جی این این سوشل

پاکستان

نیب ترامیم کیس :عمران خان ویڈیو لنک کے ذریعے سپریم کورٹ میں پیش

وفاقی حکومت نے اس فیصلے کے خلاف پریکٹس اینڈ پروسیجر ایکٹ کے تحت اپیل دائر کی تھی

پر شائع ہوا

کی طرف سے

نیب ترامیم کیس :عمران آج ویڈیو لنک کے ذریعے پیش ہوں گے
نیب ترامیم کیس :عمران آج ویڈیو لنک کے ذریعے پیش ہوں گے

بانی پی ٹی آئی عمران خان قومی نیب ترمیمی کیس میں ویڈیو لنک کے ذریعے سپریم کورٹ میں پیش ہوئے۔

چیف جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کی سربراہی میں پانچ رکنی لارجر بینچ نیب ترامیم کو کالعدم قرار دینے کے خلاف حکومتی اپیلوں کی سماعت کر رہا ہے،  جسٹس امین الدین، جسٹس جمال مندوخیل، جسٹس اطہر من اللہ اور جسٹس حسن اظہر رضوی بینچ کا حصہ ہیں۔

عمران خان نے نیلے رنگ کی شرٹ پہن رکھی ہے۔ چیف جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے اٹارنی جنرل کو روسٹرم پر بلایا۔ جبکہ سینیٹر فیصل جاوید اور وکیل نعیم پنجوٹھہ بھی سپریم کورٹ پہنچ گئے ہیں۔

چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ کیا نیٹ چل رہا ہے؟ جس پر اٹارنی جنرل نے جواب دیا جی ہاں! بالکل چل رہا ہے۔

وفاقی حکومت کے وکیل مخدوم علی خان نے دلائل کا آغاز کرتے ہوئے کہا کہ اسلام آباد ہائیکورٹ میں نیب ترامیم کا معاملہ زیر التواء ہے۔

اس موقع پر جسٹس قاضی فائز عیسی نے کہا کہ مخدوم علی خان آپ اونچی آواز میں دلائل دیں تاکہ ویڈیو لنک پر موجود بانی پی ٹی آئی بھی آپ کو سن سکیں۔

جسٹس اطہر من اللہ نے استفسار کیا کہ کیا ہائی کورٹ میں زیر التوا درخواست سماعت کے لیے منظور ہوئی؟ وکیل وفاقی حکومت نے بتایا کہ جی اسے قابل سماعت قراردے دیا گیا تھا، جسٹس قاضی فائز عیسی نے کہا کہ اسلام آباد ہائی کورٹ سے نیب ترامیم کے خلاف کیس کا مکمل ریکارڈ منگوا لیں۔

چیف جسٹس نے خواجہ حارث سے استفسار کیا آپ اس کیس میں وکالت کریں گے؟ وکیل نے بتایا کہ جی میں عدالت کی معاونت کروں گا۔

حکومتی وکیل مخدوم علی خان نے دلائل جاری رکھتے ہوئے بتایا کہ جولائی 2022 کو نیب ترامیم کے خلاف پہلی سماعت ہوئی۔

جسٹس اطہر من اللہ نے استفسار کیا کہ کل کتنی سماعتیں ہوئیں ہیں؟ وکیل وفاقی حکومت نے کہا کہ کل 53 سماعتیں ہوئیں۔

چیف جسٹس پاکستان نے دریافت کیا کہ اتنا طویل عرصے تک کیس کیوں چلا؟ کیا آپ نے کیس کو طول دیا؟

وکیل مخدوم علی خان نے جواب دیا زیادہ وقت دلائل میں درخواست گزار نے لیا، جسٹس جمال مندوخیل نے کہا کہ 1999 میں نیب قانون بنانے میں کتنا وقت لگا تھا؟ اس پر اٹارنی جنرل نے بتایا کہ مارشل لا کے فوری بعد ایک ماہ کے اندر نیب قانون بن گیا تھا۔

چیف جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے کہا کہ یہ تو بڑا تعجب ہے کہ نیب ترامیم کیس 53 سماعتوں تک چلایا گیا۔

یاد رہے کہ سابق چیف جسٹس عمر عطا بندیال کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے بینچ نے عمران خان کی درخواست منظور کرتے ہوئے نیب ترامیم کو کالعدم قرار دے دیاتھا۔ وفاقی حکومت نے اس فیصلے کے خلاف پریکٹس اینڈ پروسیجر ایکٹ کے تحت اپیل دائر کی تھی۔ پہلی سماعت گزشتہ سال اکتوبر میں ہوئی تھی اور دوسری سماعت دو روز قبل ہوئی تھی۔

خیال رہے کہ گزشتہ سماعت پر سپریم کورٹ نے پی ٹی آئی کے بانی عمران خان کی نیب ترامیم کالعدم قرار دینے کے خلاف انٹرا کورٹ اپیلوں پر دلائل دینے کی درخواست منظور کرلی تھی۔ سپریم کورٹ نے بانی پی ٹی آئی کو ویڈیو لنک کے ذریعے دلائل دینے کی اجازت دے دی تھی۔

سماعت کے آغاز پر جسٹس اطہر من اللہ نے ریمارکس دیے تھےکہ اس مقدمے میں پٹیشنر عمران خان ذاتی حیثیت میں پیش ہونا چاہتے ہیں تو ان کو یہاں پیش کیا جانا چاہیے، وہ اس مقدمے میں ایک فریق ہیں ہم ان کو پیش ہونے کے حق سے کیسے روک سکتے ہیں، یہ نیب کا معاملہ ہے اور ذاتی حیثیت میں پیش ہونا ان کا حق ہے۔

دنیا

اسرائیلی حملوں میں مزید 91 فلسطینی شہید

گزشتہ سال سات اکتوبر سے لے کر اب تک اسرائیلی حملوں میں پینتیس ہزار آٹھ سو سے زائد فلسطینی شہید اور اسی ہزار سے زائد زخمی ہوچکے ہیں

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

اسرائیلی حملوں میں   مزید 91 فلسطینی شہید

محصور غزہ میں گزشتہ چوبیس گھنٹے کے دوران اسرائیلی حملوں میں کم از کم اکیانوے فلسطینی شہید اور دو سو سے زائد زخمی ہوگئے ہیں۔

گزشتہ سال سات اکتوبر سے لے کر اب تک اسرائیلی حملوں میں پینتیس ہزار آٹھ سو سے زائد فلسطینی شہید اور اسی ہزار سے زائد زخمی ہوچکے ہیں۔

واضح رہے کہ غزہ شہر میں کویت جنکشن پر ہونے والے حملے میں  متعدد افراد ہلاک اور زخمی ہوئے ہیں۔

پڑھنا جاری رکھیں

دنیا

ایرانی صدر کے ہیلی کاپٹر حادثے کی تحقیقاتی رپورٹ جاری

ہیلی کاپٹر کی باقیات سے گولیاں لگنے یا کسی تخریبی کاروائی کے کوئی شواہد نہیں ملے، رپورٹ

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

ایرانی صدر کے ہیلی کاپٹر حادثے کی تحقیقاتی رپورٹ جاری

ایرانی صدر ابراہیم رئیسی کے ہیلی کاپٹر حادثے سے متعلق ایران نے تحقیقاتی رپورٹ جاری کردی جس میں کسی قسم کی ’تخریبی کارروائی‘ کے تاثر کو مسترد کیا گیا ہے۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ہیلی کاپٹر میں بلندی سے ٹکرانے کے بعد آگ لگ گئی تاہم اس دعوے کی وجہ نہیں بتائی گئی اور اس رپورٹ کے دعوے کے مطابق یہ بھی واضح نہیں کہ ہیلی کاپٹر بلندی سے کیوں ٹکرایا۔

غیر ملکی میڈیا رپورٹ کے مطابق ہیلی کاپٹر کی باقیات سے گولیاں لگنے یا کسی تخریبی کاروائی کے کوئی شواہد نہیں ملے۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ہیلی کاپٹر مقررہ راستے سے نہیں ہٹا اور جس ہیلی کاپٹر کو حادثہ پیش آیا اس کے پائلٹ نے حادثے سے ڈیڑھ منٹ قبل دو دیگر ہیلی کاپٹرز سے رابطہ کیا۔

اس رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ واچ ٹاور کی ہیلی کاپٹر کے عملے کے ساتھ گفتگو میں بھی کوئی مشکوک مواد سامنے نہیں آیا۔

رپورٹ کے آخر میں کہا گیا کہ کچھ حصوں اور دستاویزات کا جائزہ لینے کے لیے مزید وقت درکار ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

تجارت

غیر رجسٹرڈ آرکیٹیکٹ فرمز کو ٹیکس نیٹ میں لانے کے اقدامات شروع

کمشنر پی آر اے مصباح نواز کی ہدایت پر لاہور میں موجود آرکیٹیکٹ فرمز کے نمائندگان سے ملاقاتیں شروع کر دی گئیں

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

غیر رجسٹرڈ آرکیٹیکٹ فرمز کو ٹیکس نیٹ  میں لانے کے اقدامات شروع

ترجمان پی آر اے کےمطابق پنجاب ریونیو اتھارٹی نے لاہور میں موجود غیر رجسٹرڈ آرکیٹیکٹ فرمز کو ٹیکس نیٹ میں لانے کے لئے سرگرمیاں شروع کر دیں ،  انفورسمنٹ آفیسز علی رضا ہاشمی نے انسٹیٹیوٹ آف آرکیٹیکٹس پاکستان کی شراکت سے زوم میٹنگ کی ، زوم میٹنگ میں چیئرمین بورڈ آف آرکیٹیکٹ ایجوکیشن عمر سعید ، ایزیکٹیو ممبران نے خصوصی شرکت کی ۔

کمشنر پی آر اے مصباح نواز کی ہدایت پر لاہور میں موجود آرکیٹیکٹ فرمز کے نمائندگان سے ملاقاتیں شروع کر دی گئیں۔ 

اسکے علاوہ تقریبا 40 آرکیٹیکس نے بھی زوم میٹنگ میں شریک ہوئے ،ترجمان پی آر اے کےمطابق شرکاء کو سروس ٹیکس قوانین کے حوالے سے ذمہ داریوں کے بارے میں تفصیلی آگاہی فراہم کی گئ۔

اسکے علاوہ غیر رجسٹرڈ آرکیٹیکٹ کو رجسٹرڈ ہونے اور گوشوارے بروقت جمع کروانے کے حوالے سے رہنمائی کی گئ ۔

زوم میٹنگ میں شریک تمام شرکاء کے مختلف سوالات کے جوابات بھی دیے گئے۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll