جی این این سوشل

پاکستان

قومی اسمبلی میں واپس جانے والا مشورہ مناسب ہے، فیصل جاوید

اسلام آباد: پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے رہنما سینیٹر فیصل جاوید نے کہا ہے کہ قومی اسمبلی میں واپس جانے والا مشورہ مناسب ہے۔

پر شائع ہوا

کی طرف سے

قومی اسمبلی میں واپس جانے والا مشورہ مناسب ہے، فیصل جاوید
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

 

پی ٹی آئی کے رہنما سینیٹر فیصل جاوید نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ عمران خان عدلیہ کا احترام کرتے ہیں اور عدلیہ کا فیصلہ عمران خان کے حق میں آئے گا۔ کچھ ہفتے بعد عمران خان دوبارہ وزیر اعظم ہوں گے۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان نے ہمیشہ قانون کا احترام کرنے کی بات کی ہے اور وہ ملک کے لیے سوچ رہے ہیں۔ ان کے بیرون ملک اثاثے نہیں اور ملک کے تمام تر مسائل کا حل انتخابات ہی ہیں۔

سینیٹر فیصل جاوید نے کہا کہ عوام نے عمران خان کے حق میں فیصلہ دیا ہے۔ عمران خان نے بیان حلفی جمع کرا دیا ہے اور معاملہ عدالت میں ہے۔

انہوں نے کہا کہ اس سے پہلے عمران خان نے قانون کی پاسداری کے لیے الیکشن کا بائیکاٹ کیا تھا لیکن میرا خیال ہے کہ قومی اسمبلی میں واپس جانے والا مشورہ مناسب ہے۔

پاکستان

اسلام آباد پولیس کا عمران خان کی گرفتاری سے متعلق بیان سامنے آگیا

چیئرمین پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) عمران خان کے وارنٹ گرفتاری جاری ہونے کے معاملے پر اسلام آباد پولیس کا بیان سامنے آگیا۔

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

اسلام آباد پولیس کا  عمران خان کی گرفتاری سے متعلق بیان سامنے آگیا

ایک بیان میں اسلام آباد پولیس کا کہنا ہےکہ  وارنٹ گرفتاری ایک قانونی عمل ہے، عمران خان پچھلی پیشی پر عدالت میں پیش نہیں ہوئے تھے، ان کی عدالت میں پیشی کو یقینی بنانےکے لیے وارنٹ گرفتاری جاری ہوئے ہیں۔

اسلام آباد پولیس کا کہنا ہےکہ معزز عدالت عالیہ نے مقدمہ نمبر 407/22 سے دہشت گردی کی دفعہ خارج کرنےکا حکم جاری کیا تھا، اس حکم کے بعد یہ مقدمہ سیشن کورٹ میں منتقل کیا گیا تھا،  عمران خان نے سیشن کورٹ سے ابھی تک اپنی ضمانت نہیں کروائی، پیش نہ ہونے کی صورت میں انہیں گرفتارکیا جاسکتا ہے۔

اسلام آباد پولیس نے عوام سےگذارش کی ہےکہ وہ افواہوں پر کان مت دھریں۔

خیال رہے کہ تھانہ مارگلہ کے علاقہ مجسٹریٹ نے خاتون مجسٹریٹ زیباچوہدری کو دھمکی دینے کے کیس میں سابق وزیراعظم عمران خان کے وارنٹ گرفتاری جاری کیے ہیں۔

ذرائع کا کہنا تھا کہ اسلام آباد پولیس عمران خان کو گرفتار کرنے بنی گالہ روانہ ہوگئی ہے جس کے بعد عمران خان سخت سکیورٹی میں بنی گالہ سے روانہ ہوگئے۔

دوسری جانب پی ٹی آئی ذرائع کا یہ بھی کہنا  تھا کہ عمران خان ابھی بنی گالا میں موجود ہیں اور ان کے گھر سے کسی نامعلوم جگہ جانے کی خبردرست نہیں، عمران خان کی آج گرفتاری محض قیاس آرائیاں ہیں۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

سائفر اب بھی موجود ہے سیکیورٹی رسک کی وجہ سے پبلک نہیں کیا : عمران خان

چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے کہا ہے کہ سائفر اب بھی موجود ہے سیکیورٹی رسک کی وجہ سے پبلک نہیں کیا۔

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

سائفر اب بھی موجود ہے سیکیورٹی رسک کی وجہ سے پبلک نہیں کیا : عمران خان

نجی ٹی وی کو دیئے گئے انٹرویو میں انہوں نے کہا کہ آڈیو لیکس بہت بڑی سیکیورٹی بریچ ہے،بڑی بات ہے کہ وزیراعظم کی گفتگو محفوظ نہیں،پبلک ہوگئی،وزیراعظم کی ریکارڈنگ ہمارے دشمنوں کے پاس بھی پہنچ گئی ہوں گی۔

ان کا کہنا تھا کہ سائفر میں جو بھی باتیں ہوئیں وہ جلسوں میں کر چکا ہوں، او آئی سی اجلاس میں سائفرمعاملے کو نہیں لاناچاہتاتھا،ڈی مارش کرنے سےپہلے ہم نے کسی ملک کا نام نہیں لیا۔

عمران خان نے کہا کہ سائفر کی کاپی صدرمملکت کے پاس بھی ہے جو انہوں نے چیف جسٹس کو بھجوائی،اسپیکر کی جانب سے بھی سائفر کی کاپی چیف جسٹس کو بھجوائی گئی۔

انہوں نے کہا کہ اعظم خان کے ساتھ میری گفتگو فون پر ہوئی جو لیک ہو گئی۔

ان کا کہنا تھا کہ جب ان لوگوں کی حکومت آئی تو تیاری کرلی تھی یہ مقدمات بنائیں گے،آخری مرتبہ گرفتاری دینےکے لیے تیار تھا،بیگ بھی تیار تھا،شاید لوگوں کی بڑی تعداد دیکھ کر یہ لوگ نہیں آئے۔

پڑھنا جاری رکھیں

پاکستان

جج دھمکی کیس:عمران خان کی عبوری ضمانت منظور

اسلام آباد ہائیکورٹ  نے خاتون جج کو دھمکی دینے کے کیس میں  عمران خان کی عبوری ضمانت منظور کر لی۔

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

جج دھمکی کیس:عمران خان کی عبوری ضمانت منظور

 

اسلام آباد ہا ئیکورٹ نے  جج دھمکی کیس میں سابق وزیر اعظم عمران خان کی عبوری ضمانت منظور کر لی۔اسلام آباد ہائیکورٹ کے جسٹس محسن اختر کیانی نے عبوری ضمانت منظور کی۔

عدالت نے عمران خان  کو دس ہزار کے مچلکے جمع کرانے کا حکم دے دیا۔ عمران خان کو کیس میں10 اکتوبر سے پہلے متعلقہ عدالت میں پیش ہونے کا حکم بھی دیا گیا۔

درخواست  میں استدعا کی گئی تھی کہ عمران خان کے خلاف ابتدائی طور پر دہشت گردی کا مقدمہ بنایا گیا۔ہائی کورٹ نے دہشت گردی کی دفعات ختم کیں تو کیس منتقل ہو گیا۔انسداد دہشتگردی عدالت سے کیس منتقل ہونے پر ضمانت بھی مسترد ہو گئی۔

درخواست میں موقف اپنایا گیا کہ سیاسی مخالف حکومت نے بدنیتی کے تحت جھوٹا مقدمہ بنایا۔کیس درج کرنے کا مقصد کرپشن مافیا کے خلاف پرامن تحریک کو روکنا ہے۔مقدمے کا مقصد عمران خان کو گرفتار کر کے پرامن سیاسی تحریک کو روکنا ہے۔

جج دھمکی کیس میں عمران خان کے وارنٹ گرفتاری  جاری کیے جانے کے معاملے پراسلام آباد ہائی کورٹ  چھٹی کے روز کھلی ۔درخواست دائر کرنے کے لیے عمران خان کے وکیل ڈاکٹر بابر اعوان ہائیکورٹ پہنچے تھے۔عمران خان کی جانب سے بائیو میٹرک سے استثنی کی درخواست بھی دائر کی گئی۔

واضح  رہے کہ  گزشتہ روزاسلام آباد کی مقامی عدالت نے عمران خان کے خلاف   خاتون جج  کو دھمکی  دینے کےکیس میں وارنٹ گرفتاری جاری کیے تھے۔

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll