیٹ کی سیٹ سے مستعفی

سنیٹر سرفراز بگٹی نے اپنا استعفی چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی کو پیش کردیا، چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی نے سنیٹر سرفراز بگٹی کا استعفی منظور کرلیا

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

سنیٹر سرفراز بگٹی اور پرنس عمر احمد زئی سینیٹ کی سیٹ سے مستعفی

بلوچستان عوامی پارٹی کی جانب سے سینیٹر منتخب ہونے والے سنیٹر سرفراز بگٹی اور پرنس عمر احمد زئی نے سینیٹ کی نشست سے استعفیٰ دے دیا۔ 

دوسری جانب بلوچستان عوامی پارٹی کی سینیٹر پرنس عمر احمد زئی سینیٹ کی نشست سے مستعفی ہوگئے- سینیٹر پرنس عمر احمد زئی  نے اپنا استعفی چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی کو پیش کردیا۔

یاد رہے کہ سنیٹر سرفراز بگٹی نے اپنا استعفی چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی کو پیش کردیا، چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی نے سنیٹر سرفراز بگٹی کا استعفی منظور کرلیا.

چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی نے سینیٹر پرنس عمر احمد زئی کا استعفی منظور کرلیا- سینیٹر پرنس عمر احمد زئی بلوچستان اسمبلی میں بطور ایم پی اے حلف لیں گے۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

پاکستان میں جمہوریت کو بچانا ہے تو جس کا مینڈیٹ ہے اسے دیا جائے، علی محمد خان

مریم نواز کو مبارکباد ضرور دیتا لیکن پہلے وہ اپنی سیٹ تو جیت جاتیں، رہنما پی ٹی آئی

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

پاکستان میں جمہوریت کو بچانا ہے تو جس کا مینڈیٹ ہے اسے دیا جائے، علی محمد خان

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کی رہنما علی محمد خان نے کہا ہے کہ شریف خاندان نے زبردستی تخت پنجاب لیا، 2013 میں بھی نواز شریف کو ان کی سیٹ پرجا کر مبارکباد دی تھی مگر مریم تو ہار چکی ہیں ،پہلے یہ جیت کے تو آئیں، غریب کا آخری ہتھیار بھی انہوں نے لے لیا، اگر پاکستان میں جمہوریت کو بچانا ہے تو جس کا مینڈیٹ ہے اسے دیا جائے۔

پی ٹی آئی قائدین اور بلوچستان کے امیدواران قومی اسمبلی کے ہمراہ اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے علی محمد خان نے کہا کہختم نبوت اور حرمت رسول ﷺ پر کوئی سمجھوتا نہیں ہوگا، بانی پی ٹی آئی نے امریکہ میں جا کر مسلمانوں کی جنگ لڑی ہے۔ قوم کے ساتھ کیسے یہ مذاق کیا جا سکتا ہے، الیکشن پر اربوں روپے لگا کر کیوں ڈراما رچایا گیا۔ مریم نواز شریف نے وزیر اعلیٰ پنجاب کا حلف اٹھایا،

انہوں نے کہا کہ میں مریم نواز کو مبارکباد ضرور دیتا لیکن پہلے وہ اپنی سیٹ تو جیت جاتیں، 2013 میں بھی نواز شریف کو ان کی سیٹ پرجا کر مبارکباد دی تھی، ان الیکشنز میں نواز شریف، شہباز شریف سب بڑے سورما ہارگئے، مگر صبح ہونے تک حتمی نتائج میں سب کو الیکشن جتوا دیا گیا۔ کراچی کا میڈینٹ ہمارے پاس ہے، پاکستان کو بچانا ہے تو جس کا میڈینٹ ہے اس کو دیا جائے۔ دھاندلی کے باوجود لوگوں نے نکل کر فسطائیت کا مقابلہ کیا، ہمارے چیئرمین کوجیل میں قید کردیا گیا، پارٹی کا نشان واپس لے لیا گیا، تمام سختیوں کے باوجود عوام نے نکل کر جمہوریت کو ووٹ دیا۔ 

انہوں نے مزید کہا کہ قوم کے حق پر ڈاکا ڈالا گیا ہے، غریب آدمی کے پاس اس ملک میں آخری اختیار ووٹ ہے، اگر یہ اختیار بھی غریب سے چھین لیں تو یہ طریقہ تو 1947 سے پہلے بھی تھا، یہ طریقہ کار تو وائی سرائے کے دور میں بھی اپنایا جاتا تھا، یہی ہماری جدوجہد تھی کہ لندن پلان کا حصہ نہیں بنیں گے۔

پریس کانفرنس کے دوران شیر افضل مروت نے کہا کہ ملک بھر میں تحریک انصاف کے میڈینٹ پر ڈاکا ڈالا گیا ہے، ہم پہلے بھی اس پر احتجاج کر چکے ہیں، سات صوبائی حلقے اور تین قومی اسمبلی حلقوں کی عزرداریاں لے کر الیکشن کمیشن گئے، لیکن الیکشن کمیشن کا رویہ دوسری جماعتوں کی نسبت یکسر مختلف ہے، ہمارے امیدواروں کے حتمی نتائج آنے کے بعد دوسرے امیدواروں کو جتوایا گیا ہے، ہم بلوچستان کے امیدوار مختصر طریقہ سے اپنا مسئلہ بیان کریں گے۔

شاندانہ گلزار کا کہنا ہے کہ بلوچستان میں پی ٹی آئی کے آزاد امیدواروں کے الیکشن چوری ہوئے، ہم بتائیں گے کس طرح بلوچستان میں ہمارا الیکشن چوری ہوا، ہمارے امیدوار تمام شواہد ساتھ لے کر آئے ہیں۔

این اے 263 بلوچستان سے انتخابات میں حصہ لینے والے سالار خان کاکڑ نے کہا کہ ہمارا صوبہ وسائل سے مالا مال ہے، بلوچستان کی محرومیوں کا قصہ ہر ٹی وی چینل پر ہو رہا ہوتا ہے۔بلوچستان میں میڈیا کوریج نہ ہونے کے برابر ہے، اسی وجہ سے آج ہم سب اسلام آباد آئے ہیں، ہمیں امید ہے میڈیا کے توسط سے ملک اور ملک سے باہر آواز پہنچے گی۔

انہوں نے کہا کہ پہلے بھی دھاندلی ہوتی تھی اس بار ٹھیکداروں اور قبضہ مافیا کو الیکشن میں جتوایا گیا، اس بار 20 کروڑ سے ایک ارب تک سیٹوں کے سودے کیے گئے، میرے حلقے کے تمام فارم 45 موجود ہیں، میرے فارم 45 کے مطابق 32 ہزار ووٹ حاصل کیے، آٹھویں نمبر والے امیدوار کو اٹھا کر جتوا دیا گیا۔میرے حلقے میں چار ہزار ووٹ لینے والے کو الیکشن جتوایا گیا، الیکشن کے روز ساری رات آر او کے دفتر کے باہر کھڑے رہے لیکن ہمیں آر او آفس میں جانے کی اجازت نہیں دی گئی، ہمارے ساتھ الیکشن میں اتنا بڑا مزاق کیا گیا ہے جس کا کوئی ثانی نہیں۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ بلوچستان کے عوام کے ساتھ کھلواڑ ہوا ہے، حالیہ الیکشن میں بلوچستان کے عوام کی تعلیم، صحت اور وسائل بیچ دیئے گئے، ہماری مسلسل جدو جہد ہے کہ تحریک انصاف کے ووٹرز کا حق محفوظ کریں گے۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll