جی این این سوشل

دنیا

غزہ: مصر کیساتھ رفاح کی سرحد تاحال بند، امدادی اداروں کو قحط کا خدشہ

امدادی ٹیمیں ہر جگہ ہرممکن طور سے لوگوں کو مدد فراہم کرنے کی کوشش کر رہی ہیں، اقوام متحدہ

پر شائع ہوا

کی طرف سے

غزہ: مصر کیساتھ رفاح کی سرحد تاحال بند، امدادی اداروں کو قحط کا خدشہ
غزہ: مصر کیساتھ رفاح کی سرحد تاحال بند، امدادی اداروں کو قحط کا خدشہ

غزہ کے شمالی اور جنوبی علاقوں میں اسرائیلی فوج اور فلسطینی جنگجوؤں کے مابین شدید لڑائی کی اطلاعات ہیں۔ اقوام متحدہ کے امدادی اداروں نے خبردار کیا ہے کہ امداد پر پابندیوں اور محفوظ رسائی میں مشکلات کے باعث علاقے میں قحط کا خطرہ برقرار ہے۔

امدادی امور کے لیے اقوام متحدہ کے رابطہ دفتر (اوچا) نے کہا ہے کہ امدادی ٹیمیں ہر جگہ ہرممکن طور سے لوگوں کو مدد فراہم کرنے کی کوشش کر رہی ہیں۔ تاہم مصر کے ساتھ رفاح کی سرحد تاحال بند ہے اور جنگ کے باعث اسرائیل کے ساتھ کیریم شالوم کی سرحد تک محفوظ رسائی میسر نہیں۔

حالیہ دنوں غزہ کے مختلف علاقوں میں اسرائیلی فوج اور فلسطینی جنگجوؤں کے مابین لڑائی میں مزید شدت آ گئی ہے۔

شمالی غزہ کے علاقے جبالیہ اور جنوبی شہر رفاح میں لڑائی کے باعث امداد کی فراہمی متاثر ہو رہی ہے۔ گزشتہ ایک ہفتے کے دوران 450000لوگ غزہ سے انخلا کر چکے ہیں جبکہ اسرائیل کے احکامات پر شمالی غزہ سے مزید ایک لاکھ لوگوں نے نقل مکانی کی ہے۔

فلسطینی پناہ گزینوں کے لیے اقوام متحدہ کے امدادی ادارے انرا کا کہنا ہے کہ لوگ تحفظ کی تلاش میں جہاں جگہ ملے وہیں کا رخ کر رہے ہیں تاہم غزہ میں تحفظ نام کی کوئی چیز وجود نہیں رکھتی۔

انرا نے بتایا ہے کہ سات ماہ سے جاری جنگ اور خوراک و طبی سہولیات کی شدید قلت کے باعث غزہ میں کم وزن بچے پیدا ہو رہے ہیں۔ ادارے نے سوشل میڈیا کے پلیٹ فارم ایکس پر ایک پناہ گزین گھرانے میں پیدا ہونے والی بچی کے بارے میں بتایا ہے جس کا دو ہفتے کی عمر میں وزن دو کلوگرام سے بھی کم ہے۔

عالمی پروگرام برائے خوراک (ڈبلیو ایف پی) نے بتایا ہے کہ والدین کو اپنے بچوں کی حفاظت اور انہیں خوراک مہیا کرنے میں بہت سے مسائل کا سامنا ہے۔ ادارے نے لوگوں کو غذائی قلت سے بچانے کے لیے مقوی کھجوریں مہیا کی ہیں۔ ان میں ایسے لوگ بھی شامل ہیں جنہیں کئی روز سے خوراک میسر نہیں آئی تھی۔

ادارے کا کہنا ہے کہ بچوں میں غذائی قلت انتہائی تیز رفتار سے بڑھ رہی ہے۔ دو سال سے کم عمر کے ایک تہائی بچے غذائی قلت یا جسمانی کمزوری کا شکار ہیں۔ اقوام متحدہ اور اس کے شراکت داروں کے پاس غزہ بھر کی 22 لاکھ آبادی کو امداد مہیا کرنے کے ذرائع موجود ہیں تاہم اس کے لیے جنگ بندی ہونا ضروری ہے۔

پاکستان

آئندہ 12 گھنٹو ں کے دوران موسم شدید گرم رہے گا ، محکمہ موسمیات

 بالائی خیبر پختونخوا، خطہ پوٹھوہار گلگت بلتستان اور کشمیر میں کہیں کہیں گرج چمک کے ساتھ بارش کا امکان ہے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

آئندہ  12 گھنٹو  ں کے دوران موسم شدید گرم رہے گا ، محکمہ موسمیات

محکمہ موسمیات کی پیشگوئی کے مطابق آئندہ بارہ گھنٹے کے دوران ملک کے بیشتر حصوں میں موسم شدیدگرم رہے گا۔

 بالائی خیبر پختونخوا، خطہ پوٹھوہار گلگت بلتستان اور کشمیر میں کہیں کہیں گرج چمک کے ساتھ بارش کا امکان ہے۔آج صبح ریکارڈ کیا گیا بعض شہروں کا درجہ حرارتاسلام آباد پشاوراور مظفرآباد چوبیس ڈگری سینٹی گریڈ لاہور تینتیس کراچی تیسکوئٹہ بیسگلگت اٹھارہاور مری انیس ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا ہے موسم جزوی طور پر ابر آلوداور گرج چمک کے ساتھ بارش گرم اور بعض مقامات پر گرج چمک کے ساتھ بارش کا امکان ہے۔

 

 

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

برٹش ایشین ٹرسٹ اور پنجاب سکلز ڈویلپمنٹ فنڈ  کے درمیان مفاہمتی یاداشت کی تقریب منقعد

ایمپلائمنٹ امپیکٹ بانڈ کو ترقی کے اہم شعبوں میں نوجوانوں کے لیے 40,000 ملازمتوں کو یقینی بنانے اور طویل مدتی روزگار کے نتائج پر توجہ مرکوز کرنے کے لیے ڈیزائن کیا گیا ہے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

برٹش ایشین ٹرسٹ اور پنجاب سکلز ڈویلپمنٹ فنڈ  کے درمیان مفاہمتی یاداشت کی تقریب منقعد

برٹش ایشین ٹرسٹ اور پنجاب سکلز ڈویلپمنٹ فنڈ  کے درمیان مفاہمتی یاداشت کی تقریب منقعد ہوئی ۔ 


برٹش ایشین ٹرسٹ جس کی بنیاد کنگ چارلس سوم نے رکھی تھی  نے پنجاب سکلز ڈویلپمنٹ فنڈ کے ساتھ مل کر پاکستانی تارکین وطن کے سرکردہ اراکین کی حمایت  کے ساتھ پاکستان کے پہلے ڈویلپمنٹ امپیکٹ بانڈ پر کام کا آغاز  کر دیا ہے۔ 
اس سلسلہ میں دونوں اداروں کے درمیان ایک مفاہمتئ یاداشت  کی تقریب منقعد ہوئی جس میں دونوں ادرواں نے ملکرچالیس ہزار سے زائد نوجوانوں کو ایسی سکلز کی ٹرینگ دینا پر اتفاق کیا گیا جس سے نوجوانوں کے لیے روزگار کے مواقعوں میں نہ صرف اضافہ ہو گا بلکہ انکی کی آمدن میں بھی خاطر خواہ اضافہ متوقع ہے۔ 
 
ایمپلائمنٹ امپیکٹ بانڈ کو ترقی کے اہم شعبوں میں نوجوانوں کے لیے 40,000 ملازمتوں کو یقینی بنانے اور طویل مدتی روزگار کے نتائج پر توجہ مرکوز کرنے کے لیے ڈیزائن کیا گیا ہے، اسکے علاوہ اس بانڈ کے زریعہ پاکستان میں سماجی اثرات کو فنڈ دینے کے لیے نئے سرمائے  کے مواقعے پیدا کرنا ہے ہے۔ امپیکٹ بانڈز فنانسنگ کے جدید آلات ہیں جو نجی شعبے کے سرمائے اور ترقی کے لیے مہارت سے فائدہ اٹھاتے ہیں، جس میں نتائج کے حصول پر توجہ دی جاتی ہے۔ وہ مالی ترغیبات کے ذریعے ان پٹ سے نتائج، کارکردگی اور نتائج کی طرف توجہ مرکوز کرتے ہیں۔
  اس تقریب سے خطاب کرتے ہوئے برٹش ایشین ٹرسٹ پاکستان کی ڈائریکٹر کمیلا ماروی نے کہا کے  PSDF کے ساتھ یہ شراکت داری پاکستان کے نوجوانوں کے لیے روزگار فراہم کرنے کی ہماری کوششوں میں ایک اہم سنگ میل ہے۔ ہم روزگار کے لیے ملک کے پہلے اثر والے بانڈ کے مقامی ڈیزائن کی حمایت کے لیے بین الاقوامی مہارت لانے کے لیے پرجوش ہیں۔ ہم حقیقی طور پر یقین رکھتے ہیں کہ یہ پاکستان میں ترقیاتی مالیات کے نقطہ نظر کو تبدیل کرنے کا ایک موقع ہے جس کے نتیجے میں زیادہ جدت، کارکردگی اور پیمانے کی طرف جاتا ہے۔
پی ایس ڈی ایف کے چیف آپریٹنگ آفیسر علی اکبر بوسن نے تقریب میں خطاب کرتے ہوئے کہا کے یہ بانڈ ہنر مندی کی تربیت کے لیے ایک انقلابی نقطہ نظر کی نمائندگی کرتا ہے، جو ہنر مند افرادی قوت کی ترقی کے منظر نامے کو تبدیل کرنے  کی پوری صلاحیت رکھتا ہے۔ ۔ فزیبلٹی اسٹڈی ایمپلائمنٹ امپیکٹ بانڈ کے ممکنہ اثرات، اسکیل ایبلٹی، اور مالی قابل عمل ہونے کا جائزہ لے گی، جو مستقبل کے پروگراموں کی بنیاد رکھے گی۔ پاکستان میں اپنی نوعیت کا یہ پہلا منصوبہ جدید حل کے لیے ہماری وابستگی ہے جو ہنر مند مزدوروں کی اہم ضرورت کو پورا کرتے ہیں، جو کہ ہنر مندی کے تربیتی پروگراموں کی مالی اعانت اور نفاذ کے طریقہ کار میں ایک اہم تبدیلی کا وعدہ کرتے ہیں۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

پاکستان نیوی وار کالج میں  53 ویں کانوکیشن کا انعقاد

مہمان خصوصی ایڈمرل نوید اشرف نے کامیاب ہونے والے نیوی وار کالج کے گریجویٹس میں ڈگریاں تقسیم کیں

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

پاکستان نیوی وار کالج  میں   53 ویں کانوکیشن کا انعقاد

لاہور :  لاہور میں پاکستان نیوی وار کالج میں 53 ویں کانوکیشن کا انعقاد ہوا۔  
تقریب میں چیف آف نیول سٹاف ایڈمرل نوید اشرف نے  بطور مہمان خصوصی شرکت کی ،  پاکستان نیوی وار کالج  کی کانوکیشن میں فارغ التحصیل ہونے والے ننانوے افسران میں ڈگریاں تقسیم کی  گئیں۔ 

ذرائع کے مطابق فارغ التحصیل  ہونے والے  افسران میں 37 کا تعلق دوست ممالک سے ہے۔ 

چیف آف نیول سٹاف نوید اشرف نے تقریب سے خطاب فرماتے ہوئے کہا کہ ٹیکنا لوجی کا فروغ مقناطیسی طبیعت کا ہے ، ایڈمرل نوید اشرف نے میری ٹائم سے متعلق آگاہی مہم کے لیے نیول وار کالج کو سراہا ، انہوں نے خطاب کرتے ہوئے مزید کہا کہ جنگی حکمت عملی میں روایت کے بجائے جدت کو اپنایا جائے۔
مہمان خصوصی ایڈمرل نوید اشرف نے کامیاب ہونے والے نیوی وار کالج کے گریجویٹس میں ڈگریاں تقسیم کیں۔ 
تقریب میں بشمول مہمان خصوصی ،اعلیٰ عسکری حکام، سول معززین اور گریجویٹس کے اہل خانہ نے بھی شرکت کی۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll