جی این این سوشل

دنیا

ترک میڈیا نے ایرانی صدر کے ہیلی کاپٹر حادثے سے متعلق سوالات اٹھا دیئے

ایرانی صدر ابراہیم رئیسی کے لئے 30 برس پرانا امریکی ہیلی کاپٹر کیوں استعمال کیا گیا؟،ترک میڈیا

پر شائع ہوا

کی طرف سے

ترک میڈیا نے ایرانی صدر کے ہیلی کاپٹر حادثے سے متعلق سوالات اٹھا دیئے
ترک میڈیا نے ایرانی صدر کے ہیلی کاپٹر حادثے سے متعلق سوالات اٹھا دیئے

ترک میڈیا نے ایرانی صدر ابراہیم رئیسی کے ہیلی کاپٹر حادثے سے متعلق سوالات اٹھا دیئے۔

غیرملکی میڈیا رپورٹس کے مطابق ترک میڈیا نے سوال اٹھایا کہ ایرانی صدر ابراہیم رئیسی کے لئے 30 برس پرانا امریکی ہیلی کاپٹر کیوں استعمال کیا گیا؟، امریکی ساختہ ہیلی کاپٹر ایرانی صدر کے استعمال میں کیسے آیا؟، 3 ہیلی کاپٹروں پر مسافروں کی ترتیب کیوں بدلی گئی؟۔

رپورٹ میں بتایا گیا کہ ایرانی صدر کیلئے پائلٹ کا چنائو ماضی میں پاسدران انقلاب کے اہلکاروں میں سے کیا جاتا تھا تاہم اس بار ان کے پائلٹ کا تعلق آرمی سے تھا۔

ایرانی صدر ماضی میں تبریز کے دوروں کیلئے روسی ہیلی کاپٹر استعمال کرتے رہے، اب امریکی کیوں کرنا پڑا؟ٹریکنگ سسٹم کے باوجود جائے حادثہ کا فوری تعین کیوں نہ ہوسکا؟

ترک میڈیا نے مزید سوالات اٹھاتے ہوئے کہا ہے کہ ہیلی کاپٹر سگنل کے فعال یا خراب ہونے کا کیوں نہ نوٹ ہوا؟ دورہ شیڈول کے مطابق وزیر خارجہ اور گورنر تبریز نے 2 نمبر ہیلی کاپٹر میں سوار ہونا تھا وہ اس پر سوار کیوں نہ ہوئے؟۔

ایرانی صدر کے ہیلی کاپٹر کو حادثہ بظاہر موسم اور تکنیکی وجوہات کی بنا پر پیش آیا۔

دوسری جانب ایرانی حکومت کے اہلکار غلام حسین اسماعیلی کا کہنا ہے کہ ہیلی کاپٹر نے پرواز کی تو موسم ٹھیک تھا ، پروازکے 45 منٹ بعد صدارتی پائلٹ نے کہا کہ بادل سے بچنے کیلئے پرواز کو اونچی کریں۔

30 سکینڈ بعد ہمارے پائلٹ نے نوٹ کیا کہ صدر کا ہیلی کاپٹر غائب ہو گیا ہے۔

یاد رہے کہ ایران حکام کی جانب سے ہیلی کاپٹر حادثے کی تحقیقات شروع کر دی گئی ہیں، ایرانی چیف آف سٹاف نے اعلیٰ سطح کی تحقیقاتی کمیٹی تشکیل دے دی، تحقیقاتی کمیٹی کی سربراہی چیف آف سٹاف کے ڈپٹی کوآرڈی نیٹر کر رہے ہیں، تحقیقاتی کمیٹی میں فوجی افسران اور تکنیکی ماہرین بھی شامل ہیں۔

علاقائی

کراچی میں لیاقت آباد کے علاقے میں کھدائی کے دوران عمارت گر گئی

کباڑی گلی میں بلڈنگ زمین بوس ہونے سے کوئی جانی نقصان نہیں ہوا،ریسکیو حکام

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

کراچی میں لیاقت آباد کے علاقے میں کھدائی کے دوران عمارت گر گئی

کراچی کے علاقے لیاقت آباد میں عمارت کے نیچے قائم دکان میں کھدائی کے دوران عمارت گرگئی۔واقعہ لیاقت آباد 10 نمبر میں بورے خان سینٹر پر زیر تعمیر عمارت کو حادثہ پیش آیا۔

ریسکیو حکام کے مطابق کباڑی گلی میں بلڈنگ زمین بوس ہونے سے کوئی جانی نقصان نہیں ہوا، عہدیداروں کے مطابق عمارت کے نیچے قائم دکان میں کھدائی کا کام چل رہا تھا۔

یاد رہے کہ لیاقت آباد 10 نمبر میں گلیاں انتہائی تنگ ہیں اور بیشتر رہائشی عمارتیں کثیرمنزلہ عمارتوں پر مشتمل ہیں۔ ایسے کسی بھی حادثے کی صورت میں امدادی سرگرمیاں جاری رکھنا قدرے مشکل ہوتا ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹیکنالوجی

گوگل کا جی میل میں بھی اے آئی فیچر متعارف کرانے کا اعلان

جی میل میں اے آئی کی بدولت اب ای میل کی اندرونی چیدہ معلومات بھی با آسانی اخذ کی جا سکتی ہیں، گوگل 

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

گوگل کا جی میل میں بھی اے آئی فیچر متعارف کرانے کا اعلان

گوگل نے جی میل میں بھی اے آئی فیچر متعارف کرانے کا اعلان کر دیا۔ جی میل میں اے آئی کی بدولت اب ای میل کی اندرونی چیدہ معلومات بھی با آسانی اخذ کی جا سکتی ہیں

گوگل کی حالیہ اپڈیٹ کے بعد اب صارفین کو ای میل کی لمبی لائنز اور ان میں سے معلومات اخذ کرنے کی کھپت سے چھٹکارہ مل جائے گا۔ جیمنائی سسٹم کی اشتراکیت سے اب جی میل کے اندرونی مواد سے بھی باآسانی مطلوبہ معلومات اخذ کی جا سکتی ہیں۔ 

گوگل کے مطابق جی میل میں شامل کیا گیا اے آئی سسٹم صارفین کو یہاں تک بھی معلومات نکال کے دے سکتا ہے کہ آپ کی کون سی میٹنگ کب ہوئی، آپ کی کمپنی نے اپنے ایونٹ میں کتنا خرچہ برداشت کیا، اور آپ کو بزریعہ ای میل موصول ہوا کوڈ نمبر کیا تھا۔ مزید یہ کہ جیمنائی اے آئی سسٹم ایک تھریڈ میں موجود ای میلز کے کانٹینٹ کے اہم نکات کا خلاصہ نکال کے دینے کی بھی صلاحیت رکھتا ہے۔ 

موبائل فون کی جی میل ایپ میں بھی اے آئی فیچر فعال کر دیاگیا ہے۔ ویب کی طرح موبائل ایپ میں بھی اے آئی کے تمام فیچرز سے فائدہ اٹھایا جا سکتا ہے۔ ویب میں اے آئی ٹیب سائیڈ پینل کے طور پر موجود ہے، جبکہ موبائل ایپ میں بھی نیچے کی جانب اے آئی کا آپشن فعال ہے۔ 

 

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

مسلم لیگ (ن) کے رہنما عباس آفریدی کا پارٹی چھوڑنے کا اعلان

عباس آفریدی نے پارٹی کی موجودہ پالیسیوں سے اختلاف کرتے ہوئے علیحدگی اختیار کی

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

مسلم لیگ (ن) کے رہنما  عباس آفریدی کا پارٹی چھوڑنے کا اعلان

پاکستان مسلم لیگ (ن) کے رہنما اور نوازشریف کے قریبی ساتھی عباس آفریدی نے پارٹی سے کنارہ کشی اختیار کرلی ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق عباس آفریدی نے پارٹی کی موجودہ پالیسیوں سے اختلاف کرتے ہوئے علیحدگی اختیار کی۔

عباس آفریدی نے مسلم لیگ ن کے مرکزی جوائنٹ سیکرٹری اور کوہاٹ کی ضلعی صدارت سے باضابطہ طور پر استعفیٰ دے دیا، استعفے کے بعد ان کا کہنا تھا کہ نوازشریف سے ذاتی تعلق رہے گا مگر پارٹی کو اندر سے تقسیم کردیا گیا ہے۔

انھوں نے کہا کہ کسی جماعت میں شامل نہیں ہورہا، آزاد حیثیت میں سیاست کرتا رہوں گا۔ عباس آفریدی نے استعفی سیکرٹری جنرل احسن اقبال کو بھجوا دیا۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll