جی این این سوشل

تجارت

ڈالر کی قیمت میں کمی

ملکی تبادلہ مارکیٹوں میں مسلسل کئی روز اضافے کے بعد آج ڈالر کا بھاؤ کم ہوا ہے۔

پر شائع ہوا

کی طرف سے

ڈالر کی قیمت میں کمی
ڈالر کی قیمت میں کمی

انٹربینک تبادلہ مارکیٹ میں ڈالر کا بھاؤ 94 پیسے کم ہوا ہے۔

کاروبار کی بندش پر ایک امریکی ڈالر کی قیمت ایک 168 روپے 18 پیسے ہے۔

اسی طرح اوپن مارکیٹ میں ڈالر کا بھاؤ 80 پیسے کمی سے 168 روپے 80 پیسے ہے۔

شہروز اظہر 2018 سے ویب جرنلسٹ کے طور پر کام کر رہے ہیں۔ انہوں نے نیشنل یونیورسٹی آف ماڈرن لینگویجز سے ماس کمیونیکیشن میں بی ایس کیا ہے۔ مسٹر اظہر اس سے قبل معروف چینلز کے ساتھ کام کر چکے ہیں اور اب جی این این کے ساتھ بطور سینئر کنٹینٹ رائٹر وابستہ ہیں۔

جرم

گھوٹکی: پولیس کے روکنے پر موٹر سائیکل سواروں کی اہلکاروں پر فائرنگ

گھوٹکی: ایس ایچ او کا کہنا  ہے کہ سرچ آپریشن کے دوران  موٹر سائیکل سواروں کو روکنے پر فائرنگ کی گئی۔ 

پر شائع ہوا

Ali Raza

کی طرف سے

گھوٹکی: پولیس کے روکنے پر موٹر سائیکل سواروں کی اہلکاروں پر فائرنگ

تفصیلات کے مطابق   ایس ایچ او اوباڑو کا کہنا ہے کہ  سرچ آپریشن کے دوران  موٹر سائیکل سواروں کو روکنے پر فائرنگ کی گئی۔ پولیس کے روکنے پر موٹر سائیکل سوار بھاگنے کی کوشش کی اور پولیس پر فائرنگ کردی۔  حملے کے دوران پولیس پر دو ہیند گرنیڈ بھی پھینکے گئے ۔ ایک ہینڈ گرنیڈ مس ہوگیا دوسرہ پولیس کے پیچھے گرا ۔

 ایس ایچ او اوباڑو نے کہا کہ   پسٹل کی گولیاں ختم ہونے پر دونوں نے خود کو ہینڈ گرنیڈ سے اڑا لیا۔  بم ڈسپوزل اسکواڈ کے پہنچنے کے بعد دھماکہ خیز مواد کا تعین کیا جائے گا۔

 ایس ایس پی گھوٹکی جائے وقوعہ پر پہنچ گئے ،  بھاری پولیس نفری نے علاقے کو گھیرے میں لے لیا ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

کورونا کے وار مزید تیز ، سروسز ہسپتال لاہور کے15 ڈاکٹر کورونا کا شکار

لاہور: ملک میں وائرس کا پھیلاؤ تیرہ فیصد ہوگیا۔

پر شائع ہوا

Ali Raza

کی طرف سے

کورونا کے وار مزید تیز ، سروسز ہسپتال لاہور کے15 ڈاکٹر کورونا کا شکار

تفصیلات کے مطابق ملک میں کورونا سنگین شکل اختیار کرنےلگا ہے۔ چوبیس گھنٹے میں  سات ہزار586 افراد میں  وائرس کی تشخیص ہوئی۔دوسروں کی زندگیاں  بچانے والے بھی  کورونا کے نشانے پر آگئے۔ سروسز ہسپتال لاہور کے 15 ڈاکٹروں  کی ٹیسٹ رپورٹ مثبت آگئی۔

ملک  میں  کورونا  کے مثبت  کیسز کی شرح تیرہ فیصد  تک پہنچ گئی ہے۔ کراچی میں  وائرس کا پھیلاؤ 42 اعشاریہ 31 فیصد ریکارڈ کیا گیا ہے۔  حیدرآباد میں  مثبت کیسز کی شرح  سولہ فیصد رہی۔

پنجاب میں بھی وبا کے حملے  کم نہیں۔ صوبے میں کورونا  پازیٹو آنے کا تناسب نواعشاریہ دو فیصد ہے جبکہ لاہور یہ شرح چودہ اعشاریہ چار فیصد جبکہ راولپنڈی میں  انیس اعشاریہ آٹھ فیصد ریکارڈ کی گئی ہے۔

ادھرپنجاب میں اومی کرون کے نئے 93 کیس  سامنے آگئے ہیں۔ لاہور میں مزید 84 افراد میں کورونا کے نئے ویرینٹ کی تصدیق ہوئی ہے۔موذی وائرس  مزید بیس زندگیاں نگل گیاہے۔ ملک میں فعال کیسز70 ہزار263 ہوگئےہیں۔

موذی وائرس کا پھیلاؤ روکنے کےلیے  اسلام آباد انتظامیہ سنجیدہ نظر نہیں آرہی۔شہر  کے مختلف سیکٹرز کی 24 گلیاں سیل کرنے کا نوٹیفکیشن  جاری کیا گیا مگر اس پر عملدرآمد  کرانا بھول گئی۔ 

کراچی  کےضلع وسطی کے 4ٹاؤنز میں مائیکرواسمارٹ لاک ڈاؤن کردیا گیا ہے۔105 گھروں میں پانچ فروری تک  پابندیاں برقراررہیں گی۔

پڑھنا جاری رکھیں

دنیا

صدر اردوغان کے لیے توہین آمیز الفاظ استعمال کرنے پرصحافی گرفتار

ایک ترک عدالت نے معروف صحافی صدف كابس کو ملک کے صدر کے لیے توہین آمیز الفاظ استعمال کرنے کے الزام میں گرفتار کرنے کا حکم دیا ہے۔

پر شائع ہوا

Shehroz Azhar

کی طرف سے

صدر اردوغان کے لیے توہین آمیز الفاظ استعمال کرنے پرصحافی گرفتار

سنیچر کو صدف کابس کو گرفتار کیا گیا اور ایک عدالت نے انھیں مقدمے سے قبل ہی جیل بھیجنے کا فیصلہ دیا ہے۔
ان پر الزام ہے کہ انھوں نے ایک شو میں ترک صدر طیب اردوغان کو ہدف بنایا۔ انھوں نے اپوزیشن سے جڑے ایک ٹی وی چینل کے لائیو شو کے دوران ایک محاورہ کہا تھا۔ صدف اپنے اوپر لگے الزامات کی تردید کرتی ہیں۔
ان پر عائد اس الزام کی سزا ایک سے چار سال قید تک ہوسکتی ہے۔
ٹیلی ون چینل پر بات کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ ایک مشہور کہاوت ہے کہ سر پر تاج پہننے سے انسان سمجھدار ہوجاتا ہے۔ لیکن ہم نے دیکھا ہے کہ یہ سچ نہیں۔  
ان کا کہنا تھا کہ ’بھینسا محل میں داخل ہو تو وہ بادشاہ نہیں بن جاتا، بلکہ محل کا باڑا بن جاتا ہے۔
انھوں نے بعد میں ٹوئٹر پر بھی اپنا یہ بیان شیئر کیا۔
اردوغان کے چیف ترجمان فہریتن التن نے ان کے تبصرے کو ’غیر ذمہ دارانہ‘ قرار دیا تھا۔ انھوں نے ٹوئٹر پر اپنے پیغام میں کہا کہ ’نام نہاد صحافی کھلے عام ایک ٹی وی چینل پر ہمارے صدر کی توہین کر رہی ہے جس کا نفرت پھیلانے کے سوا کوئی مقصد نہیں۔‘

عدالت میں دیے گئے اپنے بیان میں صدف نے صدر کے لیے توہین آمیز الفاظ استعمال کرنے کے الزام کو مسترد کیا ہے۔
ٹیلی ون چینل کے مدیر مردان یانردگ نے صدف کی گرفتاری کی مذمت کی ہے۔ انھوں نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ ’ایک محاورے کی وجہ سے رات کے دو بجے ان کی گرفتاری ناقابل قبول ہے۔‘
’اس اقدام سے صحافیوں، میڈیا اور معاشرے کو ڈرانے کی کوشش کی جا رہی ہے۔‘
اردوغان ترکی میں 11 سال وزیر اعظم رہے جس کے بعد وہ اگست 2014 میں ملک کے پہلے صدارتی انتخاب میں صدر منتخب ہوئے۔ یہ ملک میں ایک عزازی عہدہ ہوا کرتا تھا۔
ناقدین کو خاموش کرنے کے یہ اقدامات بیرون ملک بھی تشویش کا باعث بنے ہیں اور اس سے ترکی کے یورپی یونین کے ساتھ تعلقات تناؤ کا شکار ہوئے ہیں۔ یورپی یونین نے اس اتحاد میں ترکی کی شمولیت کو روک کر رکھا ہوا ہے۔
جب سے اردوغان صدر بنے ہیں ہزاروں لوگوں کو ان کے خلاف ہتک عزت کے الزامات پر سزائیں دی گئی ہیں۔

میڈیا کے مطابق سنہ 2020 کے دوران ترکی میں اس الزام پر 31 ہزار سے زیادہ تحقیقات ہوئی تھیں۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll