جی این این سوشل

کھیل

برازیلین ٹیم کے کپتان نیمار زخمی ، آئندہ میچز میں شرکت مشکوک

برازیلین ٹیم اپنا گروپ جی کا دوسرا میچ 28 نومبر کو سوئٹزرلینڈ کے خلاف دوحہ میں کھیلے گی۔

پر شائع ہوا

کی طرف سے

برازیلین ٹیم کے کپتان نیمار زخمی ، آئندہ میچز میں شرکت مشکوک
جی این این میڈیا: نمائندہ تصویر

برازیلین فٹ بال ٹیم کے کپتان نیمارقطر میں جاری فیفا ورلڈکپ 2022  میں سربیا کے خلاف گروپ جی کے میچ کے دوران  پاؤں میں چوٹ لگنے سے زخمی ہوگئے ہیں جس کے بعد ان کی آئندہ میچز میں شرکت مشکوک ہوگئی ہے۔

میچ کے دوران مخالف ٹیم کے کھلاڑی سے ٹکرانے کے بعد نیمار کے دائیں ٹخنے میں موچ آئی جس کے باعث انہیں گراؤنڈ سے باہر جانا پڑا۔

برازیل کی فٹبال ٹیم کے ڈاکٹر نے تصدیق کی ہے کہ نیمار کے ٹخنے میں موچ آئی ہے ۔ 

انہوں نے کہا کہ سٹار پلیئر کا علاج شروع کردیا ہے ، آئندہ 24 گھنٹوں میں ان کی فٹنس کا جائزہ لینے کے بعد پتا چلے گا کہ وہ مزید میچز کھیل پائیں گے یا نہیں۔

ڈاکٹرز کا کہنا ہے کہ انجری کی نوعیت سے متعلق ابھی کچھ کہنا قبل از وقت ہوگا ، ہمیں امید ہے کہ نیمار فٹبال ورلڈ کپ میں ٹیم کی نمائندگی کریں گے۔

واضح رہے کہ برازیل نے فیفا ورلڈ کپ 2022 میں اچھا آغاز کرتے ہوئے حریف ٹیم سربیا کو 0-2 گول سے شکست دی ہے ۔

برازیلین ٹیم اپنا گروپ جی کا دوسرا میچ 28 نومبر کو سوئٹزرلینڈ کے خلاف دوحہ میں کھیلے گی۔

برازیلین فٹ بال ٹیم کے کوچ ٹائٹ کا کہنا ہے کہ وہ پرامید ہیں کہ نیمار جلد فٹ ہوکر میدان میں نظر آئیں گے۔

نیمار کو برازیل کے لیے پیلے کے 77 کے آل ٹائم ریکارڈ کی برابری کرنے کے لیے صرف دو گول درکار ہیں ۔ نیمار کے ٹخنے میں موچ کا جمعہ کو معائنہ کیا جائے گا۔

دنیا

غزہ میں اسرائیلی جارحیت جاری، شہید فلسطینیوں کی تعداد 37 ہزار سے متجاوز

شہید ہونے والوں میں سب سے زیادہ فلسطینی بچے اور عورتیں شامل ہیں، فلسطینی وزارت صحت کا کہنا ہے کہ یہ تعداد کل تعداد کا دو تہائی ہو سکتی ہے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

غزہ میں اسرائیلی جارحیت جاری، شہید فلسطینیوں کی تعداد 37 ہزار سے متجاوز

غزہ میں جاری اسرائیلی جارحیت سے شہید فلسطینیوں کی تعداد 37 ہزار سے تجاوز کر گئی ۔ اسرائیل کی جانب سے عیدا لاضحی کے روز بھی حملے جاری ہیں، آج کے حملوں میں مزید 40 فلسطینی شہید ہو گئےجس کے بعد 37337 تک پہنچ گئی۔

غیر ملکی میڈیا رپورٹ کے مطابق شہید ہونے والوں میں سب سے زیادہ فلسطینی بچے اور عورتیں شامل ہیں۔ فلسطینی وزارت صحت کا کہنا ہے کہ یہ تعداد کل تعداد کا دو تہائی ہو سکتی ہے۔

وزارت صحت کے اعداد و شمار کے مطابق اب تک زخمی ہونے والے فلسطینیوں کی تعداد 85229 ہے۔

واضح رہے کہ 7اکتوبر 2023 سے شروع ہونے والی جنگ کے بعد یہ دوسری عید ہے جس میں اسرائیلی فوج نے اپنے حملے جاری رکھے ہوئے ہیں اور اتوار یعنی عید الاضحیٰ کے روز بھی اسرائیلی فورسز نے حملہ کرکے 40 فلسطینیوں کو شہید کیا۔

پڑھنا جاری رکھیں

دنیا

امریکی صدر جوبائیڈن کا عید الاضحیٰ کے موقع پر پیغام

امریکہ کی حمایت سے تیار کی گئی جنگ بندی تجویز پر عمل کیا جانا چاہیے، بائیڈن

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

امریکی  صدر جوبائیڈن کا عید الاضحیٰ کے موقع پر پیغام

امریکہ کے صدر جوبائیڈن نے مسلمانوں کے مذہبی تہوار عید الاضحیٰ کے موقع پر جاری کیے گئے پیغام میں اس امر پر زور دیا ہے کہ امریکہ کی حمایت سے تیار کی گئی جنگ بندی تجویز پر عمل کیا جانا چاہیے۔

سوشل میڈیا پلیٹ فارم ایکس پر اپنے ٹویٹ میں امریکی صدر نے کہا کہ اس جنگ بندی تجویز پر عمل سے ہی شہریوں کے جنگی مصائب سے نکلنے میں مدد دی جا سکتی ہے کیونکہ اسرائیل اور حماس کے درمیان جنگ کی خوف ناکی سے بچ سکتے ہیں۔

جوبائیڈن نے مزید کہا اس جنگ میں بہت سے معصوم لوگ مارے جا چکے ہیں جن میں ہزاروں کی تعداد میں بچے بھی شامل ہیں۔ بہت سے لوگوں کو اپنے گھروں کو چھوڑنا پڑا ہے۔ ان کی درد غیر معمولی ہے۔میں یقین رکھتا ہوں کہ اسرائیل کی طرف سے حماس کو پیش کیا گیا تین مراحل پر مشتمل جنگ بندی منصوبہ تشدد کے خاتمے کا بہترین راستہ ہے۔ اس کی سلامتی کونسل نے بھی تائید کی ہے۔

تاہم یہ نئی بات ہے کہ امریکی صدر اپنے پیش کردہ یا خود سے منسوب کیے گئے جنگ بندی منصوبے کو اسرائیل کی طرف سے حماس کو پیش کیا گیا منصوبہ قرار دے رہے ہیں۔ اس دوران حماس کی طرف سے پیش کردہ ترامیم کا بھی ذکر کیے بغیر اسی منصوبے کو بہترین راستہ قرار دیا ہے۔

اپنے پیغام میں مسلم کمیونٹی کے حقوق کے لیے امریکی کوشش کو اجاگر کیا ، خصوصاً جو مسلمان مظالم کا شکار ہیں۔ ان میں برما اور چین میں ہیں اور ریاستی جبر کا سامنا کر رہے ہیں۔ میری انتظامیہ اسلامو فوبیا کے خلاف کام کر رہی ہے۔' یاد رہے اسلامو فوبیا مسلم اور اسلام دشمنی کی ایک ملفوف اصطلاح ہے۔ یہ اس کے باوجود ہے کہ امریکہ میں بھی اور یورپ میں بھی اسلامو فوبیا کا مسلمانوں کو نشانہ بنایا جاتا ہے۔

پڑھنا جاری رکھیں

دنیا

نیتن یاہو نے 6 رکنی جنگی کابینہ تحلیل کر دی

نیتن یاہو ایک چھوٹے گروپ کے ساتھ غزہ جنگ کے بارے میں مشاورت کریں گے

پر شائع ہوا

ویب ڈیسک

کی طرف سے

نیتن یاہو نے 6 رکنی  جنگی کابینہ تحلیل کر دی

اسرائیل کے وزیر اعظم نیتن یاہو نے جنگی کابینہ تحلیل کر دی ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق اسرائیلی وزیر اعظم بینجمن نیتن یاہو نے 6 رکنی جنگی کابینہ کو تحلیل کر دیا ہے، مرکزپسند سابق جنرل بینی گانٹرز کے استعفے کے بعد اس اقدام کی توقع کی جا رہی تھی۔

رپورٹس کے مطابق اسرائیلی رہنما نے اس فیصلے کا اعلان گزشتہ شام سیاسی سکیورٹی کابینہ کے اجلاس میں کیا تھا، اب نتن یاہو کے انتہائی دائیں بازو کے اتحادی شراکت دار ایک نئی جنگی کابینہ کے قیام کے لیے زور دے رہے ہیں۔نیتن یاہو اب جنگی کابینہ میں رہنے والے وزیر دفاع یوو گیلنٹ اور اسٹریٹجک امور کے وزیر رون ڈرمر سمیت وزرا کے ایک چھوٹے گروپ سے غزہ جنگ کے بارے میں مشاورت کیا کریں گے۔

نیتن یاہو کو وزیر خزانہ بیزلیل سموٹرچ اور قومی سلامتی کے وزیر اتمار بن گویر جیسے قوم پرست مذہبی شراکت داروں کی جانب سے جنگی کابینہ میں شمولیت کے مطالبے کا سامنا تھا، یہ ایسا اقدام ہے جس سے امریکا سمیت بین الاقوامی شراکت داروں کے ساتھ تناؤ مزید بڑھ جائے گا۔

مذکورہ جنگی کابینہ گزشتہ برس اکتوبر میں جنگ کے آغاز پر تشکیل دی گئی تھی، جب بینی گانٹز نیتن یاہو کے قومی اتحاد کی حکومت میں شامل ہوئے، کابینہ میں گانٹز کے ساتھی گاڈی آئزن کوٹ اور مذہبی جماعت شاس کے سربراہ آریہ دیری کو بطور مبصر شامل کیا گیا تھا۔ بینی گانٹز اور آئزن کوٹ دونوں نے گزشتہ ہفتے نیتن یاہو حکومت کو اس اعتراض کے ساتھ چھوڑ دیا، کہ وزیر اعظم غزہ جنگ کے لیے کوئی حکمت عملی بنانے میں ناکام ہو گئے ہیں، ان کا مطالبہ تھا کہ امریکی اور اتحادیوں کے مطالبات کے باوجود غزہ پر بمباری جاری رکھی جائے، تاہم نیتن یاہو نے مبینہ طور پر انھیں مسترد کر دیا۔

 

پڑھنا جاری رکھیں

ٹرینڈنگ

Take a poll