جی این این سوشل

دنیا

مودی حکومت پر مسلم مخالف پروپیگنڈے کو ہوا دینے کا الزام

ایک امریکی اخبار واشنگٹن پوسٹ نے بھارت میں مسلمانوں کے خلاف مودی حکومت کے شرمناک پروپیگنڈے کا انکشاف کیا ہے

پر شائع ہوا

کی طرف سے

مودی حکومت پر مسلم مخالف پروپیگنڈے کو ہوا دینے کا الزام
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

نئی دہلی: وزیر اعظم نریندر مودی کی قیادت میں ہندوستانی حکومت کے بارے میں چونکا دینے والے انکشافات سامنے آئے ہیں، جس سے سوشل میڈیا پلیٹ فارمز کے ذریعے بنائے گئے مسلم مخالف پروپیگنڈے اور غلط معلومات پھیلانے والے ہتھکنڈوں کے ایک جال کو بے نقاب کیا گیا ہے۔

یہ انکشافات امریکی اخبار واشنگٹن پوسٹ کی طرف سے سامنے آئے ہیں، جس میں بھارت میں جمہوریت کی حالت کے بارے میں شدید تشویش کا اظہار کیا گیا ہے کیونکہ قوم اپنے آئندہ عام انتخابات کے قریب پہنچ رہی ہے۔

واشنگٹن پوسٹ کی تحقیقات کے مطابق حکمران جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) مبینہ طور پر مختلف سوشل میڈیا چینلز پر مسلم مخالف بیانیے کو فعال طور پر فروغ دے کر انتہا پسند ہندو گروپوں کی حمایت حاصل کر رہی ہے۔

رپورٹ سے پتہ چلتا ہے کہ بی جے پی نے اپنے پیغامات کو پھیلانے کے لیے تقریباً 150,000 سوشل میڈیا کارکنوں کا ایک وسیع نیٹ ورک ترتیب دیا ہے۔

تحقیقاتی رپورٹ مزید اس بات پر زور دیتی ہے کہ مودی حکومت نے مسلم کمیونٹی کو نشانہ بناتے ہوئے جعلی خبروں کو پھیلانے میں اہم کردار ادا کیا ہے۔

اس خطرناک رجحان نے نفرت انگیز تقاریر اور بھارت کے اندر گمراہ کن معلومات کی گردش میں نمایاں اضافہ دیکھا ہے۔

ایک انکشاف میں، بی جے پی لیڈروں کو ممکنہ ووٹروں کو پیغامات پہنچاتے ہوئے پکڑا گیا ہے، جس میں یہ تجویز کیا گیا ہے کہ پارٹی کو ووٹ دینے سے ان کے بچوں اور ہندو برادری کی حفاظت اور بہبود کو یقینی بنایا گیا ہے۔

مزید برآں یہ انکشاف کیا گیا ہے کہ بی جے پی 'تیسرے فریق' یا 'ٹرول' پیجز کی آڑ میں کام کرنے والے افراد کے ساتھ تعاون کرتی ہے، جس سے سوشل میڈیا پر ان کی رسائی اور اثر بڑھتا ہے۔

واشنگٹن پوسٹ کی رپورٹ میں تفصیلی چونکا دینے والے انکشافات نے اقوام متحدہ کی جانب سے سخت تنقید سمیت بین الاقوامی سطح پر مذمت کی ہے۔

پاکستان

پاکستان کا اقوام متحدہ کے زیر اہتمام عالمی کانفرنس میں شرکت کرنے کا فیصلہ

اقوام متحدہ کی افغانستان پر عالمی کانفرنس 30 جون سے یکم جولائی تک قطر کے دارالحکومت دوحا میں منعقد ہوگی

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

پاکستان کا اقوام متحدہ کے زیر اہتمام عالمی کانفرنس میں شرکت کرنے کا فیصلہ

پاکستان نے رواں ماہ کے آخر میں اقوام متحدہ کے زیر اہتمام عالمی افغان کانفرنس میں شرکت کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے ۔

ذرائع کے مطابق اقوام متحدہ کی افغانستان پر عالمی کانفرنس 30 جون سے یکم جولائی تک قطر کے دارالحکومت دوحا میں منعقد ہوگی۔

تیسری افغان کانفرنس میں نمائندہ خصوصی برائے افغانستان آصف درانی سمیت پاکستانی وفد ملک کی نمائندگی کرے گا کانفرنس میں افغان طالبان حکومت کے نمائندے بھی شرکت کریں گے۔

افغانستان کے لئے دنیا بھر کے خصوصی نمائندے شرکت کرینگے جبکہ کانفرنس میں پرائیوئٹ سیکٹر کی ترقی میں شمولیت، منشیات کے خاتمے اور سلامتی کے معاملات پر مشاورت ہو گی۔ پاکستانی وفد دیگر ممالک کے وفود سے ملااتیں کرے گا۔

پڑھنا جاری رکھیں

صحت

پاکستان مزید 5 اضلاع میں ماحولیاتی نمونوں میں پولیو وائرس کی تصدیق

بلوچستان کے اضلاع کوئٹہ، چمن اور پشین جبکہ سندھ کے شہروں حیدر آباد اور میر پور خاص کے ماحولیاتی نمونوں میں بھی پولیو وائرس کی تصدیق ہوئی

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

پاکستان مزید 5 اضلاع میں ماحولیاتی نمونوں میں پولیو وائرس کی تصدیق

پاکستان میں پولیو وائرس کا پھیلاؤ مسلسل جاری ہے، صوبہ سندھ اور بلوچستان کے 5 اضلاع کے ماحولیاتی نمونوں میں پولیو وائرس کی تصدیق ہوگئی۔

محکمہ صحت کے حکام کے مطابق سندھ اور بلوچستان کے 5 اضلاع کے 6 ماحولیاتی نمونوں میں ایک بار پھر پولیو وائرس پایا گیا ہے۔

ملک میں پولیو وائرس کا پھیلاؤ تھم نہ سکا، بلوچستان کے اضلاع کوئٹہ، چمن اور پشین جبکہ سندھ کے شہروں حیدر آباد اور میر پور خاص کے ماحولیاتی نمونوں میں بھی پولیو وائرس کی تصدیق ہوئی ہے۔

حکام کا کہنا ہے کہ اب تک 45 اضلاع کے 182 ماحولیاتی نمونوں میں پولیو وائرس پایا جا چکا ہے جبکہ رواں سال 5 پولیو کیسز سامنے آئے جبکہ اس مرض سے ایک موت رپورٹ ہوئی ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

علی امین گنڈا پور بھی خیبر پختونخوا میں بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ پر پھٹ پڑے

اگر نیشنل گرڈ سے بجلی کم کی گئی تو بجلی بند کردوں گا، وزیر اعلیٰ کے پی

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

علی امین گنڈا پور بھی خیبر پختونخوا میں بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ پر پھٹ پڑے

خیبر پختونخوا میں بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ پر وزیراعلیٰ علی امین گنڈا پور بھی پھٹ پڑے.

ڈیرہ اسماعیل خان میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وزیراعلیٰ خیبر پختونخوا علی امین گنڈا پور نے کہا کہ اگر نیشنل گرڈ سے بجلی کم کی گئی تو بجلی بند کردوں گا، آپ کس طرح بیٹھے ہیں اور کس طرح آپ کو نکالنا ہے مجھے پتہ ہے، واپڈا ہمارے صوبے کے ساتھ زیادتی کررہا ہے، یہ لوگ مینڈیٹ چوری کرکے حکومت میں بیٹھے ہیں، وفاقی حکومت اپنی ذمے داری پوری نہیں کررہی۔

انہوں نے کہا کہ ریاست مدینہ کی صرف بات نہیں کرتے ہم اس پر عمل بھی کرتے ہیں، جتنا وفاق نے بجٹ پیش کیا اس سے زیادہ ہمارے صوبے کے واجبات رہتے ہیں جو نہیں ادا کیے جا رہے، سی سی آئی سے منظور شدہ صوبے کے 1600 ارب واجبات ہمیں نہیں مل رہے۔ وفاق کے ذمے ہمارے صوبے کے 16ارب روپے واجب الا ادا ہیں، وزیراعظم سے آخری بار کہتا ہوں ہمارے پیسے واپس دو، ہمیں اپنے عوام کے تعاون کی ضرورت ہے۔

وزیراعلیٰ خیبر پختونخوا کا کہنا تھا کہ لوڈشیڈنگ کے خاتمے کے لیے واپڈا کے ساتھ پلان بنایا کہ لاسس والے علاقوں میں سولر لگائیں گے، سولر سسٹم کے لیے 10 ارب روپے مختض کیے جس کے لیے ڈیڑھ مہینے کا وقت مختض کیا،وفاقی منسٹر سے ڈیڈ لائن ختم ہونے کے بعد رابطہ کیا لیکن کوئی جواب نہ مل سکا، عوام سے التماس ہے کہ واپڈا کے کسی بھی اثاثے کو نقصان نہیں پہنچانا کیونکہ یہ ہمارا اثاثہ ہے، تمام ایم پی ایز بھی گرڈ اسٹیشن پر جائیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ صوبے میں 12 گھنٹے سے زیادہ لوڈشیڈنگ نہیں ہونی چاہیئے، لوڈشیڈنگ ختم کرنا وفاقی حکومت کی ذمے داری ہے، وفاق اپنی ذمے داری پوری نہیں کررہا، یہ لوگ چوری کا مینڈیٹ لے کر حکومت میں بیٹھے ہیں، اگر نیشنل گرڈ سے بجلی کم کی گئی تو بجلی بند کردوں گا۔

علی امین گنڈا پور نے کہا کہ وعدہ کرتا ہوں 12 گھنٹے سے زیادہ لوڈشیڈنگ کسی بھی فیڈر پر نہیں ہوگی، عوام نے خود بیٹھ کر چوکیداری کرنی ہے کہ 12 گھنٹے سے زائد لوڈشیڈنگ کہیں نہ ہو، خیبر پختونخوا کی پولیس واپڈ کے کہنے پر کسی بھی شخص پر ایف آئی آر درج نہیں کرے گی، خیبرپختونخوا کی پولیس واپڈا کی ما تحت نہیں ہے۔

وزیراعلیٰ خیبر پختونخوا نے مزید کہا کہ واپڈ جو زیادتیاں کر رہا ہے تو عوام کو حق کے ساتھ کھڑا ہونا ہوگا، ذمہ داران اور پارلیمنٹیرینز عوام کی نمائندگی کریں گے لوڈشیڈنگ کے خاتمے کے لیے، میینڈیٹ چور حکومت میں چوری کوٹ کوٹ کر بھری ہے ۔

ان کا کہنا تھا کہ ویراعظم مجھے مجبور کر رہا ہے کہ ان کی حکومت کو دھکے دے کر نکالا جائے، صوبے کا حق بھی لینا ہے اور حق لینے سے کوئی روک نہیں سکتا، میں نے اویس لغاری کو کل کی پیغام بھیجا لیکن انہوں نے جواب نہیں دیا، حکومت سے دوبارہ بات کریں گے مسائل سے آگاہ کریں گے، دوسرے مرحلے میں صوبوں سے نیشنل گرڈ کو بند کروں گا۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll