جی این این سوشل

تجارت

بٹ کوائن کی قیمت میں یکدم بڑی کمی

2021 بٹ کوائن کے لیے بہت خاص سال ثابت ہوا جس میں اس نے 30، 40 اور 50 ہزار کے بعد اب 60 ہزار ڈالرز کی حد کو بھی عبور کیا۔

پر شائع ہوا

کی طرف سے

بٹ کوائن  کی قیمت میں یکدم بڑی کمی
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

ڈیجیٹل کرنسی کے غبارے کی ہوا نکلنا شروع ہوگئی ہے اور اس کی قیمتوں میں حالیہ ہفتوں کے دوران نمایاں کمی آئی ہے۔

بٹ کوائن کی قیمت میں 22 جنوری کو 36 ہزار ڈالرز سے بھی نیچے آگئی اور اس کی مارکیٹ ویلیو میں سے 600 ارب ڈالرز سے زیادہ کمی آئی۔

اس وقت بٹ کوائن ایک یونٹ لگ بھگ 35 ہزار ڈالرز یعنی 63 لاکھ پاکستانی روپے سے زائد میں فروخت ہورہا ہے جو جولائی 2021 کے بعد اب تک کی سب سے کم قیمت ہے۔

نومبر 2021 میں بلند ترین سطح کو چھونے کے بعد بٹ کوائن کی قیمت میں اب تک 45 فیصد کمی آئی ہے جبکہ دیگر ڈیجیٹل کرنسیوں کو بھی اسی صورتحال کا سامنا ہے۔

بٹ کوائن کے ساتھ ساتھ دیگر کرنسیوں جیسے ایتھر سمیت دیگر میں آنے والی کمی سے کرپٹو مارکیٹ کو ایک ٹریلین سے زیادہ کا نقصان ہوا ہے۔

بیسپوک انویسٹمنٹ گروپ نے کرپٹو پلیٹ فارم ایف آر این ٹی فنانشنل کے شریک بانی اور چیف ایگزیکٹیو اسٹیفن اولیٹی نے بتایا کہ کرپٹو مارکیٹ کا ردعمل اسی طرح کا ہے جو خطرات والے اثاثوں کا عالمی سطح پر ہوتا ہے۔

ماہرین کے مطابق متوقع خطرات کو مدنظر رکھا جائے تو بٹ کوائن کی قیمت میں ایک سال میں 60 فیصد تبدیلی آئی جبکہ سونے کی قیمتوں میں یہ شرح 14 فیصد تھی، اس سے عندیہ ملتا ہے کہ بٹ کوائن اور دیگر ڈیجیٹل کرنسیاں محفوظ کی بجائے خطرے والے اثاثے ہیں۔

تجزیہ کاروں کے مطابق کرنسیوں کی قدر میں مزید کمی دیکھنے میں آسکتی ہے کم از کم مختصر مدت کے لیے۔

بٹ کوائن کی قیمتوں میں اس طرح کا اتار چڑھاؤ نیا نہیں، 2017 میں بھی ایسا دیکھنے میں آیا تھا۔

2017 میں اس کرنسی کی قدر میں 900 فیصد سے زیادہ اضافہ ہوا تھا اور وہ 20 ہزار ڈالرز کے قریب پہنچ گئی تھی، مگر اس موقع پر مالیاتی ماہرین نے انتباہ کیا تھا کہ یہ قیمت بہت تیزی سے نیچے جاسکتی ہے۔

پھر ایسا ہوا بھی اور فروری 2018 میں قیمت 7 ہزار ڈالرز سے بھی نیچے چلی گئی۔

اسی طرح 2021 میں بھی اس کی قیمتوں میں ریکارڈ اضافے کے بعد اچانک تیزی سے کمی آئی ہے اور وہ 30 ہزار ڈالرز کے قریب پہنچ گئی۔

پاکستان

یوٹیلیٹی اسٹورزپر آٹے کی قیمت میں کمی

وزیر اعظم شہباز شریف کے اعلان کے بعد آٹے کی قیمتوں میں واضح کمی،نئی قیمتوں کے اطلاق کے بعد 20 کلو آٹے کا تھیلا 800 جبکہ دس کلو کا تھیلا چار سو میں دستیاب ہو گا، قیمتوں میں کمی کا نوٹیفکیشن بھی جاری کر دیا گیا۔

پر شائع ہوا

Raja Sheroz Azhar

کی طرف سے

یوٹیلیٹی اسٹورزپر آٹے کی قیمت میں کمی

تفصیلات کےمطابق وزیراعظم شہباز شریف کی ہدایت پر یوٹیلیٹی اسٹورزپر آٹے کی قیمت میں کیا گیا اضافہ واپس لے لیا گیا۔ یوٹیلیٹی اسٹورز  پر آٹےکا 20 کلوکا تھیلا 180روپےکی کمی کے بعد 980 روپے سے دوبارہ 800 روپےکا ہوگیا ہے ۔

10 کلو کے آٹے کےتھیلےکی قیمت میں 90 روپے کی کمی کردی گئی ہے، جس کے بعد 10 کلوآٹے کے تھیلے کی قیمت 490روپےسےکم ہوکر 400 روپے ہوگئی ہے۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز ہی یوٹیلٹی اسٹورزپر بیس کلو آٹےکی قیمت میں ایک سو اسی روپے کا اضافہ کیا گیا تھا جب کہ 26 مئی تک 20 کلو آٹے کے تھیلے کی قیمت 800 روپے تھی اور 10 کلو آٹےکے تھیلے کی قیمت 400 روپے تھی۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

نئے چئیرمین نیب کیلئے حکومتی اتحاد جسٹس (ر)مقبول باقرکے نام پر متفق 

اسلام آباد: حکومتی اتحادی جماعتوں کی جانب سے چیئرمین قومی احتساب بیورو (نیب)   کیلئےجسٹس ریٹائرڈ مقبول باقر کے نام پر اتفاق ہوگیا ۔ 

پر شائع ہوا

Asma Rafi

کی طرف سے

نئے چئیرمین نیب کیلئے حکومتی اتحاد جسٹس (ر)مقبول باقرکے نام پر متفق 

ذرائع کے مطابق چیئرمین نیب جسٹس ریٹائرڈ جاوید اقبال کی جگہ نئے چیئرمین نیب  کیلئے سپریم کورٹ کے سابق جج جسٹس ریٹائرڈ مقبول باقر کے نام پر حکومتی اتحادی جماعتوں میں آپس میں اتفاق کیا گیا ہے۔

مسلم لیگ ن ،  پیپلز پارٹی اور دیگر اتحادی جماعتوں کے مابین نئے چیئرمین نیب کے نام پربا ضابطہ مشاورت ہوئی جس میں جسٹس (ر) مقبول باقر کے نام پر اتفاق کیا گیا ۔  سابق صدر آصف علی زرداری اور سابق وزیر اعظم نواز شریف نے بھی اس نام پر اتفاق کیا ہے ۔

جسٹس (ر) مقبول باقرسندھ ہائی کورٹ سےسپریم کورٹ میں پروموٹ ہوئے تھے جبکہ فوادحسن فواد کے نام پر حکومتی اتحادیوں میں اتفاق نہیں ہوسکا تھا ۔ ابتدائی طور پر فواد حسن فواد،جسٹس امیر مسلم ہانی ،   قمر الزماں اور بشیر میمن کے نام  بھی زیر غور لائے گئے ۔

ذرائع کے مطابق قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر اور پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے منحرف رکن راجہ ریاض بھی جسٹس ریٹائرڈ مقبول باقر کے نام پر اتفاق کریں گے اور اگر کوئی رکاوٹ نہ آئی تو وہی نئے چیئرمین نیب ہوں گے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ وزیراعظم اور اپوزیشن لیڈر کے درمیان اتفاق کے بعد چیئرمین نیب کے نام کی سمری صدر کو ارسال کردی جائے گی۔

یاد رہے کہ موجودہ چیئرمین جسٹس (ر) جاوید اقبال کے عہدے کی مدت 2 جون کو ختم ہورہی ہے۔

 

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

اب پوری تیاری کے ساتھ اسلام آباد آؤں گا : عمران خان

پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین اور سابق وزیر اعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ میں دوبارہ آؤں گا اور اب کی بار پوری تیاری کے ساتھ اسلام آباد آؤں گا۔

پر شائع ہوا

Raja Sheroz Azhar

کی طرف سے

اب پوری تیاری کے ساتھ اسلام آباد آؤں گا : عمران خان

پشاور میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان نے کہا کہ میں اپنی جان قربان کردوں گا لیکن ان چوروں کو کو قبول نہیں کروں گا، ضمانت  پر رہا باپ بیٹے سمجھتے ہیں کہ ان کو قبول کرلیں گے، میں اپنی جان دے دوں گا الیکن ان کو قبول نہیں کروں گا۔

عمران خان نے کہا کہ حکومت کو 6 دن کا ٹائم دیا تھا، اب کی بار تیاری کر کے آئیں گے، ان لوگوں نے ہم سب پر مقدمے بنا دیے، ان چوروں کا یہی کام ہے، اس مافیا کا کام ایسا ہے یا بلیک میل کرتے ہیں یا خریدتے ہیں، ابھی سے اپنے اپنے حلقوں میں جائیں اور تیاری کریں۔

سابق وزیر اعظم نے کہا کہ جنہوں نے درختوں کو آگ لگائی وہ ہمارے لوگ نہیں تھے، املاک کو آگ پولیس اور ان کے لوگ لگا رہے تھے، میں نے تو احتجاج میں فیملیز کو بھی بلایا تھا، میں فیمیلیز کو احتجاج میں آنے کا کہہ رہا تھا کیا ہم انتشار کے لیے آ رہے تھے۔

انہوں نے کہا کہ سی سی پی او لاہور اور ڈی جی آپریشنز کےخلاف عدالت جانا ہے، مقدمہ درج کرانا ہے، ڈی آئی جی آپریشنز کے خلاف بھی درخواست دیں گے، آئی جی اسلام کو سزا ہونے والی تھی اسلام آباد میں لے آئے، جن حکام نے کیا ان کے خلاف مقدمے درج کرائیں گے، ان سب کے چہرے سوشل میڈیا پر ڈالیں گے۔

عمران خان نے کہا کہ کیا ہم بھیڑ بکریاں ہیں جو امریکا کے غلاموں کو قبول کرلیں گے، یہ پاکستان کی جمہوریت کا امتحان ہے، پاکستان میں پرامن احتجاج کا راستہ روکا جا رہا ہے، عدلیہ سے بڑے ادب سے کہتا ہوں کہ امتحان آپ کا بھی ہے، انہوں  نے خواتین اور وکلا سے بدسلو کی اور انہیں پکڑ کر مارا۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll